ارشد شریف میت :اس میں ایک سبق ہے،ہمیں سیکھنا چاہیے:مریم کے بیان پر تنقید

arsad-sharif-maryam-nawaz-matt-p.jpg


گزشتہ روز کینیا میں قتل ہونے والے معروف صحافی تشریف کی لاش کو خیمے سے روانہ کیا گیا تو اس مرحلے کی چند تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئیں، مریم نواز نے بھی ان میں سے ایک تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ان کو یہ تصویر شیئر کرتے ہوئے بالکل اچھا نہیں لگ رہا۔


مسلم لیگ نون کے مرکزی نائب صدر صدر مریم نواز نے صحافی ارشد شریف کے تابوت کی تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ انہیں یہ تصویر شیئر کرتے ہوئے اچھا تو نہیں لگ رہا مگر اس میں ایک سبق ہے تمام بنی نوع انسان کے لیے جس سے ہمیں سیکھنا چاہیے۔


مریم نواز نے یہ تصویر شیئر کی تھی اور ساتھ میں جو کچھ لکھا اس پر سوشل میڈیا صارفین نے سخت برہمی کا اظہار کیا۔ ارسلان جٹ نے لکھا کہ ذرا دماغ کا استعمال کریں اور سوچیں کتنا فرق ہے وہ ملک میں واپس آنا چاہ رہا تھا آپ کے بھائیوں کی طرح نہیں کہ بس میت بھیج دی۔ وہ اکیلا گیا تھا اس لیے اکیلا آرہا شہادت کا رتبہ پا کرآرہا ہے۔ اگر اس کا خاندان باہر ہوتا تو یقیناً ساتھ آتا۔


سحر شنواری نے لکھا کہ ایک صحافی کو پہلے ملک بدر کیا گیا۔ پھر اس کے لئے دوسرے ملک میں بھی اتنے مسائل پیدا کیئے کہ اسے وہ ملک بھی چھوڑنا پڑا۔ جب وہ کسی اور ملک چلا گیا تو اسے وہاں بے دردی سے قتل کردیا اور یہ محترمہ اس کی موت کا بھی مذاق اڑا رہی ہیں۔ کہاں گئے وہ صحافیوں کے حقوق کے ادارے؟


مسرت چیمہ نے لکھا کہ اب ہمیں پتہ چل گیا ہے کہ اس کے پروگرامز اور تجزیوں سے کون زیادہ ناراض تھا۔ جلد اس حوالے سے آپ بھی احتساب کے کٹہرے میں ہوگی۔


عمران نامی صارف نے لکھا کہ کوئی شریف خاندان کا شخص ہی اس حد تک گر سکتا ہے۔


تحریک انصاف کی رہنما مسرت جمشید چیمہ نے کہا کہ تم جیسی اولاد جس عورت نے پیدا کی تھی اس کا بنتا ہی نہیں تھا کہ اس کی اولاد اس کی تدفین میں شرکت کرتی. انہوں نے کہا ارشد شریف کو پوری قوم عزت کے ساتھ آخری آرام گاہ تک پہنچائے گی اور تمہارا خاندان ہمیشہ ایسے ہی ذلیل ہوتا رہے گا۔


اینکر پرسن عمردراز گوندل نے کہا کہ ‏یہ ہے شریف خاندان کی اصلیت اور ظرف، نواز شریف کی سیاسی جانشین مذمت کرنے کے بجائے قرض چکا رہیں۔ اس سے بہتر تھا آپ منافقانہ خاموشی ہی اختیار کیے رکھتیں۔


اسلام الدین ساجد نے لکھا کہ ‏مریم نواز کل جشن اور اج یہ ٹویٹ۔۔۔ ہمارے صحافیوں کے زخموں پر یہ نمک پاشی نہیں کرنی چاہئے تھی۔


ظہیر نے کہا کہ خواتین و حضرات یہ مریم بی بی کا اصل چہرہ ہے۔

 
Last edited by a moderator:

stranger

Chief Minister (5k+ posts)
ab sharif family ki maut kab aay gi ye kisi ko bhi pata nahi chalay ga.. tum ab awam main nikelo to sahi... kitnay hisab hain iss qaum ke ju chukanay hain

ab kutti fauj bhi tumhain tahafuz nahi de sakay gi..
 

Complete Sense

Senator (1k+ posts)
Maryam Nawaz is very clear from her heart, she never hide anything nor her feelings...so it is clear that MN is behind the killing of Arshad Sharif and she is behind the all lotted money moved from Pakistan to UK.
But my question is...when she will be convicted or killed?
 

JusticeLover

Minister (2k+ posts)
اس سے ایک سبق تو ملتا ھے شریف خاندان اور حاجی صاحب پر کبھی کچھ نہ بولنا نھیں تو مروا دیں گے یا لا پتا کرا دیں گے۔
 

satifhasan

Minister (2k+ posts)
ajj k bad sa ma Marium Nawaz ko KUTIA likhon or bolonga
jahan kahin may KUTTIA likhon sumjh jana kon ha
or na sumjha ai (PMLN walao ) tu apna chehra dekhlena sumjh ajai ga
 

Champion 01

Chief Minister (5k+ posts)
قوم کو تو پہلے سے پتہ ہے کہ اس ٹبر کا تعلق جاتی امرا کی رام گلی سے ہے، اب مریم قطری کی ان حرکتوں سے مزید کنفرمہوتا ہے کہ بلکل ان عورتوں کی طرح کرتی ہے جو وہاں کی عورت کا وطیرہ ہے۔
 

NCP123

Minister (2k+ posts)
arsad-sharif-maryam-nawaz-matt-p.jpg


گزشتہ روز کینیا میں قتل ہونے والے معروف صحافی تشریف کی لاش کو خیمے سے روانہ کیا گیا تو اس مرحلے کی چند تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئیں، مریم نواز نے بھی ان میں سے ایک تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ان کو یہ تصویر شیئر کرتے ہوئے بالکل اچھا نہیں لگ رہا۔


مسلم لیگ نون کے مرکزی نائب صدر صدر مریم نواز نے صحافی ارشد شریف کے تابوت کی تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ انہیں یہ تصویر شیئر کرتے ہوئے اچھا تو نہیں لگ رہا مگر اس میں ایک سبق ہے تمام بنی نوع انسان کے لیے جس سے ہمیں سیکھنا چاہیے۔


مریم نواز نے یہ تصویر شیئر کی تھی اور ساتھ میں جو کچھ لکھا اس پر سوشل میڈیا صارفین نے سخت برہمی کا اظہار کیا۔ ارسلان جٹ نے لکھا کہ ذرا دماغ کا استعمال کریں اور سوچیں کتنا فرق ہے وہ ملک میں واپس آنا چاہ رہا تھا آپ کے بھائیوں کی طرح نہیں کہ بس میت بھیج دی۔ وہ اکیلا گیا تھا اس لیے اکیلا آرہا شہادت کا رتبہ پا کرآرہا ہے۔ اگر اس کا خاندان باہر ہوتا تو یقیناً ساتھ آتا۔


سحر شنواری نے لکھا کہ ایک صحافی کو پہلے ملک بدر کیا گیا۔ پھر اس کے لئے دوسرے ملک میں بھی اتنے مسائل پیدا کیئے کہ اسے وہ ملک بھی چھوڑنا پڑا۔ جب وہ کسی اور ملک چلا گیا تو اسے وہاں بے دردی سے قتل کردیا اور یہ محترمہ اس کی موت کا بھی مذاق اڑا رہی ہیں۔ کہاں گئے وہ صحافیوں کے حقوق کے ادارے؟


مسرت چیمہ نے لکھا کہ اب ہمیں پتہ چل گیا ہے کہ اس کے پروگرامز اور تجزیوں سے کون زیادہ ناراض تھا۔ جلد اس حوالے سے آپ بھی احتساب کے کٹہرے میں ہوگی۔


عمران نامی صارف نے لکھا کہ کوئی شریف خاندان کا شخص ہی اس حد تک گر سکتا ہے۔


تحریک انصاف کی رہنما مسرت جمشید چیمہ نے کہا کہ تم جیسی اولاد جس عورت نے پیدا کی تھی اس کا بنتا ہی نہیں تھا کہ اس کی اولاد اس کی تدفین میں شرکت کرتی. انہوں نے کہا ارشد شریف کو پوری قوم عزت کے ساتھ آخری آرام گاہ تک پہنچائے گی اور تمہارا خاندان ہمیشہ ایسے ہی ذلیل ہوتا رہے گا۔


اینکر پرسن عمردراز گوندل نے کہا کہ ‏یہ ہے شریف خاندان کی اصلیت اور ظرف، نواز شریف کی سیاسی جانشین مذمت کرنے کے بجائے قرض چکا رہیں۔ اس سے بہتر تھا آپ منافقانہ خاموشی ہی اختیار کیے رکھتیں۔


اسلام الدین ساجد نے لکھا کہ ‏مریم نواز کل جشن اور اج یہ ٹویٹ۔۔۔ ہمارے صحافیوں کے زخموں پر یہ نمک پاشی نہیں کرنی چاہئے تھی۔


ظہیر نے کہا کہ خواتین و حضرات یہ مریم بی بی کا اصل چہرہ ہے۔

she is saying that look if anyone speaks against Maafia we will kill them........this is a lesson.....she is part of Maafia who do faraad, killing, terrorism.......she made Generals to stop by saying that we have your videos......this is blackmailing maafia...
 

Husaink

Prime Minister (20k+ posts)
arsad-sharif-maryam-nawaz-matt-p.jpg


گزشتہ روز کینیا میں قتل ہونے والے معروف صحافی تشریف کی لاش کو خیمے سے روانہ کیا گیا تو اس مرحلے کی چند تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئیں، مریم نواز نے بھی ان میں سے ایک تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ان کو یہ تصویر شیئر کرتے ہوئے بالکل اچھا نہیں لگ رہا۔


مسلم لیگ نون کے مرکزی نائب صدر صدر مریم نواز نے صحافی ارشد شریف کے تابوت کی تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ انہیں یہ تصویر شیئر کرتے ہوئے اچھا تو نہیں لگ رہا مگر اس میں ایک سبق ہے تمام بنی نوع انسان کے لیے جس سے ہمیں سیکھنا چاہیے۔


مریم نواز نے یہ تصویر شیئر کی تھی اور ساتھ میں جو کچھ لکھا اس پر سوشل میڈیا صارفین نے سخت برہمی کا اظہار کیا۔ ارسلان جٹ نے لکھا کہ ذرا دماغ کا استعمال کریں اور سوچیں کتنا فرق ہے وہ ملک میں واپس آنا چاہ رہا تھا آپ کے بھائیوں کی طرح نہیں کہ بس میت بھیج دی۔ وہ اکیلا گیا تھا اس لیے اکیلا آرہا شہادت کا رتبہ پا کرآرہا ہے۔ اگر اس کا خاندان باہر ہوتا تو یقیناً ساتھ آتا۔


سحر شنواری نے لکھا کہ ایک صحافی کو پہلے ملک بدر کیا گیا۔ پھر اس کے لئے دوسرے ملک میں بھی اتنے مسائل پیدا کیئے کہ اسے وہ ملک بھی چھوڑنا پڑا۔ جب وہ کسی اور ملک چلا گیا تو اسے وہاں بے دردی سے قتل کردیا اور یہ محترمہ اس کی موت کا بھی مذاق اڑا رہی ہیں۔ کہاں گئے وہ صحافیوں کے حقوق کے ادارے؟


مسرت چیمہ نے لکھا کہ اب ہمیں پتہ چل گیا ہے کہ اس کے پروگرامز اور تجزیوں سے کون زیادہ ناراض تھا۔ جلد اس حوالے سے آپ بھی احتساب کے کٹہرے میں ہوگی۔


عمران نامی صارف نے لکھا کہ کوئی شریف خاندان کا شخص ہی اس حد تک گر سکتا ہے۔


تحریک انصاف کی رہنما مسرت جمشید چیمہ نے کہا کہ تم جیسی اولاد جس عورت نے پیدا کی تھی اس کا بنتا ہی نہیں تھا کہ اس کی اولاد اس کی تدفین میں شرکت کرتی. انہوں نے کہا ارشد شریف کو پوری قوم عزت کے ساتھ آخری آرام گاہ تک پہنچائے گی اور تمہارا خاندان ہمیشہ ایسے ہی ذلیل ہوتا رہے گا۔


اینکر پرسن عمردراز گوندل نے کہا کہ ‏یہ ہے شریف خاندان کی اصلیت اور ظرف، نواز شریف کی سیاسی جانشین مذمت کرنے کے بجائے قرض چکا رہیں۔ اس سے بہتر تھا آپ منافقانہ خاموشی ہی اختیار کیے رکھتیں۔


اسلام الدین ساجد نے لکھا کہ ‏مریم نواز کل جشن اور اج یہ ٹویٹ۔۔۔ ہمارے صحافیوں کے زخموں پر یہ نمک پاشی نہیں کرنی چاہئے تھی۔


ظہیر نے کہا کہ خواتین و حضرات یہ مریم بی بی کا اصل چہرہ ہے۔

قوم سیکھ لے اسکا تابوت بھی ایسا ہی ہونا چاہئے
 

atensari

President (40k+ posts)
یہ دھمکی ہے بقیہ سب کے لئے

بھٹو اور زرداری نے اپنے خاندان میں ہونے والے حادثوں سے کچھ نہیں سیکھا. کیا شریف خاندان نے بھٹو اور زرداری سے کچھ سبق سیکھا
 
Sponsored Link