کورونا وائرس: انڈیا میں تبلیغی جماعت کے سربراہ پر قتلِ کی دفعات کے تحت مقدمہ درج

atensari

(50k+ posts) بابائے فورم
کورونا وائرس: انڈیا میں تبلیغی جماعت کے سربراہ پر قتلِ کی دفعات کے تحت مقدمہ درج

انڈیا میں تبلیغی جماعت کے رہنما محمد سعد کندھالوی کے خلاف دہلی پولیس نے تبلیغی جماعت کے اجتماع کے ذریعے ملک بھر میں کورونا وائرس پھیلانے کے الزامات پر قتل خطا کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کر لیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ تین مارچ کو شروع ہونے والے تبلیغی اجتماع کو اس وقت بھی ختم نہیں کیا گیا جب 24 مارچ کو حکومت نے ملک میں لاک ڈاؤن نافذ کرنے کا اعلان کیا تھا۔

اس تبلیغی اجتماع کو ملک کی 17 ریاستوں میں ایک ہزار سے زائد افراد میں کورونا پھیلانے کا ذمہ دار کہا جا رہا ہے، خیال کیا جا رہا ہے کہ یہ وائرس اجتماع میں باہر کے ممالک سے آئے شرکا کے ذریعے پھیلا۔

تبلیغی جماعت اور اس کے رہنما سعد کندھالوی نے ان الزامات کی تردید کی ہے۔

دہلی کی پولیس کا کہنا ہے کہ سعد کندھالوی پر بڑے پیمانے پر جو الزامات عائد کیے ہیں ان کی وجہ سے وہ ضمانت کے لیے درخواست بھی نہیں دے سکیں گے۔

یہ مقدمہ ایسے وقت پر درج کیا گیا ہے جب سعد کندھالوی وائرس سے بچاؤ کے لیے خود ساختہ تنہائی میں رہ رہے ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اگرچہ انھیں حکام کی جانب سے دو نوٹس بھی دیے گئے تاہم انھوں نے دہلی کے نظام الدین نامی علاقے کی ایک مسجد میں اجتماع جاری رکھا۔

دوسری جانب تبلیغی جماعت کا مؤقف ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی جانب سے 22 مارچ کو ملک گیر ایک روزہ کرفیو کے اعلان کے فوراً بعد انھوں نے یہ اجتماع ختم کرتے ہوئے وہاں موجود تمام شرکا کو اپنے اپنے گھروں میں واپس جانے کا کہا تھا۔

اجتماع کے منتظمین کا کہنا ہے کہ بہت سے لوگ واپس چلے گئے تھے لیکن بہت سے لوگ وہاں پھنس گئے تھے کیونکہ اگلے ہی دن مختلف ریاستوں نے اپنی سرحدیں بند کرنا شروع کر دی تھیں اور دو دن بعد پورے ملک میں لاک ڈاؤن ہو گیا تھا اور بسیں اور ٹرینیں چلنا بند ہو گئیں تھیں۔

اس مسجد میں رہائشی کمرے بھی موجود ہیں جس میں سینکڑوں افراد قیام کر سکتے ہیں۔

منتظمین کا یہ بھی کہنا ہے کہ انھوں نے اس صورت حال سے پولیس کو آگاہ کر دیا تھا اور طبی عملے سے بھرپور تعاون کرتے ہوئے انھیں مسجد میں آ کر اس جگہ کا معائنہ کرنے میں بھی مدد دی تھی۔

دہلی کے نظام الدین مرکز کے محمد سعد کون ہیں؟
انڈیا میں تبلیغی جماعت اور اس کے امیر مولانا محمد سعد کاندھالوی ان دنوں سرخیوں میں ہیں۔ اگر آپ ان کے بارے میں گوگل کر کے کوئی معلومات حاصل کرنا چاہیں تو آپ کو کوئی خاص معلومات حاصل نہیں ہوں گی اور نہ ان کی تصاویر یا ویڈیو ملے گیں۔ اگر ان کے بارے میں کچھ آرٹیکل ملے بھی تو غلط یا بے بنیاد معلومات پر مبنی ہوں گے۔

ایسا اس لیے نہیں کہ جماعت یا مولانا سعد خفیہ طریقے سے کام کرتے ہیں بلکہ اس لیے کہ جماعت ٹی وی، فلم، ویڈیو اور انٹرنیٹ وغیرہ کے خلاف ہے۔

مولانا سعد کے سب سے قریبی رشتے دار اور ان کے بہنوئی ضیا الحسن نے بی بی سی کو فون پر بتایا کہ ’ہمارے گھروں میں ٹی وی کبھی نہیں آیا۔ ہم نہ ٹی وی دیکھتے ہیں اور نہ ہی تصاویر کھینچتے ہیں۔‘

جماعت والوں کی نظر میں ٹی وی دیکھنا، فوٹو اتروانا، اور فلمیں دیکھنا معیوب یا مذہب کے خلاف سمجھا جاتا ہے۔ جماعت کے کئی ارکان کے پاس موبائل فون بھی نہیں ہیں۔

مولانا سعد کے قریبی رشتے داروں اور ان کو برسوں سے قریب سے جاننے والے سے بات چیت کرنے پر ان کی ایک تصویر ابھر کر سامنے آتی ہے۔ وہ دلی کی مشہور نظام الدین بستی کے 'لوکل بوائے' ہیں۔

تبلیغی جماعت کی سربراہی انھیں وراثت میں ملی ہے۔

مولانا سعد اسلام کے عالم نہیں مانے جاتے ہیں لیکن اپنی تنظیم پر ان کی گرفت مضبوط ہے۔ وہ دوسروں کی کم سنتے ہیں لیکن ایک عام شحض جو کسی کو اپنا دشمن نہیں مانتے۔

مولانا سعد 1926 میں تبلیغ جماعت کی تشکیل کرنے والے مولانا محمد الیاس کاندھالوی کے پڑپوتے ہیں۔ ایک طرح یہ کہا جاسکتا ہے کہ انھیں جماعت کی لیڈرشپ یا سربراہی وراثت میں ملی ہے۔

ان کا جنم 55 برس قبل نظام الدین علاقے کے اسی گھر میں ہوا تھا جس میں آج وہ رہتے ہیں۔ ان کا گھر تبلیغی جماعت کے صدر دفتر یا مرکز کے بالکل قریب ہے۔

جماعت کے لاکھوں ارکان دنیا کے 80 سے زیادہ ممالک میں رہتے ہیں۔ ان میں پاکستان، بنگلہ دیش، یورپ، آسٹریلیا اور امریکہ اہم ہیں۔ مولانا سعد اپنی جماعت کے لاکھوں ارکان کے روحانی پیشوا ہیں۔
اپنے پردادا محمد الیاس اور اپنے دادا محمد یوسف کے برعکس مولانا سعد کا شمار اسلامی سکولر کے طور پر نہیں ہوتا ہے۔

ان کے بہنوئی مولانا حسن کے مطابق 'مولانا سعد کی تعلیم مرکز میں واقع مدرسے کاشف العلوم مین مکمل ہوئی۔'

مدرسے اسلامی تعلیم حاصل کرنے کے باوجود ان کا درجہ جماعت کے اندر اسلامی سکالر یا کسی بڑی شخصیت جیسے مولانا ابراہیم اور مولانا احمد کے برابر نہیں تھا۔

شاید یہی وجہ ہے کہ پانچ برس قبل جب وہ جماعت کے امیر مقرر ہوئے تو انھیں بزرگ عالموں سے اتنی عزت حاصل نہیں ہوئی جتنی کہ تبلیغی جماعت کے امیر کو ملنی چاہیے تھی۔

سورس
 
Last edited by a moderator:

atensari

(50k+ posts) بابائے فورم
زعفرانی ہندو اور کالے انگریز ہی بتا سکتے ہیں کے پاکستان اور بھارت میں کرونا وائرس تبلیغی جماعت کی وجہ پھیلا تو اٹلی، برطانیہ، امریکا میں کس جماعت کی وجہ سے! مقدمہ کس کے خلاف درج کیا جائے!؛
 

Citizen X

President (40k+ posts)
I actually agree with this. Moulvis like mufti muneeb also need this, ek dafa ek per kerdo baki sub danday ki tarah seeday ho jaiye gay,
 

atensari

(50k+ posts) بابائے فورم
I actually agree with this. Moulvis like mufti muneeb also need this, ek dafa ek per kerdo baki sub danday ki tarah seeday ho jaiye gay,
اس نیک کام کا آغاز منتخب نمائندوں سے کیا جائے تو بہتر نتائج حاصل ہوں گے
 

منتظر

Minister (2k+ posts)
یہ ہندو انتہا پسند جماعت بھارتی جنتا پارٹی اور تبلیغی جماعت والوں کی نورا کشتی ہے ورنہ یہ دیو بند جماعت کا خروج اور تبلیغی جماعت یہ دونوں بدعتیں بھارت کا ہی تحفه ہے
 

Citizen X

President (40k+ posts)
اس نیک کام کا آغاز منتخب نمائندوں سے کیا جائے تو بہتر نتائج حاصل ہوں گے
Meri nazar mein kissi Muntakhib numaiday ne unilateral elaan nahi ker diya tha ke masjidon kal se khol di jaaien gi. Kissi muntakhib numaiday ne ijtima nahi karaya.

Aur agar karaya hai, to phir us ka bhi ragrda laga do. I have no issues.
 

atensari

(50k+ posts) بابائے فورم
Meri nazar mein kissi Muntakhib numaiday ne unilateral elaan nahi ker diya tha ke masjidon kal se khol di jaaien gi. Kissi muntakhib numaiday ne ijtima nahi karaya.

Aur agar karaya hai, to phir us ka bhi ragrda laga do. I have no issues.
منتخب نمائندہ ذاتی اور سیاسی تقریبات منعقد کر رہے ہیں

شمالی کوریا فارمولہ
سو فیصد نتائج حاصل کرنے ہیں تو دائرہ کار گلی محلوں، شاہراہوں، پارک اور بازاروں تک بڑھانا پڑے گا
 

Okara

Prime Minister (20k+ posts)
اس نیک کام کا آغاز منتخب نمائندوں سے کیا جائے تو بہتر نتائج حاصل ہوں گے
Lets assume due to Mufti Muneeb's decision, we start seeing more cases, can we recommend Mufti Muneeb the highest civil award of Pakistan?
We know we have few Quarantine centers so why shouldn't we send Mufti Sahib to lead prayers their?
 

The Oasis

MPA (400+ posts)
سارے سیکولر پاکستان کو دعائیں نہیں دیتے​
agreed thats why i don't give a shit about them as well, having half of my family living more than half of my family and visiting India quite regularly i have to say Indian Muslims have more hate for Pakistan than anyone else, as they all blame Pakistan for their pathetic condition
 

منتظر

Minister (2k+ posts)
سارے سیکولر پاکستان کو دعائیں نہیں دیتے​
تم ادھر لوگوں کو گمراہ کر رہے ہو ادھر آج سے کی برس پہلے ڈاکٹر اسرار اس جماعت کو بدعتی قرار دے چکے پر تم ہو کے ان کا نام مزید خراب کر رہے ہو


 

atensari

(50k+ posts) بابائے فورم
Lets assume due to Mufti Muneeb's decision, we start seeing more cases, can we recommend Mufti Muneeb the highest civil award of Pakistan?
We know we have few Quarantine centers so why shouldn't we send Mufti Sahib to lead prayers their?
مفتی منیب کے فیصلے کی میں بھی حمایت نہیں کرتا

پاکستان اور بھارت میں کرونا وائرس تبلیغی جماعت کی وجہ پھیلا تو اٹلی، برطانیہ، امریکا میں کس جماعت کی وجہ سے! مقدمہ کس کے خلاف درج کیا جائے!؛
 

atensari

(50k+ posts) بابائے فورم
تم ادھر لوگوں کو گمراہ کر رہے ہو ادھر آج سے کی برس پہلے ڈاکٹر اسرار اس جماعت کو بدعتی قرار دے چکے پر تم ہو کے ان کا نام مزید خراب کر رہے ہو


ڈاکٹر اسرار احمد تمہارے ابا اجداد کے متعلق بھی کہہ گئے ہیں. وہی کچھ بتا بتا کر ان کا نام روشن کر رہا ہوں
 

Okara

Prime Minister (20k+ posts)
مفتی منیب کے فیصلے کی میں بھی حمایت نہیں کرتا

پاکستان اور بھارت میں کرونا وائرس تبلیغی جماعت کی وجہ پھیلا تو اٹلی، برطانیہ، امریکا میں کس جماعت کی وجہ سے! مقدمہ کس کے خلاف درج کیا جائے!؛
Why we have such issues only in India/ Pakistan? Why Tableeghi Jamat didn't try same in other countries? Simply because rule of law which is not in in ours country.
 

atensari

(50k+ posts) بابائے فورم
agreed thats why i don't give a shit about them as well, having half of my family living more than half of my family and visiting India quite regularly i have to say Indian Muslims have more hate for Pakistan than anyone else, as they all blame Pakistan for their pathetic condition
ہندوستان کے مسلمانوں نے اپنا مستقبل گروی رکھ کر مسلم لیگ کو ووٹ دیا. ہمارا یہ حال کے اپنی شہ رگ چھڑوا نہیں سکتے اور طعنے دیتے ہیں بھارتی مسلمانوں کو​