کبھی سوچا تم نے مسلمانوں، اتنے خجل خوار کیوں ہو

Baadshaah

MPA (400+ posts)
خطہ ارض پر پچاس سے اوپر اسلامی ممالک ہیں۔یعنی وہ ممالک جن میں مسلمانوں کی اکثریت ہے۔ آپ ایک ایک کرکے ان تمام ممالک کو جانچتے جائیں، سوائے وہ ممالک جن کو اتفاق سے تیل کی قدرتی دولت مل گئی ہے، باقی ممالک میں مسلمانوں کا حال کیا ہے۔۔ ان مسلمان ممالک میں آپ کو جمہوریت کہیں نظر نہیں آئے گی، امن کہیں نظر نہیں آئے گا، خوشحالی کہیں نظر نہیں آئے گی۔ ان ممالک میں آپ کو شہریوں کے درمیان مذہب کے نام پر تفریق نظر آئے گی، مذہب مسلک کے نام پر لوگ ایک دوسرے کی سر پھٹول کرتے نظر آئیں گے۔ ان میں آپ کو سائنسدان، ادیب اور مفکر نہیں ملیں گے، ہاں مولوی، مفتی اور مذہبی پیشوا بے شمار ملیں گے۔ جدید دنیا کی تشکیل میں ان ممالک کا کوئی حصہ نہیں۔

پاکستان سے شروع ہوجائیں، افغانستان، عراق، شام، ایران، بنگلہ دیش، لبنان، سعودی عرب، انڈونیشیا، ملائشیا، ترکی، مصر، یمن، تیونس، لیبیا، سوڈان، اومان وغیرہ وغیرہ وغیرہ سب کو کھنگال لیں، کہیں سے کوئی ایجاد، کوئی دریافت، کوئی قابلِ ذکر سائنسدان، انسانی ذہانت کا کوئی کرشمہ آپ کو نظر نہیں آئے گا۔۔ یہ سب یورپ کی ایجادات سے مستفید ہورہے ہیں۔

آپ اسلامی دنیا یعنی اسلامی ممالک پر ایک نظر ڈالیں تو آپ کو علم ہوگا کہ اپنے ہی اکثریتی ممالک میں مسلمان خوش نہیں ہیں، خوش حال نہیں ہیں۔ ان ممالک میں یہ بدحال، خجل خوار مسلمان آپ کو ہر وقت اپنے حکمرانوں کو یا پھر کافروں کو کوستے نظر آئیں گے۔ اگر آپ نے خوش اور خوشحال مسلمان ڈھونڈنے ہیں تو وہ آپ کو سیکولر مغربی ممالک میں نظر آئیں گے۔ آپ امریکہ، کینیڈا، انگلینڈ، جرمنی، سوئٹزرلینڈ، ناروے جیسے کافر ممالک میں مسلمانوں سے ملیں، یہ مسلمان وہاں بڑی خوشحال اور محفوظ زندگی بسر کررہے ہیں، ان سے پوچھیں یہ کبھی واپس ان جہالت بھرے ممالک میں نہیں جائیں گے جہاں ان کی اپنی قوم کی اکثریت ہے۔۔ انہوں نے اپنے معاشروں کو اس قابل نہیں بنایا کہ وہاں کوئی خوشحال اور محفوظ زندگی بسر کرسکے۔ یہ بھاگے بھاگے ان معاشروں میں آگئے جہاں کافر، سیکولر لوگوں نے ایسے معاشرے تشکیل دیئے جہاں سے جانے کو ان کا من نہیں کرتا اور جہاں غیر قانونی طور پر پہنچنے کیلئے پاکستان جیسے ممالک سے ہر سال کتنے ہی لوگ جان کی بازی گنوا بیٹھتے ہیں۔۔


اے مسلمانو! کبھی غور کیا کہ ایسا کیوں ہے؟ تم صرف مغربی سیکولر خطوں میں ہی خوش کیوں ہو؟ تم اپنے اکثریتی ممالک میں خوش کیوں نہیں؟ اس کی سیدھی سیدھی وجہ ہے، تم نے اس دنیا کو اپنی دنیا سمجھا ہی نہیں، تم نے مذہبی جہالت کو چن لیا، تم نے ایک خیالی دنیا کو اپنی مستقل ہمیشگی کی دنیا مان لیا اور اس نام نہاد خیالی جنت کے حصول کیلئے تم نے ایک دوسرے کا خون بہانا، قتل و غارتگری کرنا، مذہب کی بنیاد پر نفرت کرنا اپنا شعار بنایا۔ یورپ نے برسوں پہلے یہ سیکھ لیا تھا کہ اگر پرامن معاشرے تشکیل دینے ہیں تو انسانوں کے درمیان، رنگ ، نسل مذہب کی بنیاد پر تفریق ختم کرنی ہوگی، مذہب کو ریاست کے امور سے نکال کر فرد کا پرائیویٹ معاملہ قرار دینا ہوگا۔۔ تم لوگ آج بھی مذہب کے نام پر انسانوں میں تفریق کرتے ہو۔۔۔جب تک کوئی قوم خود اپنی خامیوں کو شناخت کرکے ان کو دور نہیں کرتی، کوئی ان کی مدد نہیں کرسکتا۔
 

FahadBhatti

Chief Minister (5k+ posts)
Hamare Nabi Akrm Saw nein bhee khushhaali ki zindagi basar nahin ki aur naa hee ahle bait ne.

Tumhare khyaal mein jo khyaali dunya hai wohi asal haqiqat hai.. iss dunya ki qadar ek machar ke per ke barabar bhi nahin.

Jib terha kuch mulla apna deen sab per thopna chahte hen wahan tum jese atheiests bhee mojood hain jo apna seculerism sab per thopna chahte hen.Qomon per arooj aur zwal aatay rehte hen aur ye jo 'roshan daur' nazar aaraha hai tum ko ye history ka ek chunna munna sa hissa hai.
 

Shan ALi AK 27

Chief Minister (5k+ posts)
خطہ ارض پر پچاس سے اوپر اسلامی ممالک ہیں۔یعنی وہ ممالک جن میں مسلمانوں کی اکثریت ہے۔ آپ ایک ایک کرکے ان تمام ممالک کو جانچتے جائیں، سوائے وہ ممالک جن کو اتفاق سے تیل کی قدرتی دولت مل گئی ہے، باقی ممالک میں مسلمانوں کا حال کیا ہے۔۔ ان مسلمان ممالک میں آپ کو جمہوریت کہیں نظر نہیں آئے گی، امن کہیں نظر نہیں آئے گا، خوشحالی کہیں نظر نہیں آئے گی۔ ان ممالک میں آپ کو شہریوں کے درمیان مذہب کے نام پر تفریق نظر آئے گی، مذہب مسلک کے نام پر لوگ ایک دوسرے کی سر پھٹول کرتے نظر آئیں گے۔ ان میں آپ کو سائنسدان، ادیب اور مفکر نہیں ملیں گے، ہاں مولوی، مفتی اور مذہبی پیشوا بے شمار ملیں گے۔ جدید دنیا کی تشکیل میں ان ممالک کا کوئی حصہ نہیں۔

پاکستان سے شروع ہوجائیں، افغانستان، عراق، شام، ایران، بنگلہ دیش، لبنان، سعودی عرب، انڈونیشیا، ملائشیا، ترکی، مصر، یمن، تیونس، لیبیا، سوڈان، اومان وغیرہ وغیرہ وغیرہ سب کو کھنگال لیں، کہیں سے کوئی ایجاد، کوئی دریافت، کوئی قابلِ ذکر سائنسدان، انسانی ذہانت کا کوئی کرشمہ آپ کو نظر نہیں آئے گا۔۔ یہ سب یورپ کی ایجادات سے مستفید ہورہے ہیں۔

آپ اسلامی دنیا یعنی اسلامی ممالک پر ایک نظر ڈالیں تو آپ کو علم ہوگا کہ اپنے ہی اکثریتی ممالک میں مسلمان خوش نہیں ہیں، خوش حال نہیں ہیں۔ ان ممالک میں یہ بدحال، خجل خوار مسلمان آپ کو ہر وقت اپنے حکمرانوں کو یا پھر کافروں کو کوستے نظر آئیں گے۔ اگر آپ نے خوش اور خوشحال مسلمان ڈھونڈنے ہیں تو وہ آپ کو سیکولر مغربی ممالک میں نظر آئیں گے۔ آپ امریکہ، کینیڈا، انگلینڈ، جرمنی، سوئٹزرلینڈ، ناروے جیسے کافر ممالک میں مسلمانوں سے ملیں، یہ مسلمان وہاں بڑی خوشحال اور محفوظ زندگی بسر کررہے ہیں، ان سے پوچھیں یہ کبھی واپس ان جہالت بھرے ممالک میں نہیں جائیں گے جہاں ان کی اپنی قوم کی اکثریت ہے۔۔ انہوں نے اپنے معاشروں کو اس قابل نہیں بنایا کہ وہاں کوئی خوشحال اور محفوظ زندگی بسر کرسکے۔ یہ بھاگے بھاگے ان معاشروں میں آگئے جہاں کافر، سیکولر لوگوں نے ایسے معاشرے تشکیل دیئے جہاں سے جانے کو ان کا من نہیں کرتا اور جہاں غیر قانونی طور پر پہنچنے کیلئے پاکستان جیسے ممالک سے ہر سال کتنے ہی لوگ جان کی بازی گنوا بیٹھتے ہیں۔۔


اے مسلمانو! کبھی غور کیا کہ ایسا کیوں ہے؟ تم صرف مغربی سیکولر خطوں میں ہی خوش کیوں ہو؟ تم اپنے اکثریتی ممالک میں خوش کیوں نہیں؟ اس کی سیدھی سیدھی وجہ ہے، تم نے اس دنیا کو اپنی دنیا سمجھا ہی نہیں، تم نے مذہبی جہالت کو چن لیا، تم نے ایک خیالی دنیا کو اپنی مستقل ہمیشگی کی دنیا مان لیا اور اس نام نہاد خیالی جنت کے حصول کیلئے تم نے ایک دوسرے کا خون بہانا، قتل و غارتگری کرنا، مذہب کی بنیاد پر نفرت کرنا اپنا شعار بنایا۔ یورپ نے برسوں پہلے یہ سیکھ لیا تھا کہ اگر پرامن معاشرے تشکیل دینے ہیں تو انسانوں کے درمیان، رنگ ، نسل مذہب کی بنیاد پر تفریق ختم کرنی ہوگی، مذہب کو ریاست کے امور سے نکال کر فرد کا پرائیویٹ معاملہ قرار دینا ہوگا۔۔ تم لوگ آج بھی مذہب کے نام پر انسانوں میں تفریق کرتے ہو۔۔۔جب تک کوئی قوم خود اپنی خامیوں کو شناخت کرکے ان کو دور نہیں کرتی، کوئی ان کی مدد نہیں کرسکتا۔
انتہائی جاہلانہ تحریر ہے-
دین کو مذھبھی جہالت ثابت کرنے کی ناکام کوشش میں تمام حقائق مسخ کر دے ہیں
اصل ترقی ہوئی ہی مسلمانوں کے ادوار میں ہے اور اسلام نے ہی اس دنیا میں
مساوات قائم کی- جن اپنے آقاؤں کو خوش کرنے کے لیے تم نے یہ بکواسیات لکھی ہے
وہی تفرکہ ڈالنے والے اور نسل پرست اور نسل کش ہیں - کبھی آنکھوں پر بندھی مغربی غلامی اور جہالت کی پٹی اتار کے دیکھنا شائد کچھ حقائق نظر آئیں-
 

arifkarim

Prime Minister (20k+ posts)
یورپ نے برسوں پہلے یہ سیکھ لیا تھا کہ اگر پرامن معاشرے تشکیل دینے ہیں تو انسانوں کے درمیان، رنگ ، نسل مذہب کی بنیاد پر تفریق ختم کرنی ہوگی، مذہب کو ریاست کے امور سے نکال کر فرد کا پرائیویٹ معاملہ قرار دینا ہوگا۔
برسوں پہلے نہیں، دوسری جنگ عظیم کے بعد
 

arifkarim

Prime Minister (20k+ posts)
Tumhare khyaal mein jo khyaali dunya hai wohi asal haqiqat hai.. iss dunya ki qadar ek machar ke per ke barabar bhi nahin.
معیار زندگی بہتر بنانے کا یہ مطلب نہیں کہ عیاشی میں پڑ جاؤ
 

arifkarim

Prime Minister (20k+ posts)
مغربی غلامی اور جہالت
مغربی غلامی اور جہالت کو ایک ساتھ کیوں لکھا؟ ساری سائنس و ٹیکنالوجی مغرب کی استعمال کرتے ہو اور جاہل بھی اسے ہی کہتے ہو، کھوتے
 

FahadBhatti

Chief Minister (5k+ posts)
اسی لئے مسلمان قیامت تک ذلیلوں والی زندگی گزاریں گے؟
agar tangdasti ki zindagi guzaar bhi len to koi muzaaiqa nahin.

tum guzaro zardari wali zindagi tumhain kisne mana kia hai..

pai pai ka hisaab ho ga beta.

jisko yaqeen nahin hai wo phir kuch bho ker sakta hai pesa kamane ke liye.

ham musalmanon ke liye Nabi ki zaat hee sab se aala namuna hai...

baaqi tumharee saree harkaten dekh raha hun main forum mein..

teeli laga ker khush hone wale , gay rights ke alambardar, tum jese loge islam ka mazaak hee uraate nazaraate ho.
 

arifkarim

Prime Minister (20k+ posts)
agar tangdasti ki zindagi guzaar bhi len to koi muzaaiqa nahin.

tum guzaro zardari wali zindagi tumhain kisne mana kia hai..

pai pai ka hisaab ho ga beta.

jisko yaqeen nahin hai wo phir kuch bho ker sakta hai pesa kamane ke liye.

ham musalmanon ke liye Nabi ki zaat hee sab se aala namuna hai...

baaqi tumharee saree harkaten dekh raha hun main forum mein..

teeli laga ker khush hone wale , gay rights ke alambardar, tum jese loge islam ka mazaak hee uraate nazaraate ho.
رہو پھر اپنے کنویں میں مینڈک
 

jani1

Chief Minister (5k+ posts)
images
 

FahadBhatti

Chief Minister (5k+ posts)
مولویوں کو فارغ کرو پھر
مولویوں کو فارغ کرو پھر
aise ganday kaam main nahin kerta ..

ek taraf tum molvion ko londay baaz keh rehe ho dusree taraf unko farigh kerne ka mashwara de rehe ho :D.

ye islamic madrassay to 19th century ki eejaad hen , pehle madrasson mein jadeed uloom perhaye jaate the. Musalmanon kee libraries se kai bunyadi uloom hasil kiye gaye , baghdad ki library ko to jala diya gaya thaa. Modern world yaad he , lekin bunyaad mein jo eeenten hen un mein musalmanon ka bhee hissa raha thaa. He to 2 dhai soo saalon per tum per maghrib charh daura hai uss se pehle ke 800 saal musalmanon ne buhat achay din dekhe hen.
 

Wake up Pak

Prime Minister (20k+ posts)
Unfortunately, after the golden era of Muslim civilizations, we fell prey to the hands of fake religious authorities and kingdoms which led to the downfall of Muslims.
They moved away from the pristine message of the Quran and indulged in fake men made literature and to date, they are following it blindly.
The day Muslims revert to the Quran alone they will regain their lost glory once again.