نوجوان کو تھپڑ کیوں مارا؟ عظمیٰ بخاری نے وجہ بتادی

uzma-slap.jpg


نوجوان کو تھپڑ کیوں مارا؟ مسلم لیگ ن کی رہنما عظمیٰ بخاری نے وجہ بتادی۔۔

ہفتہ کے روز فیصل آباد میں پی ڈی ایم کا جلسہ ہوا جس کی میزبانی مسلم لیگ ن نے کی، فیصل آباد میں پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے جلسے میں عوام کی بڑی تعداد نے شرکت کی اور خوب جوش و خروش کا مظاہرہ کیا تھا۔

اس جلسے میں ن لیگی ایم پی اے عظمیٰ بخاری نے ایک نوجوان کو تھپڑ مادیا جس پر سوشل میڈیا پر سخت ردعمل دیکھنے میں آیا اور عظمیٰ بخاری کی یہ ویڈیو خوب وائرل ہوئی اور مختلف تبصروں کی زینت بنی۔


عظمیٰ بخاری سیاہ رنگ کی گاڑی میں ن لیگ کی دیگر خواتین رہنماؤں کے ہمراہ جلسے میں شرکت کے لیے پہنچیں اور جب گاڑی سے اترنے لگیں تو ان کے قریب کارکنوں اور گارڈز کا ہجوم تھا۔ آگے بڑھنے کیلئے جگہ نہ ملنے یا کسی بات پر عظمیٰ بخاری نے ایک نوجوان کو غصے میں تھپڑ دے مارا۔

عظمیٰ بخاری نے یہ بھی پوچھا کہ یہ کس کے ساتھ ہے تو کسی نے جواب دیا کہ یہ سیکورٹی میں ہے۔ جس پر عظمی بخاری نے اس نوجوان کے بازو پر لگا بیج بھی اتاردیا۔


عظمیٰ بخاری کے اس اقدام پر سوشل میڈیا پر سخت ردعمل دیکھنے کو ملا۔ ن لیگ مخالف سپورٹرز نے کہا کہ یہ عظمیٰ بخاری کا تکبر ہے جس کی وجہ سے اس نے ایک کارکن کو تھپڑ مارا تو کسی نے کہا کہ عظمیٰ بخاری دراصل جلدی جلدی میں اپنی قائد مریم نواز کے پاس پہنچنا چاہتی تھیں اور جگہ نہ ملنے پر غصہ میں آگئیں اور تھپڑ جڑدیا۔

ن لیگی سپورٹرز نے اس پر ملا جلاردعمل دیا، کسی نے کہا کہ کارکن ایک طرف تو پارٹی کیلئے محنت کرتے ہیں اور دوسری طرف پیپلزپارٹی سے آئے لوٹوں سے تھپڑ بھی کھاتے ہیں ، کسی نے کہا کہ اس نوجوان نےعظمیٰ بخاری کیساتھ کوئی نامناسب حرکت کی ہوگی جو وہ اتنا غصہ میں آئیں۔

ن لیگی کارکنوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ کارکنوں کو عزت ملنی چاہئے، اگر ووٹ کا عزت دو کا نعرہ لگ سکتا ہے تو کارکنوں کو عزت دو کا نعرہ بھی لگنا چاہئے۔

بعدازاں نوجوان کو تھپڑ مارنے پر عظمیٰ بخاری نے ردعمل میں کہا کہ یہ پی ڈی ایم کا جلسہ ہے جس میں 10 جماعتیں ہیں، جب اتنا ہجوم ہو تو تھوڑی بہت دھکم پیل تو ہوجاتی ہے یہ کوئی بڑی بات نہیں، کچھ نہیں ہوتا، داخلی دروازے پر چھوٹے موٹے مسئلے ہوجاتے ہیں، اس میں کون سی بڑی بات ہے۔

 
Advertisement
Sponsored Link