منی بجٹ کے نفاذ سے امپورٹڈ موبائل فون کی رجسٹریشن،ٹیکس میں کتنا اضافہ ہوا؟

tax-mini-bugget-and-phones.jpg


ایکسپریس نیوز کے مطابق منی بجٹ کے نتیجے میں ہونے والی مالیاتی تبدیلیوں اور قوانین کے نفاذ کے بعد مختلف برانڈ کے امپورٹڈ موبائل فونز کی پی ٹی اے رجسٹریشن کے ٹیکسز میں 15
ہزار روپے سے لیکر 70 ہزار روپے تک اضافہ ہوگیا ہے۔

منی بجٹ میں بیرون ملک سے آنیوالے200 ڈالر سے زیادہ قیمت والے موبائل فونز پر فکسڈ سیلز ٹیکس ختم کر کے قیمت کے تناسب سے17 فیصد سیلز ٹیکس لاگو کردیا گیا ہے تاہم مختلف کٹیگریز کے امپورٹڈ موبائل فونز پرکسٹم ڈیوٹی کی سابق فکسڈ شرح برقرار ہی رہے گی۔

56241e6e-55f3-440b-8c36-965c9c769bfd.jpg


ٹیکس بڑھنے سے ملک بھر کی موبائل فون مارکیٹس میں کاروبار میں شدید مندی آ گئی ہے اورنئے فونز کی فروخت میں غیر معمولی کمی جبکہ پی ٹی اے سے منظورشدہ پرانے فونز کی فروخت میں اضافہ ہوا ہے۔ بجٹ کی منظوری کے بعد ایف بی آر نے بیرون ملک سے آنے والے موبائل فونز پر ٹیکسز کی شرح میں ردوبدل کردیا ہے۔

ایف بی آر کی جانب سے کیے جانے والے ردوبدل کے بعد پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی کے موبائل فون رجسٹریشن سسٹم کو بھی اپ گریڈ کردیا گیا ہے۔ جاری کردہ ٹیکس ٹیرف کے مطابق پاکستان آنے والے مسافروں کو ان کے پاسپورٹ کے ذریعے پی ٹی اے رجسٹریشن کروانے پر 30 ڈالر تک مالیت کے فون پر 430 روپے فکسڈ ٹیکس جبکہ 31 تا 100 ڈالر مالیت کے فون پر 3200 روپے فکسڈ ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔

یہی نہیں 100 سے 200 ڈالر مالیت کے فون پر 9580 روپے فکسڈ ٹکیس ادا کرنا ہوگا اور201 ڈالر تا 350 ڈالر مالیت کے موبائل فون پر 12200 روپے کسٹم ڈیوٹی کے علاوہ فون کی مالیت کا 17 فیصد بطور سیلز ٹیکس بھی ادا کرنا ہوگا۔

دستاویز کے مطابق 351 تا 500 ڈالر مالیت کے فون پر 17800 روپے کسٹم ڈیوٹی کے علاوہ فون کی مالیت کا 17 فیصد سیلز ٹیکس لاگو ہوگا اور 500 ڈالر سے زائد مالیت کے موبائل فون پر 27600 روپے کسٹم ڈیوٹی کے علاوہ فون مالیت کا 17 فیصد بطور سیلز ٹیکس بھی ادا کرنا ہوگا۔
 
Advertisement
Last edited by a moderator:
Sponsored Link