عدالت کا خاتون ٹک ٹاکر کو گرفتار کرنے کا حکم

ayeshaiah.jpg


لاہور کی مقامی عدالت نے مینار پاکستان پارک میں گزشتہ برس 14 اگست کو خاتون ٹک ٹاکر سے بدسلوکی کیس میں سوشل میڈیا اسٹار عائشہ اکرم کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دے دیا۔


تفصیلات کے مطابق ایڈیشنل سیشن جج عشرت عباس نے مینار پاکستان میں بدسلوکی کیس کی گزشتہ سماعت کا تحریری فیصلہ جاری کردیا۔ عدالت نے بطور گواہ پیش نہ ہونے پر عاٸشہ اکرم کے ورانٹ گرفتاری جاری کیے اور متعلقہ ایس ایچ او کو خاتون سمیت دیگر گواہوں کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دیا۔

اپنے تحریری فیصلے میں عدالت نے کہا کہ مدعیہ سمیت دیگر گواہوں کو طلب کیا، عدالتی احکامات کو مدعیہ سمیت کسی گواہ نے اہمیت نہیں دی۔ لہٰذا وارنٹ گرفتاری جاری کیے جاتے ہیں۔ عدالت نے سماعت 5 جنوری تک ملتوی کردی۔

واضح رہے کہ تھانہ لاری اڈا پولیس نے ٹک ٹاکر عائشہ کی مدعیت میں مقدمہ درج کررکھا ہے۔ گذشتہ ماہ عدالت نے مینار پاکستان پر خاتون عائشہ اکرم سے بدسلوکی کے مقدمے میں ملزمان پر فرد جرم عائد کی تھی تاہم ملزمان نے فرد جرم سے انکار کیا تھا۔

یاد رہے14 اگستب 2021 کو مینار پاکستان پر عائشہ اکرم کو وہاں موجود 400 افراد کی جانب سے تشدد اور جنسی حملے کا نشانہ بنایا گیا تھا، گریٹر اقبال پارک میں خاتون سے بدتمیزی کامقدمہ تھانہ لاری اڈا میں درج کیا گیا تھا۔
 
Last edited:
Sponsored Link