شہباز شریف کو خطاب سے روکنے کیلئے قرار داد کی تیاری:مظہر عباس کا تبصرہ

mazhar-abbas.jpg


سینئر تجزیہ کار مظہر عباس کا کہنا ہے کہ اگر یہ قرارداد آتی ہے تو یہ تمام ممبران پر لاگو ہو گا کیونکہ قومی اسمبلی میں متعدد لوگوں پر کیسز چل رہے ہیں، کسی کو قومی اسمبلی میں خطاب سے روکنا بنیادی انسانی حقوق کے خلاف ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف نے قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کے خلاف قومی اسمبلی میں قرارداد لانے کا فیصلہ کیا ہے، نجی نیوز چینل کے پروگرام رپورٹ کارڈ میں بات کرت ہوئے سینئر تجزیہ کار مظہر عباس نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر تو حکومت چاہتی ہے کہ جن پر کیسز ہیں وہ براہ راست دکھائے جائیں تو پھر یہ قانون سب پر لاگو ہونا چاہیئے کیونکہ قومی اسمبلی میں متعدد لوگ ایسے ہیں جن پر کیسز چل رہے ہیں، سب کے کیسز براہ راست دکھائے جائیں۔


اپنی بات جاری رکھتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کو ان ہاؤس خطاب کرنے سے روکنا بنیادی انسانی حقوق کے خلاف ہے جو کہ عدالت میں آسانی سے چیلنج کیا جا سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر حکومت چاہتی ہے کہ ٹرائلز کو لائیو دکھایا جائے تو اس کی درخواست عدالت میں دی جائے کیونکہ یہ عدالت کی صوابدید ہے کہ کوئی پروسیڈنگ لائیو دکھانی ہے یا نہیں۔

مظہر عباس نے مزید انکشاف کیا کہ یہ قرار دادیں سیاسی ہے.جو سیاسی مقاصد کے حصول کے لئے اسمبلی میں لائی جا رہی ہیںواضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف نے قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کے خلاف قومی اسمبلی میں قرارداد لانے کا فیصلہ کیا ہے۔

حکومت کی جانب سے قومی اسمبلی میں شہباز شریف کے خلاف قرار داد پی ٹی آئی رکن اسمبلی فرخ حبیب پیش کریں گے۔ذرائع کے مطابق قومی اسمبلی میں شہباز شریف کے خلاف قرار داد پی ٹی آئی رکن اسمبلی فرخ حبیب پیش کریں گے۔

پاکستان تحریک انصاف نے قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کے خلاف قومی اسمبلی میں قرارداد لانے کا فیصلہ کیا ہے۔

ذرائع کے مطابق قومی اسمبلی میں شہباز شریف کے خلاف قرار داد پی ٹی آئی رکن اسمبلی فرخ حبیب پیش کریں گے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ منی لانڈرنگ کیس کے فیصلے تک شہباز شریف کو قومی اسمبلی میں تقریر نہیں کرنے دی جائے گی۔

خیال رہے کہ چند روز قبل مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کی قیادت نے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے خلاف بھی تحریک عدم اعتماد لانے پر اتفاق کیا تھا۔
 
Advertisement

Dr Adam

Prime Minister (20k+ posts)

پنڈ وسیا نئیں، تے اُچکّے پیلہے

ٹوکروں اور درباریوں کا نیا معجون بیچنے کا کاروبار شروع
 

Husaink

Chief Minister (5k+ posts)
mazhar-abbas.jpg


سینئر تجزیہ کار مظہر عباس کا کہنا ہے کہ اگر یہ قرارداد آتی ہے تو یہ تمام ممبران پر لاگو ہو گا کیونکہ قومی اسمبلی میں متعدد لوگوں پر کیسز چل رہے ہیں، کسی کو قومی اسمبلی میں خطاب سے روکنا بنیادی انسانی حقوق کے خلاف ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف نے قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کے خلاف قومی اسمبلی میں قرارداد لانے کا فیصلہ کیا ہے، نجی نیوز چینل کے پروگرام رپورٹ کارڈ میں بات کرت ہوئے سینئر تجزیہ کار مظہر عباس نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر تو حکومت چاہتی ہے کہ جن پر کیسز ہیں وہ براہ راست دکھائے جائیں تو پھر یہ قانون سب پر لاگو ہونا چاہیئے کیونکہ قومی اسمبلی میں متعدد لوگ ایسے ہیں جن پر کیسز چل رہے ہیں، سب کے کیسز براہ راست دکھائے جائیں۔


اپنی بات جاری رکھتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کو ان ہاؤس خطاب کرنے سے روکنا بنیادی انسانی حقوق کے خلاف ہے جو کہ عدالت میں آسانی سے چیلنج کیا جا سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر حکومت چاہتی ہے کہ ٹرائلز کو لائیو دکھایا جائے تو اس کی درخواست عدالت میں دی جائے کیونکہ یہ عدالت کی صوابدید ہے کہ کوئی پروسیڈنگ لائیو دکھانی ہے یا نہیں۔

مظہر عباس نے مزید انکشاف کیا کہ یہ قرار دادیں سیاسی ہے.جو سیاسی مقاصد کے حصول کے لئے اسمبلی میں لائی جا رہی ہیںواضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف نے قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کے خلاف قومی اسمبلی میں قرارداد لانے کا فیصلہ کیا ہے۔

حکومت کی جانب سے قومی اسمبلی میں شہباز شریف کے خلاف قرار داد پی ٹی آئی رکن اسمبلی فرخ حبیب پیش کریں گے۔ذرائع کے مطابق قومی اسمبلی میں شہباز شریف کے خلاف قرار داد پی ٹی آئی رکن اسمبلی فرخ حبیب پیش کریں گے۔

پاکستان تحریک انصاف نے قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کے خلاف قومی اسمبلی میں قرارداد لانے کا فیصلہ کیا ہے۔

ذرائع کے مطابق قومی اسمبلی میں شہباز شریف کے خلاف قرار داد پی ٹی آئی رکن اسمبلی فرخ حبیب پیش کریں گے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ منی لانڈرنگ کیس کے فیصلے تک شہباز شریف کو قومی اسمبلی میں تقریر نہیں کرنے دی جائے گی۔

خیال رہے کہ چند روز قبل مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کی قیادت نے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے خلاف بھی تحریک عدم اعتماد لانے پر اتفاق کیا تھا۔
چلو جی مظھر عباس صاحب تہاڈی گل وڈی سب کے کیس لائیو دکھائیں جائیں لوگوں کو پتہ تو چلے
اب تو اظہار رائے کی آزادی والا پیٹ درد نہیں ہوگا نا ، اس سے بڑی اظہار رائے کی آزادی کیا ہوگی کہ پوری دنیا دیکھے
 

stargazer

Chief Minister (5k+ posts)
Mazhar Abbas ko choron kay bunyadi hukook yad a gaye! Yeh kitney baar bola hai Model Town k shaheedon kay leyay? Ya to is jaisay logon key matt maree gaye hai ya yeh khulay jaahil hain ya 2 numberee!
 
Sponsored Link