حامد میر کی نظر میں فوادچوہدری کے خلاف مقدمہ کمزور کیوں ہے؟

hamdi1h1h11.jpg


سینئر صحافی و تجزیہ کار حامد میر کا کہنا ہے کہ فواد چودھری کے خلاف مقدمہ اتنا مضبوط نہیں، ممکن ہے ان کی پہلی ہی پیشی پر ضمانت ہو جائے یا پھر عدالت دو روز کا ریمانڈ دے۔

نجی چینل جیو کے مارننگ شو میں گفتگو کرتے ہوئےحامد میر نے کہا کہ فواد چودھری کے خلاف سیکریٹری الیکشن کمیشن نے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کرایا جس میں انہوں نے کہا کہ فواد چودھری نے الیکشن کمیشن کے بارے میں قابل اعتراض باتیں کی۔

انہوں نے کہا کہ ہو سکتا ہے فواد چودھری کی گرفتاری گرفتاریوں کا پہلا مرحلہ ہو، الیکشن کمیشن نے ایک کیس میں عمران خان کو مفرور قرار دیا ہے جس میں فواد چودھری بھی شامل ہیں۔ ان کا مزید کہنا ہے کہ توہین الیکشن کمیشن کیس میں عمران خان اور اسد عمر کی گرفتاری کے امکانات بھی موجود ہیں۔

ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ کل زمان پارک کے باہر پی ٹی آئی کارکنان کی بہت بڑی تعدا موجود نہیں تھی، شاید یہی وجہ ہے کہ اسلام آباد میں بیٹھے لوگوں نے فواد چودھری کی گرفتاری کا سوچا۔

یاد رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فواد چودھری کو کل لاہور سے اسلام آباد پولیس نے گرفتار کیا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ فواد چودھری کو ٹھوکر نیاز بیگ کے قریب ان کی رہائش گاہ سے گرفتار کیا گیا ہے، انہیں اسلام آباد لے جایا جائے گا۔

فواد چودھری کے خلاف مقدمہ گزشتہ رات تھانہ کوہسار میں درج کیا گیا ہے، ان پر مقدمہ سیکریٹری الیکشن کمیشن عمر حمید کی درخواست پر درج کیا گیا ہے۔

مقدمے میں کہا گیا ہے کہ فواد چودھری نے کہا تھا کہ الیکشن کمیشن کی حیثیت ایک منشی کی ہوگئی ہے، جو لوگ نگراں حکومت میں لگ رہے ہیں ان کا سزا ہونے تک پیچھا کریں گے۔
 

sensible

Chief Minister (5k+ posts)
یہ ہی رائے پاکستانی عوام کی ہے تو سب کو گرفتار کر لیں۔بے غیرتوں ٹٹ پونجیوں کو عزت کی بھی ضرورت ہے اور کالے کرتوت بھی کرنے ہیں ۔عزت نہیں کرتا پورا ملک جو کرنا ہے کر لو
 
Sponsored Link