مریم نواز کے کاغذات نامزدگی پر اعتراضات لگ گئے

10marymkjagazaat.jpg

مسلم لیگ ن کی سینئر نائب صدر مریم نواز شریف کے کاغذات نامزدگی پر تین اعتراضات سامنے آگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کی سینئر نائب صدر اور چیف آرگنائزر مریم نواز شریف نے پنجاب کے حلقہ پی پی 163 سے انتخاب لڑنے کیلئے اپنے کاغذات نامزدگی جمع کروائےتھے ، ریٹرننگ افسر عثمان سکندر کے دفتر میں کاغذات کی جانچ پڑتا ل کے دوران پی ٹی آئی کے امیدوار لالا اسد اللہ کے وکلاء نےمریم نواز کے کاغذات نامزدگی پر تین اعتراضات لگادیئے۔

مخالف امیدوار کے وکلاء کی جانب سے مریم نواز شریف کے کاغذات نامزدگی پر تجویز کنندہ اور تائید کنندہ کے شناختی کارڈ اوتھ کمشنر سے تصدیق نا ہونے پر اعتراض لگایا گیا ہے۔


اس کے علاوہ لالا اسد اللہ کی جانب سے مریم نواز کے کاغذات نامزدگی کے ساتھ جمع کروائے گئے بیان حلفی سمیت دیگر کاغذات بھی اوتھ کمشنر سے تصدیق شدہ نا ہونے کااعتراض لگایا ہے۔

تیسرا اعتراض مریم نواز شریف کی جانب سے کاغذات نامزدگی میں اس دعوے پر لگایا گیا ہے جس میں مریم کا کہنا ہے کہ ان کی پاکستان میں کوئی سرمایہ کاری نہیں ہے، اعتراض کنندہ نے موقف اپنایا ہے کہ مریم نے اپنےکاغذات میں کروڑوں روپے کے اثاثے ظاہر کیے ہیں۔

مریم نواز شریف نے پی ٹی آئی امیدوار کی جانب سے عائد اعتراضات کو مسترد کردیا ہے، ن لیگی وکلاء کا موقف ہے کہ پی ٹی آئی امیدوار نے شہرت حاصل کرنے کیلئے بے بنیاد اعتراضات لگائے ہیں، مریم نواز شریف کے دیگر حلقوں میں جمع کروائے گئے کاغذات منظور ہوچکے ہیں۔

دونوں فریقین کے دلائل سننے کے بعد ریٹرننگ افسر عثمان سکندر نے کاغذات نامزدگی منظور یا مسترد کرنے سے متعلق فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔
 

Digital_Pakistani

Chief Minister (5k+ posts)

NCP123

Minister (2k+ posts)
10marymkjagazaat.jpg

مسلم لیگ ن کی سینئر نائب صدر مریم نواز شریف کے کاغذات نامزدگی پر تین اعتراضات سامنے آگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کی سینئر نائب صدر اور چیف آرگنائزر مریم نواز شریف نے پنجاب کے حلقہ پی پی 163 سے انتخاب لڑنے کیلئے اپنے کاغذات نامزدگی جمع کروائےتھے ، ریٹرننگ افسر عثمان سکندر کے دفتر میں کاغذات کی جانچ پڑتا ل کے دوران پی ٹی آئی کے امیدوار لالا اسد اللہ کے وکلاء نےمریم نواز کے کاغذات نامزدگی پر تین اعتراضات لگادیئے۔

مخالف امیدوار کے وکلاء کی جانب سے مریم نواز شریف کے کاغذات نامزدگی پر تجویز کنندہ اور تائید کنندہ کے شناختی کارڈ اوتھ کمشنر سے تصدیق نا ہونے پر اعتراض لگایا گیا ہے۔


اس کے علاوہ لالا اسد اللہ کی جانب سے مریم نواز کے کاغذات نامزدگی کے ساتھ جمع کروائے گئے بیان حلفی سمیت دیگر کاغذات بھی اوتھ کمشنر سے تصدیق شدہ نا ہونے کااعتراض لگایا ہے۔

تیسرا اعتراض مریم نواز شریف کی جانب سے کاغذات نامزدگی میں اس دعوے پر لگایا گیا ہے جس میں مریم کا کہنا ہے کہ ان کی پاکستان میں کوئی سرمایہ کاری نہیں ہے، اعتراض کنندہ نے موقف اپنایا ہے کہ مریم نے اپنےکاغذات میں کروڑوں روپے کے اثاثے ظاہر کیے ہیں۔

مریم نواز شریف نے پی ٹی آئی امیدوار کی جانب سے عائد اعتراضات کو مسترد کردیا ہے، ن لیگی وکلاء کا موقف ہے کہ پی ٹی آئی امیدوار نے شہرت حاصل کرنے کیلئے بے بنیاد اعتراضات لگائے ہیں، مریم نواز شریف کے دیگر حلقوں میں جمع کروائے گئے کاغذات منظور ہوچکے ہیں۔

دونوں فریقین کے دلائل سننے کے بعد ریٹرننگ افسر عثمان سکندر نے کاغذات نامزدگی منظور یا مسترد کرنے سے متعلق فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔
ye subb scrippted drama hey to pressurize courts and ECP that look you are against us and favoring IK......although this is otherway round.
 

crankthskunk

Chief Minister (5k+ posts)
Why the idiot didn't put objection that Maryam is not suitable to hold the seat in a Parliament. She is a Zani and given birth to an illigimate child , 5 months after getting married.
Secondly that she is a convicted criminal and presented fake documents in Supreme Court in Pakistan.
 
Sponsored Link