آئی ایم ایف پروگرام رول اوور نہ ہواتو پاکستان کےدیوالیہ کاخطرہ ہے:بلوم برگ

ishaq-dar-bloomburg-shehbaz-a.jpg


امریکی جریدے بلوم برگ نے پاکستان کے حوالے سے اہم دعویٰ کردیا، بلوم برگ کے مطابق عالمی مالیاتی ادارے کا پروگرام رول اوور نہ ہوا تو پاکستان کے ڈیفالٹ کا خطرہ ہے،پاکستانی بجٹ پر آئی ایم ایف اعتراض نے قسط نہ ملنے کے خدشات بڑھائے ہیں، فنڈ پروگرام کے بغیر مہنگائی اور شرح سود توقعات سے زیادہ بڑھے گی۔

رپورٹ کے مطابق آئی ایم ایف کو ٹیکس بیس نہ بڑھانے اور ایمنسٹی اسکیم پر اعتراض ہیں، فنڈ پروگرام کے بغیر بین الاقوامی فنڈنگ کے ذرائع محدود ہوں گے،رپورٹ میں کہا گیا نئے پروگرام پر اکتوبر میں انتخابات سے پہلے پیش رفت مشکل ہے، دسمبر سے پہلے آئی ایم ایف کا نیا پروگرام مشکل ہوگا۔

نئے مالی سال کی پہلی ششماہی میں پاکستان کو دوست ملکوں کی مدد درکار ہوگی، طلب دبانے اور زرمبادلہ کی کفایت شعاری سے استعمال کیلئے شرح سود بڑھانا ہوگی۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ بلند شرح سود سے حکومت کا سود کا خرچ بڑھے گا، حکومت کا اپنا آدھا بجٹ سود پر خرچ کرنے کا منصوبہ ہے، آئندہ مالی سال کی 2.5 فیصد معاشی نمو کا حصول دشوار ہوگا۔

اس سے پہلے وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا تھا پاکستان کو آئی ایم ایف کے بغیر زندہ رہنا سیکھنا ہو گا، وہ سمجھتے ہیں کہ اگر آئی ایم ایف کا قرضہ نہ بھی ملے تو پاکستان ڈیفالٹ نہیں کرے گا۔

گذشتہ نو ماہ کے دوران پاکستان کو آئی ایم ایف سے قرضہ نہیں مل سکا مگر اس کے باوجود پاکستان نے ڈیفالٹ نہیں کیا، کئی مرتبہ یہ شرط لگائی گئی کہ سری لنکا کے بعد پاکستان ڈیفالٹ کر جائے گا مگر ایسا نہیں ہوا، بلکہ پاکستان نے اپنی بیرونی ادائیگیاں بروقت کی ہیں۔

دوسری جانب ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا کہتی ہیں فی الحال ہم آئی ایم ایف پروگرام پر عمل درآمد کے پر عزم ہیں، ابھی پلان بی کا وقت نہیں آیا، جب آئے گا تو دیکھیں گے، پاکستان اس وقت آئی ایم ایف کے علاوہ چین، سعودی عرب، یو اے ای اور قطر سے مالی امداد کی بات چیت کر رہا ہے۔
 

Twister

MPA (400+ posts)
کوئی شک نہیں کچھ بھی ہوسکتا ہے، ہماری عوام گھر بیٹھ کر ٹی وی، لیپ ٹاپ، موبائل اور پی سی پر بیٹھ کر حالات پر نظر رکھے اور چپس کے پیکٹ اور چائے، جوس کا انتظام اپنے پاس رکھے ہوسکے تو باتھ روم کے پاس ہی بیٹھے تاکہ بووقت ضرورت وہاں جایا سکے باقی سب خیر ہے۔
ڈیوائیڈ اینڈ رول۔۔۔
 

Faculty

MPA (400+ posts)
Awam will suffer, they will run with hoarded dollars.
In KUTTON (PDM Govt and Napak Army-Generals) ko dinya munh hi nahin laga rahi ha..
They must be removed ASAP form some one within ARMY for the sake of country and clean their image in the public.

Army Generals are usually KHASSI and most-cowards like old politicians quickly quiteing the parties on press conferences. They rely on the firepowers of the young soldiers under the commands of Colonels / Major and Captains.
 
Last edited:
Sponsored Link