ملک میں کسی کوبھی قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دیں گے،اجلاس میں فیصلہ

11pmijlasa.jpg

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اعلی سطحی اجلاس میں سیالکوٹ واقعے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اعلی سطحی اجلاس ہوا جس میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، مشیر قومی سلامتی ڈاکٹر معید یوسف، وزیر داخلہ شیخ رشید، وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری سمیت اعلی حکومتی و عسکری حکام شریک ہوئے۔


اجلاس میں سیالکوٹ میں سری لنکن شہری کو تشدد کے بعد قتل کرنے کے واقعے پر تبادلہ خیال کیا گیا اور مینجر کو ظالمانہ طریقے سے قتل کرنے پر تشویش کا اظہار کیا گیا۔

اجلاس کے بعدحکومت کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق واقعے میں ملوث ملزمان کو لازمی انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے گا، ملک میں کسی کو بھی چاہے افراد اور ہجوم کو قانون میں ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دیں گے۔


اجلاس میں تمام شرکاء نے موقف اپنایا کہ ملک میں ایسے واقعات کو کسی بھی طرح برداشت نہیں کیا جائے گا اور مستقبل میں ایسے واقعات کی روک تھام کیلئے جامع حکمت عملی مرتب کی جائے گی اور تمام ملزمان کو سخت سزائیں دی جائیں گی۔


اجلاس میں سری لنکن شہری کو بچانے کیلئے اپنی جان کی بازی لگانے والے ساتھ ورکر ملک عدنان کی بہادری اور جرات کو خراج تحسین پیش کیا گیا، اور کہا گیا کہ ملک عدنان نے سری لنکن شہری کو بچانے کیلئے اپنی جان خطرے میں ڈالی۔
 
Advertisement

Malik_007

Senator (1k+ posts)
Bhai pehla sawal to yeh banta ha k kia koi aap say asa khuch krnay ki ijazat talab krta ha? k ji hum nay sir tan sy juda krna ha so hazoor ijazat dain??? abay BSDK batein bahoot ho gaien jab tak amli tor per latkao gy nahi yeh ijazat wala chooran kisi kam ka nahi ha !
 

master timi

MPA (400+ posts)
مشرف ہو یا زرداری، نواز شریف ہو یا عمران خان۔ ہر سانحے کے بعد ایک ہی جیسے گھسے پھٹے بیانات آتے ہیں۔ یہ کون اس طرح کے ریڈی میڈ بیانات تیار کر کے رکھتا ہے جسے حکمران طبقہ استعمال کیے جا رہا ہے؟
 

Curious_Mind

MPA (400+ posts)
11pmijlasa.jpg

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اعلی سطحی اجلاس میں سیالکوٹ واقعے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اعلی سطحی اجلاس ہوا جس میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، مشیر قومی سلامتی ڈاکٹر معید یوسف، وزیر داخلہ شیخ رشید، وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری سمیت اعلی حکومتی و عسکری حکام شریک ہوئے۔


اجلاس میں سیالکوٹ میں سری لنکن شہری کو تشدد کے بعد قتل کرنے کے واقعے پر تبادلہ خیال کیا گیا اور مینجر کو ظالمانہ طریقے سے قتل کرنے پر تشویش کا اظہار کیا گیا۔

اجلاس کے بعدحکومت کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق واقعے میں ملوث ملزمان کو لازمی انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے گا، ملک میں کسی کو بھی چاہے افراد اور ہجوم کو قانون میں ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دیں گے۔


اجلاس میں تمام شرکاء نے موقف اپنایا کہ ملک میں ایسے واقعات کو کسی بھی طرح برداشت نہیں کیا جائے گا اور مستقبل میں ایسے واقعات کی روک تھام کیلئے جامع حکمت عملی مرتب کی جائے گی اور تمام ملزمان کو سخت سزائیں دی جائیں گی۔


اجلاس میں سری لنکن شہری کو بچانے کیلئے اپنی جان کی بازی لگانے والے ساتھ ورکر ملک عدنان کی بہادری اور جرات کو خراج تحسین پیش کیا گیا، اور کہا گیا کہ ملک عدنان نے سری لنکن شہری کو بچانے کیلئے اپنی جان خطرے میں ڈالی۔

Pakistan May have a great external facing Intelligence agency but I have no doubt that Internal facing segments and other intelligence agencies are totally ridiculous.

secondly the police is so untrained and I’ll prepared that they have no clue of how to handle a group of criminals let alone a Mob.

Thirdly the investigation team is so immature that they leave out the very important clues and pieces of evidences and witnesses. In some cases the evidences are completely destroyed.

the prosecution is so weak that the benefit of doubt always goes to criminals.
The witnesses are not provided any sort of protection instead they are harassed and threatened to give statement in favor of accused.

lastly our Judiciary and Lawers, I don’t need to say anything.

so without fixing all these issues, all statements are just Bull Crap
 
Sponsored Link