ریاض ملک نے جھوٹ بولا۔ کرسٹینالیمب

syed01

MPA (400+ posts)
cristinalamb.jpg
امریکی صحافی کرسٹینا لیمب، جو کہ چیف جسٹس کے خلاف اسکینڈل کی اہم کردار تھی وہ بھی اپنے کردار سے مگر گئ ہے اور اس نے صاف کردیا ہے کہ اس کےپاس ایسا کوئی مواد تھا جسے شائع کیا جانا تھا۔ اس طرح یہ اسکینڈل بنانے والے خود ہی بری طرح پھنسے جا رہے ہیں۔ کرسٹینا ، نے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کے حوالے سے بیان کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کے بارے میں مجھ سے منسوب تمام باتیں من گھڑت ہیں، میں جو کچھ جانتی ہوں وہ میڈیا میں پڑھا ہے اور ریاض ملک ان کے بارے میں جھوٹ بول رہے ہیں انہوں نےکبھی بھی ایسی کوئی اسٹوری شائع کرنے کامعاہدہ نہیں کیا تھا۔ اتوار کو انہوں نے اپنی سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئیٹر پر جاری پیغام میں کہاکہ میری اس معاملے پر ریاض ملک یا ان کے کسی نمائندے سے کوئی بات نہیں ہوئی،کہا جا رہا تھا کہ کرسٹینا لیمب ارسلان افتخار کیس کی اسٹوری بریک کریں گی مگر چیف جسٹس کے بارے میں مجھ سے تمام باتیں من گھڑت اور قیاس آرائیوں پر مبنی ہیں۔ سنڈے ٹائمز کی بیوروچیف نے ان اطلاعات کی سختی سے تردید کی جن میں کہا گیا ہے کہ فیملی گیٹ اسکینڈل کو بریک کرنے کے لیے ملک ریاض نے ان سے رابطہ کیا تھا۔ کرسٹنا لیمب نے وضاحت کی ہے کہ پاکستان کے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی ساکھ کو نقصان پہنچانے کے لیے بنائے گئے منصوبے جس میں طے کیا گیا تھا کہ افتخار چوہدری کے دورہ لندن کے موقع پر جو انٹرنیشنل جیورسٹ ایوارڈ کے حصول کے لیے تھا، اسی دوران ان کے فرزند ارسلان افتخار کے خلاف معاملات کو بڑے انداز میں بذریعہ میڈیا سامنے لایا جائے اور ان کی شخصیت کو متاثر کیا جائے،میں نہیں جانتی کہ یہ منصوبہ کہاں سے شروع ہو ا تاہم میں وضاحت کرنا ضروری سمجھتی ہوں کہ اس نوعیت کی خبر کو کسی خاص موقع پر بریکنگ کی صورت میں شائع کرنے کے منصوبے کی تکمیل کے لیے مجھ سے رابطہ نہیں کیا گیا تھا،میری ذات سے متعلق ایسے کسی مطلوبہ مقصد کے حوالے سے رپورٹیں بالا ہی بالا ہیں حقیقت سے اس بات کا تعلق نہیں ہے۔ ارسلان افتخار پر ملک ریاض سے40کروڑ روپے وصول کرنے کا الزام ہے جس کی ارسلان افتخار نے تر دید کی ہے۔
 

sohails

Councller (250+ posts)
[h=1]British journalist Christiana Lamb rejects media reports about Arsalan Iftikhar case[/h]Monday, June 11th, 2012 11:19:10 by Faisal Farooq








British journalist Christina Lamb denied media reports saying that she had not been contacted for a plan to reveal familygate scandal, a case involving allegations of financial corruption against Chief Justices son Arsalan Iftikhar.
Earlier, reports had claimed that Malik Riaz, the property tycoon, had sought British journalist Christina Lambs help to break the news about the scandal, when Justice Chaudhry was scheduled to arrive in London to receive the International Jurists Award for 2012.
The famous British journalist and bureau chief of Sunday Times in Washington, however, rejected the reports, terming it made up items.
In a message to social micro-blogging website, she said that she had not been contacted by anyone in this regard.
According to the reports, the timing of the disclosure was being deliberately planned to damage the growing recognition of Justice Iftikhar Muhammad Chaudhry in the international circles.
The reports alleged that it might have even led to his resignation if the plan was to meet its objectives.
The British journalist observed, Any purported quotes from me on the CJ issue are made up, all I know is what Ive read in the media and have spoken to no one!. (I) have no idea how this started but can I clarify I am not planning a big expos on Familygate, (and) have spoken to no one about it.
Arsalan Chaudhry, the chief justices son has been rumored to have received between Rs 300 to Rs 400 million from Malik Riaz to influence the court in proceedings against the Bahria Town.
On Saturday, Arsalan Iftikhar recorded his statement in the apex court, refusing having any link with the business tycoon.
In the meantime, Zahid Bokhari, the counsel for Malik Riaz said that doctors had advised his client complete bed rest in the United Kingdom due to a urine infection. He, however, said his client had decided to fly back home immediately to appear before the apex court.
He informed that Malik Riaz would bring along evidence showing payments made to Dr Arsalan Iftikhar.



Source: http://www.newspakistan.pk/2012/06/...-rejects-media-reports-arsalan-iftikhar-case/

 

BuTurabi

Chief Minister (5k+ posts)


کوئی کالیا دوسرے کالیے کا کُچھ نہیں بِگاڑ سکتا لِہٰذا کالیے کا کُچھ نہیں ہوگا شانت رہیں
۔
نہ چِنتا کریں نہ حسد ۔ ۔ ۔ بلکہ محنت کریں۔
 
Last edited:

famamdani

Minister (2k+ posts)


کوئی کالیا دوسرے کالیے کا کُچھ نہیں بِگاڑ سکتا لِہٰذا کالیے کا کُچھ نہیں ہوگا شانت رہیں
۔
نہ چِنتا کریں نہ حسد ۔ ۔ ۔ بلکہ محنت کریں۔


gar hath ko junbish nahi aankho me tou dum he

rehne de abhi shokh ka sapna mere aage...
..................:)


(Ghalib se sorry ke saath)