جیل کی تصویریں کسی فائیو اسٹار ہوٹل سے کم نہیں،جاوید لطیف

battery low

Minister (2k+ posts)
1358240_7598756_jab_updates.jpg


مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما میاں جاوید لطیف نے کہا ہے کہ حمود الرحمٰن کمیشن رپورٹ اُس وقت پبلک کردی جاتی تو آج 9 مئی نہ ہوتا۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جاوید لطیف نے کہا کہ جیل کی تصویریں کسی فائیو اسٹار ہوٹل سے کم نہیں، مئی جون کے مہینے میں مجھے تو کوئی سہولت نہیں دی جاتی تھی۔

جاوید لطیف نے کہا کہ جیل میں مجھے تو مئی جون میں ایک ڈرم میں رکھا جاتا تھا، میں نے لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس قاسم خان کے سامنے فریاد کی، مجھے کہا گیا تم اداروں کے خلاف اور ایجنسیوں کے متعلق بات کرتے ہو، مجھے کہا گیا تمہیں تو سنگسار کر دینا چاہیے تھا، مجھے کہا گیا تم پابندیاں برداشت نہیں کرسکتے تو پاکستان چھوڑ دو، کیا میں پاکستانی نہیں تھا؟

جاوید لطیف نے کہا کہ میری پیشی پر تو کرفیو لگا دیا جاتا تھا، کیا پاکستان کے اندر 9 مئی کرنا جرم نہیں، کسی کو گڈ ٹو سی یو اور مجھے سیسیلین مافیا اور گاڈ فادر کہا جائے۔

انہوں نے کہا کہ منصوبہ سازوں کے نام پبلک نہیں کیے جا رہے، دعوت دے رہے ہیں دوسرا 9 مئی ہو جائے۔

ن لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ میں کہتا ہوں بانی پی ٹی آئی پر جتنے ناجائز مقدمے ہیں فوری ختم کیے جائیں، ملک کے اندر 75 سال بعد بحث ہے کہ مقبول کون اور معقول کون ہے۔

انہوں نے کہا کہ انصاف کا دُہرا معیار قائم ہو جائے تو پھر ریاست کی بقا کی فکر ہوتی ہے، بھٹو کو 45 سال بعد کہا جائے اس وقت انصاف کے تقاضے پورے نہیں کیے گئے، 10 سال بعد نوازشریف کو انصاف ملے مگر آج یہ نہ کہا جائے انصاف کے تقاضے پورے نہیں ہوئے۔

جاوید لطیف نے کہا کہ مفاہمت کا اوپن کورٹ میں کہا جا رہا ہے یہ خوشی نہیں لمحہ فکریہ ہے، ملک میں قانون تبدیل کردیں، عدت کا قانون تبدیل کردیں، کسی خاص کے لیے قانون نہیں عام کے لیے سولی پر لٹکا دو، 190ملین پاؤنڈ کوئی جرم نہیں مگر موبائل چھیننا بہت بڑا جرم ہے۔

Source
 

ek hindustani

Chief Minister (5k+ posts)
Abay bhosri k
Tu hai kaun jo sahoolat maang raha tha
Tuu to us drum k laiq bhi nahi tha.
Tuu naali ka keeda hai aur teri jagah to gandi naali hai.
Yahan jis ki baat ho rahi hai wo Pakistan ki sab say bari party ka leader, aur poori duniya mein mash-hoor shakhsiyat aur tere mulk ka sabiq wazeer e Aazam hai.
Sala Kutta, Patwari kahi ka....
 

انقلاب

Chief Minister (5k+ posts)
1358240_7598756_jab_updates.jpg


مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما میاں جاوید لطیف نے کہا ہے کہ حمود الرحمٰن کمیشن رپورٹ اُس وقت پبلک کردی جاتی تو آج 9 مئی نہ ہوتا۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جاوید لطیف نے کہا کہ جیل کی تصویریں کسی فائیو اسٹار ہوٹل سے کم نہیں، مئی جون کے مہینے میں مجھے تو کوئی سہولت نہیں دی جاتی تھی۔

جاوید لطیف نے کہا کہ جیل میں مجھے تو مئی جون میں ایک ڈرم میں رکھا جاتا تھا، میں نے لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس قاسم خان کے سامنے فریاد کی، مجھے کہا گیا تم اداروں کے خلاف اور ایجنسیوں کے متعلق بات کرتے ہو، مجھے کہا گیا تمہیں تو سنگسار کر دینا چاہیے تھا، مجھے کہا گیا تم پابندیاں برداشت نہیں کرسکتے تو پاکستان چھوڑ دو، کیا میں پاکستانی نہیں تھا؟

جاوید لطیف نے کہا کہ میری پیشی پر تو کرفیو لگا دیا جاتا تھا، کیا پاکستان کے اندر 9 مئی کرنا جرم نہیں، کسی کو گڈ ٹو سی یو اور مجھے سیسیلین مافیا اور گاڈ فادر کہا جائے۔

انہوں نے کہا کہ منصوبہ سازوں کے نام پبلک نہیں کیے جا رہے، دعوت دے رہے ہیں دوسرا 9 مئی ہو جائے۔

ن لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ میں کہتا ہوں بانی پی ٹی آئی پر جتنے ناجائز مقدمے ہیں فوری ختم کیے جائیں، ملک کے اندر 75 سال بعد بحث ہے کہ مقبول کون اور معقول کون ہے۔

انہوں نے کہا کہ انصاف کا دُہرا معیار قائم ہو جائے تو پھر ریاست کی بقا کی فکر ہوتی ہے، بھٹو کو 45 سال بعد کہا جائے اس وقت انصاف کے تقاضے پورے نہیں کیے گئے، 10 سال بعد نوازشریف کو انصاف ملے مگر آج یہ نہ کہا جائے انصاف کے تقاضے پورے نہیں ہوئے۔

جاوید لطیف نے کہا کہ مفاہمت کا اوپن کورٹ میں کہا جا رہا ہے یہ خوشی نہیں لمحہ فکریہ ہے، ملک میں قانون تبدیل کردیں، عدت کا قانون تبدیل کردیں، کسی خاص کے لیے قانون نہیں عام کے لیے سولی پر لٹکا دو، 190ملین پاؤنڈ کوئی جرم نہیں مگر موبائل چھیننا بہت بڑا جرم ہے۔


Source
او میاں، تیری بہن کے ساتھ ہاتھ ہو گیا ہے۔ تو اسے اپنی طرف سے فائیو سٹار ہوٹل ہی بھیجتا رہا ہے
 

crankthskunk

Chief Minister (5k+ posts)
When you bend over backward to absolve criminals of their cases, that's what they do and talk.
He is nothing but mouthpiece of Corrupt Ganja AKA NS. We know how system facilitated him and his instructions issuer to the judges of LHS , the corrupt beggar AKA SS.
Then there is AZ , he got rid of his cases in the guise of presidential immunity.
Pakistan is fcuked because it protects criminals, which Javed Latif is a petty criminal.
 

Will_Bite

Prime Minister (20k+ posts)
1358240_7598756_jab_updates.jpg


مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما میاں جاوید لطیف نے کہا ہے کہ حمود الرحمٰن کمیشن رپورٹ اُس وقت پبلک کردی جاتی تو آج 9 مئی نہ ہوتا۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جاوید لطیف نے کہا کہ جیل کی تصویریں کسی فائیو اسٹار ہوٹل سے کم نہیں، مئی جون کے مہینے میں مجھے تو کوئی سہولت نہیں دی جاتی تھی۔

جاوید لطیف نے کہا کہ جیل میں مجھے تو مئی جون میں ایک ڈرم میں رکھا جاتا تھا، میں نے لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس قاسم خان کے سامنے فریاد کی، مجھے کہا گیا تم اداروں کے خلاف اور ایجنسیوں کے متعلق بات کرتے ہو، مجھے کہا گیا تمہیں تو سنگسار کر دینا چاہیے تھا، مجھے کہا گیا تم پابندیاں برداشت نہیں کرسکتے تو پاکستان چھوڑ دو، کیا میں پاکستانی نہیں تھا؟

جاوید لطیف نے کہا کہ میری پیشی پر تو کرفیو لگا دیا جاتا تھا، کیا پاکستان کے اندر 9 مئی کرنا جرم نہیں، کسی کو گڈ ٹو سی یو اور مجھے سیسیلین مافیا اور گاڈ فادر کہا جائے۔

انہوں نے کہا کہ منصوبہ سازوں کے نام پبلک نہیں کیے جا رہے، دعوت دے رہے ہیں دوسرا 9 مئی ہو جائے۔

ن لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ میں کہتا ہوں بانی پی ٹی آئی پر جتنے ناجائز مقدمے ہیں فوری ختم کیے جائیں، ملک کے اندر 75 سال بعد بحث ہے کہ مقبول کون اور معقول کون ہے۔

انہوں نے کہا کہ انصاف کا دُہرا معیار قائم ہو جائے تو پھر ریاست کی بقا کی فکر ہوتی ہے، بھٹو کو 45 سال بعد کہا جائے اس وقت انصاف کے تقاضے پورے نہیں کیے گئے، 10 سال بعد نوازشریف کو انصاف ملے مگر آج یہ نہ کہا جائے انصاف کے تقاضے پورے نہیں ہوئے۔

جاوید لطیف نے کہا کہ مفاہمت کا اوپن کورٹ میں کہا جا رہا ہے یہ خوشی نہیں لمحہ فکریہ ہے، ملک میں قانون تبدیل کردیں، عدت کا قانون تبدیل کردیں، کسی خاص کے لیے قانون نہیں عام کے لیے سولی پر لٹکا دو، 190ملین پاؤنڈ کوئی جرم نہیں مگر موبائل چھیننا بہت بڑا جرم ہے۔


Source
lol..hes comparing himself to Imran Khan?

Reality si the other way around. NAwaz should be compared with PTI workers....actually he cant be compared. he lost to no namers in the generla election..twice
 

چاچا بوٹا

MPA (400+ posts)
فوجیوں کے ٹٹے منہ میں لے کر پیدا ہونے والی اس پارٹی کے حرامی ٹولے میں ایک سے بڑھ کر ایک رنڈی کا بچہ ہے۔ لوگوں کو چوتیا سمجھتے ہیں۔ ۔ ان کےبھگوڑے وڈے دلے سمیت سب کی مثال اس رنڈی جیسی جو یواتی کم اور شور زیادہ ڈالتی ہے۔ گانڈ ان کی جرنیل مارتے رہے ہیں اور بہینوں کے رشتے عمران خان کو دینے کیلئے مرے جا رہے ہیں
 
now this should be the trend. imran khan should not be given any more relief or facilities in jail, but this should be the trend in future. chors like maryam, nawaz shehbaz zardari should also be given the same facilities. I am sure Nawaz and Zardari will run to hospitals in a week. If so, then hospitals should also be like normal public wards.
 

Munawarkhan

Chief Minister (5k+ posts)
I swear we had bigger bathrooms than this jail room. People forget that there is an open bathroom space behind too

1358240_7598756_jab_updates.jpg


مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما میاں جاوید لطیف نے کہا ہے کہ حمود الرحمٰن کمیشن رپورٹ اُس وقت پبلک کردی جاتی تو آج 9 مئی نہ ہوتا۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جاوید لطیف نے کہا کہ جیل کی تصویریں کسی فائیو اسٹار ہوٹل سے کم نہیں، مئی جون کے مہینے میں مجھے تو کوئی سہولت نہیں دی جاتی تھی۔

جاوید لطیف نے کہا کہ جیل میں مجھے تو مئی جون میں ایک ڈرم میں رکھا جاتا تھا، میں نے لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس قاسم خان کے سامنے فریاد کی، مجھے کہا گیا تم اداروں کے خلاف اور ایجنسیوں کے متعلق بات کرتے ہو، مجھے کہا گیا تمہیں تو سنگسار کر دینا چاہیے تھا، مجھے کہا گیا تم پابندیاں برداشت نہیں کرسکتے تو پاکستان چھوڑ دو، کیا میں پاکستانی نہیں تھا؟

جاوید لطیف نے کہا کہ میری پیشی پر تو کرفیو لگا دیا جاتا تھا، کیا پاکستان کے اندر 9 مئی کرنا جرم نہیں، کسی کو گڈ ٹو سی یو اور مجھے سیسیلین مافیا اور گاڈ فادر کہا جائے۔

انہوں نے کہا کہ منصوبہ سازوں کے نام پبلک نہیں کیے جا رہے، دعوت دے رہے ہیں دوسرا 9 مئی ہو جائے۔

ن لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ میں کہتا ہوں بانی پی ٹی آئی پر جتنے ناجائز مقدمے ہیں فوری ختم کیے جائیں، ملک کے اندر 75 سال بعد بحث ہے کہ مقبول کون اور معقول کون ہے۔

انہوں نے کہا کہ انصاف کا دُہرا معیار قائم ہو جائے تو پھر ریاست کی بقا کی فکر ہوتی ہے، بھٹو کو 45 سال بعد کہا جائے اس وقت انصاف کے تقاضے پورے نہیں کیے گئے، 10 سال بعد نوازشریف کو انصاف ملے مگر آج یہ نہ کہا جائے انصاف کے تقاضے پورے نہیں ہوئے۔

جاوید لطیف نے کہا کہ مفاہمت کا اوپن کورٹ میں کہا جا رہا ہے یہ خوشی نہیں لمحہ فکریہ ہے، ملک میں قانون تبدیل کردیں، عدت کا قانون تبدیل کردیں، کسی خاص کے لیے قانون نہیں عام کے لیے سولی پر لٹکا دو، 190ملین پاؤنڈ کوئی جرم نہیں مگر موبائل چھیننا بہت بڑا جرم ہے۔


Source
 

Altruist

Minister (2k+ posts)
He should compare the facilities given to a PM, not to a commoner like him. What was given to Nawaz Sharif vs. Imran Khan?