PM forms body to control rupee devaluation

naveed

Chief Minister (5k+ posts)


اسلام آباد/کراچی: روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قدر تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچنے کے بعد وزیراعظم عمران خان نے روپے کی قدر میں کمی پر قابو پانے کے لیے کمیٹی قائم کردی۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اجلاس میں وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ ڈاکٹر حفیظ شیخ کی سربراہی میں کمیٹی قائم کی گئی۔

اجلاس میں ایکسچینج کمپنیز ایسوسی ایشن آف پاکستان (ای سی اے پی) کے اراکین نے ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں کمی کی وجوہات سے متعلق وزیراعظم کو آگاہ کیا۔

روپے کی قدر میں کمی پر قابو پانے کے لیے تشکیل دی گئی کمیٹی میں اسٹیٹ آف پاکستان (ایس بی پی) کے گورنر بھی شامل ہیں۔

کمیٹی فیصلہ کرے گی کہ ای سی اے پی کی تجاویز کے مطابق بیرون ملک سفر کرنے والے پاکستانی کو 10 ہزار ڈالر لے جانے کی اجازت کو کم کرکے 3 ہزار ڈالر تک محدود کیا جاسکتا ہے یا نہیں۔

اجلاس کے بعد ڈان سے بات کرتے ہوئے ای سی اے پی کے صدر ملک بوستان نے کہا کہ انہوں نے اپنے وفد کے ہمراہ وزیراعظم سے بات چیت کی اور حکومت کو روپے کی قدر میں کمی پر قابو پانے کے لیے تجاویز پیش کیں۔




انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے ان کی تجاویز پر غور کیا اور یقین دہانی کروائی کہ ان کی پیش کردہ تجاویز کی روشنی میں کارروائی کی جائے گی۔

ملک بوستان نے بتایا کہ وزیراعظم نے کہا تھا کہ ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں کمی کی وجہ سے پاکستان کو دنیا کے سامنے شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا۔

ای سی اے پی کے صدر نے بتایا کہ انہوں نے وزیراعظم کو بتایا کہ ملک میں غیر ملکی زرمبادلہ کی کمی نہیں لیکن اسے منظم کرنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے وزیراعظم کو آگاہ کیا کہ گزشتہ 23 برس میں پاکستان سے ایک سو 60 ارب ڈالر باہر بھیجے گئے جبکہ ملک کا مجموعی غیر ملکی گردشی قرضہ ایک سو ارب ڈالر تھا۔

ملک بوستان نے کہا کہ ڈالر کی منتقلی کے اکثر کیسز پشاور اور کوئٹہ سے رپورٹ ہوئے تھے، انہوں نے افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کو اس مسئلے کا ذمہ دار قرار دیا۔

ای سی اے پی کے صدر کا کہنا تھا کہ جب افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کا آغاز ہوا تو اس وقت پڑوسی ملک میں کوئی کمرشل بینک نہیں تھا اس لیے مقامی برآمد کنندگان کو افغانستان سے کرنسی لانے کی اجازت تھی اور انہیں بعدازاں اس رقم کو پاکستان کے بینکوں میں جمع کروانا ہوتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ لیکن وہاں بینک کھلنے کے باوجود مقامی برآمد کنندگان افغانستان سے رقم لاتے ہیں لیکن اسے پاکستان کے بینکوں میں جمع نہیں کرواتے، اس کے بجائے وہ دبئی اور یورپی ممالک کو غیر ملکی زرمبادلہ بھیجتے ہیں۔

ملک بوستان کا کہنا تھا کہ اس ضمن میں کارروائی کرنے سے مقامی معیشت میں 2 ارب ڈالر شامل کیے جاسکیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ ای سی اے پی وفد نے وزیراعظم کو تجویز پیش کی کہ درآمدات میں کمی کی جائے اور پاکستان میں تیار کی جانے والی اشیا کی درآمد پر پابندی عائد کی جائے۔

ای سی اے پی صدر کا کہنا تھا کہ ایسا کرنے سے درآمدات کے اخراجات میں سالانہ 5 ارب سے 10 ارب ڈالر کمی آسکے گی۔

ملک بوستان نے مزید کہا کہ بیرون ملک جانے والے ہر پاکستانی کو اپنے ساتھ 10 ہزار ڈالر لے جانے کی اجازت حاصل ہے، اس رقم کو کم کرکے 3 ہزار ڈالر کیا جاسکتا ہے، ایسا کرنے سے ہم ہر سال 2 ارب ڈالر کی بچت کرسکتے ہیں۔

اسی دوران فاریکس ڈیلرز ایسوسی ایشن کے صدر شیخ علاؤالدین نے کہا کہ ملک میں ڈالر کی کمی کو روکنے کے لیے تجاویز پیش کی گئی تھی۔

اجلاس میں گورنر اسٹیٹ بینک، چیئرمین فیڈرل بورڈ آف ریونیو اور وفاقی تحقیقاتی ادارے ( ایف آئی اے )کے ڈائریکٹر جنرل شریک تھے۔

 
Advertisement

tribune.com.pk

New Member
Rupee hits all-time low of 148.5 against US dollar in inter-bank market
The drop in rupee comes a day after Prime Minister Imran Khan constituted a committed to control rupee devaluation after its free fall reaching 147 in the open market.
 

islamabadi

Minister (2k+ posts)


اسلام آباد/کراچی: روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قدر تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچنے کے بعد وزیراعظم عمران خان نے روپے کی قدر میں کمی پر قابو پانے کے لیے کمیٹی قائم کردی۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اجلاس میں وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ ڈاکٹر حفیظ شیخ کی سربراہی میں کمیٹی قائم کی گئی۔

اجلاس میں ایکسچینج کمپنیز ایسوسی ایشن آف پاکستان (ای سی اے پی) کے اراکین نے ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں کمی کی وجوہات سے متعلق وزیراعظم کو آگاہ کیا۔

روپے کی قدر میں کمی پر قابو پانے کے لیے تشکیل دی گئی کمیٹی میں اسٹیٹ آف پاکستان (ایس بی پی) کے گورنر بھی شامل ہیں۔

کمیٹی فیصلہ کرے گی کہ ای سی اے پی کی تجاویز کے مطابق بیرون ملک سفر کرنے والے پاکستانی کو 10 ہزار ڈالر لے جانے کی اجازت کو کم کرکے 3 ہزار ڈالر تک محدود کیا جاسکتا ہے یا نہیں۔

اجلاس کے بعد ڈان سے بات کرتے ہوئے ای سی اے پی کے صدر ملک بوستان نے کہا کہ انہوں نے اپنے وفد کے ہمراہ وزیراعظم سے بات چیت کی اور حکومت کو روپے کی قدر میں کمی پر قابو پانے کے لیے تجاویز پیش کیں۔




انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے ان کی تجاویز پر غور کیا اور یقین دہانی کروائی کہ ان کی پیش کردہ تجاویز کی روشنی میں کارروائی کی جائے گی۔

ملک بوستان نے بتایا کہ وزیراعظم نے کہا تھا کہ ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں کمی کی وجہ سے پاکستان کو دنیا کے سامنے شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا۔

ای سی اے پی کے صدر نے بتایا کہ انہوں نے وزیراعظم کو بتایا کہ ملک میں غیر ملکی زرمبادلہ کی کمی نہیں لیکن اسے منظم کرنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے وزیراعظم کو آگاہ کیا کہ گزشتہ 23 برس میں پاکستان سے ایک سو 60 ارب ڈالر باہر بھیجے گئے جبکہ ملک کا مجموعی غیر ملکی گردشی قرضہ ایک سو ارب ڈالر تھا۔

ملک بوستان نے کہا کہ ڈالر کی منتقلی کے اکثر کیسز پشاور اور کوئٹہ سے رپورٹ ہوئے تھے، انہوں نے افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کو اس مسئلے کا ذمہ دار قرار دیا۔

ای سی اے پی کے صدر کا کہنا تھا کہ جب افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کا آغاز ہوا تو اس وقت پڑوسی ملک میں کوئی کمرشل بینک نہیں تھا اس لیے مقامی برآمد کنندگان کو افغانستان سے کرنسی لانے کی اجازت تھی اور انہیں بعدازاں اس رقم کو پاکستان کے بینکوں میں جمع کروانا ہوتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ لیکن وہاں بینک کھلنے کے باوجود مقامی برآمد کنندگان افغانستان سے رقم لاتے ہیں لیکن اسے پاکستان کے بینکوں میں جمع نہیں کرواتے، اس کے بجائے وہ دبئی اور یورپی ممالک کو غیر ملکی زرمبادلہ بھیجتے ہیں۔

ملک بوستان کا کہنا تھا کہ اس ضمن میں کارروائی کرنے سے مقامی معیشت میں 2 ارب ڈالر شامل کیے جاسکیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ ای سی اے پی وفد نے وزیراعظم کو تجویز پیش کی کہ درآمدات میں کمی کی جائے اور پاکستان میں تیار کی جانے والی اشیا کی درآمد پر پابندی عائد کی جائے۔

ای سی اے پی صدر کا کہنا تھا کہ ایسا کرنے سے درآمدات کے اخراجات میں سالانہ 5 ارب سے 10 ارب ڈالر کمی آسکے گی۔

ملک بوستان نے مزید کہا کہ بیرون ملک جانے والے ہر پاکستانی کو اپنے ساتھ 10 ہزار ڈالر لے جانے کی اجازت حاصل ہے، اس رقم کو کم کرکے 3 ہزار ڈالر کیا جاسکتا ہے، ایسا کرنے سے ہم ہر سال 2 ارب ڈالر کی بچت کرسکتے ہیں۔

اسی دوران فاریکس ڈیلرز ایسوسی ایشن کے صدر شیخ علاؤالدین نے کہا کہ ملک میں ڈالر کی کمی کو روکنے کے لیے تجاویز پیش کی گئی تھی۔

اجلاس میں گورنر اسٹیٹ بینک، چیئرمین فیڈرل بورڈ آف ریونیو اور وفاقی تحقیقاتی ادارے ( ایف آئی اے )کے ڈائریکٹر جنرل شریک تھے۔


Yesterda IK : Anyone found selling dollar over 144 will be prosecuted
Today PTI Gov: Itself is selling dollar at 148....ye haraamzadeh hen.....apni government ko prosecute karogey ullu k pathey ?

First they critisize PML for keeping rupee strong for 5 years....now they THEMSELVES want a Strong rupee and are talking against devaluation. Ye sirf haramzadeh nahi Na Ahal haramzadeh hen....
 

islamabadi

Minister (2k+ posts)
Spend 200 Million dollars NOW to save 20 Billion in damage tomorrow. Crackdown against Hawala and Hundi is NOT the solution. Crackdown should be against SPECULATORS which are economic hitmen. The state bank is sitting like a monkey and is not dumping dollars in the market. 200 million ki khel hai.....you need a person with guts to take on speculators....not cowards like Imran Khan or Bajwa. These basterds are learning on the job....aakhir mein karna wohi parega jo isaq Dar 5 saal pehle kar chuka hai.....he DUMPED dollars in the market and caused speculators huge losses. Make an announcement that you are fixing the rate at 120 and will gradually reduce it by dumping dollars on a daily basis. You willl not require more than 200 million but save the potential loss of 20 billion later. Ye harami hen with no foresight.....you cant control dollar by giving out directions or threats....because you (PTI) are a joke. Reminds me of your bureaucrcy reforms which was "Siddhey hojao" voila hogai Bureaucracy reforms. You police reforms = "Siddhey hojao" Hogai police reforms bhi
 

khaaki

Senator (1k+ posts)
Spend 200 Million dollars NOW to save 20 Billion in damage tomorrow. Crackdown against Hawala and Hundi is NOT the solution. Crackdown should be against SPECULATORS which are economic hitmen. The state bank is sitting like a monkey and is not dumping dollars in the market. 200 million ki khel hai.....you need a person with guts to take on speculators....not cowards like Imran Khan or Bajwa. These basterds are learning on the job....aakhir mein karna wohi parega jo isaq Dar 5 saal pehle kar chuka hai.....he DUMPED dollars in the market and caused speculators huge losses. Make an announcement that you are fixing the rate at 120 and will gradually reduce it by dumping dollars on a daily basis. You willl not require more than 200 million but save the potential loss of 20 billion later. Ye harami hen with no foresight.....you cant control dollar by giving out directions or threats....because you (PTI) are a joke. Reminds me of your bureaucrcy reforms which was "Siddhey hojao" voila hogai Bureaucracy reforms. You police reforms = "Siddhey hojao" Hogai police reforms bhi
Man you are hellbent to curse this govt....and I am afraid you would hurt yourself in the process.
Why dont you raise these concerns at the right forum and to the right authorities??...May b reach out to people who are at helm of affairs ( now that they all have digital access)...at times you've good suggestions but it seems you're not routing them to the right channel.
This forum is nothing but a mere lip service....therefore my sincere suggestion is that u somehow get in touch with those who are in a close reach....AU or Hammad Azhar etc.
If you're serious in your bashing for public good , you must bring it to fruition.
 

islamabadi

Minister (2k+ posts)
Man you are hellbent to curse this govt....and I am afraid you would hurt yourself in the process.
Why dont you raise these concerns at the right forum and to the right authorities??...May b reach out to people who are at helm of affairs ( now that they all have digital access)...at times you've good suggestions but it seems you're not routing them to the right channel.
This forum is nothing but a mere lip service....therefore my sincere suggestion is that u somehow get in touch with those who are in a close reach....AU or Hammad Azhar etc.
If you're serious in your bashing for public good , you must bring it to fruition.
This is the most popular and most visited website on Pakistan politics. I have noticed alot of things i write are folllowed or discussed on tv or announced by government within few days after I post here. I wouldnt be surprised if im followed by many people in government already....
 
Sponsored Link

Featured Discussions