پاکستانیوں نے موقع موقع والوں کے بعد سکیورٹی والوں کو نشانے پر رکھ لیا

11security.jpg

آئی سی سی ٹی 20 میں آج پاکستان نے اپنے دوسرے میچ میں نیوزی لینڈ کے خلاف بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے فتح حاصل کی، فتح کے بعد ٹویٹر پر نیوزی لینڈ کی "سیکیورٹی" کے خوب چرچے ہوئے۔ ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ میں نیوزی لینڈ کے خلاف پاکستان کی مسلسل دوسری فتح کے بعد پاکستان سے سکیورٹی کا بہانہ بنا کر واپس جانے والی نیوزی لینڈ کو پاکستانی شائقین اور سوشل میڈیا صارفین نے نشانے پر رکھ لیا۔

تفصیلات کے مطابق آئی سی سی ٹی 20 ورلڈ کپ میں پاکستان نے اپنا دوسرا میچ نیوزی لینڈ کی ٹیم کے خلاف کھیلا، پہلے میچ میں بھارت کو 10 وکٹوں سے شکست دینے کے بعد پاکستان نے نیوزی لینڈ کو 5 وکٹوں سے شکست دی جس کے بعد پاکستانی صارفین نے ٹویٹر پر تبصروں کے انبار لگادیئے۔ شارجہ کرکٹ گراؤنڈ میں پاکستانی شائقین کرکٹ کے سکیورٹی، سکیورٹی کے نعرے، ویڈیوز سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئیں۔


سوشل میڈیا پر ہونے والے تبصروں کے دوران "سیکیورٹی" کا لفظ بازگشت کررہا ہےجس کے پیچھے گزشتہ ماہ سیکیورٹی خدشات کا بہانہ بنا کر پاکستان دورے پر آئی نیوزی لینڈ ٹیم کی واپسی تھی۔ صارفین کا کہنا ہے نیوزی لینڈ ٹیم نے پاکستان میں سیکیورٹی کو غیر تسلی بخش قرار دیا تھا تاہم آج شارجہ کرکٹ اسٹیڈیم میں پاکستانی ٹیم نے نیوزی لینڈ کے تمام سیکیورٹی خدشات دور کردیئے ہیں۔

مسلم لیگ ن کے صدر میاں شہباز شریف نے ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ ہم نے آپ سے گراؤنڈ کے باہر کی سیکیورٹی کا وعدہ کیا تھا مگر گراؤنڈ کے اندر آپ گرین شرٹس کی مرہون منت ہیں۔


پاکستان تحریک انصاف پنجاب کے سیکرٹری اطلاعات عثمان سعید بسرا نے کہا کہ سیکیورٹی ضبط ہوگئی۔


صحافی و تجزیہ کار ارشاد بھٹی نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کو فون کرکےکہا ہے کہ آپ آج کے سیکیورٹی انتظامات سے مطمئن ہوں گی ہمیں جب جب بھی موقع ملا آپ کو ایسی سیکیورٹی فراہم کرتے رہیں گے۔


انہوں نے نیوزی لینڈ کی جانب سے جیت کیلئے پاکستان کو دیئے گئے 135 رنز کے ہدف پر بھی دلچسپ تبصرہ کیا اور کہا کہ نیوزی لینڈ والوں کو کیا پتا کہ 135 میں تو ہم ایک لٹر پیٹرول نہیں دیتے میچ کیسے دے دیتے۔


صحافی و سیاسی مبصر انوار لودھی نے نیوزی لینڈ کرکٹ کے آفیشل ہینڈل کو اپنی ٹویٹ میں ٹیگ کرتے ہوئے کہا کہ کیا آج آپ کو سیکیورٹی مل گئی۔


صحافی احتشام الحق نے عمران خان کا ٹیگ کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم صاحب کیا آپ اپنی مبارکباد کی ٹویٹ میں نیوزی لینڈ کی ہم منصب کو ٹیگ کرسکتے ہیں؟


صحافی خنیس الرحمان نے بابراعظم اور نیوزی لینڈ ٹیم کے کپتان کا ایک کارٹون شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ سیکیورٹی معاملات طے پاجانے کے بعد ۔


بین الاقومی کرکٹ ایکسپرٹ اور سابق کرکٹر ڈیوڈ الیکس نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ ویل ڈن پاکستان ، نیوزی لینڈ کے تمام سیکیورٹی خدشات دور ہوچکے ہیں۔


ایک ٹویٹر صارف نے آج کے میچ کے بعد تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ انڈیا کی تکلیف ختم اور نیوزی لینڈ کو سیکیورٹی فراہم کردی گئی ہے اب ایسا نہ ہو افغانستان کو اچھی سیکیورٹی فراہم کرنی پڑجائے۔


سوشل میڈیا پر "کوہلی نہیں ہوتا تم سے چیز" کے بعد آج سیکیورٹی کا لفظ بھی خوب پزیرائی پاچکا ہے، گراؤنڈ میں موجود شائقین کرکٹ نے بھی نیوزی لینڈ کے فیلڈ میں موجود کھلاڑی کو دیکھ کر سیکیور ٹی سیکیورٹی کے خوب نعرے لگائے۔

 
Advertisement
Sponsored Link