شریف فیملی نے 1992 میں خود کو اور اپنی کرپشن کو بچانے کے لیے ایک قانون پاس کیا تھا-ظفر ہلالی

BrotherKantu

Chief Minister (5k+ posts)
سہی کہا ہلالی صاحب

سہی قانون تھاچوروں کے لئے .
مگر دنیا میں قانون بن گیا ہے کہ باہر کے کسی ملک میں بھی اگر آپ کے پاس پیسے ہوں تو آپ کا ملک اگر کہے کہ یہ لوٹ کا پیسہ ہے تو یہ آپ کو ثابت کرنا ہے کہ آپ کی یہ کمائی حلال کی ہے اور یہ آپ کے ملک کو ثابت نہیں کرنا.
اسی قانون کے تحت ملک ریاض کے جس پیسے کو بھی ہماری حکومت نے چلینج کیا ہے اور ملک ریاض ثابت نہیں کر سکا وہ پاکستان کو مل گئے ہیں باقی دولت بھی واپس آ جاۓ گئی.


.
 

Wake up Pak

Chief Minister (5k+ posts)
‏ایک پٹواری کے گھر مہمان آیا
کھانا کھایا اور جاتے ہوئے ایک تھپڑ لگا گیا
پٹواری: “کھاتا ہے تو لگاتا بھی ہے”
پٹواری کی خوشی چھپائے نہ چھپی تو
میاں صاحب کی یاد میں
دوسرا گال بھی آگے کر دیا?
 

Penthouse_Pirates

Councller (250+ posts)

جو لوگ امرتسر کی رام گلی سے بھڑوا گیری شروع کریں

بھڑوا گیری سے لوھاری،، اور لوھاری سے
اور اپنی چالاکی، اور نو سر بازی سے قصرِ اقتدار تک پہنچ جائیں

اُنکی مکّاری، اور عیّاری کا اندازہ آپ خود لگائیں

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
یہ لوگ کرپشن کے نظام کے بانی ہیں،،انجنئیر ہیں
 
Sponsored Link

Featured Discussion Latest Blogs اردوخبریں