حکومت نے ایک سال میں ہزاروں ارب روپے کا ریکارڈ قرض لے لیا

loan-govt-shehbaz-pak-one.jpg


وفاقی حکومت نے ایک سال کے دوران 14900ارب روپے کے قرضے لے کر نیا ریکارڈ قائم کردیا،اسٹیٹ بینک نے ملک پر اندرونی اور بیرونی قرضوں کے اعداد و شمار جاری کردیئے، اپریل2022 میں ملک پر مجموعی قرض کا حجم 43705 ارب روپے تھا جو اپریل 2023 میں غیرمعمولی طور پر بڑھ کر 58599 ارب روپے تک جاپہنچا۔

وفاقی حکومت نے ایک سال کے عرصے میں 14900 ارب روپے کا ریکارڈ قرضہ لیا، یعنی 41 ارب روپے یومیہ قرض لیا گیا،مرکزی بینک کے مطابق حکومت نے ایک سال میں مجموعی ملکی قرض کا 34 فیصد قرضہ لیا، صرف اپریل 2023 میں 1476 ارب روپے کے ریکارڈ قرضے لیے گئے، اپریل میں بیرونی قرضے نہ ملنے کے باعث 99 فیصد قرضے مقامی ذرائع سے لیے گئے۔

اعداد وشمار کے مطابق ایک سال میں ملک پر واجب الادا بیرونی قرض 7259 ارب روپے بڑھ کر 22050 ارب روپے ہوگیا،اسی سال کی مدت میں اندرونی قرض 7635 ارب روپے بڑھ کر36549 ارب روپے کی سطح پر پہنچ گیا۔
 

ranaji

President (40k+ posts)
عا صم منیر نے بھی باجوے حرام دے کی طرح اپنا اثاثے اربوں ڈالر میں بنانے ہیں جس حرامی کی بہو اس کی شادی سے پہلے ارب پتئ بن گئی تھی ایک حرامی کباڑئے کی دوٹکے کی بیٹی یہ ایف پاس فراڈئے جنکی اہلیت چپراسی سے بدتر ہے لوٹ لوٹ کر کھر ب پتئ بن جاتے ہیں جب لڑائی کا وقت آئے جس کے لئے انہیں پالا گیا ہے تو یہ اپنی پتلون دشمن سے اتروا کر کت پریڈ کراکے ہتھیار پھینک دیتے ہیں