پنجاب حکومت نے سکولوں میں تمام طلبہ کو مفت کتابوں کی فراہمی روک دی

11punjaddmmfrrrbooks.png

پنجاب میں سرکاری اسکولوں کے طلباء کو مفت نصاب کیسے فراہم کیا جائے گا ؟ اس حوالے سے ضابطہ اخلاق جاری کردیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ تعلیم پنجاب نے نرسری سے تیسری (سوئم) کلاس تک کے طلبہ و طالبات کو مفت نصاب دینے کے حوالے سے ضابطہ اخلاق جاری کردیا ہےجس کے مطابق نرسری سے تیسری جماعت تک کے طلبہ و طالبات کو 100 فیصد کتابیں مفت ملیں گی ۔

اس کے علاوہ چہارم اور پنجم کے طلباء کو 80 فیصد جبکہ ششم سے دہم کلاس کے طلبہ و طالبات کو 50 فیصدکتابیں فراہم کی جائیں گی، طلباء کو کتابوں کی فراہمی انرولمنٹ کے مطابق کی جائے گی۔

اس حوالے سے سیکرٹری اسکول ایجوکیشن کی جانب سے ایک مراسلہ جاری کیا گیا ہے جس میں صوبے کے تمام ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹیز کے چیف ایگزیکٹیو کو کہا گیا ہے کہ وہ پالیسی کے مطابق طلباء کو کتابیں فراہم کریں اور پالیسی کے مطابق طلباء کو بقیہ کتابیں اسکول کی جانب سے فراہم کی جائیں گی۔


اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ سرکاری اسکولوں کے اساتذہ کو ہدایات دی گئی ہیں کہ اگلی کلاسوں میں پروموٹ ہونے والے طلباء کو پرانی کتابیں واپس کرنے کے احکامات جاری کی جائیں تاکہ مڈل اور ہائی اسکول کے طلبہ کو بھی 100 فیصد کتابوں کی فراہمی یقینی بنائی جاسکے۔

محکمہ تعلیم نے اسکولوں کے سربراہان کو اسکولوں کے اندر اولڈ بک بنک قائم کرنے کی بھی ہدایات دی ہیں کہاں پرانی کتابیں جمع کی جائیں گی تاکہ ضرورت پڑنے پرطلباء کو بک بینک سے کتابیں فراہم کی جاسکیں۔

https://twitter.com/x/status/1775472973404655937
 
Last edited by a moderator:

zaheer2003

Chief Minister (5k+ posts)
اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ سرکاری اسکولوں کے اساتذہ کو ہدایات دی گئی ہیں کہ اگلی کلاسوں میں پروموٹ ہونے والے طلباء کو پرانی کتابیں واپس کرنے کے احکامات جاری کی جائیں تاکہ مڈل اور ہائی اسکول کے طلبہ کو بھی 100 فیصد کتابوں کی فراہمی یقینی بنائی جاسکے۔
Because we have money only to be spent on Mercedes Tires and interior
 

sensible

Chief Minister (5k+ posts)
پنجاب کے لوگ پڑھ کر نون لیگ کے لئے بہتر ثابت نہیں ہوئے اس لئے فورا سکول بند کرنے پڑیں گے