کیا قرضوں ، کرنسی اور معشیت پر عمران خان قوم کو اعتماد میں لیں گے ؟

Syed Haider Imam

Chief Minister (5k+ posts)
کیا قرضوں ، کرنسی اور معشیت پر عمران خان قوم کو اعتماد میں لیں گے ؟

zero-tolerance.png

سید حیدر امام - ٹورنٹو - کینیڈا

٢٠١٨ کے الیکشن میں عمران خان کو ایک بنانا ریپلک کا وزیراعظم اس وقت بنایا گیا جب ریاست مکمل طور پر دیوالیہ ہو چکی تھی ،انتظامیہ مکمل مافیہ کی شکل میں تھی اور اسحاق ڈار نے نئی حکومت کے لئے جا بجا لینڈ مائنز بچھا چھوڑی تھی. اسحاق ڈار کو حالات کا مکمل ادارک تھا لھذا انہوں نے فوری طور پر ملک چھوڑ کر اپنے سیف ہیون میں پناہ لے کر آجکل اپنے مشوروں سے ریاست پاکستان کو نواز رہے ہیں . عمران خان کے معاونین خصوصی جہانگیر خان ترین نے عمران خان کو نظریاتی کارکنوں کی بجاۓ ابنلوقت سیاستدانوں کے ساتھ اسمبلی میں بھیجا . ایک ناکام حکومت کو چلانے کے لئے عمران خان ٩ ماہ بعد بھی ناکام ہیں کیونکے ریاستی مشینری کنٹرول سے باہر ہو چکی ہے . پروپوگنڈا مشینوں میں ایک مرتبہ پھر حرکت پڑ چکی ہیں اور مہنگائی کا رنڈی رونا رو کر عمران خان کے خلاف ایک محاذ کھڑا کیا جا چکا ہے . پاکستان کی ریاست کو بیشمار مشکلات کا سامنا ہے مگر منظم "پروپوگنڈا " صرف مہنگائی کا کیا جا رہا ہے . جب پیپلز پارٹی کی حکومت تھی تو مسلم لیگ خاموش تماشائی بنی رہی . جب مسلم لیگ نون کی حکومت تھی پیپلز پارٹی خاموش رہی . ١٠ سالہ دور میں خاموشی کی وجہ سے پاکستان دیوالیہ ہو گیا . عمران خان نے بطور اپوزیشن اپنی ڈیوٹی بطریق احسن نبھائی اور قوم کو شعور دیتے رہے لھذا وہ شعوری کوشش میں بھی کر رہا ہوں. آپلوگوں کے سامنے حقائق رکھ رہا ہوں ، فیصلہ اپ خود کریں

کیا انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ ایک ناسور ہے ؟

پاکستان میڈیا پر عمران خان کے کلپس اپنے دیکھے ہوں گے کے وہ کسطرح انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ کے خلاف تھے اور کسطرح وہ اکنامک ہٹ مین سے ڈراتے تھے . پاکستان کے میڈیا نے آپکو نہیں بتایا کے عمران خان وہ تقاریر کس موقع پر کیا کرتے تھے . میں آپکو بتاتا ہوں . نواز شریف نے بطور وزیراعظم ٥ جون ٢٠١٣ کو تیسری مرتبہ حلف لیا تھا . اس وقت قومی خزانے میں صرف ٦ بلین ڈالر رہ گئے تھے جو محض ٦ ہفتوں کو امپورٹ کو کوور کر سکتے تھے . اسحاق ڈار نے ٦ جولائی ٢٠١٣ کو ٥.٣ بلین ڈالر کے بیل اوٹ پیکج کے لئے انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ سے رجوع کیا تھا



مسلم لیگ نون کے اسحاق ڈار نے کیسے پاکستان کو دیوالیہ کیا ؟


آج پوری مسلم لیگی اور زرداری قیادت چیخ چیخ کر لوگوں کو بتا رہی ہے کے تحریک انصاف نے ملک کو انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ کے پاس گروی رکھ رہی ہے . کیا پاکستانی میڈیا نے یہ سادہ حقیقت لوگوں کو بتائی ؟

کیا پاکستانی میڈیا نے لوگوں کو بتایا کے عمران خان بطور اپوزیشن کب وہ تقاریر کی تھیں؟
کیا مسلم لیگی سیاستدانوں نے بتایا کے ٢٠١٣ میں پیپلز پارٹی اپنی حکومت کن حالات میں چھوڑ کر گئی تھے جسکی وجہ سے وہ الیکشن ہارے تھے ؟



اب اگے چلتے ہیں ، ڈاکٹر معید پیرزادہ کا یہ کلپ سنیں . وہ فرماتے ہیں کے ٢٠١٦ میں پاکستان انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ سے نکلنے کے بعد مالیاتی ڈسپلن کی سختیاں جیسے ہی ختم ہوئی ، اسحاق ڈار نے امپورٹ ( ڈالر کی روانگی ) کو ٦٣ بلین ڈالر تک پونھچا دیا جبکے ایکسپورٹ ( ڈالر کی آمد ) محض ٢٠ بلین ڈالر تھی . اس فرق کی وجہ سے معشیت میں بیلنس اوف پیمنٹ کے مسائل آئے جو ١٣.٦ فیصد مہنگے قرضے لے کر پورے کے گئے . پاکستان کا مالیاتی خسارہ پیپلز پارٹی کے دور میں محض ٢ ارب ڈالر تھا جو بڑھ کر ٢٠ ارب ڈالر تک جا پونھچا . ایک اور کلپ دیکھ لیں جس میں کاشف عباسی کسطرح محمد زبیر کو رگڑ رہے ہیں
.
کاشف عباسی اور محمد زبیر




تو پھر اگر دو ارب ڈالر کا خسارہ آپنے بیس ارب ڈالر پر پہنچا دیا اور پھر بھی آپ کہتے ہیں آپ کامیاب تھے، تو یہ حکومت آٹھ مہینے میں ناکام کیسے ہوگئی؟

اگر مسلم لیگ کی حکومت پیپلز پارٹی کی ناکامی کی وجہ سے انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ سے ٥.٣ بلین ڈالر قرض لے تو وہ حلال ، اگر عمران خان کو اسحاق ڈار کی بچھائی لینڈ مائنز کی وجہ سے قرض لینے جائیں تو وہ حرام ؟

ارشد شریف اور ڈاکٹر اشفاق حسن




ڈاکٹر اشفاق حسن کا یہ کلپ دیکھیں اور فیصلہ کریں کے کسطرح اسحاق ڈار نے مستقبل کی حکومت کو ناکام کرنے کے لئے منصوبہ بندی کی تھی . ڈاکٹر اشفاق حسن مسلسل ٹیلی ویژن ٹالک شوز میں حکومت کو مشورہ دیتے نظر آئے کے وہ انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ کے چنگل میں مت پھنسیں . آخر کار ارشد شریف نے ڈاکٹر صاحب سے پوچھ ہی لیا کے ...کیا اپ نے عمران کو کوئی مشورہ دیا تھا ؟

جس کے جواب میں ڈاکٹر صاحب نے امپورٹ کم کرنے کی بات کی جو اسد عمر پہلے کر چکے تھے جسکی وجہ سے پاکستان کا تجارتی خسارہ صرف ٢ ارب ڈالر حالیہ دنوں میں کم ہوا ہے . یہ سوال نہیں پوچھا گیا کے قرضوں کی واپسی ٢٧ ارب ڈالر ہے تو باقی فرق کہاں سے پورا ہو گا ؟

انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ کو ناسور کہا جا رہا ہے . بطور طالب علم چند باتیں توجہ طلب ہیں

١- پاکستان کی ریاست ٢١ مرتبہ یہ پروگرام لیا . اس پروگرام میں کوئی بھی قومی اثاثہ گروی نہیں رکھوایا جاتا بلکے مالیاتی ڈسپلن کا ایک مکمل پلان دیا جاتا ہے . ہم نے دیکھا کے پروگرام سے نکلتے ہی اسحاق ڈار نے کیسے پاکستان کی معشیت کو تباہ کیا
٢- یہ قرض ملکی کریڈٹ ریٹنگ کو مدنظر رکھ کر نہیں دیا جاتا جسکی وجہ سے شرح سود انتہائی کم (٣ فیصد تک ) ہوتا ہے . مارکیٹ میں پاکستان کو ١٤ فیصد سود ادا کرنا پڑ رہا ہے
٣ – انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ کے پاس ممالک اس وقت جاتے ہیں جب انکو کوئی قرض دینے والا کوئی نہیں ہوتا اور فارن ریزرو امپورٹ کی ضروریات کے لئے ناکافی ہوں
٤- ماہرین معشیت انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ کو اسلئے پسند نہیں کرتے کیونکے فنڈ صرف ٹیکس کی وصولی کو یقینی بنتا ہے ، ملکی گروتھ کا اس سے کوئی واسطہ نیہں ہوتا جسکی وجہ سے ملک میں مہنگائی اور بیروزگاری بڑھ جاتی ہے
٥- یہ انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ ہی ہے جو تمام وزیرخزانہ کی شماریاتی گھپلوں کا کھوج نکالتی ہے جسکی وجہ سے پاکستان کو ٩ ارب روپے کا جرمانہ ہوا تھا جو شوکت عزیز نے اپنے نمبر بنانے کے چکر میں فوری ادا کر دیا تھا

وزیراعظم نے الیکشن جیتنے کے لئے اپنی سیاسی تقاریر میں کیا کہا تھا ، اسٹیٹ مشینری کو اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا .وہ وزیراعظم کو صاف صاف بتا تی ہے کے ، بھائی صاحب اسکے علاوہ کوئی چارہ نہیں ہے . وزیراعظم کو بھی فرق نہیں پڑتا کے وزیر خزانہ کون ہوں کیونکے یہ پروگرام انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ ایک ریاست کو اپنی شرائط منوا کر دیتا ہے ، فرد واحد کو نہیں

فیڈرل بورڈ وف ریونیو میں گھپلے اور عمران خان کی ناکامی

مالی سال ٢٠١٧ – ٢٠١٨ میں فیڈرل بورڈ وف ریوینو کو ٤٠٠٠ ارب روپیہ اکھٹا کرنے کو کہا گیا تھا . اسحاق ڈار جسے انگلش اخبارات کے صحافی جادوگر کا لقب دیتے ہیں ، انہوں نے ایکسپورٹس ریفنڈ کو بلاگ کر کے شماریاتی حساب میں گھپلہ کیا جسکا خمیازہ بھی تحریک انصاف کو بھگتنا ہو گا . اس گھپلے کے نتیجے میں اسحاق ڈار نے فیڈرل بورڈ وف ریوینو کے ملازمین کو بیشمار بونسز دئے . پاکستان میں ہر تاجر کو ٹیکس دینے کے لئے کہا جاتا ہے مگر زیادہ تر رقم ٹیکس آفیسرز کے جیب میں جاتی ہے اور بہت کم رقم حکومت کے کھاتے میں جاتی ہے . یہی وہ وجوہات ہیں جسکی وجہ سے ٹیکس چوری ہوتی ہے اور بینامی جائیداد بنتی ہیں ٹی ٹی کر کاروبار فروخ پتا ہے . یہی وجہ ہے کے حکومتیں ٹیکس امنیسٹی کا پروگرام لے کر اتی ہیں تاکے فوری مال اکھٹا ہو . فیڈرل بورڈ وف ریوینو کے ملازمین نے بھی عمران خان کی تمام حکمت عملی پر بغاوت کر چکی ہے جسکی وجہ سے معاشی مسائل ایک خطرناک بحران کا روپ اختیار کر چکی ہے

اسٹاک مارکیٹ اور کرنسی مارکیٹ میں پینک کیوں ہے ؟

پاکستان کی سیاسی حکومت اور اسٹیٹ مشینر ی آمنے سامنے کھڑی ہو گئی ہے. وزیراعظم عمران خان کو پاکستان کے ذمے پہلے تین سالوں میں قرض ٤٠ بلین ڈالر کر ادا کرنا ہے . حکومت پہلے نو ماہ میں میں ١٣ ارب ڈالر کے قریب دے چکی ہے جبکے ٢٧ ارب ڈالر دینا باقی ہیں . عمومی طور پر حکومتوں کے قرض طویل مدتی ہوتے ہیں . پاکستان کی تاریخ میں اتنا بڑا قرض اتنی جلدی کبھی بھی واجب الادا نہیں ہوا ہے . انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ نے پاکستان کو بیل اوٹ پیکج نہیں دیا ہے کیونکے پاکستان کی ضروریات اس سے کہیں زیادہ ہیں . پاکستان کو قرضوں کی واپسی کے علاوہ امپورٹ کے بل کے لئے بھی ڈالر درکار ہیں . عام آدمی اور میڈیا کے لوگوں میں فہم نہیں ہے مگر جو لوگ مارکیٹ میں کام کرتے ہیں انھیں اندازہ ہے کے پاکستان کی سمت کدھر جا رہی ہے


میں نے اپنے آخری بلاگ میں وزیراعظم عمران خان سے یہ مطالبہ کیا تھا کے وزیراعظم عمران خان پاکستانی قوم کو قرضوں اور روپے کی بے قدری پر اعتماد میں لیں . میری دانست میں نہ وزیراعظم ایسا کریں گے اور نہ انکے خزانہ کے مشیر . آخر ایسا کرنے میں کیا امر مانع ہو سکتا ہے ؟

پاکستان کے قرضوں کو مکمل صیغہ راز میں رکھا گیا ہے . ہمیں نہیں پتا کے کے ہم نے ملکوں کے طویل مدتی قرضے کتنے اور کن شرائط کے تحت دینے ہیں . ہمیں نہیں پتا کے کم مدتی قرضوں کا کیا حجم ہے . اگر پاکستان کے وزیراعظم یہ پینڈورا باکس کھولتے ہیں تو پاکستان کی مارکیٹ میں مزید پینک پیدا ہو گا . بدقسمتی سے پاکستان کی زرد صحافت میں اردو میڈیم کے صحافیوں نے صحافت کو ایک گالی بنا دیا ہے . سوشل میڈیا پر جب لوگ انھیں گالیاں دیتے ہیں تو وہ ناراض ہوتے ہیں . جہاں پاکستان کے لوگوں کو حقائق بتانے چاہئے وہ عمران خان کی ناکامی کو گن گن کر بتا رہے ہیں . عمران خان کی ناکامی پاکستان کی ناکامی ہے. انگلش میڈیم میڈیا گزشتہ پانچ سالوں سے مستقل قرضوں پر قوم کو اگاہ کر رہا تھا . میں نے خود ملکی اور صوبائی قرضوں پر مستقل تھریڈ بنائے ہیں . پاکستان مسلم لیگ ، زرداری گروپ اور میڈیا جنتا عمران خان کو ناکام گردانیں گے ، باقی چار انگلیاں انکی طرف ہی اشارہ کریں گی . ایک طرف عمران خان اور دوسری طرف مافیہ ، اب اپ رؤف کلاسرہ صاحب کا کالم پڑھیں اور اندازہ کریں گے سب زیادہ خطرہ بیرونی ہے یا اندرونی ؟
 
Last edited:

Syed Haider Imam

Chief Minister (5k+ posts)
ریاست کے پانچوں ستون ٧٠ سالوں سے ریاست پاکستان کو مسلسل ناکام کر رہے ہیں ، عمران خان محض ٩ ماہ میں ایک ناکام ریاست کو مزید کتنا ناکام کر سکتا ہے ؟




image.jpg
 
Last edited:

There is only 1

Chief Minister (5k+ posts)
حالات اتنے خراب نہیں ہیں جتنے بیان کیے جا رہے ہیں
ڈالر کے مقابلے میں روپے کو پہلے بھی مار پڑتی رہی ہے اور لوگ گزارا کرتے رہے ہیں اس وقت بس میڈیا نے اٹ مچائی ہوئی ہے
.

 

Dr Adam

Prime Minister (20k+ posts)
کیا قرضوں ، کرنسی اور معشیت پر عمران خان قوم کو اعتماد میں لیں گے ؟

zero-tolerance.png

سید حیدر امام - ٹورنٹو - کینیڈا

٢٠١٨ کے الیکشن میں عمران خان کو ایک بنانا ریپلک کا وزیراعظم اس وقت بنایا گیا جب ریاست مکمل طور پر دیوالیہ ہو چکی تھی ،انتظامیہ مکمل مافیہ کی شکل میں تھی اور اسحاق ڈار نے نئی حکومت کے لئے جا بجا لینڈ مائنز بچھا چھوڑی تھی. اسحاق ڈار کو حالات کا مکمل ادارک تھا لھذا انہوں نے فوری طور پر ملک چھوڑ کر اپنے سیف ہیون میں پناہ لے کر آجکل اپنے مشوروں سے ریاست پاکستان کو نواز رہے ہیں . عمران خان کے معاونین خصوصی جہانگیر خان ترین نے عمران خان کو نظریاتی کارکنوں کی بجاۓ ابنلوقت سیاستدانوں کے ساتھ اسمبلی میں بھیجا . ایک ناکام حکومت کو چلانے کے لئے عمران خان ٩ ماہ بعد بھی ناکام ہیں کیونکے ریاستی مشینری کنٹرول سے باہر ہو چکی ہے . پروپوگنڈا مشینوں میں ایک مرتبہ پھر حرکت پڑ چکی ہیں اور مہنگائی کا رنڈی رونا رو کر عمران خان کے خلاف ایک محاذ کھڑا کیا جا چکا ہے . پاکستان کی ریاست کو بیشمار مشکلات کا سامنا ہے مگر منظم "پروپوگنڈا " صرف مہنگائی کا کیا جا رہا ہے . جب پیپلز پارٹی کی حکومت تھی تو مسلم لیگ خاموش تماشائی بنی رہی . جب مسلم لیگ نون کی حکومت تھی پیپلز پارٹی خاموش رہی . ١٠ سالہ دور میں خاموشی کی وجہ سے پاکستان دیوالیہ ہو گیا . عمران خان نے بطور اپوزیشن اپنی ڈیوٹی بطریق احسن نبھائی اور قوم کو شعور دیتے رہے لھذا وہ شعوری کوشش میں بھی کر رہا ہوں. آپلوگوں کے سامنے حقائق رکھ رہا ہوں ، فیصلہ اپ خود کریں

کیا انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ ایک ناسور ہے ؟

پاکستان میڈیا پر عمران خان کے کلپس اپنے دیکھے ہوں گے کے وہ کسطرح انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ کے خلاف تھے اور کسطرح وہ اکنامک ہٹ مین سے ڈراتے تھے . پاکستان کے میڈیا نے آپکو نہیں بتایا کے عمران خان وہ تقاریر کس موقع پر کیا کرتے تھے . میں آپکو بتاتا ہوں . نواز شریف نے بطور وزیراعظم ٥ جون ٢٠١٣ کو تیسری مرتبہ حلف لیا تھا . اس وقت قومی خزانے میں صرف ٦ بلین ڈالر رہ گئے تھے جو محض ٦ ہفتوں کو امپورٹ کو کوور کر سکتے تھے . اسحاق ڈار نے ٦ جولائی ٢٠١٣ کو ٥.٣ بلین ڈالر کے بیل اوٹ پیکج کے لئے انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ سے رجوع کیا تھا



مسلم لیگ نون کے اسحاق ڈار نے کیسے پاکستان کو دیوالیہ کیا ؟


آج پوری مسلم لیگی اور زرداری قیادت چیخ چیخ کر لوگوں کو بتا رہی ہے کے تحریک انصاف نے ملک کو انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ کے پاس گروی رکھ رہی ہے . کیا پاکستانی میڈیا نے یہ سادہ حقیقت لوگوں کو بتائی ؟

کیا پاکستانی میڈیا نے لوگوں کو بتایا کے عمران خان بطور اپوزیشن کب وہ تقاریر کی تھیں؟
کیا مسلم لیگی سیاستدانوں نے بتایا کے ٢٠١٣ میں پیپلز پارٹی اپنی حکومت کن حالات میں چھوڑ کر گئی تھے جسکی وجہ سے وہ الیکشن ہارے تھے ؟



اب اگے چلتے ہیں ، ڈاکٹر معید پیرزادہ کا یہ کلپ سنیں . وہ فرماتے ہیں کے ٢٠١٦ میں پاکستان انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ سے نکلنے کے بعد مالیاتی ڈسپلن کی سختیاں جیسے ہی ختم ہوئی ، اسحاق ڈار نے امپورٹ ( ڈالر کی روانگی ) کو ٦٣ بلین ڈالر تک پونھچا دیا جبکے ایکسپورٹ ( ڈالر کی آمد ) محض ٢٠ بلین ڈالر تھی . اس فرق کی وجہ سے معشیت میں بیلنس اوف پیمنٹ کے مسائل آئے جو ١٣.٦ فیصد مہنگے قرضے لے کر پورے کے گئے . پاکستان کا مالیاتی خسارہ پیپلز پارٹی کے دور میں محض ٢ ارب ڈالر تھا جو بڑھ کر ٢٠ ارب ڈالر تک جا پونھچا . ایک اور کلپ دیکھ لیں جس میں کاشف عباسی کسطرح محمد زبیر کو رگڑ رہے ہیں
.
کاشف عباسی اور محمد زبیر




تو پھر اگر دو ارب ڈالر کا خسارہ آپنے بیس ارب ڈالر پر پہنچا دیا اور پھر بھی آپ کہتے ہیں آپ کامیاب تھے، تو یہ حکومت آٹھ مہینے میں ناکام کیسے ہوگئی؟

اگر مسلم لیگ کی حکومت پیپلز پارٹی کی ناکامی کی وجہ سے انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ سے ٥.٣ بلین ڈالر قرض لے تو وہ حلال ، اگر عمران خان کو اسحاق ڈار کی بچھائی لینڈ مائنز کی وجہ سے قرض لینے جائیں تو وہ حرام ؟

ارشد شریف اور ڈاکٹر اشفاق حسن




ڈاکٹر اشفاق حسن کا یہ کلپ دیکھیں اور فیصلہ کریں کے کسطرح اسحاق ڈار نے مستقبل کی حکومت کو ناکام کرنے کے لئے منصوبہ بندی کی تھی . ڈاکٹر اشفاق حسن مسلسل ٹیلی ویژن ٹالک شوز میں حکومت کو مشورہ دیتے نظر آئے کے وہ انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ کے چنگل میں مت پھنسیں . آخر کار ارشد شریف نے ڈاکٹر صاحب سے پوچھ ہی لیا کے ...کیا اپ نے عمران کو کوئی مشورہ دیا تھا ؟

جس کے جواب میں ڈاکٹر صاحب نے امپورٹ کم کرنے کی بات کی جو اسد عمر پہلے کر چکے تھے جسکی وجہ سے پاکستان کا تجارتی خسارہ صرف ٢ ارب ڈالر حالیہ دنوں میں کم ہوا ہے . یہ سوال نہیں پوچھا گیا کے قرضوں کی واپسی ٢٧ ارب ڈالر ہے تو باقی فرق کہاں سے پورا ہو گا ؟

انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ کو ناسور کہا جا رہا ہے . بطور طالب علم چند باتیں توجہ طلب ہیں

١- پاکستان کی ریاست ٢١ مرتبہ یہ پروگرام لیا . اس پروگرام میں کوئی بھی قومی اثاثہ گروی نہیں رکھوایا جاتا بلکے مالیاتی ڈسپلن کا ایک مکمل پلان دیا جاتا ہے . ہم نے دیکھا کے پروگرام سے نکلتے ہی اسحاق ڈار نے کیسے پاکستان کی معشیت کو تباہ کیا
٢- یہ قرض ملکی کریڈٹ ریٹنگ کو مدنظر رکھ کر نہیں دیا جاتا جسکی وجہ سے شرح سود انتہائی کم (٣ فیصد تک ) ہوتا ہے . مارکیٹ میں پاکستان کو ١٤ فیصد سود ادا کرنا پڑ رہا ہے
٣ – انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ کے پاس ممالک اس وقت جاتے ہیں جب انکو کوئی قرض دینے والا کوئی نہیں ہوتا اور فارن ریزرو امپورٹ کی ضروریات کے لئے ناکافی ہوں
٤- ماہرین معشیت انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ کو اسلئے پسند نہیں کرتے کیونکے فنڈ صرف ٹیکس کی وصولی کو یقینی بنتا ہے ، ملکی گروتھ کا اس سے کوئی واسطہ نیہں ہوتا جسکی وجہ سے ملک میں مہنگائی اور بیروزگاری بڑھ جاتی ہے
٥- یہ انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ ہی ہے جو تمام وزیرخزانہ کی شماریاتی گھپلوں کا کھوج نکالتی ہے جسکی وجہ سے پاکستان کو ٩ ارب روپے کا جرمانہ ہوا تھا جو شوکت عزیز نے اپنے نمبر بنانے کے چکر میں فوری ادا کر دیا تھا

وزیراعظم نے الیکشن جیتنے کے لئے اپنی سیاسی تقاریر میں کیا کہا تھا ، اسٹیٹ مشینری کو اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا .وہ وزیراعظم کو صاف صاف بتا تی ہے کے ، بھائی صاحب اسکے علاوہ کوئی چارہ نہیں ہے . وزیراعظم کو بھی فرق نہیں پڑتا کے وزیر خزانہ کون ہوں کیونکے یہ پروگرام انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ ایک ریاست کو اپنی شرائط منوا کر دیتا ہے ، فرد واحد کو نہیں

فیڈرل بورڈ وف ریونیو میں گھپلے اور عمران خان کی ناکامی

مالی سال ٢٠١٧ – ٢٠١٨ میں فیڈرل بورڈ وف ریوینو کو ٤٠٠٠ ارب روپیہ اکھٹا کرنے کو کہا گیا تھا . اسحاق ڈار جسے انگلش اخبارات کے صحافی جادوگر کا لقب دیتے ہیں ، انہوں نے ایکسپورٹس ریفنڈ کو بلاگ کر کے شماریاتی حساب میں گھپلہ کیا جسکا خمیازہ بھی تحریک انصاف کو بھگتنا ہو گا . اس گھپلے کے نتیجے میں اسحاق ڈار نے فیڈرل بورڈ وف ریوینو کے ملازمین کو بیشمار بونسز دئے . پاکستان میں ہر تاجر کو ٹیکس دینے کے لئے کہا جاتا ہے مگر زیادہ تر رقم ٹیکس آفیسرز کے جیب میں جاتی ہے اور بہت کم رقم حکومت کے کھاتے میں جاتی ہے . یہی وہ وجوہات ہیں جسکی وجہ سے ٹیکس چوری ہوتی ہے اور بینامی جائیداد بنتی ہیں ٹی ٹی کر کاروبار فروخ پتا ہے . یہی وجہ ہے کے حکومتیں ٹیکس امنیسٹی کا پروگرام لے کر اتی ہیں تاکے فوری مال اکھٹا ہو . فیڈرل بورڈ وف ریوینو کے ملازمین نے بھی عمران خان کی تمام حکمت عملی پر بغاوت کر چکی ہے جسکی وجہ سے معاشی مسائل ایک خطرناک بحران کا روپ اختیار کر چکی ہے

اسٹاک مارکیٹ اور کرنسی مارکیٹ میں پینک کیوں ہے ؟

پاکستان کی سیاسی حکومت اور اسٹیٹ مشینر ی آمنے سامنے کھڑی ہو گئی ہے. وزیراعظم عمران خان کو پاکستان کے ذمے پہلے تین سالوں میں قرض ٤٠ بلین ڈالر کر ادا کرنا ہے . حکومت پہلے نو ماہ میں میں ١٣ ارب ڈالر کے قریب دے چکی ہے جبکے ٢٧ ارب ڈالر دینا باقی ہیں . عمومی طور پر حکومتوں کے قرض طویل مدتی ہوتے ہیں . پاکستان کی تاریخ میں اتنا بڑا قرض اتنی جلدی کبھی بھی واجب الادا نہیں ہوا ہے . انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ نے پاکستان کو بیل اوٹ پیکج نہیں دیا ہے کیونکے پاکستان کی ضروریات اس سے کہیں زیادہ ہیں . پاکستان کو قرضوں کی واپسی کے علاوہ امپورٹ کے بل کے لئے بھی ڈالر درکار ہیں . عام آدمی اور میڈیا کے لوگوں میں فہم نہیں ہے مگر جو لوگ مارکیٹ میں کام کرتے ہیں انھیں اندازہ ہے کے پاکستان کی سمت کدھر جا رہی ہے


میں نے اپنے آخری بلاگ میں وزیراعظم عمران خان سے یہ مطالبہ کیا تھا کے وزیراعظم عمران خان پاکستانی قوم کو قرضوں اور روپے کی بے قدری پر اعتماد میں لیں . میری دانست میں نہ وزیراعظم ایسا کریں گے اور نہ انکے خزانہ کے مشیر . آخر ایسا کرنے میں کیا امر مانع ہو سکتا ہے ؟

پاکستان کے قرضوں کو مکمل صیغہ راز میں رکھا گیا ہے . ہمیں نہیں پتا کے کے ہم نے ملکوں کے طویل مدتی قرضے کتنے اور کن شرائط کے تحت دینے ہیں . ہمیں نہیں پتا کے کم مدتی قرضوں کا کیا حجم ہے . اگر پاکستان کے وزیراعظم یہ پینڈورا باکس کھولتے ہیں تو پاکستان کی مارکیٹ میں مزید پینک پیدا ہو گا . بدقسمتی سے پاکستان کی زرد صحافت میں اردو میڈیم کے صحافیوں نے صحافت کو ایک گالی بنا دیا ہے . سوشل میڈیا پر جب لوگ انھیں گالیاں دیتے ہیں تو وہ ناراض ہوتے ہیں . جہاں پاکستان کے لوگوں کو حقائق بتانے چاہئے وہ عمران خان کی ناکامی کو گن گن کر بتا رہے ہیں . عمران خان کی ناکامی پاکستان کی ناکامی ہے. انگلش میڈیم میڈیا گزشتہ پانچ سالوں سے مستقل قرضوں پر قوم کو اگاہ کر رہا تھا . میں نے خود ملکی اور صوبائی قرضوں پر مستقل تھریڈ بنائے ہیں . پاکستان مسلم لیگ ، زرداری گروپ اور میڈیا جنتا عمران خان کو ناکام گردانیں گے ، باقی چار انگلیاں انکی طرف ہی اشارہ کریں گی . ایک طرف عمران خان اور دوسری طرف مافیہ ، اب اپ رؤف کلاسرہ صاحب کا کالم پڑھیں اور اندازہ کریں گے سب زیادہ خطرہ بیرونی ہے یا اندرونی ؟



Very scary situation. Appears, things are slipping out of hand by the day.

It LQQKS like Pakistan no longer have any sincere friends left. Otherwise, with so much surplus available with many countries, two or three long term soft loans on a nominal mark up can reverse this situation effectively.

Additionally, if these opposition goons continue behaving the way they are behaving at present then melt down is inevitable.

I wish the superior court comes into action and starts cancelling the bails of everyone involved in corruption and forgeries to deter any future strikes, complicating the matters further.
 

Syed Haider Imam

Chief Minister (5k+ posts)
Very scary situation. Appears, things are slipping out of hand by the day.

It LQQKS like Pakistan no longer have any sincere friends left. Otherwise, with so much surplus available with many countries, two or three long term soft loans on a nominal mark up can reverse this situation effectively.

Additionally, if these opposition goons continue behaving the way they are behaving at present then melt down is inevitable.

I wish the superior court comes into action and starts cancelling the bails of everyone involved in corruption and forgeries to deter any future strikes, complicating the matters further.

Dr Sahib,

1- Donor Fatigue. Pakistani friends are facing with this dilemma. We have used all of our options. Every new Government approaches our friends and test their nerves.
اسلئے غریب رشتہ داروں کو مونہ نہیں لگایا جاتا ، وہ ہمیشہ منگ ڈال کر رکھتے ہیں
2- Melt down is not inevitable, it has already begun. Without fixing the real problems, all the hell broke loose since Ishaq Dar halted advancement of Pak Rupee for too long with too much borrowed foreign exchange.
Ignorance is not blessing. English paper columnist were highlighting this issue for too long.
Our Paindu production Urdu medium intellectual's were tied with the Nawaz Sharif testicals and were busy in selling his narratives on the main stream media. Rest of them were busy in challenging them. No one pay heed on the economy since people get bored easily.
Hoor Choppoo

3- Superior courts, Lower courts . All are bunch of idiots and criminals. They are part of the problem not part of the solution. Note vekha mairey mood baney. 23 Million people will face life like hell due to our judicairy. They are the biggest moron and root cause of every ill in Pakistan. Please read this article

" As a result of two verdicts of the former chief justice of Pakistan Iftikhar Chaudhry and giving $100 million to lawyers as their fees, the country now faces a fine of $1.4 billion"

 
Last edited:

Dr Adam

Prime Minister (20k+ posts)
Dr Sahib,

1- Donor Fatigue. Pakistani friends are facing with this dilemma. We have used all of our options. Every new Government approaches our friends and test their nerves.
اسلئے غریب رشتہ داروں کو مونہ نہیں لگایا جاتا ، وہ ہمیشہ منگ ڈال کر رکھتے ہیں
2- Melt down is not inevitable, it has already begun. Without fixing the real problems, all the hell broke loose since Ishaq Dar halted advancement of Pak Rupee for too long with too much borrowed foreign exchange.
Ignorance is not blessing. English paper columnist were highlighting this issue for too long.
Our Paindu production Urdu medium intellectual's were tied with the Nawaz Sharif testicals and were busy in selling his narratives on the main stream media. Rest of them were busy in challenging them. No one pay heed on the economy since people get bored easily.
Hoor Choppoo

3- Superior courts, Lower courts . All are bunch of idiots and criminals. They are part of the problem not part of the solution. Note vekha mairey mood baney. 23 Million people will face life like hell due to our judicairy. They are the biggest moron and root cause of every ill in Pakistan. Please read this article

" As a result of two verdicts of the former chief justice of Pakistan Iftikhar Chaudhry and giving $100 million to lawyers as their fees, the country now faces a fine of $1.4 billion"



Very true.
I believe you.
!!!اب پھر تو بس الله کا ہی آسرا رہ گیا ہے
 

Syed Haider Imam

Chief Minister (5k+ posts)
Very true.
I believe you.
!!!اب پھر تو بس الله کا ہی آسرا رہ گیا ہے


بدقسمتی سے ہم الله کے نظام کو نہیں سمجھتے . اللہ پاک نے انسان کو دماغ دے کر اشرفلماخلوقت کا درجہ دیا ہے اور پھر دنیا میں کھلا چھوڑ دیا ہے . کمزور لوگ عبادات اور دعاؤں پر تکیہ کرتے ہیں اور طاقتور اپنی طاقت پر بھروسہ کرتے ہیں

کارما کا قانون اپنے وقت پر حرکت میں اتا ہے




میں نے یہ بلاگ جون ٠٨ ، ٢٠١٣ میں لکھا تھا اور متواتر اسکو کسی نہ کسی جگہ ریفرنس کے طور پر چپکا رہا ہوں . ایک پیٹرن کے تحت تمام اسلامی ملک تباہ کئے گئے اور اب امریکہ ایران تک پہنچ گیا ہے اور پاکستان کو انڈیا نے ہلکی سے انگلی کی اور پاکستان کا ٣ ارب ڈالر انتہائی مفلسی میں پھونک دئے . یہ اخراجات صرف فوجوں کی نقل اور حرکت اور چند جہازوں کی اڑان کے ہیں . یہ سب صرف حسن اتفاق نہیں ہے . جب میرا جیسا گمنام بندہ اتنی سادہ بات ٢٠١٣ میں سمجھ گیا تھا تو پاکستان کے کرتا دھرتا کیا کر رہے تھے ؟

پاکستان کے جنرل ، جج ، افسر اور میڈیا والے لوٹ کھسوٹ کر رہے تھے . سیاستدان تو صرف مہرہ ہیں لھذا ہمیشہ سے ریاست کے اصل ستون انکو تحفظ فراہم کرتے رہے اور ابھی تک کر رہے ہیں . عوام کی جاہلیت ہمالیہ کی چوٹی پر خیمہ زن ہے .

میں نے اور اپنے اپنی اپنی زندگیوں میں جو غلطیاں کی ہیں ، کیا اسکا کوئی پرائس ٹیگ نہیں تھا یا دعاؤں نے نتائج تبدیل کر دئے تھے ؟

شائد اپ مجھ سے اختلاف کریں ، مگر ایک مرتبہ سوچیں ضرور
کیا چین سموکر کے لئے دعائیں کینسر ٹال دیتی ہیں ؟
کیا ٤٠ سال کی عمر کے بعد مرغن خزائیں کھا کھا کر دعائیں سٹروک کو روک دیتی ہیں ؟
کیا علماء کو بیماریاں نہیں ہوتیں ہیں جو دن میں کم از کم پانچ مرتبہ دعائیں کرواتے ہیں ؟
میری باتیں شائد آپکو عجیب اور غریب لگیں ، مگر خدا کی خدائی پر سوچنا اپکا فرض بھی ہے اور اللہ کا حکم بھی

/

اور تم غور کیوں نہیں کرتے ؟

 

Dr Adam

Prime Minister (20k+ posts)

پاکستان کے جنرل ، جج ، افسر اور میڈیا والے لوٹ کھسوٹ کر رہے تھے . سیاستدان تو صرف مہرہ ہیں لھذا ہمیشہ سے ریاست کے اصل ستون انکو تحفظ فراہم کرتے رہے اور ابھی تک کر رہے ہیں . عوام کی جاہلیت ہمالیہ کی چوٹی پر خیمہ زن ہے .




اِسمیں کوئی کلام نہیں کہ بہت اچھی اِنٹلیکچواَل اور پولیٹیکل سینس پائی ہے آپ نے

.باتیں سمجھ میں آتی ہیں

صبح سے آج ایک خیال ذہن میں کچوکے دے رہا تھا اور آمد بھی ہو رہی تھی

لیکن کچھ پروفیشنل مصروفیت کے باعث اُسے ڈاکومینٹ نہیں کر پایا . اگر دل نے چاہا

تو آپکے پیرے کی روشنی میں کچھ ورقے کالے کرنے کی کوشش کروں گا

!!! کب ؟؟؟ معلوم نہیں