پیپلز پارٹی کا بہرا مندتنگی کی سوشل میڈیا سے متعلق قرارداد سے اظہارلاتعلقی

bahramandh11.jpg


پاکستان پیپلز پارٹی نے سوشل میڈیا پر پابندی کے حوالے سے سینیٹ میں جمع کرائی گئی قرارداد سے لاتعلقی کا اظہار کر دیا,پاکستان پیپلز پارٹی کے سیکرٹری جنرل سید نیئر حسین بخاری نے کہا سینیٹر بہرامند تنگی کی سینیٹ میں جمع قرارداد سے پیپلز پارٹی کا کوئی تعلق نہیں ہے اور نہ ہی سینیٹر بہرامند تنگی کا پیپلز پارٹی سے کوئی تعلق ہے۔

انہوں نے کہا کہ سینیٹر بہرامند تنگی کو پارٹی پالیسی سے انحراف کرنے پر اظہار وجوہ کا نوٹس دیا گیا تھا جس کی وہ پارٹی کے سامنے وضاحت کرنے میں ناکام رہے تھے, جس کے بعد پیپلز پارٹی چارسدہ کے صدر نے سینیٹر بہرامند تنگی کی بنیادی رکنیت منسوخ کر دی تھی۔

سید نیئر بخاری نے کہا کہ سینیٹر بہرا مند تنگی 11 مارچ کو سینیٹ کی رکنیت سے ریٹائر ہو رہے ہیں اور اُن کی پیپلز پارٹی کی بنیادی رکنیت بھی ختم ہوچکی ہے لہذا وہ پیپلز پارٹی کا نام استعمال کرنے سے باز رہیں۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے سینیٹر بہرامند تنگی نے تمام سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر پابندی کیلئے سینیٹ میں قرارداد جمع کروائی ہے, بہرامند تنگی کی جانب سے سینیٹ میں جمع کرائی گئی قرارداد میں کہا گیا کہ یوٹیوب، ٹوئٹر، فیس بک، انسٹاگرام اور ٹک ٹاک سمیت تمام سوشل میڈیا کو بند کر دیا جائے تاکہ نوجوان نسل محفوظ رہ سکے۔


پاکستان میں پہلے ہی سوشل میڈیا پلیٹ فارم ”ایکس“ پر غیر اعلانیہ پابندی عائد ہے جسے 18 دن ہوگئے ہیں۔بہرا مند تنگی کی جانب سے جمع کرائی گئی قرارداد کے میں کہا گیا کہ سوشل میڈیا پلیٹ فارمز ملک میں نوجوان نسل کو بری طرح متاثر کر رہے ہیں۔قرارداد کے متن میں لکھا گیا ہے کہ ان پلیٹ فارمز کو ہمارے مذہب اور ثقافت کے خلاف اصولوں کے فروغ کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے، جس سے زبان اور مذہب کی بنیاد پر لوگوں میں نفرت پیدا ہو رہی ہے۔

قرارداد میں افواج پاکستان کے خلاف منفی اور بدنیتی پر مبنی پروپیگنڈے کے ذریعے ملکی مفادات کے خلاف ایسے پلیٹ فارمز کے استعمال پر تشویش کا اظہار کیا گیا,قرارداد کے مطابق اس بات کا مشاہدہ کیا گیا ہے کہ اس طرح کے پلیٹ فارم کو مفاد پرستوں کی جانب سے مختلف مسائل کے بارے میں جعلی خبریں پھیلانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے اور نوجوان نسل کو دھوکہ دینے کے لیے ملک میں جعلی قیادت پیدا کرنے اور اسے فروغ دینے کی کوشش کی جاتی ہے۔

بہرامند تنگی نے قرارداد میں لکھا کہ سینیٹ آف پاکستان نے حکومت سے سفارش کرتا ہے کہ وہ فیس بک، ٹک ٹاک، انسٹاگرام، ٹویٹر یعنی ایکس اور یوٹیوب پر پابندی عائد کرے تاکہ نوجوان نسل کو ان کے منفی اور تباہ کن اثرات سے بچایا جا سکے۔
 

sensible

Chief Minister (5k+ posts)
سب کھوچل بڈھے اپنے کالے کرتوت ٹھیک نہیں کرتے نوجوانوں کے منہ بند کرنے کے لئے بے قرار ہیں لیکن یہ کسی پسماندہ طبقے کی مخلوق ہے کہ نوجوانوں کو بھی جاہل رکھنا ہیں ۔کل کو قرار داد لے آئیں گے تعلیمی اداروں کو بھی بند کر دیں تاکہ نوجوانوں کو پڑھنے لکھنے کے اثرات سے بچایا جاسکے
 

ranaji

President (40k+ posts)
کھسرے کو تنگی محسوس نا ہو وہ اس کے لئے ڈیوریکس کا لبیریکنٹ استعمال کرتا ہے
اس لئے کھسرے کو تنگی نہیں ہوتی
 

exitonce

Chief Minister (5k+ posts)
کھسرے کو تنگی محسوس نا ہو وہ اس کے لئے ڈیوریکس کا لبیریکنٹ استعمال کرتا ہے
اس لئے کھسرے کو تنگی نہیں ہوتی
Sath protocole ka maza bhee hay. 😁