پشاور میں بچیوں کے مسلسل ریپ پر کسی کو غیرت نہیں آی؟

Bubber Shair

Chief Minister (5k+ posts)
پہلا ریپ سات سالہ بچی کا چار جولای کو ہوتا ہے یعنی اکیس دن پہلے مگر پولیس نے کچھ بھی نہیں کیا کم از کم ڈی این اے کروا کے ارد گرد کے لوگوں سے تفتیش کی ہوتی جو آوارہ اور نشئی ہیں ان کو چیک کیا ہوتا مگر نہیں۔
اس کے بعد اگلے ہی ہفتے دوسری بچی کا ریپ اور قتل ہوتا ہے۔ قتل کی وجہ بہت واضح ہے ببر شیر کو پتا ہے کہ قتل کب کیا جاتا ہے۔ قتل اس وقت کیا جاتا ہے جب بچی ریپسٹ کو پہچانتی ہو یا سمجھدار ہو۔ اس بچی کی عمر بھی دس سال تھی یعنی بلوغت کی عمر سے چار پانچ سال پیچھے مگر دس سالہ بچیاں عموما ذہنی طور پر پندرہ کی ہوتی ہیں۔ اسی لئے ریپسٹ نے اس کو قتل کردیا۔ یاد رکھیں قصور میں زینب کو قتل کرنے کی بھی یہی وجوہات تھیں؟
پشاور کی پولیس نے حسب معمول حرام خوری کی اور ریپسٹ کو پکڑنے کیلئے کچھ بھی نہیں کیا دوسری بچی کے ریپ پر بھی آنکھیں نہ کھلیں ورنہ اس علاقے کے ہر پولیس اہلکار اور ہر نوجوان کو نیند نہیں آنی چاہئے تھی جس میں اتنا بڑا ظلم عظیم ہوگیا
ہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھنے کا وہی نتیجہ نکلا جو نکلنا چاہئے اور تیسری بچی کا ریپ اور قتل بھی ہوگیا اس بار بچی کا ریپ اور قتل مسجد کی دیوار کے ساتھ ہوا۔ یہ بہت معنی خیز ہے۔
ایک سال پہلے ایک ویڈیو وائرل ہوی تھی جس میں ایک چھ سات سال کا بچہ بری طرح چیختا ہوا ایک مسجد کے اندر سے نکل کر بھاگ رہا ہے اور تین چار مولوی ہٹے کٹے نوجوان اس کے پیچھے بھاگتے ہیں ان کے چہرے انتہای کرخت اور سنجیدہ تھے بچے کو ایک آدمی نے آگے بڑھ کے اپنی پناہ مین لے لیا تو وہ مولوی اس آدمی سے جھگڑے پر تیار تھا مگر اس کے پاس کیمرہ تھا جس میں یہ سارا منظر ریکارڈ ہوگیا
اس بچے کے کیس میں کیا ہوا کچھ پتا نہیں ؟
پاکستان کے بچوں کو خدارا ان درندوں سے نجات دلائیے جو بھی ایسا کرے گا اس کا نام ہمیشہ زندہ رہے گا
راقم
ببر شیر
 

Bubber Shair

Chief Minister (5k+ posts)
یہ بچیاں ہماری آپ کی سب کی سانجھی ہیں ان معصوم کلیوں کو بچانے کیلئے تو اکٹھے ہوجاو سیاست پر لعنت بھیجو
خبر یہاں پڑھی جاسکتی ہے

سورس
 

AbbuJee

Chief Minister (5k+ posts)
قصور والے واقع میں سزا نہ ہونے کے بعد سب کو کھلی چھٹی ہے۔
 

Bubber Shair

Chief Minister (5k+ posts)
قصور والے واقع میں سزا نہ ہونے کے بعد سب کو کھلی چھٹی ہے۔
عمران نامی ایک ریپسٹ کو پھانسی دی گئی تھی ڈی این اے ملنے کے علاوہ سی ٹی فوٹیج بھی اسی کی تھی لوگ مولوی اور مذہبی سمجھ کر اس کا نام نہیں لے رہے تھے
Zainab-Murder-case-Imran-Ali-604x270.jpg
 

mskhan

Minister (2k+ posts)
پہلا ریپ سات سالہ بچی کا چار جولای کو ہوتا ہے یعنی اکیس دن پہلے مگر پولیس نے کچھ بھی نہیں کیا کم از کم ڈی این اے کروا کے ارد گرد کے لوگوں سے تفتیش کی ہوتی جو آوارہ اور نشئی ہیں ان کو چیک کیا ہوتا مگر نہیں۔
اس کے بعد اگلے ہی ہفتے دوسری بچی کا ریپ اور قتل ہوتا ہے۔ قتل کی وجہ بہت واضح ہے ببر شیر کو پتا ہے کہ قتل کب کیا جاتا ہے۔ قتل اس وقت کیا جاتا ہے جب بچی ریپسٹ کو پہچانتی ہو یا سمجھدار ہو۔ اس بچی کی عمر بھی دس سال تھی یعنی بلوغت کی عمر سے چار پانچ سال پیچھے مگر دس سالہ بچیاں عموما ذہنی طور پر پندرہ کی ہوتی ہیں۔ اسی لئے ریپسٹ نے اس کو قتل کردیا۔ یاد رکھیں قصور میں زینب کو قتل کرنے کی بھی یہی وجوہات تھیں؟
پشاور کی پولیس نے حسب معمول حرام خوری کی اور ریپسٹ کو پکڑنے کیلئے کچھ بھی نہیں کیا دوسری بچی کے ریپ پر بھی آنکھیں نہ کھلیں ورنہ اس علاقے کے ہر پولیس اہلکار اور ہر نوجوان کو نیند نہیں آنی چاہئے تھی جس میں اتنا بڑا ظلم عظیم ہوگیا
ہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھنے کا وہی نتیجہ نکلا جو نکلنا چاہئے اور تیسری بچی کا ریپ اور قتل بھی ہوگیا اس بار بچی کا ریپ اور قتل مسجد کی دیوار کے ساتھ ہوا۔ یہ بہت معنی خیز ہے۔
ایک سال پہلے ایک ویڈیو وائرل ہوی تھی جس میں ایک چھ سات سال کا بچہ بری طرح چیختا ہوا ایک مسجد کے اندر سے نکل کر بھاگ رہا ہے اور تین چار مولوی ہٹے کٹے نوجوان اس کے پیچھے بھاگتے ہیں ان کے چہرے انتہای کرخت اور سنجیدہ تھے بچے کو ایک آدمی نے آگے بڑھ کے اپنی پناہ مین لے لیا تو وہ مولوی اس آدمی سے جھگڑے پر تیار تھا مگر اس کے پاس کیمرہ تھا جس میں یہ سارا منظر ریکارڈ ہوگیا
اس بچے کے کیس میں کیا ہوا کچھ پتا نہیں ؟
پاکستان کے بچوں کو خدارا ان درندوں سے نجات دلائیے جو بھی ایسا کرے گا اس کا نام ہمیشہ زندہ رہے گا
راقم
ببر شیر
What a fucking scumbag you are, people like yourself should be openly hanged.
 

AbbuJee

Chief Minister (5k+ posts)
عمران نامی ایک ریپسٹ کو پھانسی دی گئی تھی ڈی این اے ملنے کے علاوہ سی ٹی فوٹیج بھی اسی کی تھی لوگ مولوی اور مذہبی سمجھ کر اس کا نام نہیں لے رہے تھے
Zainab-Murder-case-Imran-Ali-604x270.jpg
what about the other MPAs that were involved and were let go.
 

Raiwind-Destroyer

Chief Minister (5k+ posts)
Patwari ko zardari nazar nahi aya dubai bhagta howa

Karachi mai rooz bgaer rape ke log mar rahe hai paani pene ko nahi lekn us pani se log mar rahe hain

Kanjar league
 

Bubber Shair

Chief Minister (5k+ posts)
Patwari ko zardari nazar nahi aya dubai bhagta howa

Karachi mai rooz bgaer rape ke log mar rahe hai paani pene ko nahi lekn us pani se log mar rahe hain

Kanjar league
تیرے جیسا بے غیرت بھی کوی کم ہی ہوگا جو بچیوں کے ریپ کو سیاست میں گھسیٹ رہا ہے میں لعنت ڈالتا ہوں تیرے سیاسی قائدین پر
 

Bubber Shair

Chief Minister (5k+ posts)
x1188570_38731409.jpg.pagespeed.ic.pOp-M0RegD.jpg



Remember the events around this, He was MPA and got out easily. He was running the whole operation there.
اس پین چود کو سرعام پھانسی دینی چاہئے
وکلا نے پہلی بار اپنے مجرم کو زبردستی چھڑوانے کی کوشش نہیں اس سے پہلے بھی کرتے رہے ہیں
میں تو آواز ہی اٹھا سکتا ہوں
ابھی دو ماہ پہلے یاسر شاہ کے دوست نے اس کی ایک فین کو اسکول جاتے ہوے اغوا کرکے ریپ کردیا تھا بہت دہای دی مگر کچھ بھی نہیں ہوا اس لئے براے مہربانی مجھے اس کا قصووروار ٹھہرا کر اگر کسی اور کیس پر لکھوں تو طعنہ مت دیں میرے لئے سب مظلوم ایک جیسے ہیں
 

Sarkash

Minister (2k+ posts)
گنجگانڈو کے متھے لگنے کا کوئی فائدہ نہیں یہ نون سے پیسے کھاتا ہے حرام کے۔
 

sensible

Chief Minister (5k+ posts)
یہ بچیاں ہماری آپ کی سب کی سانجھی ہیں ان معصوم کلیوں کو بچانے کیلئے تو اکٹھے ہوجاو سیاست پر لعنت بھیجو
خبر یہاں پڑھی جاسکتی ہے

سورس
پاکستان کی بچیوں کی بات کرتے تو زیادہ مناسب ہوتا کیونکہ پاکستان کا کوی کونہ نہیں جہاں یہ گھناونا جرم نہ ہو رہا ہو۔کسی ایک شہر پر بات کرنے سے پوری سوسایٹی سے کسی جرم کا خاتمہ نہیں ہو سکتا جب تک پوری قوم اسے اپنے ملک سے صاف کرنے کا نہ ٹھان لے ہر فرد اسپر اپنی زمہ داری نہ سمجھے
لوگوں کے غیرت کھانےسے مطلب؟ لوگ کیا قانون ہاتھ میں لیں؟
 

AbbuJee

Chief Minister (5k+ posts)
عدالتیں انصاف دے رہی ہوتیں تو کسی کو اعتراز نہ ہوتا۔
 

Bubber Shair

Chief Minister (5k+ posts)
What a fucking scumbag you are, people like yourself should be openly hanged.
تم اور جو تمہاری بدبودار پھوسی کو لائیک دے رہا ہے جہنم میں جاو صرف پشاورکا نام سن کر تمہیں خارش ہورہی ہے کتی کے بچے۔ اور بچیوں کے ریپ جیسے سیریس معاملے میں اپنا حرامی پن مت دکھاو
اگر یہی سانحہ تمہاری سات سال کی بیٹی کے ساتھ ہوا ہوتا تو پھر میں دیکھتا کہ تم کیسے شوخیاں کرتے ہو۔
 

Bubber Shair

Chief Minister (5k+ posts)
پاکستان کی بچیوں کی بات کرتے تو زیادہ مناسب ہوتا کیونکہ پاکستان کا کوی کونہ نہیں جہاں یہ گھناونا جرم نہ ہو رہا ہو۔کسی ایک شہر پر بات کرنے سے پوری سوسایٹی سے کسی جرم کا خاتمہ نہیں ہو سکتا جب تک پوری قوم اسے اپنے ملک سے صاف کرنے کا نہ ٹھان لے ہر فرد اسپر اپنی زمہ داری نہ سمجھے
پشاور ہم سب کا ہے تمہاری یہ غیر ضروری احساس کمہتری نہیں جاتا تو میں ایسی خبروں پر اواز اٹھانا بند نہیں کرسکتا کراچی یا لاہور میں خبر ہو تو بھی میں تھریڈ بناتا ہوں وہاں سے کوی اعتراض نہیں کرتا یہ یوتھیوں کی عادت ہے اتنے بے عقل لوگ ہیں یہ
پشاور کی خبر پشاور کے نام سے ہی دی جاے گی اور خاص کر جب یہ کچھ کر بھی نہیں رہے اور بچیاں ریپ ہورہی ہیں اگر تم کسی بچی یا بچے کے لواحقین کو جاکر یہ چول مارو وہ تمہاری عقل درست کردیں گے
 

KPKInsafian

Senator (1k+ posts)
پہلا ریپ سات سالہ بچی کا چار جولای کو ہوتا ہے یعنی اکیس دن پہلے مگر پولیس نے کچھ بھی نہیں کیا کم از کم ڈی این اے کروا کے ارد گرد کے لوگوں سے تفتیش کی ہوتی جو آوارہ اور نشئی ہیں ان کو چیک کیا ہوتا مگر نہیں۔
اس کے بعد اگلے ہی ہفتے دوسری بچی کا ریپ اور قتل ہوتا ہے۔ قتل کی وجہ بہت واضح ہے ببر شیر کو پتا ہے کہ قتل کب کیا جاتا ہے۔ قتل اس وقت کیا جاتا ہے جب بچی ریپسٹ کو پہچانتی ہو یا سمجھدار ہو۔ اس بچی کی عمر بھی دس سال تھی یعنی بلوغت کی عمر سے چار پانچ سال پیچھے مگر دس سالہ بچیاں عموما ذہنی طور پر پندرہ کی ہوتی ہیں۔ اسی لئے ریپسٹ نے اس کو قتل کردیا۔ یاد رکھیں قصور میں زینب کو قتل کرنے کی بھی یہی وجوہات تھیں؟
پشاور کی پولیس نے حسب معمول حرام خوری کی اور ریپسٹ کو پکڑنے کیلئے کچھ بھی نہیں کیا دوسری بچی کے ریپ پر بھی آنکھیں نہ کھلیں ورنہ اس علاقے کے ہر پولیس اہلکار اور ہر نوجوان کو نیند نہیں آنی چاہئے تھی جس میں اتنا بڑا ظلم عظیم ہوگیا
ہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھنے کا وہی نتیجہ نکلا جو نکلنا چاہئے اور تیسری بچی کا ریپ اور قتل بھی ہوگیا اس بار بچی کا ریپ اور قتل مسجد کی دیوار کے ساتھ ہوا۔ یہ بہت معنی خیز ہے۔
ایک سال پہلے ایک ویڈیو وائرل ہوی تھی جس میں ایک چھ سات سال کا بچہ بری طرح چیختا ہوا ایک مسجد کے اندر سے نکل کر بھاگ رہا ہے اور تین چار مولوی ہٹے کٹے نوجوان اس کے پیچھے بھاگتے ہیں ان کے چہرے انتہای کرخت اور سنجیدہ تھے بچے کو ایک آدمی نے آگے بڑھ کے اپنی پناہ مین لے لیا تو وہ مولوی اس آدمی سے جھگڑے پر تیار تھا مگر اس کے پاس کیمرہ تھا جس میں یہ سارا منظر ریکارڈ ہوگیا
اس بچے کے کیس میں کیا ہوا کچھ پتا نہیں ؟
پاکستان کے بچوں کو خدارا ان درندوں سے نجات دلائیے جو بھی ایسا کرے گا اس کا نام ہمیشہ زندہ رہے گا
راقم
ببر شیر
Patwaari hou aur jhoit na bhoolay, dhandi na maray hou nhi sakta, mai aik haftay mai tumhe punjaab mai aesay beesoo waqiyaat sunna sakta hou jaha par ab bi kukarhh ki hi hukoomat hai, pir pi yai justification nhi hou sakty lekin kehtay hai na baat niyat ki hoty hai aur patwaari ki niyat hum sai zyda kis ko pata.
Dosry baat 10 saala bachy ko us kai baap nai gherat kai naam pai qatal kiya ta, qatal pakrha bi jaa chuka hai court mai confession kar chuka hai, aap ki itlaa kai liyai arz hai, sab sai zyada aur jald mujrimoo ko pakarhnay nai KPK ki police sab sai aagay hai, apny hi hukoomat kai aadaad shumaar par lejiyai.
 

Melanthus

Chief Minister (5k+ posts)
This is a racist post by a nutcase.The truth is rapes happen all over Pakistan.There are lots of sick people in the world.Cild rape abuse happens all over the world but it is not widely reported.Pakistan claim to be Muslims but they are Muslims in name, they don’t practice Islam that is why such heinous crime happen in Pakistan.
 

Bubber Shair

Chief Minister (5k+ posts)
This is a racist post by a nutcase.The truth is rapes happen all over Pakistan.There are lots of sick people in the world.Cild rape abuse happens all over the world but it is not widely reported.Pakistan claim to be Muslims but they are Muslims in name, they don’t practice Islam that is why such heinous crime happen in Pakistan.
سارے پاکستان میں ہوتے ہیں تو تھریڈ بنا کر آواز اٹھایا کرو جو میرے جیسا ایک اچھا کام کرتا ہے اس پر بھی تنقید کرکے تم ریپسٹ کا ساتھ دے رہے ہو کیونکہ میں تو ایسے تھریڈز پر سیاسی پہلو نہیں رکھتا ہاں غصہ میں ہوتا ہوں انتظامیہ کو رگیدتا ہوں جن کی وجہ سے ایک کے بعد دوسرا اور پھر تیسرا کیس ہوا
اگر پہلے کیس پر کاروای کی ہوتی تو دوسرا اور تیسرا کیس نہ ہوتا دو بچیاں اس ہولناک جرم کا شکار نہ ہوتیں تیری اپنی کوی بچی کے ساتھ ایسا ہو تو پھر دیکھنا تیری کیسے بند ہوتی ہے