نگراں وزیر کا نئی حکومت سے توانائی کے نرخ کم کرنے کا مطالبہ

8goharejajjzjjhsjsf.png

نگراں سیٹ اپ میں وزیر تجارت رہنے والے گوہر اعجاز نے نئی حکومت سے اہم مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ توانائی نرخوں میں کمی کی جائے۔

تفصیلات کے مطابق نگراں وزیر تجارت گوہر اعجاز نے ایک بیان میں کہا ہے کہ نئی حکومت کو فیصلہ کرنا ہوگا کہ سبسڈی فراہم کرنی ہے یا صنعتیں چلانی ہیں، صنعتوں و گھریلو صارفین کو بجلی پر سبسڈی دے رہے ہیں، ہمیں صنعتوں کو بچانے کیلئے انرجی کے نرخوں کو 9 سینٹ کرنا ہوگا۔

انہوں نے مزید کہا کہ صنعتیں برآمدات کے ذریعے روزگار کے مواقع فراہم کررہی ہیں، 500 روپے ماہانہ دینی ہے یا 35ہزار روپے کی نوکری دینی ہے، اگلی حکومت کو یہ بنیادی فیصلہ کرنا ہوگا کہ ہمیں برآمدات کیلئے بیرونی قرضہ لینا ہے یا ایکسپورٹ بڑھا کر قرضے ادا کرنے ہیں، ہمارے ملک میں توانائی کے نرخ علاقائی ممالک سے کہیں زیادہ ہیں۔

نگراں وزیر تجارت گوہر اعجاز نے کہا کہ100 ارب ڈالرز کی برآمدات کیلئے حکومت کو بنیادی فیصلے کرنا ہوں گے، پاکستان کی مصنوعات کو عالمی منڈیوں میں قابل فروخت بنانا ہوگا اور ہمارے مینوفیکچرنگ کو مقابلے کے قابل بنانا ہوگا۔
 

Digital_Pakistani

Chief Minister (5k+ posts)
جن سرکاری افسران سے مافیا توانائی لیتا ہے ان کا بھی کچھ کرنا پڑے گا