ملک کو سرکس جیسے تجربات کے ذریعے نہیں چلایا جاسکتا،حماداظہر

hammadhaiaaha.jpg

پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما حماد اظہر نے کہا ہے کہ ملک کو سرکس جیسے سیاسی طور پر انجینئرڈ تجربات سے نہیں چلایا جاسکتا، اس وقت ایک ایسی حکومت کی ضرورت ہے جو حقیقی معنوں میں میں عوام کی نمائندہ ہو۔

مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر حماد اظہر نے اپنی ٹویٹ میں ملکی کی مجموعی سیاسی و معاشی صورتحال پر اپنی رائے دیتے ہوئے حل بتاتے ہوئے کہا کہ اس وقت فضول معاشی پالیسیوں سے ہٹ کر گہری اصلاحات کی تیاری کرنے کی ضرورت ہے، صرف دہرائی گئی قیمتوں میں ایڈجسٹمنٹ اور پہلے سے زیادہ ٹیکس عائد کرنے،بیرون ملک سے خواب اور "گیم چینجر" جیسے سودے بیچنے کے بجائے مقامی وسائل اور سرمایہ کاری پر توجہ مرکوز کرنا شروع کرنی چاہیے۔
https://twitter.com/x/status/1672909072507518976
انہوں نے مزید کہا کہ ریاست کو ایک کھلی، تکثیری، روادارنظام کو قانون کی مضبوط حکمرانی کے ساتھ راستہ دینے کی ضرورت ہے۔ریڈ لائن صرف آئین ہے، جسے پارلیمنٹ نے تشکیل دینا ہے اور عدلیہ کی طرف سے اس کی تشریح اور نفاذ ہونا ہے، اس کے علاوہ باقی سب انا ہے،ہماری خارجہ پالیسی کو سادہ، شفاف اور سب سے پہلے اپنے لوگوں کی اقتصادی سلامتی پر توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت ہے۔

رہنما پی ٹی آئی کا مزید کہنا تھا کہ زیادہ تر پبلک سیکٹر کو ریفارم کرنے، پرائیویٹائز کرنے یا محض بندکرنے کی ضرورت ہے، کیونکہ یہ ادارے یہ بھاری رقم میں کھا رہے ہیں، ہم ان حساس ترجیحات سے کس حد تک ہٹ چکے ہیں اور آج ریاست اپنی توانائیاں کون سے اہداف کو حاصل کرنے پر صرف کررہی ہے؟

حماد اظہر نے کہا کہ یہ وقت عوام کو امید دینے کا ، متحد ہونے ہے خوف میں مبتلا کرنے نفرت کا بیج بونے کا تفرقہ ڈالنے کا نہیں، بحران کا وقت مواقع پیدا کرتا ہے، اس دوران قومیں تاریخ کے لمحات تخلیق کرتی ہیں، ہمیں بھی انتخاب کرنا ہوگا، اور ہمیں پاکستان کا انتخاب کرنا ہوگا، یہ کوئی مشکل انتخاب نہیں ہے۔