لیگی ایم این اے راجہ خرم نواز نے اپنے فارم 45 جمع کرادئیے

Kashif Rafiq

Prime Minister (20k+ posts)
نون لیگی ایم این اے راجہ خرم نواز نے الیکشن ٹربیونل کے جج جسٹس طارق محمود جہانگیری کے پاس اپنے فارم،45،46،47،جمع کرادیے

اگر پریزائیڈنگ افسر فارمز ایجنٹوں کو فراہم نہیں کرتا تو الیکشن ایکٹ کے تحت کارروائی ہو گی، جسٹس طارق جہانگیری
پریزائیڈنگ افسر دس پیکٹ بنائے گا اور سب پولنگ ایجنٹوں کے دستخط لے گا، جسٹس طارق جہانگیری
اگر ایسا نہیں ہو گا تو وہ اسکی وجوہات لکھے گا، جسٹس طارق محمود جہانگیری
ہمیں تو اندر ہی نہیں جانے دیا گیا، وکیل علی بخاری
کیا آپ اور آپ کے ایجنٹ سے ان 10 لفافوں پر دستخط لیے گئے؟ جسٹس طارق محمود جہانگیری
نہ مجھ سے اور نہ میرے ایجنٹ سے سائن لیے گئے، علی بخاری ایڈووکیٹ
یہ معاملہ الیکشن پٹیشن میں نہیں اٹھایا گیا، وکیل الیکشن کمیشن کا اعتراض
یہ سول سوٹ نہیں ٹریبیونل ہے، ہم نے معاملے کی تہہ تک جانا ہے، الیکشن ٹریبیونل
کسی نے کوئی غلط کام کیا ہے تو کون ذمہ دار ہے؟ جسٹس طارق محمود جہانگیری
واقعے کی تہہ تک پہنچنے کے لیے کسی حد تک بھی جائیں گے، جسٹس طارق محمود جہانگیری

آپ نے ای ایم ایس سسٹم کا کیا کیا؟ جسٹس طارق محمود جہانگیری کا وکیل الیکشن کمیشن سے استفسار
پریزائیڈنگ افسران نے فارمز آپ کو بھیجے یا نہیں؟ جسٹس طارق محمود جہانگیری
میں اس کے بارے میں کمیشن سے پوچھ کر بتاؤں گا، وکیل الیکشن کمیشن
پریزائڈنگ افسران کی ذمہ داری ہے کہ وہ پولنگ ایجنٹ کو تمام متعلقہ فارمز مہیا کریں، جسٹس طارق جہانگیری

پریزائیڈنگ افسر پر لازم ہے کہ وہ فارم 45 پولنگ ایجنٹ کو دے، پریزائیڈنگ افسر اگر فارم 45 نہیں دیتا تو اس نے وجوہات لکھنی ہیں،پریذائڈنگ افسر کو بلائیں گے پوچھیں گے کیا انہوں نے تمام قانونی تقاضے پورے کیے ہیں؟261 پریذائڈنگ افسر ہیں ان تمام کو پارٹی تو نہیں بنا سکتے،ممبر اسمبلی راجہ خرم نواز اور ریٹرننگ افسر کو فارم 45، 46، 47 رجسٹرار کے پاس جمع کروائیں،، جسٹس طارق محمود جہانگیری۔۔

جسٹس طارق محمود جہانگیری نے ریمارکس دیے ہیں کہ اگر کوئی فریق فارم 45، 46 اور 47 کا ریکارڈ لینا چاہیے تو لے سکتا ہے اور کوئی صحافی یا عام شہری ریکارڈ دیکھنا چاہے تو رجسٹرار ہائیکورٹ کو درخواست دے کر ریکارڈ دیکھ سکتا ہے
 

Dr Adam

Prime Minister (20k+ posts)

جسٹس صاحب! یہ رسہ گیر ٹھگ اب بھاگنے نہ پائیں . تُن کے رکھو ان چوروں کو