فون ٹیپنگ:لوگوں کی پرائیویسی کا خیال رکھاجائے گا،غلط استعمال پر ایکشن ہوگا

Kashif Rafiq

Prime Minister (20k+ posts)

وفاقی وزیر قانون سینیٹر اعظم نذیر تارڑ نے کہا ہے کہ فون ٹیپنگ کے کام کو قانون کے دائرے میں لایا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ 1996ء سے یہ قانون ہے، اس دوران پانچ حکومتیں آئی ہیں کسی نے اسے نہیں چھیڑا، اس قانون میں دیگر ایجنسیوں کو شامل کیا جاتا تو پھر غلط استعمال کا خطرہ تھا۔

سینیٹر اعظم نذیر تارڑ نے یہ بھی کہا کہ اس قانون میں 18 گریڈ سے اوپر کے افسر کو لگایا جائے گا تاکہ غلط استعمال روکا جاسکے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ اس قانون کے استعمال پر مختلف چیکس ہوسکتے ہیں، اگر اتنا ہی یہ قانون غیر آئینی تھا تو گزشتہ 4 سال میں ہی اسے ختم کردیتے۔
 

Melanthus

Chief Minister (5k+ posts)
No one is going to believe these liars.Those who install cameras in people’s bedrooms have lost their moral compass.They are disgusting low lives.They have no shame,no honour and no regard for others.They are kanjars.