شہریوں کو 7ہزار میں مکمل سولر سسٹم ملے گا، سندھ حکومت کا بڑا اعلان

sola11h1h21.jpg


سندھ حکومت نے صوبے کے عوام کیلئے بڑا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ شہریوں کو صرف 7ہزار روپے میں مکمل سولر سسٹم فراہم کیا جائے گا۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سندھ حکومت نے ورلڈ بینک کے تعاون سے سندھ کے عوام کو سستے داموں سولر سسٹم فراہم کرنے کا منصوبہ شروع کیا ہے، اس منصوبے کے تحت کراچی کے 50 ہزار گھرانوں سمیت سندھ کے 2 لاکھ گھرانوں کو سولر سسٹم فراہم کیا جائے گا۔

رپورٹ کے مطابق ہر گھرانے کو 7 ہزارروپے میں سولر سسٹم فراہم کیا جائے گااس سسٹم سے گھر کا ایک پنکھا اور 3 ایل ای ڈی بلب جلائے جاسکتے ہیں، سسٹم میں سولر پینل، بیٹری اور چارج کنٹرولر شامل ہوگا۔

منصوبے کی تفصیلات بتاتے ہوئے ڈائریکٹر سندھ سولرا نرجی کا کہنا تھا کہ سندھ کے ہر ضلع میں 6ہزار 656 سولر سسٹم تقسیم کیے جائیں گے، اکتوبر میں اس منصوبے کا آغاز ہوجائے گا، جیسے ہی حکومت کی خریداری مکمل ہوجائے گی شہریوں میں اس کی تقسیم شروع کردی جائے گی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ منصوبے کیلئے ورلڈ بینک نے سندھ حکومت کو 3 کروڑ 20لاکھ ڈالرز کے فنڈز جاری کردیئے ہیں، منصوبے کی کامیابی کو دیکھتے ہوئے اس میں مزید توسیع بھی کی جاسکتی ہے۔
 

Will_Bite

Prime Minister (20k+ posts)
nut jobs ruling sindh for decades. 3 LEDs and one fan. How about giving these people some education as well, while youare at it.
 

Awan S

Chief Minister (5k+ posts)
nut jobs ruling sindh for decades. 3 LEDs and one fan. How about giving these people some education as well, while youare at it.
At least people will get some relief. You will be surprised to see how big population uses this low energy, like one or two fans and few lights only. Whenever any government gives any relief PTI followers will say what about that. How much facilities Khan gave in his government to facilitate or promote education? Instead of increasing the budget, he slightly reduced the education budget.
 

zaheer2003

Chief Minister (5k+ posts)
تین سو یونٹ بجلی کے یونٹ مفت کوئی نہیں دے سکتا ؟ کیا خان حکومت دے سکتی ہے ؟
Promised by KHAN or Maryam / Bilawal ?

Plus governemt already showed intention of taxing solar energy to households and then bringing Gross metering concept which will bring only liabilities to people as earlier those 12000 MGW addition by Mian Sanp brought Pakistan to knees for Capacity payments and expensive imported fuel charges.
 

Awan S

Chief Minister (5k+ posts)
Promised by KHAN or Maryam / Bilawal ?

Plus governemt already showed intention of taxing solar energy to households and then bringing Gross metering concept which will bring only liabilities to people as earlier those 12000 MGW addition by Mian Sanp brought Pakistan to knees for Capacity payments and expensive imported fuel charges.
کیا نقطہ اٹھایا ہے چھا گئے ہو مجھے تو لاجواب کر دیا - چونکے جو بات پہلے ہو اس کا مطالبہ بھی پہلے پورا کرنا بنتا ہو - پہلے خان صاحب سے کہو جو ایک کروڑ نوکریوں اور پچاس لاکھ گھروں کا وعدہ انہوں نے کیا تھا وہ پورا کریں پھر بلاول یا جس نے بھی تین سو یونٹ فری دینے کا وعدہ کیا ہے وہ بھی پورا کر دیں گے پکا وعدہ ہے
 

zaheer2003

Chief Minister (5k+ posts)
کیا نقطہ اٹھایا ہے چھا گئے ہو مجھے تو لاجواب کر دیا - چونکے جو بات پہلے ہو اس کا مطالبہ بھی پہلے پورا کرنا بنتا ہو - پہلے خان صاحب سے کہو جو ایک کروڑ نوکریوں اور پچاس لاکھ گھروں کا وعدہ انہوں نے کیا تھا وہ پورا کریں پھر بلاول یا جس نے بھی تین سو یونٹ فری دینے کا وعدہ کیا ہے وہ بھی پورا کر دیں گے پکا وعدہ ہے
پہلے بہت دفعہ کوشش کی تجھے اکانومی سمجھانے کی وہ تو سمجھ میں نہیں آئی تیری چل یہاں پھر ایک کوشش کر لیتا ہوں۔

ویسے مریم کا ۳۰۰ یونٹ فری کا وعدہ کیوں بھول گیا تو یہاں ؟

الیکشن سے پہلے جو پارٹی منشور آتا ہے وہ پانچ سال کی حکومت کے اقدامات کا وعدہ ہوتا ہے۔

خان صاحب نے جو ۱ کروڑ نوکریوں کا وعدہ کیا تھا اس پر کافی حد تک کامیاب ہوئے۔

۳۔۵ سال میں ۵۵ لاکھ نوکریاں دیں۔ پانچ سال میں کروڑ نہ بھی ہوتی تو نزدیک چلی جاتیں۔

https://twitter.com/x/status/1740970389831106668
اسی طرح تقریبا ہر بڑے شہر میں نیا پاکستان کا پراجیکٹ کھڑا ہو گیا تھا جو اب مٹی دھول کھا رہا ہے اور لوگوں کو وہ گھر نہیں دیے جا رہے
E1rie4sXoAMzm2v
 

Awan S

Chief Minister (5k+ posts)
پہلے بہت دفعہ کوشش کی تجھے اکانومی سمجھانے کی وہ تو سمجھ میں نہیں آئی تیری چل یہاں پھر ایک کوشش کر لیتا ہوں۔

ویسے مریم کا ۳۰۰ یونٹ فری کا وعدہ کیوں بھول گیا تو یہاں ؟

الیکشن سے پہلے جو پارٹی منشور آتا ہے وہ پانچ سال کی حکومت کے اقدامات کا وعدہ ہوتا ہے۔

خان صاحب نے جو ۱ کروڑ نوکریوں کا وعدہ کیا تھا اس پر کافی حد تک کامیاب ہوئے۔

۳۔۵ سال میں ۵۵ لاکھ نوکریاں دیں۔ پانچ سال میں کروڑ نہ بھی ہوتی تو نزدیک چلی جاتیں۔

https://twitter.com/x/status/1740970389831106668
اسی طرح تقریبا ہر بڑے شہر میں نیا پاکستان کا پراجیکٹ کھڑا ہو گیا تھا جو اب مٹی دھول کھا رہا ہے اور لوگوں کو وہ گھر نہیں دیے جا رہے
E1rie4sXoAMzm2v
اپنے پاس سے جتنی چاہے نوکریاں اور گھر بنوا لو کون مانتا ہے سوائے خود انصافیوں کے - پچپن لاکھ کیوں دو کروڑ نوکریاں بھی کہتے تو میں نے کیا کہنا تھا - سوائے ہیلتھ کارڈ کے کونسا پروجیکٹ تھا جو اپنے دور میں شروع کیا اور اپنے دور میں ہی ختم کیا - اگر کوئی پروجیکٹ آگے بڑھا بھی تو نواز دور سے چل رہا تھا - کونسے ترقیاتی منصوبے کئے کوئی ایک بتا دو - ہوا میں تو فائر جتنے مرضی کر لو کون روکتا ہے - ذرا مہیشت کے ہی نمبر ملا دو نواز کے دور سے تو ہوش آ جائے - قرض پچھلی حکومت کیا پاکستان کی تاریخ کے ٹوٹل کا اسی فیصد لیا - جس نے کہا تھا میں نے اگر قرض لیا تو خود کشی کر لونگا - اسٹاک مارکیٹ پورے ساڑھے تین سال چالیس سے پینتالیس ہزار تک گئی جو نواز اپنی وزارت عظمیٰ میں پچپن ہزار پر چھوڑ کر گیا نواز کو ہٹانے سے یہ گر کر پینتالیس ہزار تک آ گی - خان کے بھد اگلے دو سال میں اتنی بڑھی کہ اب ستر ہزار کے قریب ہے - نواز نے چار فیصد سے کم مہنگائی چھوڑی جو تیرہ تک خان لے گیا - بھد میں مہنگائی کئی گنا بڑھی ایک تو خان کے سڑک پر تماشوں سیاسی غیر یقینی اور ڈالر نہ ہونے اور قرض نہ ملنے سے ہوا - خان نےجو چھ فیصد گروتھ کی وہ سو فیصد امپورٹ کے پہاڑ کھڑے کرنے کی وجہ سے تھا - جب ڈالر ختم ہو گئے تو امپورٹ کے لئے کچھ نہ بچا جس سے نئی حکومت کو امپورٹ پر پابندی لگانی پڑی اور قرض واپسی سے زر مبادلہ کے ذخائر چار ارب ڈالر تک آ گئے اور یقینی بینکرپسی نظر آنے لگی - باجوہ نے خان سے جو حکومت گرنے کے بھد جو ملاقات کی اس میں ہٹانے کی یہی وجہ بتائی پلس بزدار کو نہ ہٹانے کی ضد کرنا - اگر اکانومی کے کسی نمبر پر بحث کرنی ہے تو ثبوت لگانے کے لئے تیار ہوں مگر آپ کی طرف سے بھی تصدیق شدہ ثبوت آنے چاہئیں ، ہوائی باتیں نہیں چلیں گی
 

zaheer2003

Chief Minister (5k+ posts)
اپنے پاس سے جتنی چاہے نوکریاں اور گھر بنوا لو کون مانتا ہے سوائے خود انصافیوں کے - پچپن لاکھ کیوں دو کروڑ نوکریاں بھی کہتے تو میں نے کیا کہنا تھا - سوائے ہیلتھ کارڈ کے کونسا پروجیکٹ تھا جو اپنے دور میں شروع کیا اور اپنے دور میں ہی ختم کیا - اگر کوئی پروجیکٹ آگے بڑھا بھی تو نواز دور سے چل رہا تھا - کونسے ترقیاتی منصوبے کئے کوئی ایک بتا دو - ہوا میں تو فائر جتنے مرضی کر لو کون روکتا ہے - ذرا مہیشت کے ہی نمبر ملا دو نواز کے دور سے تو ہوش آ جائے - قرض پچھلی حکومت کیا پاکستان کی تاریخ کے ٹوٹل کا اسی فیصد لیا - جس نے کہا تھا میں نے اگر قرض لیا تو خود کشی کر لونگا - اسٹاک مارکیٹ پورے ساڑھے تین سال چالیس سے پینتالیس ہزار تک گئی جو نواز اپنی وزارت عظمیٰ میں پچپن ہزار پر چھوڑ کر گیا نواز کو ہٹانے سے یہ گر کر پینتالیس ہزار تک آ گی - خان کے بھد اگلے دو سال میں اتنی بڑھی کہ اب ستر ہزار کے قریب ہے - نواز نے چار فیصد سے کم مہنگائی چھوڑی جو تیرہ تک خان لے گیا - بھد میں مہنگائی کئی گنا بڑھی ایک تو خان کے سڑک پر تماشوں سیاسی غیر یقینی اور ڈالر نہ ہونے اور قرض نہ ملنے سے ہوا - خان نےجو چھ فیصد گروتھ کی وہ سو فیصد امپورٹ کے پہاڑ کھڑے کرنے کی وجہ سے تھا - جب ڈالر ختم ہو گئے تو امپورٹ کے لئے کچھ نہ بچا جس سے نئی حکومت کو امپورٹ پر پابندی لگانی پڑی اور قرض واپسی سے زر مبادلہ کے ذخائر چار ارب ڈالر تک آ گئے اور یقینی بینکرپسی نظر آنے لگی - باجوہ نے خان سے جو حکومت گرنے کے بھد جو ملاقات کی اس میں ہٹانے کی یہی وجہ بتائی پلس بزدار کو نہ ہٹانے کی ضد کرنا - اگر اکانومی کے کسی نمبر پر بحث کرنی ہے تو ثبوت لگانے کے لئے تیار ہوں مگر آپ کی طرف سے بھی تصدیق شدہ ثبوت آنے چاہئیں ، ہوائی باتیں نہیں چلیں گی
ماشااللہ میں تو خود آپ کو آج تک سٹیٹ بنک کی رپورٹیں دکھاتا رہا ہوں اور آپ لے آتے ہو تھرڈ پارٹی ویب سائٹ۔

اب لگاو یہاں سرکاری ڈیٹا


۲۔ ڈالر نہ ہونے اور قرض نہ ملنے سے ہوا

۱۔ قرض پچھلی حکومت کیا پاکستان کی تاریخ کے ٹوٹل کا اسی فیصد لیا


۳۔ خان نےجو چھ فیصد گروتھ کی وہ سو فیصد امپورٹ کے پہاڑ کھڑے کرنے کی وجہ سے تھا

۴ٴجب ڈالر ختم ہو گئے تو امپورٹ کے لئے کچھ نہ بچا (بتائیں ڈالر کب اور کیسے ختم ہوئے)

لگا اب ثبوت سٹیٹ بنک اور حکومتی اعدادو شمار سے​
 

Awan S

Chief Minister (5k+ posts)
ماشااللہ میں تو خود آپ کو آج تک سٹیٹ بنک کی رپورٹیں دکھاتا رہا ہوں اور آپ لے آتے ہو تھرڈ پارٹی ویب سائٹ۔

اب لگاو یہاں سرکاری ڈیٹا


۲۔ ڈالر نہ ہونے اور قرض نہ ملنے سے ہوا

۱۔ قرض پچھلی حکومت کیا پاکستان کی تاریخ کے ٹوٹل کا اسی فیصد لیا


۳۔ خان نےجو چھ فیصد گروتھ کی وہ سو فیصد امپورٹ کے پہاڑ کھڑے کرنے کی وجہ سے تھا

۴ٴجب ڈالر ختم ہو گئے تو امپورٹ کے لئے کچھ نہ بچا (بتائیں ڈالر کب اور کیسے ختم ہوئے)

لگا اب ثبوت سٹیٹ بنک اور حکومتی اعدادو شمار سے​
Why state bank let's see international trusted web site?
The root cause (fasad ki jur) is very heavy import
Set above chart to 10 year to see the difference of import from Nawaz era and Khan era.
this is also confirmed when foreign currency reserved dropped sharply from
2020-2022
set below for 5 years to see sharp drop from 2020-2022

Pehle yeh maan lo phir aage kionke yehi asal fasad ki jar hei
 

Awan S

Chief Minister (5k+ posts)
ماشااللہ میں تو خود آپ کو آج تک سٹیٹ بنک کی رپورٹیں دکھاتا رہا ہوں اور آپ لے آتے ہو تھرڈ پارٹی ویب سائٹ۔

اب لگاو یہاں سرکاری ڈیٹا


۲۔ ڈالر نہ ہونے اور قرض نہ ملنے سے ہوا

۱۔ قرض پچھلی حکومت کیا پاکستان کی تاریخ کے ٹوٹل کا اسی فیصد لیا


۳۔ خان نےجو چھ فیصد گروتھ کی وہ سو فیصد امپورٹ کے پہاڑ کھڑے کرنے کی وجہ سے تھا

۴ٴجب ڈالر ختم ہو گئے تو امپورٹ کے لئے کچھ نہ بچا (بتائیں ڈالر کب اور کیسے ختم ہوئے)

لگا اب ثبوت سٹیٹ بنک اور حکومتی اعدادو شمار سے​
او بھائی جواب تو دو تا کہ بات آگے بڑھے - تم دیکھ سکتے ہو ایک موقع پر غیر ملکی کرنسی کے ذخائر تاریخ کے بلند ترین سطح سے بھی بہت زیادہ ہو گئے تھے جو کہ ستائیس ارب ڈالر تھے - انہیں ملکی ترقی کے لئے احتیاط سے خرچ کیا جاتا تو اگلے دو سال حالات کچھ اور ہوتے -امپورٹ کے پہاڑ کھڑے کرنے سے قیمتی ڈالر غیر ضروری عیاشی والی امپورٹ پر برباد ہو گئے - مارکیٹ میں ڈالر شارٹ ہو گئے قرض تک واپس کرنے کے لئے حوصلہ افزا ذخائر نہ تھے -آئی ایم ایف کو خان صاحب نے بھگا دیا وہ مزید قرض دینے کو تیار نہ تھا - اس آگ میں مزید پیٹرول خان صاحب نے ڈالا جب سڑکوں پر دھینگا مستی کی سیاسی غیر یقینی کا ماحول پیدا کیا اگرچے صبر کیا جا سکتا تھا الیکشن کچھ زیادہ دور نہ تھا - تاریخ اٹھا کر دیکھ لو جب بھی ڈالر اوپر گیا ہے مہنگائی اوپر گئی ہے یہ تھی ڈالر چڑھنے کی وجہ اور اس کے ساتھ مہنگائی تین گنا چڑھنے کی وجہ -
 

zaheer2003

Chief Minister (5k+ posts)
او بھائی جواب تو دو تا کہ بات آگے بڑھے - تم دیکھ سکتے ہو ایک موقع پر غیر ملکی کرنسی کے ذخائر تاریخ کے بلند ترین سطح سے بھی بہت زیادہ ہو گئے تھے جو کہ ستائیس ارب ڈالر تھے - انہیں ملکی ترقی کے لئے احتیاط سے خرچ کیا جاتا تو اگلے دو سال حالات کچھ اور ہوتے -امپورٹ کے پہاڑ کھڑے کرنے سے قیمتی ڈالر غیر ضروری عیاشی والی امپورٹ پر برباد ہو گئے - مارکیٹ میں ڈالر شارٹ ہو گئے قرض تک واپس کرنے کے لئے حوصلہ افزا ذخائر نہ تھے -آئی ایم ایف کو خان صاحب نے بھگا دیا وہ مزید قرض دینے کو تیار نہ تھا - اس آگ میں مزید پیٹرول خان صاحب نے ڈالا جب سڑکوں پر دھینگا مستی کی سیاسی غیر یقینی کا ماحول پیدا کیا اگرچے صبر کیا جا سکتا تھا الیکشن کچھ زیادہ دور نہ تھا - تاریخ اٹھا کر دیکھ لو جب بھی ڈالر اوپر گیا ہے مہنگائی اوپر گئی ہے یہ تھی ڈالر چڑھنے کی وجہ اور اس کے ساتھ مہنگائی تین گنا چڑھنے کی وجہ -
میں نے آپ کو اکانومی سمجھانے کی متعدد بار کوشش کی مگر پٹواری دماغ سمجھنا ہی نہیں چاہتا اس لیے جو باتیں لکھ رہے ہو ان کا پیپر ورک میں ثبوت مانگا وہ پھر نہیں دیا۔ اب اس پوسٹ میں سے ہی یہ ثابت کردو کہ

غیر ضروری عیاشی والی امپورٹ کونسی تھی جس سے ڈالر برباد ہوا اور آپ کے مطابق آئی ایم ایف بھاگا۔ یہاں تو تین مہینوں میں آئی ایم ایف سے پروگرام شروع ہو گیا تھا نونی حکومت کے مطابق


الیکشن کچھ زیادہ دور نہ تھا ؟

وہی الیکشن جس کو جان بوجھ کر آئین توڑ کر لٹکایا گیا ؟

میں تو اتین محنت کرکے آپ کو ثبوت دیتا ہوں اور آپ سیاسی بیان بازی کر کے کسی چیز کو نہیں مانتے جیسا کہ میں نے ۵۵ لاکھ نوکریوں کا تین سال میں ثبوت دیا گورنمنٹ کے کاغزوں اور آپ نے زحمت نہ کی تحقیق کر کے پڑھنے کی اور اس کو ہوائی بات کہہ کر اور بحث میں پڑ گئے ۔

دوبارہ پڑھنے اور سمجھنے کی کوشش کرو اور ایک ایک نقطے پر پراپر بحث کرو​

 

zaheer2003

Chief Minister (5k+ posts)
Why state bank let's see international trusted web site?
The root cause (fasad ki jur) is very heavy import
Set above chart to 10 year to see the difference of import from Nawaz era and Khan era.
this is also confirmed when foreign currency reserved dropped sharply from
2020-2022
set below for 5 years to see sharp drop from 2020-2022

Pehle yeh maan lo phir aage kionke yehi asal fasad ki jar hei
ذرا سمجھاو یہ ویب سائٹ ڈیٹا کہاں سے لیتی ہے ؟

اس ملک کے اداروں کی رپورٹوں سے۔

جس میاں سانپ کی حکومت کے نمبروں کی آپ دہائیاں دیتے ہو وہ بھی سٹیٹ بنک سے ہی آتے ہیں انٹرنیشنل ویب سائٹ سے نہیں ۔۔۔

اگر آپ کی بات تھوڑی دیر کیلئے مان بھی لی جائے کہ امپورٹ برائی کی جڑ ہے تو ذرا ۲۰۱۸ کے ۱۹۔۵ بلین کا کرنٹ اکاونٹ خسارہ دیکھو جو امپورٹ ایکسپورٹ ریمیٹنس اور لون پیمنٹ کے بیلنس پر مشتمل ہوتا ہے اور تاریخ کا سب سے بڑا خسارہ میاں سانپ دے کر گئے جس کیلئے بہت سے قرضوں کی ضرورت تھی خود نون لیک کی حکومت نے ۲۰۱۸ کا بھٹ دیتے ہوئے کہا یہ

To service maturing debt, Pakistan to borrow Rs22 trillion in 2018-19​

Finance minister Ismail seeks National Assembly’s approval for record amount

 

Awan S

Chief Minister (5k+ posts)
ذرا سمجھاو یہ ویب سائٹ ڈیٹا کہاں سے لیتی ہے ؟

اس ملک کے اداروں کی رپورٹوں سے۔

جس میاں سانپ کی حکومت کے نمبروں کی آپ دہائیاں دیتے ہو وہ بھی سٹیٹ بنک سے ہی آتے ہیں انٹرنیشنل ویب سائٹ سے نہیں ۔۔۔

اگر آپ کی بات تھوڑی دیر کیلئے مان بھی لی جائے کہ امپورٹ برائی کی جڑ ہے تو ذرا ۲۰۱۸ کے ۱۹۔۵ بلین کا کرنٹ اکاونٹ خسارہ دیکھو جو امپورٹ ایکسپورٹ ریمیٹنس اور لون پیمنٹ کے بیلنس پر مشتمل ہوتا ہے اور تاریخ کا سب سے بڑا خسارہ میاں سانپ دے کر گئے جس کیلئے بہت سے قرضوں کی ضرورت تھی خود نون لیک کی حکومت نے ۲۰۱۸ کا بھٹ دیتے ہوئے کہا یہ

To service maturing debt, Pakistan to borrow Rs22 trillion in 2018-19​

Finance minister Ismail seeks National Assembly’s approval for record amount

ذرا گراف غور سے دیکھو میاں صاحب کے دور کی امپورٹ خان صاحب کی امپورٹ کے مقابلے میں کچھ بھی نہیں - میاں صاحب کے پاس ستائیس ارب ڈالر کے ذخائر بھی نہیں تھے خان حکومت نے اتنا بڑا زر مبادلہ امپورٹ پر خرچ نہ کیا ہوتا تو یہ آگے بیرونی قرض پر کام آتا - ملک بینکرپسی کے اتنے قریب نہ جاتا - ڈالر جب شارٹ ہوئے تو مہنگائی خوفناک حد تک بڑھی - پاکستان کی کم تعلیم یافتہ عوام تو جو جس کے دور میں ہوا اسی کو قصور وار سمجھتی ہے مگر تم پڑھے لکھے لوگ تو سمجھو کہ امپورٹ کا پہاڑ کس نے کھڑا کیا اور مہنگائی کی بنیادی وجہ کیا تھی - خان صاحب کے بھد کی حکومت کی فوری امپورٹ روکنے سے مال پورٹ پر سڑتا رہا اور ایل سی کھولنے کے لئے ڈالر نہیں تھے - کیا یہ پی ڈی ایم کا قصور تھا ؟ خان صاحب کو ہٹانے کی بنیادی وجہ یہ تھی کہ ملک کو بینکرپسی سے بچایا جائے اور الحمدو لللہ وہ اب بچ گیا ہے
 

zaheer2003

Chief Minister (5k+ posts)
ذرا گراف غور سے دیکھو میاں صاحب کے دور کی امپورٹ خان صاحب کی امپورٹ کے مقابلے میں کچھ بھی نہیں - میاں صاحب کے پاس ستائیس ارب ڈالر کے ذخائر بھی نہیں تھے خان حکومت نے اتنا بڑا زر مبادلہ امپورٹ پر خرچ نہ کیا ہوتا تو یہ آگے بیرونی قرض پر کام آتا - ملک بینکرپسی کے اتنے قریب نہ جاتا - ڈالر جب شارٹ ہوئے تو مہنگائی خوفناک حد تک بڑھی - پاکستان کی کم تعلیم یافتہ عوام تو جو جس کے دور میں ہوا اسی کو قصور وار سمجھتی ہے مگر تم پڑھے لکھے لوگ تو سمجھو کہ امپورٹ کا پہاڑ کس نے کھڑا کیا اور مہنگائی کی بنیادی وجہ کیا تھی - خان صاحب کے بھد کی حکومت کی فوری امپورٹ روکنے سے مال پورٹ پر سڑتا رہا اور ایل سی کھولنے کے لئے ڈالر نہیں تھے - کیا یہ پی ڈی ایم کا قصور تھا ؟ خان صاحب کو ہٹانے کی بنیادی وجہ یہ تھی کہ ملک کو بینکرپسی سے بچایا جائے اور الحمدو لللہ وہ اب بچ گیا ہے
معزرت دوست میں تو تجھے پڑھا لکھا ہونے کا طعنہ بھی نہیں دے سکتا۔

بار بار پوچھ رہا ہوں کہ بتا دو کہ خان جب سولہ ارب خزانے میں چھوڑ کر گیا تھا تو ملک ڈیفالٹ کیسے ہو گیا

جبکہ میاں سانپ ۱۰ ارب چھوڑ کر گئے تھے ۲۰۱۸ میں اور تمھارے مطابق ملک ایشین ٹائیگر تھا

کرنٹ اکاونٹ کا خسارہ بھی تو نے نہیں بتایا

چل میں بتا دیتا ہوں میاں سانپ ۱۹۔۵ بلین کا چھوڑ کر گئے تھے جو ان کو ۲۔۵ بلین پر ملا تھا

اب سیکھ لے کہ کرنٹ اکونٹ خسارہ ہوتا کیا ہے ۔

خان تو خزانہ بھی بھر رہا تھا۔ قرض بھی ادا کر رہا تھا لوگوں کو کووڈ سے بھی بچا رہا تھا اور بزنس بھی بڑھا رھا تھا۔

پھر آیا شوباز اور اس نے تیرے مطابق امپورٹ بھی روک دی تو کیسے خزانہ سولہ ارب سے ۳ ارب پر آگیا

کوئی تو ڈاکومنٹ دکھا کہاں گئے پیسے ؟​

GEc5f_4XkAA2MSs


GDUmZ8AX0AAV9nV

GAcLCq3XsAA_PEm


میرا چلینج ہے اوپر بیان کیے گئے حقائق کو کسی اتھینٹک انفارمیشن سے جھٹلا یہاں۔

ایور پلیز اب آئیں باٗئیں شائیں نہ کریں
 

Awan S

Chief Minister (5k+ posts)
معزرت دوست میں تو تجھے پڑھا لکھا ہونے کا طعنہ بھی نہیں دے سکتا۔

بار بار پوچھ رہا ہوں کہ بتا دو کہ خان جب سولہ ارب خزانے میں چھوڑ کر گیا تھا تو ملک ڈیفالٹ کیسے ہو گیا

جبکہ میاں سانپ ۱۰ ارب چھوڑ کر گئے تھے ۲۰۱۸ میں اور تمھارے مطابق ملک ایشین ٹائیگر تھا

کرنٹ اکاونٹ کا خسارہ بھی تو نے نہیں بتایا

چل میں بتا دیتا ہوں میاں سانپ ۱۹۔۵ بلین کا چھوڑ کر گئے تھے جو ان کو ۲۔۵ بلین پر ملا تھا

اب سیکھ لے کہ کرنٹ اکونٹ خسارہ ہوتا کیا ہے ۔

خان تو خزانہ بھی بھر رہا تھا۔ قرض بھی ادا کر رہا تھا لوگوں کو کووڈ سے بھی بچا رہا تھا اور بزنس بھی بڑھا رھا تھا۔

پھر آیا شوباز اور اس نے تیرے مطابق امپورٹ بھی روک دی تو کیسے خزانہ سولہ ارب سے ۳ ارب پر آگیا

کوئی تو ڈاکومنٹ دکھا کہاں گئے پیسے ؟​

GEc5f_4XkAA2MSs


GDUmZ8AX0AAV9nV

GAcLCq3XsAA_PEm


میرا چلینج ہے اوپر بیان کیے گئے حقائق کو کسی اتھینٹک انفارمیشن سے جھٹلا یہاں۔

ایور پلیز اب آئیں باٗئیں شائیں نہ کریں
سولہ ارب میں سے اسٹیٹ بینک کے ذخائر صرف دس ارب ڈالر تھے اور آئی ایم ایف کو خان صاحب بگھا چکے تھے اور آئی ایم ایف کو بگھا چکے تھے پیٹرول اور بجلی سستی کرنے کی وجہ سے - کوئی اور قرض دینے کو تیار نہیں تھا کیونکے آئی ایم ایف بھاگ گیا تھا - دس ارب ڈالر کے ذخائر کتنی دیر چلتے - یہ کم ہو کر چار ارب ڈالر تک آ گئے - اگر خان صاحب نے ستائیس ارب ڈالر کے ذخائر کو امپورٹ میں نہ جھونکا ہوتا تو یہ دن نہ دیکھنا پڑتا - اب بتاؤ اس کا کیا جواب ہے -
 

Awan S

Chief Minister (5k+ posts)
معزرت دوست میں تو تجھے پڑھا لکھا ہونے کا طعنہ بھی نہیں دے سکتا۔

بار بار پوچھ رہا ہوں کہ بتا دو کہ خان جب سولہ ارب خزانے میں چھوڑ کر گیا تھا تو ملک ڈیفالٹ کیسے ہو گیا

جبکہ میاں سانپ ۱۰ ارب چھوڑ کر گئے تھے ۲۰۱۸ میں اور تمھارے مطابق ملک ایشین ٹائیگر تھا

کرنٹ اکاونٹ کا خسارہ بھی تو نے نہیں بتایا

چل میں بتا دیتا ہوں میاں سانپ ۱۹۔۵ بلین کا چھوڑ کر گئے تھے جو ان کو ۲۔۵ بلین پر ملا تھا

اب سیکھ لے کہ کرنٹ اکونٹ خسارہ ہوتا کیا ہے ۔

خان تو خزانہ بھی بھر رہا تھا۔ قرض بھی ادا کر رہا تھا لوگوں کو کووڈ سے بھی بچا رہا تھا اور بزنس بھی بڑھا رھا تھا۔

پھر آیا شوباز اور اس نے تیرے مطابق امپورٹ بھی روک دی تو کیسے خزانہ سولہ ارب سے ۳ ارب پر آگیا

کوئی تو ڈاکومنٹ دکھا کہاں گئے پیسے ؟​

GEc5f_4XkAA2MSs


GDUmZ8AX0AAV9nV

GAcLCq3XsAA_PEm


میرا چلینج ہے اوپر بیان کیے گئے حقائق کو کسی اتھینٹک انفارمیشن سے جھٹلا یہاں۔

ایور پلیز اب آئیں باٗئیں شائیں نہ کریں
میاں صاحب کی حکومت بھی کم و بیش اتنے ہی ذخائر چھوڑ کر گئی لیکن وہ اس سے بہت زیادہ تھے کیونکے امپورٹ خان کے دور سے دس گنا کم تھی - ذرا خان حکومت کے آخر کے قرض دیکھو وہ کتنے زیادہ تھے ، قرض کی ضرورت بھی کم تھی - یہ جو ہر وقت چھ فیصد گروتھ کا رٹ لگائے رکھتے ہو یہ بھاری امپورٹ کی وجہ سے تھی - بھاری امپورٹ سے امپورٹ ڈیوٹی کی وجہ سے ہر شعبے کو سبسڈی دے کر کارخانے زراعت وغیرہ کو عارضی ترقی دی جا سکتی ہے جس سے جی ڈی اوپر جاتا ہے مگر جب ڈالر ختم ہوتے ہیں تو بہت بڑی مصیبت پڑتی ہے - خان صاحب کی وجہ سے امپورٹ ایکسپورٹ سے تقریبا پچاس ارب ڈالر زیادہ ہو گئی تھی - ہم ایک ارب ڈالر کے لئے آئی ایم ایف سے بھیک مانگتے ہیں اور خان پچاس ارب ڈالر کا خسارہ چھوڑ کر گیا - میں نے نہایت ایمانداری سے اصلی فگر سے سے سب ثابت کیا ہے تمھیں convince کرنے کے لئے نہیں ملکی نقصان کو بتانے کے لئے - بس میں مزید کچھ نہیں کہنا چاہتا اتنا فالتو ٹائم نہیں کہ بار بار ایک ہی بات repeat کروں -
 

zaheer2003

Chief Minister (5k+ posts)
میاں صاحب کی حکومت بھی کم و بیش اتنے ہی ذخائر چھوڑ کر گئی لیکن وہ اس سے بہت زیادہ تھے کیونکے امپورٹ خان کے دور سے دس گنا کم تھی - ذرا خان حکومت کے آخر کے قرض دیکھو وہ کتنے زیادہ تھے ، قرض کی ضرورت بھی کم تھی - یہ جو ہر وقت چھ فیصد گروتھ کا رٹ لگائے رکھتے ہو یہ بھاری امپورٹ کی وجہ سے تھی - بھاری امپورٹ سے امپورٹ ڈیوٹی کی وجہ سے ہر شعبے کو سبسڈی دے کر کارخانے زراعت وغیرہ کو عارضی ترقی دی جا سکتی ہے جس سے جی ڈی اوپر جاتا ہے مگر جب ڈالر ختم ہوتے ہیں تو بہت بڑی مصیبت پڑتی ہے - خان صاحب کی وجہ سے امپورٹ ایکسپورٹ سے تقریبا پچاس ارب ڈالر زیادہ ہو گئی تھی - ہم ایک ارب ڈالر کے لئے آئی ایم ایف سے بھیک مانگتے ہیں اور خان پچاس ارب ڈالر کا خسارہ چھوڑ کر گیا - میں نے نہایت ایمانداری سے اصلی فگر سے سے سب ثابت کیا ہے تمھیں convince کرنے کے لئے نہیں ملکی نقصان کو بتانے کے لئے - بس میں مزید کچھ نہیں کہنا چاہتا اتنا فالتو ٹائم نہیں کہ بار بار ایک ہی بات repeat کروں -
آپ کے استاد کو جوتا ہاتھ میں پکڑ کر پڑھانا چاہیئے تھا۔

ایک بھی رپورٹ پڑھ لیتے تو پتہ چلتا کہ کیا اول فول لکھی جا رہے ہو۔

سٹیٹ بنک کہتا ہے کہ جب خان کی حکومت گئی اس وقت فارن ریسرو سولہ بلین کے صرف حکومت کے تھے

اور ٹوٹل ۲۲ بلین تھے

اور میاں سانپ کے دس بلین

پڑھ مر لیا کرو کندھ ذہنو


اور پہلے بھی کہا کہ امپورٹ ایکسپورٹ اکیلی نہیں ہوتی۔

ریمیٹنس اور لون پے بیک بھی اس کا حصہ ہوتا ہے اور اس کے بعد بچتا ہے خسارہ یا سرپلس

اور وہ میاں سانپ پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا چھوڑ کر گئے تھے۔

اگر کہیں سے کوئی آفیشل رپورٹ پڑھ لیتے تو پتہ چلتا کہ خان کے آخری سال جو امپورٹ سب سے زیادہ ہوئی وہ انڈسٹری مشینری اور پٹرولیم پرڈاکٹ تھیں جن میں تیل کوئلہ جس سے بجلی بنتی تھی وہ زیادہ تھا۔ یہ سوخات بھی میاں سانپ ہمارے متھے مار گئے تھے کہ امپورٹڈ مال پر مہنگی بجلی بناو ورنہ بنا بنائے ہی کپیسٹی چارجز دو۔

سب سے بڑی بات اتنے دنوں سے ایک ہی بات خود کیے جارہے ہو کہ امپورٹ شوباز نے آتے ہی روک دی تو کہاں گئے وہ ۱۲ ارب کے فارن ریسرو پھر ؟
اس سے بھی بڑی چول ماری جا رہے ہو کہ ثبوت دے رہا ہوں ۔ کون سا ثبوت دیا ابھی تک تم نے صرف ایک تھرڈ پارتی ویب سائٹ ؟

جبکہ میں تمھیں حکومت پاکستان کے آفیشل سورس سے ڈیٹا دے رہا ہوں اور تم پڑھنے کی بھی زحمت نہیں کر رہے
 

Awan S

Chief Minister (5k+ posts)
آپ کے استاد کو جوتا ہاتھ میں پکڑ کر پڑھانا چاہیئے تھا۔

ایک بھی رپورٹ پڑھ لیتے تو پتہ چلتا کہ کیا اول فول لکھی جا رہے ہو۔

سٹیٹ بنک کہتا ہے کہ جب خان کی حکومت گئی اس وقت فارن ریسرو سولہ بلین کے صرف حکومت کے تھے

اور ٹوٹل ۲۲ بلین تھے

اور میاں سانپ کے دس بلین

پڑھ مر لیا کرو کندھ ذہنو


اور پہلے بھی کہا کہ امپورٹ ایکسپورٹ اکیلی نہیں ہوتی۔

ریمیٹنس اور لون پے بیک بھی اس کا حصہ ہوتا ہے اور اس کے بعد بچتا ہے خسارہ یا سرپلس

اور وہ میاں سانپ پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا چھوڑ کر گئے تھے۔

اگر کہیں سے کوئی آفیشل رپورٹ پڑھ لیتے تو پتہ چلتا کہ خان کے آخری سال جو امپورٹ سب سے زیادہ ہوئی وہ انڈسٹری مشینری اور پٹرولیم پرڈاکٹ تھیں جن میں تیل کوئلہ جس سے بجلی بنتی تھی وہ زیادہ تھا۔ یہ سوخات بھی میاں سانپ ہمارے متھے مار گئے تھے کہ امپورٹڈ مال پر مہنگی بجلی بناو ورنہ بنا بنائے ہی کپیسٹی چارجز دو۔

سب سے بڑی بات اتنے دنوں سے ایک ہی بات خود کیے جارہے ہو کہ امپورٹ شوباز نے آتے ہی روک دی تو کہاں گئے وہ ۱۲ ارب کے فارن ریسرو پھر ؟
اس سے بھی بڑی چول ماری جا رہے ہو کہ ثبوت دے رہا ہوں ۔ کون سا ثبوت دیا ابھی تک تم نے صرف ایک تھرڈ پارتی ویب سائٹ ؟

جبکہ میں تمھیں حکومت پاکستان کے آفیشل سورس سے ڈیٹا دے رہا ہوں اور تم پڑھنے کی بھی زحمت نہیں کر رہے
YEAR-END LEVELS
END PERIODNET RESERVES WITH SBPNET RESERVES WITH BANKSTOTAL LIQUID
FX RESERVES
1998-991,672.7616.52,289.2
1999-00997.0976.61,973.6
2000-011,688.91,542.63,231.5
2001-024,337.42,098.26,435.6
2002-039,529.11,240.610,769.7
2003-0410,563.91,825.412,389.3
2004-059,804.72,792.912,597.6
2005-0610,765.22,357.213,122.4
2006-0713,345.42,301.815,647.2
2007-088,577.02,821.711,398.7
2008-099,117.93,307.312,425.2
2009-1012,958.23,792.216,750.4
2010-1114,783.63,460.218,243.8
2011-1210,803.34,485.415,288.7
2012-136,008.45,011.111,019.5
2013-149,097.55,043.614,141.1
2014-1513,525.75,173.518,699.2
2015-1618,142.64,955.923,098.5
2016-1716,144.85,258.121,402.9
2017-18R9,765.26,618.416,383.6
2018-19R7,285.27,196.414,481.6
2019-20R12,132.06,754.418,886.4
2020-21R17,298.67,099.024,397.6
2021-22R9,814.65,635.215,449.8
2022-234,445.14,714.99,160.0
جو اسٹیٹ بینک کی رپورٹ لگائی ہے وہ خود پڑھ لو - یہ نو اشاریہ دو ارب ڈالر دو ہزار بائیس تیئس کے ذخائر شو کر رہی ہے