سپریم کورٹ نے تحریف قرآن پاک کیس فیصلے کی وضاحت جاری کردی

8sccwzaaahhtttjkl.png

سپریم کورٹ نے تحریف قرآن پاک کیس میں ملزم کو ضمانت دینے سے متعلق 6 فروری کے فیصلے پر وضاحت جاری کردی ہے۔

سپریم کورٹ آف پاکستان کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ فیصلے سے متعلق الیکٹرانک، پرنٹ اور سوشل میڈیا پر غلط رپورٹنگ کی وجہ سے غلط فہمیاں پیدا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے اور ایسا تاثر دیا جارہا ہے کہ سپریم کورٹ نے دوسری آئینی ترمیم"مسلمان کی تعریف" سے انحراف کیا ہے اور مذہب کے خلاف جرائم سے متعلق مجموعہ تعزیرات پاکستان کی دفعات ختم کرنے کیلئے کہا ہے۔

سپریم کورٹ نے پریس ریلیز میں ایسے تاثرات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ اگر مقدمے میں درج الزامات کو جوں کا توں درست تسلیم کیا جائے تو ان پر فوجداری ترمیمی ایکٹ 1932 کی دفعہ 5 کا اطلاق ہوتا ہے جس کے تحت زیادہ سے زیادہ سزا6 ماہ کی قید ہے، ملزم چونکہ پہلے ہی قید میں ایک سے زیادہ کا عرصہ گزار چکا ہے اس لیے اسلامی احکامات، آئینی دفعات ، قانون و انصاف کے تقاضوں کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے سپریم کورٹ نے ملزم کی ضمانت پر رہائی کا حکم دیا۔

GG8VPHDX0AAgpvI


پریس ریلیز میں کہا گیا کہ افسوس کی بات ہے کہ ایسے مقدمات میں جذبات مشتعل ہوجاتے ہیں اور اسلامی احکامات بھلادیئے جاتے ہیں، چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ اپنے فیصلوں میں قرآن مجید کی آیات، خاتم النبیین ﷺ کی احادیث، خلفائے راشدین کے فیصلوں، فقہائے کرام کی آراء سے استدلال کرتے ہوئے یہ کوشش کرتے ہیں کہ تمام قوانین کی ایسی تعبیر اختیار کی جائے کہ احکامات اسلام کے مطابق ہو۔

سپریم کورٹ کی پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ عدالت کے فیصلوں پر مناسب اسلوب میں تنقید کی جاسکتی ہے مگر نظر ثانی کا آئینی راستہ اختیار کیے بغیر تنقید کے نام پر عدلیہ یا ججز کے خلاف منظم مہم افسوسناک ہے اور اظہار رائے کی آزادی کی خلاف ورزی ہے۔
 

Nebula

Minister (2k+ posts)
In muslim state you can't allow dis respect of prophets. In mirza belive and books he is using swearing 🤬( filthy) language. Call them freedom of speech is west agenda. Once muslim accept dis respect to prophet like Christian these days used to,so muslim will stop following Allah path. May Allah save us all from these sort of ideas AAMEEN.

For fact check last 6 months Adnan Rashid and Muhammaf Imtiaz video with qadiyani preechers discussion on YouTube.