ساہیوال،ووٹ نہ دینے پربااثر افرادکامسیحی محنت کشوں پر تشدد،گھروں کوآگ لگادی

7سھاھقیاماسعھھسج.png

ضلع ساہیوال کی تحصیل ہڑپہ میں قومی اسمبلی کے حلقہ این اے142 میں ضمیر کی آواز پر ووٹ ڈالنے پر بااثرافراد نے مسیحی برادری کے محنت کشوں کو تشدد کا نشانہ بنا ڈالا اور ساتھ ہی مکان کونظر آتش بھی کردیا۔

سوشل میڈیا پر سامنے آنے والی ایک ویڈیو میں ہڑپہ کے گاؤں6/11 ایل کے رہائش پزیر حشمت مسیح، شوکت مسیح اور طاہر گل نے واقعہ کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ ایک بہت بڑے زمیندار اور بااثرافراد نے اپنےخوف سے لوگوں کو ہراساں کررکھا ہے، ہم نے اپنی مرضی اور خوشی سے ایک امیدوار کو ووٹ ڈالا جو ان بااثر افراد کو گوارا نہیں ہوا۔

https://twitter.com/x/status/1756982892180251118
متاثرین کا کہنا ہے کہ ہمارے ووٹ ڈالنے پررات 1 بجے کے قریب ہمارے گھروں پر فائرنگ ہوئی، طاہر صاحب کے رکشہ اور گھر کو نظر آتش کردیا گیا جبکہ سرعام ہمیں دھمکیاں دیتے ہوئے اعلان کیا گیا ہے کہ وہ ہمیں اس گاؤں میں رہنے نہیں دیں گے۔

خیال رہے کہ ہڑپہ کے اس حلقہ این اے 142 ہڑپہ سے پی ٹی آئی کے حمایت یافتہ امیدوار چوہدری عثمان ایم کامیاب ہوئے ہیں جبکہ مسلم لیگ ن کے امیدوار چوہدری محمد اشرف شکست سے دوچار ہوئے ہیں۔