تیری نادانیاں میری کمزوریاں

ustadjejanab

Chief Minister (5k+ posts)
یہ تو سب کو پتا ھے کہ ہاتھی کے دانت کھانے کے اور دکھانے کے الگ الگ ھوتے ہیں لیکن یہ کوئی نہیں بتاتا کے ہاتھی اپنے کھانے کے دانت چھپا کہ کیوں رکھتا ھے ...میرے خیال میں شائد اس لئے کہ " اگر کچھ ٹوٹ بھی جائیں وار ( انگلش والا) میں تو ........تکلیف نہ ہو کھانے میں ".......ھمارے سیاست دانوں نے ہاتھی سے کم از کم یہ ضرور سیکھا ھے کہ اپنے کھانے کے دانت ہمیشہ بچا کہ رکھنے چاہیے...کیونکہ اگر " کھائیں گے نہیں تو بڑے کیسے ہوں گے "...........اچھی صحت کے لئے کھانا ضروری ھے اور اچھا کھانے کے لئے حکومت میں آنا ضروری ھے .....اب چاھے ناشتے میں نیٹو کے کنٹینر کھا لیے جائیں ،،،دوپہر کو سٹیل مل کا سریا نمک چھڑک کر کھا لیا جاۓ....شام کی چاۓ کے ساتھ کچھ پلاٹ بھگو کر اور رات کے کھانے میں حاجیوں کا مال غنیمت تبرک کے طور پر تناول فرما لیا جاے تو کیا مضائقہ ھے ....... مل کر کھانے میں برکت ہوتی ھے اور جب ھمارے چوہدری صاحبان نے یہ برکت سمیٹنے کا فیصلہ کیا تو یار لوگوں نے نجانے کیوں اس میں کیڑے نکالنے شروع کر دیے ...... ھم یہ کیوں نہیں سمجھتے کہ خوہشات رکھنا ہر شخص کا حق ھے ....اب اگر پرویز الہی صاحب کی مشرف کو دس بار صدر بنانے کی خواہش میری پہلی محبت کی طرح ادھوری رہ گئی ،،،،،،تخت لاھور کے ساتھ ھنوز دلی دور است والا معاملہ رھا،،،،اور مونس الہی کو اگلا وزیر اعظم بنانے کا خواب شرمندہ تعبیر ھونے کا کوئی امکان بھی باقی نہ رھا تو کیا چودھری صاحب بھاگتے چور کی لنگوٹی نہ پکڑیں تو اور کیا کریں ..........باقی رھا اصول ،، اخلاق اور تہذیب وغیرہ کی باتیں تو یہ کتابوں میں ہی اچھی لگتی ھیں.......پڑھے لکھے پنجاب کے موجد ان موصوف کو کتابوں میں لکھی باتوں سے کوئی خاص دلچسپی نہیں .....ہاں انھیں دو جمع دو چار کرنا اچھی طرح سے آتا ھے .......................
الیکشن میں وقت تھوڑا سا رہ گیا ،،،،،ابھی تو حلقہ بندیاں بھی کرنی ھیں ،،،،کوئی دو چار ٹوٹیاں،،،،پانچ سات پائپ،،،،،دس بارہ گلیاں ھی پکی کروا دیں تو شاید ووٹروں کو کوئی رحم آ جاے .......پھر بات یہ بھی ھے کہ تھانیدار اور پٹواری اپنا بندہ نہ ہو تو بندہ بوکھلا کر اپنا ووٹ بھی کسی دوسرے کے باکس میں ڈال آتا ھے ......ووٹروں کو " روٹی شوٹی " بھی کھلانی پڑتی ھے اور اس کے لیے حکومتی صوابدیدی فنڈ سے بہتر کوئی نسخہ ھو تو کوئی ہمیں بھی بتاے......،،،ویسے بھی جھنڈا لگی گڈ ی،،،،،،آگے پیچھے لشکارے مارتی پولیس .....نام کے ساتھ وزیر لگ جاے تو بندہ ویسے ھی معزز لگنا شروع ھو جاتا ھے ....تم لوگوں کو کیا پتا ....بندر کیا جانے ادرک کا سواد.......جلنے والے کا منہ کالا ....کراس کرو یا برداشت کرو .....ٹرکوں پر لکھے آدھے سے زیادہ محاورے ویسے بھی چودھری صاحب کی اپنی تخلیق ھیں ...................................
نوٹ :::: تازہ ترین خبر یہ ھے کہ گرگٹ نے اپنے اہل و عیال کے ہمراہ محاورے بنانے والوں کے خلاف لانگ مارچ کا علان کر دیا ھے ..............
 
Last edited by a moderator: