بلاول نے خلاف قانون کاغذات نامزدگی جمع کروائے،لاہور ہائیکورٹ میں درخواست

bilalah11i1.jpg


چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کے انتخابی نشان کے حوالے سے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کر دی گئی ہے۔

سینئر صحافی شاکر محمود اعوان نے لاہور ہائیکورٹ میں دائر کی گئی یہ پٹیشن سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ایکس (ٹوئٹر) پر شیئر کرتے ہوئے لکھا: لاہور ہائیکورٹ میں چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کے انتخابی نشان سے متعلق درخواست دائر کر دی گئی ہے جس میں بلاول بھٹو زرداری کو فریق بنایا گیا ہے اور یہ پٹیشن اتنی اہم ہے کہ پیپلزپارٹی کی ساری نشستیں جا سکتی ہیں۔

لاہور ہائیکورٹ میں چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کے انتخابی نشان سے متعلق دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ وہ چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی ہیں جبکہ لاہور سے بلاول بھٹو نے کاغزات نامزدگی ایک دوسری سیاسی جماعت پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرین کی طرف سے جمع کروائے ہیں۔
https://twitter.com/x/status/1798591594008117578
درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان کی طرف سے بلاول بھٹو کی طرف سے کسی دوسری سیاسی جماعت سے کاغذات جمع کروانے پر کوئی سزا نہیں دی نہ ہی اس کے کانوں پر جوں تک رینگی ہے۔ پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرین کے صدر آصف علی زرداری جبکہ بلاول بھٹو پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین ہیں اور اس کا انتخابی نشان تیر ہے۔

درخواست کے مطابق آصف علی زرداری کی طرف سے قوانین کے برعکس پاکستان پیپلزپارٹی کا جھنڈا اور انتخابی نشان استعمال کیا جا رہا ہے۔ بلاول بھٹو نے الیکشن ایکٹ 2017ء کے برعکس لاہور سے انتخابات لڑنے کے لیے اپنے کاغذات نامزدگی جمع کروائے ہیں، عدالت الیکشن کمیشن آف پاکستان کو بلاول بھٹو کے خلاف کارروائی کرنے کا حکم جاری کرے۔

عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ بلاول بھٹو زرداری کے این اے 127 سے پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرین کے نام سے کاغذات جمع کروانے کے اقدام کو غیرقانونی قرار دیا جائے۔ عدالت پیمرا کو حکم جاری کرے کہ وہ میڈیا کو پابند بنائیں کہ بلاول بھٹو کا نام چیئرمین پیپلزپارٹی لکھا جائے۔
 

Nice2MU

President (40k+ posts)
اگر پی ٹی آئی ہوتی تو حرامی کمیشن کی پھرتیاں دیکھنے لائق ہوتی۔