آئی ایم ایف نے نومنتخب پاکستانی حکومت کو مطالبات کی فہرست ارسال کردی

6imfafafmammshehbabz.png

عالمی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف کے ماہرین نے پاکستان کی نئی وفاقی حکومت مطالبات پر مبنی رپورٹ بھیج دی ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق آئی ایم ایف ماہرین کی جانب سے پاکستانی حکومت کو بھجوائی گئی رپورٹ میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ نئی حکومت سیلز ٹیکس پر چھوٹ کو ختم کرے، تمام اشیائے خوردونوش بشمول چینی پر ٹیکس کے حوالے سے دی گئی رعایت ختم کی جائے، کھانے پینے کی اشیاء اور ادویات پر کم سے کم سیلز ٹیکس 18 فیصد کیا جائے۔


رپورٹ میں بظاہر نئے قرض کی بنیادی شرائط کے طور پر آئی ایم ایف ماہرین کی جانب سے حکومت پاکستان سے کہا گیا ہے کہ حکومت نئے بجٹ میں تقریبا 1300 ارب روپے کے ٹیکس لگائے۔

خیال رہے کہ آئی ایم ایف ماہرین پر مشتمل وفد نے پاکستان کی معاشی صورتحال اور کارکردگی کا جائزہ لینے کیلئے دسمبر 2023 میں پاکستان کا دورہ کیا تھا۔
 

ranaji

President (40k+ posts)
مطالبات بتی بنا کر جرنیلوں کو بھیجے جائیں جو دراصل خود چھپ کر حکومت کر رہے ہیں چھہتر سال سے حکومت جرنیلوں کے پاس ہی ہے
 

NCP123

Minister (2k+ posts)
مطالبات بتی بنا کر جرنیلوں کو بھیجے جائیں جو دراصل خود چھپ کر حکومت کر رہے ہیں چھہتر سال سے حکومت جرنیلوں کے پاس ہی ہے
bhejoo nahi unn ke pechwarey mein jaa ker denaa chahyey.....
 

Citizen X

President (40k+ posts)
Maujaan hi maujaan, as if these fucks care, they dont have to pay from their pocket. Yes to 70% tax bhi kaga deinge bheek lebe ke liye jo inki apni jaibon main jaani hai