New Zealand PM bans all semi-automatic weapons and assault rifles

Amin Khan 1

Minister (2k+ posts)

New Zealand will ban all types of semi-automatic weapons and assault rifles following the Christchurch attacks, Prime Minister Jacinda Ardern has said.

The announcement comes less than a week after 50 people were killed at two mosques, allegedly by a lone gunman.

Ms Ardern said she expected new legislation to be in place by 11 April, saying: "Our history changed forever. Now, our laws will too."

All of the dead have now been formally identified, police have confirmed.

Australian Brenton Tarrant, a self-proclaimed white supremacist, has been charged with one murder and was expected to face further charges.

However, police said on Thursday that the person he was formally accused of killing had been wrongly declared dead.

They said they had apologised to the woman and her family, and that the charge sheet would be updated when the suspect appeared in court on 5 April.

What will change and how soon?

"Six days after this attack, we are announcing a ban on all military style semi-automatics (MSSA) and assault rifles in New Zealand," Ms Ardern said in a news conference.

"Related parts used to convert these guns into MSSAs are also being banned, along with all high-capacity magazines."

An amnesty has been imposed so the owners of affected weapons can hand them in, and a buy-back scheme will follow.

Ms Ardern said the buy-back could cost up to NZ$200m ($138m; £104m), but "that is the price that we must pay to ensure the safety of our communities".

New Zealand prime minister Jacinda Ardern


Our actions, on behalf of all New Zealanders, are directed at making sure this never happens again.
The prime minister has called the Christchurch attacker a terrorist and said she will not utter his name.

The lone gunman, armed with semi-automatic rifles including an AR-15, is believed to have modified his weapons with high-capacity magazines - the part of the gun which stores ammunition - so they could hold more bullets.

Ms Ardern said measures had also been introduced to prevent gun stockpiling before the law changes.

As of Thursday, several weapons have been reclassified as military style semi-automatic firearms, making them harder to buy.

"For many people, you will now be in unlawful possession of your firearm," Police Commissioner Mike Bush said.

He urged affected gun owners to call police or access their website for instructions, and to avoid turning up at police stations with their weapons.

What did the PM tell gun owners?

She said many gun owners had "acted within the law" but that "the vast majority of legitimate gun owners in New Zealand will understand that these moves are in the national interest".

As with Australia's gun reforms in 1996, exemptions will be made for farmers who need weapons for pest control and animal welfare.

Police minister Stuart Nash, who was present at the prime minister's press conference, said it was "a privilege and not a right to own a firearm in New Zealand".

How will the law be changed?

Ms Ardern said the legislation would be introduced when parliament sits in the first week of April.

There would be a "short, sharp select committee process" for feedback on technical aspects of the law, she said, and changes to the Arms Act should be passed within the next session.

Once the amnesty period ends, anyone in possession of a banned weapon would face a fine of up to NZ$4,000 and three years in jail.

New Zealand has tried - and failed - to reform its gun laws several times in the past two decades, but the momentum for change is now overwhelming. Owners will be forced to surrender proscribed firearms and will be compensated, but those who resist could be prosecuted.

A major hurdle for the authorities is that no-one knows how many assault rifles and military-style semi-automatic weapons are out there. New Zealand's Police Association has said there also needs to be a register of all guns and their owners.

That could happen in the next round of amendments promised by the prime minister, which will focus on licensing and registration. She has broad public support following the atrocities in Christchurch.

Earlier, MPs in the capital, Wellington, were handed a petition with more than 65,000 signatures demanding tougher laws. Some gun owners aren't happy, insisting that vetting procedures were already strict enough. They are, though, swimming against the tide.

What has the reaction been?

Survivor Kawthar Abulaban, 54, who was at the Al Noor mosque, welcomed the move: "It's a good thing, why would we need to have guns like this in our houses?" she told AFP.

The leader of New Zealand's opposition National Party, Simon Bridges, backed the changes and said it was "imperative in the national interest [that] we keep New Zealanders safe."

The move drew strong responses in the US, where campaigners against gun violence frequently clash with the pro-gun lobby.

Democratic Senator Bernie Sanders called for America to follow New Zealand's lead, tweeting: "This is what real action to stop gun violence looks like."

In response, National Rifle Association (NRA) spokeswoman Dana Loesch cited the Second Amendment of the US constitution, which gives Americans the right to carry guns.

"The US isn't NZ," she tweeted. "While they do not have an inalienable right to bear arms and to self defense, we do."


 
Advertisement
Last edited by a moderator:

Dr Adam

Chief Minister (5k+ posts)
اس ایکشن پر سب سے زیادہ تنقید اور تکلیف امریکا کی گن لابی کو ہو گی

Stay tuned for that.
 

aneeskhan

Chief Minister (5k+ posts)
A great woman showing all good qualities of human by her emotions and actions.
Can Pakistan follow same banning all weapons irrespective what position he or she has?
If it is decided you will listen arguments
  • yeah tu Mard Ka Zewar hai
  • yeah saddion ka culture aur Rozgar hai
  • yeah aur powder hamara Zarya Mash hai

 

concern_paki

Minister (2k+ posts)
WOW, JUST AFTER ONE ATTACK AND EVEN THAT ON MUSLIMS AND MOSQUE..ban on guns, In USA MANY ATTACKS EVERYWHERE EVEN IN KIDS SCHOOL, STILL NO ONE COULD BAN GUNS, WHAT A MONOPOLY
 

Khan125

Minister (2k+ posts)
I think weapon was not guilty. It was the person who used the weapon.
Such extremist views shd be banned which spread hatred in the society.
E.g if people inside mosque also had weapons, this person would not have been able to kill so many.
 

Londoner/Lahori

Minister (2k+ posts)
کرائسٹ چرچ: وزیرِ اعظم جاسنڈا آرڈرن کا خود کار ہتھیاروں پر پابندی عائد کرنے کا اعلان
  • 28 منٹ پہلے

نیوزی لینڈ کی وزیراعظم نے کہا ہے کہ کرائسٹ چرچ حملے میں استعمال ہونے والے نیم خود کار ہتھیاروں کی تمام اقسام پر پابندی عائد کی جائے گی
نیوزی لینڈ کی وزیرِ اعظم جاسنڈا آرڈرن نے کہا ہے کہ ان کا ملک کرائسٹ چرچ حملے میں استعمال ہونے والے نیم خود کار ہتھیاروں کی تمام اقسام پر پابندی عائد کرے گا۔
گذشتہ جمعے کو دو مساجد پر ہونے والے حملوں کے بعد نیوزی لینڈ میں اسلحے کے بارے میں قوانین زیرِ بحث ہیں۔ ان حملوں میں 50 افراد ہلاک ہوئے تھے۔
جاسنڈا آرڈرن کا کہنا تھا کے اس حوالے سے نئی قانون سازی 11 اپریل تک وضح ہو جائے گی۔
انھوں نے مزید بتایا کہ ممنوعہ اسلحے کی واپسی کے حوالے سے نئی سکیم بھی متعارف کروائی جائے گی اور اس قانون سازی سے قبل ایسے اقدامات کیے جائیں گے جس سے پابندی سے پہلے اسلحے کی خریداری کی روک تھام کی جا سکے۔
وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ 'حملے کے چھ روز بعد ہم تمام اقسام کے ملٹری سٹائل نیم خود کار ہتھیاروں اور خود کار رائفلز پر پابندی عائد کرنے کا اعلان کرتے ہیں۔'
تصویر کے کاپی رائٹGETTY IMAGESImage captionکرائسٹ چرچ میں ہلاک ہونے والوں کی تدفین کا عمل شروع ہو چکا ہے
'ان پارٹس پر بھی پابندی عائد کی جائے گی جو بندوقوں کو نیم خود کار ہتھیاروں میں تبدیل کرنے اور بہت زیادہ گنجائش رکھنے والے میگزینز پر بھی پابندی عائد کی جائے گی۔'
نئی قانون سازی
بدھ کو بی بی سی کے نامہ نگار کلائیو مائری کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں جاسنڈا آرڈرن نے نیم خود کار ہتھیاروں کی عام دستیابی اور نیوزی لینڈ میں اس حوالے سے قوانین کو ایک مسئلہ قرار دیتے ہوئے نئی قانون سازی کا عندیہ دیا تھا۔
ان کا کہنا تھا کہ نیوزی لینڈ میں قانونی مقاصد کے لیے بندوق کے استعمال کی اجازت ہے خاص کر دیہی علاقوں میں۔
ان کے مطابق وہ اس حوالے سے قانون سازی کریں گی اور انھیں یقین ہے کہ نیوزی لینڈرز نیم خود کار ہتھیاروں کی دستیابی کے مسئلے کو ڈیل کرنے کے لیے ہمارا ساتھ دیں گے، وہ ہتھیار جو خاص طور پر انسانی جانوں کو لینے کے لیے بنے ہیں۔

’یہ ہر نیوزی لینڈر کا فرض ہے کہ وہ یہاں بسنے والوں کو تحفظ کا احساس دلائیں اور نسل پرستی پر مبنی ہر اقدام کو چیلنج کریں۔ میں ہر اس فرد کو جو نیوزی لینڈ کو اپنا گھر سمجھتا ہے اور اس کا جو بھی مذہب یا قومیت ہے یقین دلانا چاہتی ہوں کہ وہ اپنے آپ کو محفوظ تصور کرے۔‘
وزیرِاعظم آرڈرن نے 'وائٹ نیشنل ازم' یا سفید فام قوم پرستی کو ’ایک عالمی مسئلہ‘ بھی قرار دیا۔
'یہ حملہ ایک آسٹریلوی شہری نے کیا، لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ یہ مسئلہ ہمارے یہاں نہیں پایا جاتا۔'
اس سوال کے جواب میں کہ کیا یہ حملہ انٹیلی جنس کی ناکامی تھا، ان کا کہنا تھا کہ ایجنسیوں کی سالانہ رپورٹس میں ہر بات کا تذکرہ نہیں ہوسکتا۔ 'ان حقائق کو مدِ نظر رکھتے ہوئے کہ عالمی سطح پر سفید فام قوم پرستوں کی موجودگی بڑھی ہے، ہماری ایجنسیاں گذشتہ نو ماہ سے خاص طور پر ایسے گروہوں کے رہنماؤں پر نظر رکھے ہو جاسنڈا آرڈرن کون ہیں؟
کرائسٹ چرچ حملوں کے بعد دنیا بھر کے لوگ وزیر اعظم جاسنڈا آرڈرن کے ہمدردانہ رویے سے متاثر ہوئے اور ان کی قیادت کے انداز کو بہت سراہا گیا۔
جاسنڈا کیٹ لورل آرڈرن 26 جولائی 1980 کو نیوزی لینڈ کے شہر ہیملٹن میں پیدا ہوئیں۔ ان کے والد پولیس افسر تھے جبکہ ان کی والدہ سکول میں کیٹرنگ اسسٹنٹ کا کام کرتی تھیں۔
یونیورسٹی آف وائے کاٹو سے سیاست اور تعلقات عامہ میں تعلیم حاصل کرنے کے بعد سابق برطانوی وزیراعظم ٹونی بلیئر کے ساتھ پالیسی مشیر کے طور پر کام کرنے کے لیے جاسنڈا لندن منتقل ہو گئیں۔
ان کی پرورش ایک مورمن عیسائی کے طور پر کی گئی، لیکن ہم جنس پرستوں کے حقوق کی حمایت کرنے کے لیے انھوں نے 2005 میں مذہب سے علیحدگی اختیار کر لی۔
انھوں نے نوجوانی میں ہی نیوزی لینڈ کی لیبر پارٹی میں شمولیت اختیار کی اور 2008 میں نیوزی لینڈ کی سب سے کم عمر پارلیمانی رکن بن گئیں۔ پھر اگست 2017 میں انھوں نے قائد حزب اختلاف کا عہدہ سنبھالا۔
جاسنڈا آرڈرن 26 اکتوبر 2017 کو نیوزی لینڈ فرسٹ اور لیبر پارٹی کے اتحاد سے بننے والی مخلوط حکومت کی وزیر اعظم ٹھہریں اور اسی طرح وہ نیوزی لینڈ کی تیسری خاتون وزیر اعظم بنیں۔
38 سالہ آرڈرن نیوزی لینڈ کی 150 سالہ تاریخ میں سب سے کم عمر رہنما ہیں

نیوزی لینڈ کی وزیراعظم نے کہا ہے کہ کرائسٹ چرچ حملے میں استعمال ہونے والے نیم خود کار ہتھیاروں کی تمام اقسام پر پابندی عائد کی جائے گی
نیوزی لینڈ کی وزیرِ اعظم جاسنڈا آرڈرن نے کہا ہے کہ ان کا ملک کرائسٹ چرچ حملے میں استعمال ہونے والے نیم خود کار ہتھیاروں کی تمام اقسام پر پابندی عائد کرے گا۔
گذشتہ جمعے کو دو مساجد پر ہونے والے حملوں کے بعد نیوزی لینڈ میں اسلحے کے بارے میں قوانین زیرِ بحث ہیں۔ ان حملوں میں 50 افراد ہلاک ہوئے تھے۔
جاسنڈا آرڈرن کا کہنا تھا کے اس حوالے سے نئی قانون سازی 11 اپریل تک وضح ہو جائے گی۔
انھوں نے مزید بتایا کہ ممنوعہ اسلحے کی واپسی کے حوالے سے نئی سکیم بھی متعارف کروائی جائے گی اور اس قانون سازی سے قبل ایسے اقدامات کیے جائیں گے جس سے پابندی سے پہلے اسلحے کی خریداری کی روک تھام کی جا سکے۔
وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ 'حملے کے چھ روز بعد ہم تمام اقسام کے ملٹری سٹائل نیم خود کار ہتھیاروں اور خود کار رائفلز پر پابندی عائد کرنے کا اعلان کرتے ہیں۔'
تصویر کے کاپی رائٹGETTY IMAGESImage captionکرائسٹ چرچ میں ہلاک ہونے والوں کی تدفین کا عمل شروع ہو چکا ہے
'ان پارٹس پر بھی پابندی عائد کی جائے گی جو بندوقوں کو نیم خود کار ہتھیاروں میں تبدیل کرنے اور بہت زیادہ گنجائش رکھنے والے میگزینز پر بھی پابندی عائد کی جائے گی۔'
نئی قانون سازی
بدھ کو بی بی سی کے نامہ نگار کلائیو مائری کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں جاسنڈا آرڈرن نے نیم خود کار ہتھیاروں کی عام دستیابی اور نیوزی لینڈ میں اس حوالے سے قوانین کو ایک مسئلہ قرار دیتے ہوئے نئی قانون سازی کا عندیہ دیا تھا۔
ان کا کہنا تھا کہ نیوزی لینڈ میں قانونی مقاصد کے لیے بندوق کے استعمال کی اجازت ہے خاص کر دیہی علاقوں میں۔
ان کے مطابق وہ اس حوالے سے قانون سازی کریں گی اور انھیں یقین ہے کہ نیوزی لینڈرز نیم خود کار ہتھیاروں کی دستیابی کے مسئلے کو ڈیل کرنے کے لیے ہمارا ساتھ دیں گے، وہ ہتھیار جو خاص طور پر انسانی جانوں کو لینے کے لیے بنے ہیں۔

’یہ ہر نیوزی لینڈر کا فرض ہے کہ وہ یہاں بسنے والوں کو تحفظ کا احساس دلائیں اور نسل پرستی پر مبنی ہر اقدام کو چیلنج کریں۔ میں ہر اس فرد کو جو نیوزی لینڈ کو اپنا گھر سمجھتا ہے اور اس کا جو بھی مذہب یا قومیت ہے یقین دلانا چاہتی ہوں کہ وہ اپنے آپ کو محفوظ تصور کرے۔‘
وزیرِاعظم آرڈرن نے 'وائٹ نیشنل ازم' یا سفید فام قوم پرستی کو ’ایک عالمی مسئلہ‘ بھی قرار دیا۔
'یہ حملہ ایک آسٹریلوی شہری نے کیا، لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ یہ مسئلہ ہمارے یہاں نہیں پایا جاتا۔'
اس سوال کے جواب میں کہ کیا یہ حملہ انٹیلی جنس کی ناکامی تھا، ان کا کہنا تھا کہ ایجنسیوں کی سالانہ رپورٹس میں ہر بات کا تذکرہ نہیں ہوسکتا۔ 'ان حقائق کو مدِ نظر رکھتے ہوئے کہ عالمی سطح پر سفید فام قوم پرستوں کی موجودگی بڑھی ہے، ہماری ایجنسیاں گذشتہ نو ماہ سے خاص طور پر ایسے گروہوں کے رہنماؤں پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔'
تصویر کے کاپی رائٹGETTY IMAGESجاسنڈا آرڈرن کون ہیں؟
کرائسٹ چرچ حملوں کے بعد دنیا بھر کے لوگ وزیر اعظم جاسنڈا آرڈرن کے ہمدردانہ رویے سے متاثر ہوئے اور ان کی قیادت کے انداز کو بہت سراہا گیا۔
جاسنڈا کیٹ لورل آرڈرن 26 جولائی 1980 کو نیوزی لینڈ کے شہر ہیملٹن میں پیدا ہوئیں۔ ان کے والد پولیس افسر تھے جبکہ ان کی والدہ سکول میں کیٹرنگ اسسٹنٹ کا کام کرتی تھیں۔
یونیورسٹی آف وائے کاٹو سے سیاست اور تعلقات عامہ میں تعلیم حاصل کرنے کے بعد سابق برطانوی وزیراعظم ٹونی بلیئر کے ساتھ پالیسی مشیر کے طور پر کام کرنے کے لیے جاسنڈا لندن منتقل ہو گئیں۔
ان کی پرورش ایک مورمن عیسائی کے طور پر کی گئی، لیکن ہم جنس پرستوں کے حقوق کی حمایت کرنے کے لیے انھوں نے 2005 میں مذہب سے علیحدگی اختیار کر لی۔
انھوں نے نوجوانی میں ہی نیوزی لینڈ کی لیبر پارٹی میں شمولیت اختیار کی اور 2008 میں نیوزی لینڈ کی سب سے کم عمر پارلیمانی رکن بن گئیں۔ پھر اگست 2017 میں انھوں نے قائد حزب اختلاف کا عہدہ سنبھالا۔
جاسنڈا آرڈرن 26 اکتوبر 2017 کو نیوزی لینڈ فرسٹ اور لیبر پارٹی کے اتحاد سے بننے والی مخلوط حکومت کی وزیر اعظم ٹھہریں اور اسی طرح وہ نیوزی لینڈ کی تیسری خاتون وزیر اعظم بنیں۔
38 سالہ آرڈرن نیوزی لینڈ کی 150 سالہ تاریخ میں سب سے کم عمر رہنما ہیں۔

 

Oldwish

Councller (250+ posts)
I think weapon was not guilty. It was the person who used the weapon.
Such extremist views shd be banned which spread hatred in the society.
E.g if people inside mosque also had weapons, this person would not have been able to kill so many.
People fail to understand that this ban will result in slavery there is no second outcome. The problem here is the good people will handover their guns in the name to peace and with good intentions. But bad people Wil never do. At The end the evil becomes very powerful. History bares witness across the glob.
 
Last edited:

aneeskhan

Chief Minister (5k+ posts)
People fail to understand that this ban will result in slavery there is no second outcome. The problem here is the good people will handover their guns in the name to peace and with good intentions. But bad people Wil never do. At Te and the evil becomes very powerful. History bares witness across the glob.
Not Pakistan it is state responsibility
 

Citizen X

Chief Minister (5k+ posts)
I think weapon was not guilty. It was the person who used the weapon.
Such extremist views shd be banned which spread hatred in the society.
E.g if people inside mosque also had weapons, this person would not have been able to kill so many.
Yeah thats what the republicans and the NRA have been telling the Americans, that the solution to gun violence is more guns. And we have already seen the result of that.
So no Thank You.
 

jani1

Chief Minister (5k+ posts)
اس ایکشن پر سب سے زیادہ تنقید اور تکلیف امریکا کی گن لابی کو ہو گی

Stay tuned for that.

ویسے دیکھیں تو۔۔
ایسا لگتا ہے کہ۔۔وہاں کوئی نواز نورا پٹواری یا بلو رانی اور اس کے جیالے نما سیاست دان ہیں۔۔

ورنہ ان کے ان ایک ہفتے کے لیئے گئے اقدامات کے خلاف کوئی تو ڈرامہ سامنے آتا۔۔
جیسا کہ آسٹریلیا میں دیکھنے کو ملا۔۔


اس کڑے وقت میں اپوزیشن ان کے ساتھ دکھتی ہے۔۔
نہ کہ ہماری بلو کھسری کی طرح۔۔بک بک ۔۔

 

Oldwish

Councller (250+ posts)
Not Pakistan it is state responsibility
Not to say state does Not have a role but unfortunately 99.99% state gets involved when the damage is already done.
you protect your self first. Then your family your community your state and humanity at large. If you have any good you will consider that to be an honor.
 
Last edited:

bhaibarood

Chief Minister (5k+ posts)

ویسے دیکھیں تو۔۔
ایسا لگتا ہے کہ۔۔وہاں کوئی نواز نورا پٹواری یا بلو رانی اور اس کے جیالے نما سیاست دان ہیں۔۔

ورنہ ان کے ان ایک ہفتے کے لیئے گئے اقدامات کے خلاف کوئی تو ڈرامہ سامنے آتا۔۔
جیسا کہ آسٹریلیا میں دیکھنے کو ملا۔۔


اس کڑے وقت میں اپوزیشن ان کے ساتھ دکھتی ہے۔۔
نہ کہ ہماری بلو کھسری کی طرح۔۔بک بک ۔۔

bilo rani choroo
imran khan main dam hai tu kardey yeh kaam!
PTI kab tak oppostion ke peechey chupti raheygee?
you are in govt ,someone plz inform khan sahab
 

Khan125

Minister (2k+ posts)
Yeah thats what the republicans and the NRA have been telling the Americans, that the solution to gun violence is more guns. And we have already seen the result of that.
So no Thank You.
Stupid logic...
The terrorist would always get guns. They don't respect the law. Its the law abiding peaceful citizens who follow the law. By this anti guns law, only the peaceful law abiding citizens will suffer.
 

Khan125

Minister (2k+ posts)
People fail to understand that this ban will result in slavery there is no second outcome. The problem here is the good people will handover their guns in the name to peace and with good intentions. But bad people Wil never do. At Te and the evil becomes very powerful. History bares witness across the glob.
Yes agreed. Evil minded criminals/terrorist will get weapons even after this ban.
Its the peaceful law abiding citizens, whom are made more vulnerable to such attacks.
 
Sponsored Link

Featured Discussions