Islamabad High Courts orders to give protection to converted Muslim girls

Kashif Rafiq

Chief Minister (5k+ posts)
اسلام آباد: ہائیکورٹ نے دونوں نو مسلم لڑکیوں کو ڈپٹی کمشنر کے حوالے کردیا۔



ایکسپریس نیوزکے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے نومسلم لڑکیوں کے تحفظ کی درخواست پرسماعت کی۔ ڈی جی ہیومین رائٹس بھی عدالت میں پیش ہوئے۔جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ یہ حساس معاملہ ہے جس سے پاکستان کا تشخص جڑا ہے، نبی ﷺ کے فتح مکہ اور خطبہ حجتہ الوداع پر دو خطاب موجود ہیں، وہ دونوں خطاب اقلیتوں کے حوالے سے ہمارے لئے قانون و آئین کی حیثیت رکھتے ہیں۔ اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ کرنا ہماری ذمہ داری ہے۔ اقلیتوں کے حقوق آئین پاکستان میں درج ہیں اورقرآن پاک سے بھی واضح ہیں۔ عدالت ہرشہری کے بنیادی حقوق کی حفاظت کرے گی۔


سماعت کے دوران ڈی جی ہیومن رائٹس نے کہا کہ لڑکیوں کو شلٹرہوم یا دیگرجگہوں پررکھ سکتے ہیں۔ حکومتی نمائندے نے کہا کہ ایک ہفتے میں انکوائری مکمل کرلیں گے۔ چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے ریمارکس دیئے کہ سنا ہے وزیراعظم بھی انکوائری کا حکم دے چکے ہیں، وفاقی وزیرشیریں مزاری بھی اس معاملے کودیکھ رہی ہیں، معاملہ جب تک عدالت میں ہے لڑکیوں کو سندھ نہیں لے جایا جا سکتا جب کہ وزیراعظم نے جو انکوائری آرڈرکی ہے اس کی رپورٹ آئندہ منگل تک جمع کرائی جائے۔


عدالت نے دونوں لڑکیوں کوڈپٹی کمشنر کے حوالے کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ آئندہ سماعت تک وفاقی حکومت اور اسلام آٓباد انتظامیہ بچیوں کی محافظ ہوں گی۔ ڈسٹرکٹ اینڈسیشن جج کوگارڈین جج مقرر کررہے ہیں۔ آئندہ سماعت پر رپورٹ آجائے پھرمعاملے کو دیکھتے ہیں۔ عدالت نے نومسلم لڑکیوں کی درخواست کی سماعت آئندہ منگل تک ملتوی کردی۔


دوسری جانب سماعت کے بعد لڑکیوں نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ اسلام مرضی سے قبول کیا ہے، اسلام قبول کرنے کیلئے کسی نے دھمکیاں نہیں دیں۔

 
Advertisement

Muhammad Jibran

Minister (2k+ posts)
Opar say lykar neechay tak kisi main himat nahe k is case ka faisla karsakay..... Jab larkiyan keh rahe hain k unhounay marzi say islam qabool kiya hai tou case ko pehli paishi main farigh kardyna chaheye tga

Yehe courts hain jab aasiya maloona ka case review main bheja gaya tou adalat main sunnay say he inkar kardiya......

Yahan larkiyan khud islam qabool kar k bethi hain magar inko adaltoun main ghaseeta jaraha hai
 

Respect

Chief Minister (5k+ posts)
If they have willingly accepted then it is a happy day for Muslim's and should not overdo matters.
Slight confusion on what is going on in this particular case.
 

Khan125

Minister (2k+ posts)
Opar say lykar neechay tak kisi main himat nahe k is case ka faisla karsakay..... Jab larkiyan keh rahe hain k unhounay marzi say islam qabool kiya hai tou case ko pehli paishi main farigh kardyna chaheye tga

Yehe courts hain jab aasiya maloona ka case review main bheja gaya tou adalat main sunnay say he inkar kardiya......

Yahan larkiyan khud islam qabool kar k bethi hain magar inko adaltoun main ghaseeta jaraha hai
Adaltoo me begharat bethy hain.
 

Khan125

Minister (2k+ posts)
اسلام آباد: ہائیکورٹ نے دونوں نو مسلم لڑکیوں کو ڈپٹی کمشنر کے حوالے کردیا۔



ایکسپریس نیوزکے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے نومسلم لڑکیوں کے تحفظ کی درخواست پرسماعت کی۔ ڈی جی ہیومین رائٹس بھی عدالت میں پیش ہوئے۔جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ یہ حساس معاملہ ہے جس سے پاکستان کا تشخص جڑا ہے، نبی ﷺ کے فتح مکہ اور خطبہ حجتہ الوداع پر دو خطاب موجود ہیں، وہ دونوں خطاب اقلیتوں کے حوالے سے ہمارے لئے قانون و آئین کی حیثیت رکھتے ہیں۔ اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ کرنا ہماری ذمہ داری ہے۔ اقلیتوں کے حقوق آئین پاکستان میں درج ہیں اورقرآن پاک سے بھی واضح ہیں۔ عدالت ہرشہری کے بنیادی حقوق کی حفاظت کرے گی۔


سماعت کے دوران ڈی جی ہیومن رائٹس نے کہا کہ لڑکیوں کو شلٹرہوم یا دیگرجگہوں پررکھ سکتے ہیں۔ حکومتی نمائندے نے کہا کہ ایک ہفتے میں انکوائری مکمل کرلیں گے۔ چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے ریمارکس دیئے کہ سنا ہے وزیراعظم بھی انکوائری کا حکم دے چکے ہیں، وفاقی وزیرشیریں مزاری بھی اس معاملے کودیکھ رہی ہیں، معاملہ جب تک عدالت میں ہے لڑکیوں کو سندھ نہیں لے جایا جا سکتا جب کہ وزیراعظم نے جو انکوائری آرڈرکی ہے اس کی رپورٹ آئندہ منگل تک جمع کرائی جائے۔


عدالت نے دونوں لڑکیوں کوڈپٹی کمشنر کے حوالے کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ آئندہ سماعت تک وفاقی حکومت اور اسلام آٓباد انتظامیہ بچیوں کی محافظ ہوں گی۔ ڈسٹرکٹ اینڈسیشن جج کوگارڈین جج مقرر کررہے ہیں۔ آئندہ سماعت پر رپورٹ آجائے پھرمعاملے کو دیکھتے ہیں۔ عدالت نے نومسلم لڑکیوں کی درخواست کی سماعت آئندہ منگل تک ملتوی کردی۔


دوسری جانب سماعت کے بعد لڑکیوں نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ اسلام مرضی سے قبول کیا ہے، اسلام قبول کرنے کیلئے کسی نے دھمکیاں نہیں دیں۔

Media se jo guftagu ki vo media ne dikhaee?
 

fannu

Politcal Worker (100+ posts)
drama by pakistanis
extremist mullon ko bari jaldi pari hai , islam qabool kia to shadi ki itni jaldi kya thi ? munafiqat ki inteha , these girls will never return to their old faith . yeh natak chal raha hai.just like rinkle kumari .pakistan is hell for minorities .
all hindus should leave pakistan.


 
Sponsored Link

Featured Discussions