Govt mulls doubling toll tax on motorways

miafridi

Prime Minister (20k+ posts)
31655153967-0.jpg


ISLAMABAD:
The federal government is considering collecting double toll tax on motorways used by single-driver cars to mitigate the energy crisis and the impact of higher fuel prices.

It is also mulling over a plan under which vehicles may ply roads on alternative days based on odd and even number plates.

The cabinet, in a recent meeting, decided that Prime Minister Shehbaz Sharif would constitute a committee to discuss those proposals for energy conservation.

According to the proposed plan, the provincial governments will be asked to issue a notification for mandatory biannual tuning and inspection of motor vehicles.

It was further proposed that the provincial agriculture departments would develop programmes and provide training to the technical staff of the field engineering wing for assisting farmers in tractor tuning.

Another proposal was that Sunday should be declared as a vehicle-free day in big cities and a daylight saving programme should be adopted by moving the clock ahead.

The committee will also consider other proposals like lowering the speed limit on motorways/ highways and doubling the toll tax on motorways for single-driver cars.

The Power Division briefed the cabinet that the prime minister had convened a meeting on June 4 to discuss the current energy crisis and potential measures to mitigate the shortage. Various proposals were submitted by the power secretary.

Earlier, the prime minister had formed a working group consisting of the federal minister for finance, minister for energy, minister of state for petroleum, and minister for media and broadcasting.

The working group had been tasked to deliberate further energy conservation measures and firm up definite proposals.

The working group recommended certain proposals, but most of them were either difficult to implement or did not offer sufficient benefits.

The group proposed a five-day work week under which Saturday would be declared as a holiday. It may be announced immediately.

It proposed 33% reduction in petrol and diesel quota for government officials. However, the reduction will not be applicable to the operational vehicles of the government, eg ambulances, municipality and police vehicles.

The group recommended that government employees should be allowed to work from home for one day in a week. Private sector should also be encouraged to work from home for one day in a week, it said.

It recommended switching off street/ public lights in coordination with the provincial/ municipal authorities. It also called for early closure of commercial markets and marriage halls but exempted cafes, restaurants and pharmacies.

The working group considered some other measures as well but did not seek its approval.

It considered Sunday as a vehicle-free day in big cities, daylight savings by moving the clock ahead and lowering speed limits on motorways/ highways.

It considered double toll tax on motorways for single-driver cars and allowing vehicles to run on roads on alternative days (on odd and even number basis).

During discussion, the cabinet was informed that switching back to a five-day work week would translate into savings of $386 million annually.

Some cabinet members even suggested that Friday should be declared as a half day since practically no tangible work was being done in the offices after Friday prayers.

On the proposal of work from home for one day in a week, it was suggested that it should be further deliberated by a cabinet committee along with proposals for biannual mandatory tuning of vehicles and assisting farmers in tractor tuning, which required consultation with the provincial governments.

Regarding early closure of markets, there were two viewpoints. Some cabinet members advocated prior consultation with the trader and retailer associations, while others favoured approval of the proposal as the cabinet should provide the leadership in these difficult and testing times.

The prime minister decided to discuss the matter with the chief ministers of provinces.

The cabinet considered a summary titled “Energy conservation measures”, submitted by the Power Division, and approved the proposal of five-day work week for the conservation of energy. It reduced the fuel quota for government officials by 40% and agreed on switching off alternative street/ public lights and behavioural change for energy efficiency and conservation.

Published in The Express Tribune, June 14th, 2022.

https://tribune.com.pk/story/2361444/govt-mulls-doubling-toll-tax-on-motorways
 
Advertisement

hello

Minister (2k+ posts)

صرف 2 ماہ میں اچھا بھلا ملک تباہ ہو گیا صرف دو ماہ پہلے دنیا بھر سے پاکستان کی معشیت کے متعلق مثبت اشارے آ رہے تھے ایکسپورٹ آئے دن بھر رہی تھی دنیا کے دوسرے ملکوں میں رہنے والے پاکستانی ان ملکوں کے سٹوروں سے تصویریں بھیج رہے تھے کہ دیکھو یہاں پاکستانی ٹکسٹائل کی چیزیں بک رہی ہیں کئیوں کی انکھوں فرط جزبات سے انسو ہوتے تھے کہ ہمیں دیکھ کر خوشی ہو رہی ہے کہ ان چیزوں پر میڈ ان پاکستان لکھا ہے ہمارا ملکی ترقی کر رہا ہے ملکی خزانے مین اضافہ ہو رہا تھا اورسیز اتنا پیسہ پاکستان بھیج رہے تھے جو ہر سال ہر ماہ ایک نیا ریکارڈ بن رہا تھا طرح طرح کے عوام دوست فلاحی منصوبوں کے افتتاح ہو رہے تھے ایوب دور کے بعد پہلی مرتبہ دس ڈیم بننے لگے تھے لیکن ان کے آتے ہی ملکی خزانہ لٹنے لگا 22 ارب ڈالر عمران خان ملکی خزانہ چھوڑ کر گیا 9 ارب ڈالر رہ گئے معاشی اشارے بڑی تیزی سے گرنے لگے انڈسٹری بند ہونا شروع ہو گئی جو بڑی مشکل سے دوبارہ چلی تھی غریبوں کو روزگار ملا تھا سرمایہ دار چیخ اٹھے کسان تک پریشان ہو گئے کرونا میں بھی اتنی تباہی نہیں آئی تھی جو اب نظر آ رہی ہے روزانہ روپیہ پٹتا ہے ملکی کرنسی روپیہ کی قدر میں اس طرح کی کمی ہوئی کے ملکی تاریخ کا ریکارڈ بن گیا روزانہ اسٹاک ایکسینج گرتی ہے جو کبھی ایشاء میں ریکارڈ قائم کر رہی تھی اندھیرے لوٹ آئے عید رمضان سحریاں افطاریاں لورڈ شیٹنگ میں گزر گئی جو گزشتہ ساڑھے تین سالوں میں نہیں ہوا وہ ان کے آتے ہی شروع ہو گیا
جون کے مہینے میں گرمی کے موسم میں لوگ گرمی اور مہنگائی میں جلس کر رہ گئے آئے دن بجلی مہنگی آٹا مہنگا گھی مہنگا اور وہ بھی دستیاب نہیں 18 18 گھنٹے کی لورڈشیٹنگ یہ لوگ سعودی عرب ترکی یو اے ای جھتے کے جھتے لے کر گئےانہیں وہاں سے کوئی امداد نہیں ملی قومی خزانے کا کڑورں خرچ کرکے آ گئے

پٹرول ڈیزل کو اتنا مہنگا کیا کہ مہنگائی کا طوفان دستک دینے لگا صرف دس دنوں ساٹھ روپے پٹرول ڈیزل مہنگا کر دیا ایک دن میں گھی خوردنی آئل میں 215 روپے اضافہ کر دیا سمینٹ کی بوری جو چار پانچ سو پر گھومتی تھی وہ ان کے دو ماہ میں گیارہ بارہ سو پر پہنچ گئی ہر چیز کو مہنگائی کی آگ لگ گئی غریب پسنے لگا رزگار رکنے لگا ملکی معشیت کی تباہی کی پیش گوئیاں ہونےلگی ہر کوئی ملک ڈیفالڑ ہونے کی باتیں کرنے لگا یہ پی ڈی ایم والے ائی ایم ایف کی منتیں کرنے لگے

پی ڈی ایم کے رہنماؤں کے حکومت میں آتے ہی موجیں شروع بلاول تو مل ہی نہیں رہا جب کا وزیر بنا اس کے انٹرنیشنل دورے ختم ہونے کا نام نہیں لے رہے اسی طرح بھیس بدل کر مولانا ڈیزل بھی کبھی کہیں اور کبھی کہیں نکلا رہتا ہے تین تین پی ایم ہاؤس کیمپ بنا دیے گئے حلف اٹھاتے ہی صحافیوں کو 95 لاکھ کا کھانا کھلا دیا اخبارات کو بڑے مہنگے ایک ایک صفحے کے اشتہارات دینے شروع کردییے وہی پرانی پالیسی کے تحت صحافت کو خریدنے منہ بند رکھنے کے لیے اربوں روپے قومی خزانے سے اشتہاروں کی نظر ہونے لگے صحت کارڈ بند کر دیے لنگر خانے بند کر دیے پی ایم ہاؤس کے سوئمنگ پول پر سات کڑور لگا دیےگویا لوٹ مار کی ایک دور لگ گئی لاقانونیت کا ایک بازار گرم ہو گیا کوئی کسی کو پوچھنے والا نہیں ان کی غیر مقبولیت کا یہ عالم ہے کہ ان میں سے کوئی اعلانیہ عوام میں عید کی نماز نہیں پڑھ سکا سخت پروٹوکول میں یہ لوگ عوام کے غیظ غضب سے بچ کر نکلتے ہیں
ادھر ایک اتحادی جماعت نے حاجیوں کی خدمت کا بہانہ بنا کر اپنے ڈرائیوروں ملازموں پر مشتمل 200 افراد کو مفت حج کروانے کا قافلہ تیار کر لیا گویا جوتوں دال بٹنے لگی
مریم جیسی مجرمہ جو ضمانت پر رہا ہے وہ پی ایم کے پروٹوکول میں میں گھومنے لگی بجٹ آیا تو وہ بھی عوام کے لیے کوئی رلیف نہیں ہاں ایک من پسند صحافی کی خواہش پر بلیوں کتوں کی غذا سستی کرنے کی کوشش ضرور کی غریب کے لیے کچھ نہیں کیا اپنے بیانات میں بندروں کی طرح قلابازیاں کھاتے ہیں کبھی کہتے عمران خان کی وجہ سے پٹرول مہنگا ہوا پھر اسی زبان سے کہتے ہیں ائی ایم ایف سے معاہدے کے لیے یہ سب کچھ کر رہے ہیں پھر کہتے ہیں وہ جو عمران خان مہنگے معاہدے کرگیا اس کی وجہ سے مہنگائی ہو رہی ہے بندہ پوچھے اگر یہ سب وہ کر رہا ہے تو تم کیا کر رہے تم کس مرض کو دوا ہو تم نے اس کالک اپنے منہ پر کیوں ملی ۔۔۔ پھر کہتے اپنے کپڑے بیچیں گے اور آٹا سستا کرے گے الٹا عوام کے کپڑے اتارنا شروع کر دییے
 
Last edited:

Wake up Pak

Prime Minister (20k+ posts)
Imran Khan does not need to come out on the streets. The general public will drag these bastards to the streets.
 
Sponsored Link