Australian Ex-Senator Lee Rhiannon terms BJP leaders' call to marry Kashmiri girls 'slap in face of humanity'

Bilal Raza

Prime Minister (20k+ posts)


سڈنی: (دنیا نیوز) مقبوضہ وادی میں ظلم و تشدد پر پوری دنیا میں آوازیں بلند ہونے لگیں، آسٹریلیا کی سابق سینیٹر لی رہینن کی اپنی حکومت کی خاموشی پر کڑی تنقید کی، انہوں نے کہا بھارتی حکمرانوں کے کشمیری خواتین سے شادی کے نعرے قابل شرم ہیں، مودی نے کشمیر میں ظلم و زیادتی کی انتہا کر رکھی ہے جبکہ زیراعظم مورسن بھارت سے تجارت میں لگے ہیں۔

ہمارے وزیراعظم مورسن بھارت کےساتھ مزید تجارت بڑھانا چاہتے ہیں، ہمیں کشمیریوں کے لئے آواز اٹھانی ہے جہاں بڑے ظلم کیے جا رہے ہیں۔ کشمیریوں کی نسل کشی کی جا رہی ہے، لائن آف کنٹرول پر کیمپوں میں خواتین سے ایسی کہانیاں سننے کو ملی جو میں نے پہلے کبھی نہیں سنی۔ ایک خاتون نے بتایا کہ اس کا شوہر لاپتہ ہے اور وہ اکیلی اپنے خاندان کی دیکھ بھال کر رہی ہے۔ ایسی شکایت ہزاروں خواتین کر رہی ہیں۔

انھوں نے کہا کہ بھارتی حکومت زمین پر قبضہ کے لیے کشمیر کی ثقافت کو تباہ کر رہی ہے، بھارتی حکمرانوں کی جانب سے کشمیر پر قبضہ کے لیے کشمیری خواتین سے شادی کرنے کے نعرے قابل شرم ہیں۔


Source
 
Advertisement
Last edited by a moderator:

Saboo

Chief Minister (5k+ posts)
Well I appreciate senator's concerns about humanity but humanity is for humans, not indians, they are rapists and murderers who have no humanity left in them. As a matter of fact, they kill humans for a cow.
 

Saboo

Chief Minister (5k+ posts)
Why their inside humans reawaken after they are left their office???
Many political offices or non have their own policies and limitations as what to say or not to say and you have to tow the official line, and can only speak your mind when out of office.
 
Sponsored Link

Latest Blogs Featured Discussion