’اسامہ آخری سفر پر جاتے ہوئے بتا کر نہیں گیا‘ - قمر زمان کائرہ کی اپنے بیٹے سے متعلق گفتگو

A-Thinker

Minister (2k+ posts)


یوں تو ہر شخص کی موت قابل افسوس ہوتی ہے لیکن نوجوانی میں موت کئی چاہنے والوں کو گہرا غم دے جاتی ہے۔

ایسا ہی واقعہ جمعے کی سہ پہر پنجاب کے ضلع گجرات کے شہر لالہ موسیٰ میں جی ٹی روڑ پر لوکل گورنمنٹ اکیڈمی کے سامنے پیش آیا۔

عینی شاہدین کے مطابق کھاریاں کی جانب سے آنے والی تیز رفتار سفید گاڑی ایک موٹر سائیکل سوار کو بچاتے ہوئے بےقابو ہو کر درخت سےجا ٹکرائی۔

آس پاس موجود لوگوں نے بھاگ کر گاڑی کے پاس جا کر دیکھا تو اس کا ڈرائیور 19سالہ اسامہ قمر کائرہ اور ان کا دوست حمزہ بٹ شدید زخمی تھے۔

شہریوں نے اسامہ کو گاڑی سے باہر نکالا تو وہ دم توڑ چکے تھے جبکہ حمزہ کو ہسپتال لے جایا گیا جہاں وہ بھی جان بر نہ ہو سکے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما اور اسامہ کے والد قمر زمان کائرہ کو اسلام آباد میں، جب وہ پارٹی رہنماؤں کے ساتھ پریس کانفرنس کر رہے تھے، حادثے کی اطلاع دی گئی۔

کائرہ پریس کانفرنس ختم کر کے فوراً لالہ موسیٰ روانہ ہوگئے۔ ان کے پہنچنے سے پہلےمرنے والے دونوں نوجوانوں کی لاشیں گھر پہنچا دی گئی تھیں۔

قمر زمان کائرہ کے پرسنل سیکرٹری محمد نعیم کے مطابق جب وہ لالہ موسیٰ کائرہ خاندان کے ڈیرے پر پہنچے تو وہاں عزیز واقارب، پارٹی رہنماؤں اور کارکنوں کا تانتا بندھ چکا تھا۔ ہر آنکھ اشکبار تھی اور دونوں دوستوں کی میتیں ایک ساتھ ڈیرے پر موجود تھیں۔

ہفتے کو نماز جنازہ کے بعد لالہ موسیٰ میں تدفین کر دی گئی۔

اسامہ قمر کون تھے؟

اسامہ کے قریبی دوست فیصل عدیل نے انڈپینڈنٹ اردو کو بتایا کہ اسامہ گورنمنٹ کالج میں سیکنڈ ایئر کے طالب علم تھے۔ انہیں دوستوں کے ساتھ رہنا بہت اچھا لگتا تھا، وہ کھانا بھی اکیلے نہیں کھاتے تھے۔

فیصل نے بتایا کہ ان کی کالج میں ایک ایسی ویڈیو بھی موجود ہے جس میں وہ دوستوں کو پیزا کھلانے کی خواہش کا اظہار کر رہے ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا سادہ لباس پہننے کے عادی اسامہ سنجیدہ اور خوش گفتار تھے اور ایسا لگتا تھا وہ ہر کام جلدی سے نمٹانا چاہتے تھے۔

ان کے رویے سے کبھی محسوس نہیں ہوا کہ وہ ایک بڑے باپ کے بیٹے ہیں۔

قمر زمان کائرہ نے انڈپینڈنٹ اردو کو بتایا ان کے تین بچے تھے۔ ایک بڑی بیٹی شادی شدہ ہیں، دوسرا بیٹا حمزہ قمر پنجاب یونیورسٹی میں آخری سمسٹر کا طالب علم ہے جبکہ اسامہ قمر اور ان کی ایک بہن جڑواں تھے۔ بچی پیدا ہوتے ہی فوت ہوگئی تھی۔

انہوں نے بتایا اسامہ سب سے چھوٹا ہونے کی وجہ سے پورے خاندان کے لاڈلے تھے، لیکن حیران کن بات یہ تھی کہ اتنا لاڈلا ہونے کے باوجود وہ انتہائی عاجز تھے۔

کائرہ کے مطابق، اسامہ ان کے، والدہ اور دادی کے پاؤں دباتے تھے، انہیں اگر چائے کا کہا جاتا تو والدہ یا کسی ملازم کو کہنے کی بجائے خود بنا کر لاتے۔

انہوں نے غم زدہ لہجے میں بتایا اسامہ ایک سمجھ دار اور احساس کرنے والے بیٹے تھے۔ وہ ایک بار سمجھانے پر غلطی دہراتے نہیں تھے۔

کائرہ نے حیرت ظاہر کی کہ اسامہ نے گاڑی کی رفتار تیز کیسے کی؟ جبکہ وہ ہمیشہ اچھی طرح گاڑی چلاتے تھے۔

انہوں نے بتایا کہ اسامہ سیاست میں دلچسپی نہیں رکھتے تھے اور ڈاکٹر بننا چاہتا تھے۔

انہوں نے بھری آواز میں کہا وہ ہر کام میں گھر والوں کو اعتماد میں لیتے تھے لیکن آخری سفر پر جاتے ہوئے ہمیں بتا کر نہیں گئے۔



Source
 
Advertisement

muhammadadeel

Chief Minister (5k+ posts)
100,000 Pakistani's dead yet not body cried.
1000's of Pakistani soldiers dead for PAKISTAN no body cried.

These were son's and daughter of Pakistan as well MORE THAN these Politicians who say.

یہ جو دہشت گردی ہے اس کے پیچھے وردی ہے

Let's not be hypocrites.

PPP leaders are giving speeches to murder Army, ISI and MI in FATA. Naseerullah Babur among others.

Now we shud all cry for the son of a politician who died in a car accident.

It's the corruption of PPP and politicians who don't follow rules and break the system. Then if something wrong happens Pakistani's must cry.


Remember how children used to die NOT reaching hospital when the protocol of Nawaz, Zardari and Yusuf Raza Gillani use to pass.


 
Last edited:

abdlsy

Prime Minister (20k+ posts)
that's terrible, may allah give them subur.

extremely devastating situation for both parents.

test of allah, may allah give them strength to bare this heavy duty loss. ameen


Usama HAS A LEFT A STRONG MESSAGE FOR ALL INCLUDING ppp SUDHURR JAOE,


life is short and death can come any moment without prior notice and with that tauba kae durwazae BUNDD
 
Last edited:

abdlsy

Prime Minister (20k+ posts)
100,000 Pakistani's dead yet not body cried.
1000's of Pakistani soldiers dead for PAKISTAN no body cried.

These were son's and daughter of Pakistan as well MORE THAN these Politicians who say.

یہ جو دہشت گردی ہے اس کے پیچھے وردی ہے

Let's not be hypocrites.

PPP leaders are giving speeches to murder Army, ISI and MI in FATA. Naseerullah Babur among others.

Now we shud all cry for the son of a politician who died in a car accident.

It's the corruption of PPP and politicians who don't follow rules and break the system. Then if something wrong happens Pakistani's must cry.



you are soooooo right, I agree
 

muhammadadeel

Chief Minister (5k+ posts)
that's terrible, may allah give them subur.

extremely devastating situation for both parents.

test of allah, may allah give them strength to bare this heavy duty loss. ameen


Usama HAS A LEFT A STRONG MESSAGE FOR ALL INCLUDING ppp SUDHURR JAOE,

life is short and death can come any moment without prior notice and with that tauba kae durwazae BUNDD

ان کے توبہ کے دروازے کب کے بند ہو چکے ہیں

صرف

پاک فوج اور اشرافیہ نے ان کو این.ار.او دے رکھا ہے
 

abdlsy

Prime Minister (20k+ posts)

ان کے توبہ کے دروازے کب کے بند ہو چکے ہیں

صرف


پاک فوج اور اشرافیہ نے ان کو این.ار.او دے رکھا ہے
I agree with you , sometimes your life concepts are awesome, 100%, may allahtallah give you juzae khair as all of us Pakistanis should promote awareness and speak the truth for allah.ameen
 

Allama G

Senator (1k+ posts)
Tamam logon se request Hai k apni taraf se fatway na lagain k inkay tauba k darwazay band hogaye hain ya phr khushi ka izhar. Allah hidayat de hum sb ko
 

muhammadadeel

Chief Minister (5k+ posts)

ہمیں نہیں چاہیے یہ نظام جس میں یہ لوگ خدا تخلیق کرتے ہیں
اور ہم لوگوں کو ازلی غلامی اور ذلت دیتے ہیں


ہماری موت خدا کا فیصلہ
اُن کی موت فوج اور اشرافیہ کا افسوس


یاخدا کیا ظلم کا یہ بھی پیمانہ سچ ہے
 


یوں تو ہر شخص کی موت قابل افسوس ہوتی ہے لیکن نوجوانی میں موت کئی چاہنے والوں کو گہرا غم دے جاتی ہے۔

ایسا ہی واقعہ جمعے کی سہ پہر پنجاب کے ضلع گجرات کے شہر لالہ موسیٰ میں جی ٹی روڑ پر لوکل گورنمنٹ اکیڈمی کے سامنے پیش آیا۔

عینی شاہدین کے مطابق کھاریاں کی جانب سے آنے والی تیز رفتار سفید گاڑی ایک موٹر سائیکل سوار کو بچاتے ہوئے بےقابو ہو کر درخت سےجا ٹکرائی۔

آس پاس موجود لوگوں نے بھاگ کر گاڑی کے پاس جا کر دیکھا تو اس کا ڈرائیور 19سالہ اسامہ قمر کائرہ اور ان کا دوست حمزہ بٹ شدید زخمی تھے۔

شہریوں نے اسامہ کو گاڑی سے باہر نکالا تو وہ دم توڑ چکے تھے جبکہ حمزہ کو ہسپتال لے جایا گیا جہاں وہ بھی جان بر نہ ہو سکے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما اور اسامہ کے والد قمر زمان کائرہ کو اسلام آباد میں، جب وہ پارٹی رہنماؤں کے ساتھ پریس کانفرنس کر رہے تھے، حادثے کی اطلاع دی گئی۔

کائرہ پریس کانفرنس ختم کر کے فوراً لالہ موسیٰ روانہ ہوگئے۔ ان کے پہنچنے سے پہلےمرنے والے دونوں نوجوانوں کی لاشیں گھر پہنچا دی گئی تھیں۔

قمر زمان کائرہ کے پرسنل سیکرٹری محمد نعیم کے مطابق جب وہ لالہ موسیٰ کائرہ خاندان کے ڈیرے پر پہنچے تو وہاں عزیز واقارب، پارٹی رہنماؤں اور کارکنوں کا تانتا بندھ چکا تھا۔ ہر آنکھ اشکبار تھی اور دونوں دوستوں کی میتیں ایک ساتھ ڈیرے پر موجود تھیں۔

ہفتے کو نماز جنازہ کے بعد لالہ موسیٰ میں تدفین کر دی گئی۔

اسامہ قمر کون تھے؟

اسامہ کے قریبی دوست فیصل عدیل نے انڈپینڈنٹ اردو کو بتایا کہ اسامہ گورنمنٹ کالج میں سیکنڈ ایئر کے طالب علم تھے۔ انہیں دوستوں کے ساتھ رہنا بہت اچھا لگتا تھا، وہ کھانا بھی اکیلے نہیں کھاتے تھے۔

فیصل نے بتایا کہ ان کی کالج میں ایک ایسی ویڈیو بھی موجود ہے جس میں وہ دوستوں کو پیزا کھلانے کی خواہش کا اظہار کر رہے ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا سادہ لباس پہننے کے عادی اسامہ سنجیدہ اور خوش گفتار تھے اور ایسا لگتا تھا وہ ہر کام جلدی سے نمٹانا چاہتے تھے۔

ان کے رویے سے کبھی محسوس نہیں ہوا کہ وہ ایک بڑے باپ کے بیٹے ہیں۔

قمر زمان کائرہ نے انڈپینڈنٹ اردو کو بتایا ان کے تین بچے تھے۔ ایک بڑی بیٹی شادی شدہ ہیں، دوسرا بیٹا حمزہ قمر پنجاب یونیورسٹی میں آخری سمسٹر کا طالب علم ہے جبکہ اسامہ قمر اور ان کی ایک بہن جڑواں تھے۔ بچی پیدا ہوتے ہی فوت ہوگئی تھی۔

انہوں نے بتایا اسامہ سب سے چھوٹا ہونے کی وجہ سے پورے خاندان کے لاڈلے تھے، لیکن حیران کن بات یہ تھی کہ اتنا لاڈلا ہونے کے باوجود وہ انتہائی عاجز تھے۔

کائرہ کے مطابق، اسامہ ان کے، والدہ اور دادی کے پاؤں دباتے تھے، انہیں اگر چائے کا کہا جاتا تو والدہ یا کسی ملازم کو کہنے کی بجائے خود بنا کر لاتے۔

انہوں نے غم زدہ لہجے میں بتایا اسامہ ایک سمجھ دار اور احساس کرنے والے بیٹے تھے۔ وہ ایک بار سمجھانے پر غلطی دہراتے نہیں تھے۔

کائرہ نے حیرت ظاہر کی کہ اسامہ نے گاڑی کی رفتار تیز کیسے کی؟ جبکہ وہ ہمیشہ اچھی طرح گاڑی چلاتے تھے۔

انہوں نے بتایا کہ اسامہ سیاست میں دلچسپی نہیں رکھتے تھے اور ڈاکٹر بننا چاہتا تھے۔

انہوں نے بھری آواز میں کہا وہ ہر کام میں گھر والوں کو اعتماد میں لیتے تھے لیکن آخری سفر پر جاتے ہوئے ہمیں بتا کر نہیں گئے۔



Source
Allah Sabar de
 


یوں تو ہر شخص کی موت قابل افسوس ہوتی ہے لیکن نوجوانی میں موت کئی چاہنے والوں کو گہرا غم دے جاتی ہے۔

ایسا ہی واقعہ جمعے کی سہ پہر پنجاب کے ضلع گجرات کے شہر لالہ موسیٰ میں جی ٹی روڑ پر لوکل گورنمنٹ اکیڈمی کے سامنے پیش آیا۔

عینی شاہدین کے مطابق کھاریاں کی جانب سے آنے والی تیز رفتار سفید گاڑی ایک موٹر سائیکل سوار کو بچاتے ہوئے بےقابو ہو کر درخت سےجا ٹکرائی۔

آس پاس موجود لوگوں نے بھاگ کر گاڑی کے پاس جا کر دیکھا تو اس کا ڈرائیور 19سالہ اسامہ قمر کائرہ اور ان کا دوست حمزہ بٹ شدید زخمی تھے۔

شہریوں نے اسامہ کو گاڑی سے باہر نکالا تو وہ دم توڑ چکے تھے جبکہ حمزہ کو ہسپتال لے جایا گیا جہاں وہ بھی جان بر نہ ہو سکے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما اور اسامہ کے والد قمر زمان کائرہ کو اسلام آباد میں، جب وہ پارٹی رہنماؤں کے ساتھ پریس کانفرنس کر رہے تھے، حادثے کی اطلاع دی گئی۔

کائرہ پریس کانفرنس ختم کر کے فوراً لالہ موسیٰ روانہ ہوگئے۔ ان کے پہنچنے سے پہلےمرنے والے دونوں نوجوانوں کی لاشیں گھر پہنچا دی گئی تھیں۔

قمر زمان کائرہ کے پرسنل سیکرٹری محمد نعیم کے مطابق جب وہ لالہ موسیٰ کائرہ خاندان کے ڈیرے پر پہنچے تو وہاں عزیز واقارب، پارٹی رہنماؤں اور کارکنوں کا تانتا بندھ چکا تھا۔ ہر آنکھ اشکبار تھی اور دونوں دوستوں کی میتیں ایک ساتھ ڈیرے پر موجود تھیں۔

ہفتے کو نماز جنازہ کے بعد لالہ موسیٰ میں تدفین کر دی گئی۔

اسامہ قمر کون تھے؟

اسامہ کے قریبی دوست فیصل عدیل نے انڈپینڈنٹ اردو کو بتایا کہ اسامہ گورنمنٹ کالج میں سیکنڈ ایئر کے طالب علم تھے۔ انہیں دوستوں کے ساتھ رہنا بہت اچھا لگتا تھا، وہ کھانا بھی اکیلے نہیں کھاتے تھے۔

فیصل نے بتایا کہ ان کی کالج میں ایک ایسی ویڈیو بھی موجود ہے جس میں وہ دوستوں کو پیزا کھلانے کی خواہش کا اظہار کر رہے ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا سادہ لباس پہننے کے عادی اسامہ سنجیدہ اور خوش گفتار تھے اور ایسا لگتا تھا وہ ہر کام جلدی سے نمٹانا چاہتے تھے۔

ان کے رویے سے کبھی محسوس نہیں ہوا کہ وہ ایک بڑے باپ کے بیٹے ہیں۔

قمر زمان کائرہ نے انڈپینڈنٹ اردو کو بتایا ان کے تین بچے تھے۔ ایک بڑی بیٹی شادی شدہ ہیں، دوسرا بیٹا حمزہ قمر پنجاب یونیورسٹی میں آخری سمسٹر کا طالب علم ہے جبکہ اسامہ قمر اور ان کی ایک بہن جڑواں تھے۔ بچی پیدا ہوتے ہی فوت ہوگئی تھی۔

انہوں نے بتایا اسامہ سب سے چھوٹا ہونے کی وجہ سے پورے خاندان کے لاڈلے تھے، لیکن حیران کن بات یہ تھی کہ اتنا لاڈلا ہونے کے باوجود وہ انتہائی عاجز تھے۔

کائرہ کے مطابق، اسامہ ان کے، والدہ اور دادی کے پاؤں دباتے تھے، انہیں اگر چائے کا کہا جاتا تو والدہ یا کسی ملازم کو کہنے کی بجائے خود بنا کر لاتے۔

انہوں نے غم زدہ لہجے میں بتایا اسامہ ایک سمجھ دار اور احساس کرنے والے بیٹے تھے۔ وہ ایک بار سمجھانے پر غلطی دہراتے نہیں تھے۔

کائرہ نے حیرت ظاہر کی کہ اسامہ نے گاڑی کی رفتار تیز کیسے کی؟ جبکہ وہ ہمیشہ اچھی طرح گاڑی چلاتے تھے۔

انہوں نے بتایا کہ اسامہ سیاست میں دلچسپی نہیں رکھتے تھے اور ڈاکٹر بننا چاہتا تھے۔

انہوں نے بھری آواز میں کہا وہ ہر کام میں گھر والوں کو اعتماد میں لیتے تھے لیکن آخری سفر پر جاتے ہوئے ہمیں بتا کر نہیں گئے۔



Source
jane kab hun gy kam
Es dunya kay gham
 


عام پاکستانی مر جائے یا کتا مر جائے ایک برابر

سیاستدان مرے تو فوجی افسوس کرتے ہیں
عمران خائن بولتا ہے افسوس ہوا



کیا کمال نظام ہے پاکستانیوں کے سر پر سوار


jane kab hun gy kam
Es dunya kay gham
 
100,000 Pakistani's dead yet not body cried.
1000's of Pakistani soldiers dead for PAKISTAN no body cried.

These were son's and daughter of Pakistan as well MORE THAN these Politicians who say.

یہ جو دہشت گردی ہے اس کے پیچھے وردی ہے

Let's not be hypocrites.

PPP leaders are giving speeches to murder Army, ISI and MI in FATA. Naseerullah Babur among others.

Now we shud all cry for the son of a politician who died in a car accident.

It's the corruption of PPP and politicians who don't follow rules and break the system. Then if something wrong happens Pakistani's must cry.


Remember how children used to die NOT reaching hospital when the protocol of Nawaz, Zardari and Yusuf Raza Gillani use to pass.


jane kab hun gy kam
Es dunya kay gham
 

Scholar1

Minister (2k+ posts)

ہمیں نہیں چاہیے یہ نظام جس میں یہ لوگ خدا تخلیق کرتے ہیں
اور ہم لوگوں کو ازلی غلامی اور ذلت دیتے ہیں


ہماری موت خدا کا فیصلہ
اُن کی موت فوج اور اشرافیہ کا افسوس


یاخدا کیا ظلم کا یہ بھی پیمانہ سچ ہے
Admin Siasat.pk , Adeel This Indian Bastard is prestintly posting comments against Pak Fooj ,
You should take action against this Hindu Bastard and remove him from forum,
 

farhad80

Politcal Worker (100+ posts)


یوں تو ہر شخص کی موت قابل افسوس ہوتی ہے لیکن نوجوانی میں موت کئی چاہنے والوں کو گہرا غم دے جاتی ہے۔

ایسا ہی واقعہ جمعے کی سہ پہر پنجاب کے ضلع گجرات کے شہر لالہ موسیٰ میں جی ٹی روڑ پر لوکل گورنمنٹ اکیڈمی کے سامنے پیش آیا۔

عینی شاہدین کے مطابق کھاریاں کی جانب سے آنے والی تیز رفتار سفید گاڑی ایک موٹر سائیکل سوار کو بچاتے ہوئے بےقابو ہو کر درخت سےجا ٹکرائی۔

آس پاس موجود لوگوں نے بھاگ کر گاڑی کے پاس جا کر دیکھا تو اس کا ڈرائیور 19سالہ اسامہ قمر کائرہ اور ان کا دوست حمزہ بٹ شدید زخمی تھے۔

شہریوں نے اسامہ کو گاڑی سے باہر نکالا تو وہ دم توڑ چکے تھے جبکہ حمزہ کو ہسپتال لے جایا گیا جہاں وہ بھی جان بر نہ ہو سکے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما اور اسامہ کے والد قمر زمان کائرہ کو اسلام آباد میں، جب وہ پارٹی رہنماؤں کے ساتھ پریس کانفرنس کر رہے تھے، حادثے کی اطلاع دی گئی۔

کائرہ پریس کانفرنس ختم کر کے فوراً لالہ موسیٰ روانہ ہوگئے۔ ان کے پہنچنے سے پہلےمرنے والے دونوں نوجوانوں کی لاشیں گھر پہنچا دی گئی تھیں۔

قمر زمان کائرہ کے پرسنل سیکرٹری محمد نعیم کے مطابق جب وہ لالہ موسیٰ کائرہ خاندان کے ڈیرے پر پہنچے تو وہاں عزیز واقارب، پارٹی رہنماؤں اور کارکنوں کا تانتا بندھ چکا تھا۔ ہر آنکھ اشکبار تھی اور دونوں دوستوں کی میتیں ایک ساتھ ڈیرے پر موجود تھیں۔

ہفتے کو نماز جنازہ کے بعد لالہ موسیٰ میں تدفین کر دی گئی۔

اسامہ قمر کون تھے؟

اسامہ کے قریبی دوست فیصل عدیل نے انڈپینڈنٹ اردو کو بتایا کہ اسامہ گورنمنٹ کالج میں سیکنڈ ایئر کے طالب علم تھے۔ انہیں دوستوں کے ساتھ رہنا بہت اچھا لگتا تھا، وہ کھانا بھی اکیلے نہیں کھاتے تھے۔

فیصل نے بتایا کہ ان کی کالج میں ایک ایسی ویڈیو بھی موجود ہے جس میں وہ دوستوں کو پیزا کھلانے کی خواہش کا اظہار کر رہے ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا سادہ لباس پہننے کے عادی اسامہ سنجیدہ اور خوش گفتار تھے اور ایسا لگتا تھا وہ ہر کام جلدی سے نمٹانا چاہتے تھے۔

ان کے رویے سے کبھی محسوس نہیں ہوا کہ وہ ایک بڑے باپ کے بیٹے ہیں۔

قمر زمان کائرہ نے انڈپینڈنٹ اردو کو بتایا ان کے تین بچے تھے۔ ایک بڑی بیٹی شادی شدہ ہیں، دوسرا بیٹا حمزہ قمر پنجاب یونیورسٹی میں آخری سمسٹر کا طالب علم ہے جبکہ اسامہ قمر اور ان کی ایک بہن جڑواں تھے۔ بچی پیدا ہوتے ہی فوت ہوگئی تھی۔

انہوں نے بتایا اسامہ سب سے چھوٹا ہونے کی وجہ سے پورے خاندان کے لاڈلے تھے، لیکن حیران کن بات یہ تھی کہ اتنا لاڈلا ہونے کے باوجود وہ انتہائی عاجز تھے۔

کائرہ کے مطابق، اسامہ ان کے، والدہ اور دادی کے پاؤں دباتے تھے، انہیں اگر چائے کا کہا جاتا تو والدہ یا کسی ملازم کو کہنے کی بجائے خود بنا کر لاتے۔

انہوں نے غم زدہ لہجے میں بتایا اسامہ ایک سمجھ دار اور احساس کرنے والے بیٹے تھے۔ وہ ایک بار سمجھانے پر غلطی دہراتے نہیں تھے۔

کائرہ نے حیرت ظاہر کی کہ اسامہ نے گاڑی کی رفتار تیز کیسے کی؟ جبکہ وہ ہمیشہ اچھی طرح گاڑی چلاتے تھے۔

انہوں نے بتایا کہ اسامہ سیاست میں دلچسپی نہیں رکھتے تھے اور ڈاکٹر بننا چاہتا تھے۔

انہوں نے بھری آواز میں کہا وہ ہر کام میں گھر والوں کو اعتماد میں لیتے تھے لیکن آخری سفر پر جاتے ہوئے ہمیں بتا کر نہیں گئے۔



Source
very sad news irrespective of how he was as a person but please do not lie about his age to hide that he was driving illegally..This should be a lesson for all parents who give cars to their underage kids and put their life and others around in danger
 
Last edited:

bhaibarood

Chief Minister (5k+ posts)
very sad news irrespective of how he was as a person but please do not lie about his age to hide that he was driving illegally..This should be a lesson for all parents who give cars to their underage kids and put their life and others around in danger
How old is he? seems above 16yr
you can drive on learning license since 16
 
Sponsored Link

Latest Blogs Featured Discussion