‏حکومت میں آ کر دھاندلی کرنے والوں سے حساب لیں گے۔ خواجہ سعد رفیق

taban

Chief Minister (5k+ posts)
الو کے پٹھے حساب لینے کے لئے حکومت میں آنے کی ضرورت نہیں ہے بس لوٹا ہوا پیسہ واپس کر اپنے جرائم کا اعتراف کر اور اللہ سے معافی مانگنے کے ساتھ ساتھ عوام سے بھی معافی مانگ شائد اللہ تجھے جہنم کی آگ سے نجات دے دے اتنی سی بات کے لئے تو حکومت میں آنا چاہتا ہے پاگل کا بچہ نہ ہو وے تے
 

gorgias

Chief Minister (5k+ posts)
یہ لوہے کا چنا 2013 کے ایلکشن میں دھاندلی سے جیتا۔ بعد میں الیکشن ٹرائبیونل سے نااہل ہوا اور سپریم کورٹ کے سٹے کی وجہ سے اسمبلی کا رکن رہا ۔اب یہ دھاندلی کرنے والوں کے خلاف ایکشن لے گا۔۔ کیا پدی اور کیا پدی کا شوربہ۔۔۔
 

SharpAsKnife

Minister (2k+ posts)
پہلے گھر سے باہر نکل کر لوہے کے چنے خریدنے جا زرا، 100 جوتیاں گاف پر عوام مارے گی اور 200 پولیس والے
 

sensible

Chief Minister (5k+ posts)
اپنی دھاندلیوں اور لوٹے ہوے مال کا حساب دو گے تو ہی ممکن ہو گا حساب لینا ورنہ کون ہے اس سسٹم میں حساب لینے والا ؟ پھر نیب نواز کا گٹھ جوڑ کیسے ہو سکے گا؟
 

Haha

Minister (2k+ posts)
گشتی فراری کا بد بودار چھولا اور دو فٹا بونا نطفہ حرام اپنی ماں کا دلا بن کر سیاست میں آیا ہوا بے غیرت جس کے باپ خواجہ رفیق کو بقول کچھ لوگوں کے اس کی ماں نے اپنے کسی ناجائز تعلق کی وجہ سے خود مروا دیا اور اس کا الزام بھٹو پر لگا کر اس الزام کوجنرل ضیا الحق سے کیش کرایا حالانکہ خواجہ رفیق ایک معمولی شریف اور دیہاڑی دار ٹوٹی پھوٹی سائیکل والا معمولی مزدور ٹائپ ورکر تھا اس جیسے معمولی ورکر جو روزانہ کا اپنا خرچہ پانی مختلف سیاسی پارٹیوں کے دفتروں میں کبھی بینر لگا کر کبھی نعرے لگا کر اپنی دیہاڑی وصول کرتے ہیں خواجہ رفیق جیسے روزانہ دیہاڑی دار ورکر روزانہ نہ جانے کتنے مر جاتے ہیں اس سے پہلے اور اس کے بعد بھی اس کے باپ جیسے ہزاروں ورکر بہت سے جلسوں اور بہت سے جلوسوں میں مرے اور کئی ہزار ورکر اس خواجے چھولے سعد رفیق کے باپ کے لیول کے مرے ہوں گے مگر انہیں کوئی جانتا بھی نہیں گر اس حرامی نیولے اور دوفٹ کے بونے خواجہ سعد رفیق اور اس کی ماں اور بھائی نے اپنے حرامی پن کی وجہ سے اپنےمزدور ورکر باپ جو بے چارہ امرتسر کے بھی ایک نہایت غریب لیکن شریف دیہاڑی دار مزدور گھرانے سے تھا مہاجر ہوکر لاہور میں آیا تھا اسکی پراسرار موت کا الزام بھٹو جیسے بین الاقوامی لیڈر پر لگا دیا اور اس حرام کے نطفے سعد نیولے اور دو فٹ کے بونے نے اس وقت اس پراسرار قتل کا الزام بھٹو پر لگا کرجنرل ضیا کے وزیر چوہدری ظہور الہی کی ہمدردی بٹور کر جنرل ضیا تک رسائی حاصل کرا دی اپنی ماں کو اور ہر جگہ اپنے باپ کے قتل کا الزام بھٹو پر لگا کر ناجائز فوائد حاصل کئے ضیا جیسے منافق اور اسلام فروش نے بھی اس کی ماں کا استعمال کیا اور عوام جو اپنی ناجائز حکومت قائم رکھنے کا بہانہ بنا کر بھٹو کی پھانسی میں بھی اس کی ماں کی سازش جو استعمال کیا۔ اور تو اور چوہدری ظہور الہی کی زکات اور خیرات پر اس خواجے کا گھر کا خرچ اور اسکے بہن بھائیوں کے سکول کی فیس اسی چوہدری گھرانے کی زکات سے جاتی تھی پھر اس کی ماں کو امب لینے کے لئے جنرل ضیا سے چوہدری ظہور الہی نے متعارف کرا دیا اور اس کے بیانیہ کے مطابق ضیا کو یہ کہا کہ اس عورت کے خاوند جس کی اوقات ایک معمولی غریب دیہاڑی دار مزدور ورکر سے زیادہ نہ تھی اس کو بھٹو نے مروایا۔ حالانکہ اس کے باپ۔ جیسے معمولی ورکر کی اوقات بھٹو جیسے بین الاقوامی لیڈر اور اس جیسے لیڈروں کے نذدیک معمولی کیڑوں مکوڑوں سے زیادہ نہیں ہوتی مگر اس حراُ م کے نطفے کنجر اور بے غیرت ماں بیٹوں نے اس پراسرار قتل کو جو بھٹو کے خلاف اپوزیشن جلسے سے واپسی پر بہت سے لوگوں کے بقول ناجائز تعلقات کی وجہ اس خواجے کو راستے سے ہٹانے کو ہوا اس قتل کو ضیا سے کیش کرا کے یہ ماں بیٹے سیاست میں آئے اور ایک نہایت غریب ٹبر سے سیاست میں آکر لوٹ مار کرکے ارب پتی بن گئے یہ خواجہ اور اس کی ماں اور اس کا حرامی بھائی بہت بڑے حرامئ موقعہ پرست اور گھٹیا بلیک میلر لوگ تھے اور ہیں جو بھٹو پر جھوٹا الزام لگا کر سیاست میں آکر لوٹ مار سے ارب پتی بن چکے ہیں
 
Last edited:
Sponsored Link