یہ حرکت ن لیگ نے پہلی دفعہ نہیں کی

Citizen X

Prime Minister (20k+ posts)
There isn't a single person who stood with them for whatever reason that these gunjas haven't backstabbed. This is the dirty two faced politics of ganj khandan.

Now they have used entire party as a tissue paper wiped their asses with them and thrown them away after escaping to London, now only Nani 420 is left behind, if she was also able escape ganju would not even shit on his own party, its members and workers. Just like the last time they fucked off to Jeddah.

This time its become even more clear ganju is willing to screw his own brother as long as he can get his daughter out.

And yet we have idiots even on this forum who are still polishing his balls while he has wiped his dirty ass with them and fled to London while they are still jumping up and down like fools shouting, ek vari phir sher.
 

chacha jani

Minister (2k+ posts)
ایک آدمی کو کہیں سے پرانی بندوق ملی تو وہ شکار کرنے جنگل چلا گیا۔ وہاں اسے ایک ریچھ نظر آیا تو فوراً بندوق سے نشانہ لے کر گولی چلا دی۔ بندوق پرانی تھی، دھواں سا نکلا اور چاروں طرف پھیل گیا۔ چند لمحوں بعد جب دھواں چھٹا تو اس آدمی نے ریچھ کو اپنے پیچھے کھڑے دیکھا۔
آدمی فوراً اس کے قدموں میں گرگیا اور معافی مانگنے لگ گیا۔ ریچھ نے کہا کہ ایک شرط پر معاف کروں گا اور وہ یہ کہ تم مجھے اپنے ساتھ بدفعلی کرنے دو۔ آدمی نے سوچا کہ جنگل میں کوئی تیسرا موجود نہیں، بدفعلی کروا کر جان بچا لی جائے، چنانچہ وہ مان گیا۔ ریچھ نے دبا کر اس آدمی کے ساتھ بدفعلی کی اور پھر ایک طرف چل دیا۔

آدمی نے اپنی شلوار باندھی، غصے سے اس کا برا حال تھا۔ اس نے ایک مرتبہ پھر بندوق اٹھائی اور ریچھ پر فائر کردیا۔ پھر دھواں سا نکلا اور وہ ریچھ زندہ سلامت اس کے سر پر آن پہنچا۔ ایک مرتبہ پھر آدمی نے ریچھ کے پاؤں پکڑ کر معافی مانگی اور ایک مرتبہ پھر ریچھ نے بدفعلی کی شرط پر اس آدمی کی جان بخشی کی۔

دوسری مرتبہ بدفعلی کروا کر جب وہ شخص اپنی شلوار باندھ رہا تھا تو اسے ایک مرتبہ پھر غصہ آیا کہ ایک جانور اس کی مفت میں دو مرتبہ مار چکا ہے۔ اس نے پھر بندوق تانی، فائر کیا اور ایک مرتبہ پھر دھواں سا نکلا - چند لمحوں بعد دھواں چھٹا تو ریچھ اس کے سر پر کھڑا اسے گھور رہا تھا۔

تھوڑی دیر تک گھورنے کے بعد ریچھ نے اس آدمی سے پوچھا:او****، تم جنگل میں شکار کرنے آئے ہو یا مجھ سے*** مروانے؟؟؟؟
میاں صاحب نے اکتوبر 1999 میں ریچھ کا شکار کرنے کی کوشش کی، ناکام ہو کر ریچھ سے بدفعلی کروا کر جدہ بھاگ گئے۔
پھر منت ترلے کرکے 2007 میں واپس آئے، تیسری دفعہ حکومت سنبھالی تو پھر ریچھ کا شکار کرنے کی کوشش کی۔ اس مرتبہ نااہل ہو کر جیل گئے، پھر ریچھ کی منت سماجت کرکے اس سے بدفعلی کروائی اور لندن بھاگ گئے۔

اب میاں صاحب تیسری مرتبہ پھر ریچھ کا شکار کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

شکار کا بہانہ ہے، اصل میں میاں صاحب کو عادت پڑ چکی ہے!!!،🤣🤣
 
Sponsored Link

Featured Discussion Latest Blogs اردوخبریں