یہ ایک کڑوا سچ ہے کہ اس دور حکومت میں کرپشن بڑھی ہے،عارف حمید بھٹی

13bhattitransperanci.jpg

سینئر صحافی اور تجزیہ کار عارف حمید بھٹی نے کہا کہ یہی ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل ہے جس کی وزیراعظم عمران خان صاحب تعریف کرتے تھے لیکن اب جب ان کے دور حکومت میں کرپشن کا بھانڈا پھوٹا ہے تو وہ اس میں سو کیڑے نکال رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کی جانب سے کرپشن سے متعلق سال 2021ء کی رپورٹ جاری کردی گئی جس میں بتایا گیا کہ حکومتی دعووں کے برعکس گزشتہ سال کے دوران پاکستان میں کرپشن میں اضافہ ہوا ہے۔

نجی نیوز چینل کے پروگرام 'خبر ہے' میں ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کی جاری کردہ رپورٹ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے سینئر تجزیہ کار عارف حمید بھٹی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم پاکستان ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کی بہت تعریف کرتے تھے، تب تو یہ ادارہ بہت اچھا تھا لیکن اب اس میں سو کیڑے نکالے جارہے ہیں، یہ ایک کڑوا سچ ہے کہ کرپشن بڑھی ہے کوئی اس بات کو تسلیم کرے یا نہ کرے، حقیقت بدل نہیں سکتی۔


اپنی بات جاری رکھتے ہوئے عارف حمیدبھٹی کا کہنا تھا کہ بڑے پیمانے کے علاوہ رپورٹ می٘ں چھوٹے لیول کی کرپشن کا بھی انکشاف ہوا ہے، ٹرانسفر و پوسٹنگ کے پیسے، ترقی و تبادلوں کے پیسے اور کمیشن، ایسا نہیں کہ کرپشن صرف اسی دور حکومت میں ہوئی، ماضی میں بھی ہوتی رہی ہے لیکن اس حکومت میں ہمیشہ جی ڈی پی موضوع بحث رہی ہے، اب کرپشن میں 16 پوائنٹ بڑھ گئے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس میں عام لوگوں کے ساتھ کرپشن کا بتایا گیا ہے، ڈومیسائل بنوانے گئے تو کرپشن، ایکسائز کے دفتر میں کرپشن، ماضی میں بھی کرپشن ہوتی تھی، اس وقت کے حکمران بھی ملوث تھے لیکن اب آزادی سےہو رہی ہے۔

اس سے قبل کسی حد تک کرپشن کے خلاف کوئی نہ کوئی ایکشن لیا جاتا تھا اگر کسی افسر کو شکایت کی جاتی تھی کہ آپ کا فلاں افسر یا ماتحت کرپٹ ہے تو اس پر افسر کا مثبت ردعمل سامنے آتاتھا لیکن اب اگر کوئی کسی کو شکایت کرے کے فلاں شخص نے کینسر کے مریض سے 5 لاکھ رقم رشوت لی ہے تو وہ کہتا ہے کہ یہ تو معمول ہے آپ چھوڑیں۔

سینئر تجزیہ کار عارف حمید بھٹی نے پاکستان مسلم لیگ(ق) کے سربراہ اور سابق وزیراعظم چودھری شجاعت حسین کے گزشتہ روز کے بیان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ چودھری شجاعت صاحب سب سے زیرک سیاست دان ہیں، انہوں نے کہا ہے کہ وزیراعظم صاحب کے مشیر کس کی گیم کھیل رہے ہیں، 90 فیصد مشیر واقعی عمران خان صاحب کے ساتھ نہیں ہیں، شہزاد اکبر صاحب کل مستعفی ہوئےہیں جبکہ ایک اور وزیر نے فرمائش کی ہے کہ موجودہ وزارت کے ساتھ ایک اور پرکشش وزارت نہ ملی تو وہ بھی مستعفی ہوجائیں گے۔


پروگرام اینکر سعید قاضی نے سوال کیا کہ چودھری شجاعت کے علاوہ حکومت کے اتحادی پرویزالہی صاحب بھی کہہ رہے ہیں کہ اپنے مشیروں کے غلط مشوروں پر عمل نہ کریں ، اس سے اپوزیشن کا فائدہ ہوگا اور اشتعال میں آکر فیصلے نہ لیں جس سے نقصان اٹھانا پڑے اس کے پیچھے اصل پیغام کیا ہے، جس کے جواب میں عارف حمیدبھٹی صاحب نے کہا کہ چودھری شجاعت صاحب اور پرویز الہی زیرک سیاست دان ہیں، انہوں نے وزیراعظم عمران خان کو خبردار کیا ہے کہ اپنے اردگرد کے لوگوں سے بچ کر رہیں۔

یہ وہی لوگ ہیں جو ان کی باتیں ٹیپ کر کے اپوزیشن کے ساتھ مل کر ان کے خلاف استعمال کرتے ہیں، چونکہ حالات بہتر نہیں رہے تو چودھری شجاعت اور پرویز الہی نے اشارے کے طور پر انہیں خبردار کیا ہے آنے والے وقت کے لئے کہ ان کے اردگرد موجود لوگ انہیں اپنے اینگل کے مطابق غلط گائیڈ کر رہے ہیں، عمران خان صاحب کے لئے حالات کشیدہ ہوگئے ہیں، جس پر نپے تلے الفاظ میں اتحادیوں کی جانب سے اپنے مشیروں سے خبردار رہنے کا مشورہ دیا گیا ہے۔
 
Advertisement

Diabetes

MPA (400+ posts)
Did you have the same thoughts about these journalists when they used to criticise previous governments?
Yes, always. They do not have any I.Q. You cant watch their whole program. Najam Sethi and Malik have IQ. So I prefer to watch their programs. Some times I agree and Sometimes I dont agree with their analysis but atleast they have ability to analyze. But Unfortunately, you cannot watch these Arif Hameed, Dr Shaid, Rana Azeem etc.
 

Choudhry ji

Councller (250+ posts)
Arif Hamid . Arshad Bhati Rauf Khusra , teen metric fail ,,,,inn ko gol gappey bechney chahye.... kia ye corruption nahein inn jesey joker sahafi baney bethey hein ?
 

Husaink

Chief Minister (5k+ posts)
نواز شریف کے ہاتھوں سربیا میں لگنے والے سفیر عادل گیلانی اپنا حق نمک ادا کر رہا ہے ، ویسے پاکستان میں ایمنیسٹی انٹرنشل کا دفتر ہے کہاں پر ؟
 
Sponsored Link