پاکستانی نژاد برطانوی ٹک ٹاکر والدہ سمیت 2افراد کے قتل کے الزام میں گرفتار

mahek-bukhari-2-1645201744495.jpg


برطانوی خبررساں ادارے ڈیلی میل کے مطابق برطانوی نژاد پاکستانی ٹک ٹاکر مہک بخاری اور ان کی والدہ پر دو افراد کے قتل کا الزام عائد ہے۔ رواں ماہ 11 فروری کو انگلینڈ کے لیسٹر شائر میں ماں بیٹی نے مبینہ طور پر دو افراد کو کار میں پیچھا کرنے کے بعد قتل کیا۔

تفصیلات کے مطابق 22 سالہ مہک اور ان کی 45 سالہ والدہ انسرین بخاری اور 21 سالہ نتاشا اختر نامی ایک اور خاتون نے ایک کار کا پیچھا کیا اور گاڑی کے سڑک سے اترنے پر پیش آنے والے حادثے کے نتیجے میں 21 سالہ کزن محمد ہاشم اعجاز الدین اور ثاقب حسین کی موت واقع ہو گئی۔

find-12-16-672x372.jpg


برطانوی اخبار کے مطابق دو افراد 21 سالہ رئیس جمال، اور 28 سالہ ریکن کاروان کو بھی اس مقدمے میں چارج کیا گیا تھا، تاہم ان کے جرم میں ملوث ہونے کی نوعیت اور قتل کی جگہ پر کیا ہوا تھا، اس بارے میں ابھی تک کچھ واضح نہیں ہے۔

یاد رہے کہ مہک بخاری انسٹاگرام اور ٹک ٹاک پر "MaybVlogs" کے نام سے اکاؤنٹ رکھتی ہیں، جہاں وہ خوبصورتی اور فیشن سے متعلق مواد پوسٹ کرتی ہیں۔ سوشل میڈیا ایپلی کیشنز پر ان کے بالترتیب ایک لاکھ 28ہزار اور ٹک ٹاک پر 44ہزار فالوورز ہیں۔

مقتول ہاشم کے والد سکندر حیات نے میڈیا کو بتایا کہ ان کا بیٹا صرف کزن کی مدد کرنے کی کوشش کر رہا تھا اس نے ثاقب کو اس علاقے میں چھوڑنے کی پیشکش کی جہاں مہک اور انسرین رہتی تھیں۔ یہ واضح نہیں ہے کہ ثاقب لیسٹر شائر میں کس سے ملنا چاہتے تھے۔

Mohammed-Hashim-Ijazuddin-63.jpg


ہاشم کے خاندان نے انہیں عاجزی پسند شخصیت قرار دیا جو اپنی ضرورتوں سے قطع نظر دوسروں کی مدد کرتا تھا۔ انتقال کے دن اس نے اپنے کزن ثاقب کو دوستوں سے ملانے کے لیے اپنے دادا کی گاڑی ادھار لی تھی۔

Saqib-Hussain-64.jpg


رپورٹ کے مطابق مہک، انسرین اور نتاشا اختر کے خلاف مقدمے کی سماعت ستمبر کے آخر میں شروع ہوگی جبکہ ان کی دوسری عدالت میں سماعت مارچ میں ہوگی۔

 
Advertisement
Sponsored Link