ٹرین میں زیادتی کا الزام لگانے والی خاتون اپنے بیان سے مکر گئی

5sirsyedexpressrapeedoropscene.jpg

سرسید ایکسپریس میں زیادتی کی شکایت کرنے والی خاتون بیان سے منحرف ہوگئی ، خاتون کے بیان بدلنے پر پولیس نے معاملے کی تحقیقات مکمل کرکے رپورٹ آئی جی ریلوے پولیس کو بجھوا دی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق نجی شعبے میں چلنے والی ٹرین سرسید ایکسپریس کے سکیورٹی گارڈز پر زیادتی کا الزام لگانے والی خاتون تحقیقات کے دوران اپنے بیان سے منحرف ہو گئی ، خاتون نے اپنے نئے بیان میں کہا ہے کہ سکیورٹی گارڈز اسے فحش باتیں کرکے تنگ کر رہے تھے ، اس لیے غصے میں پولیس کو کال کرکے زیادتی کا جھوٹ بولا تھا۔

یاد رہے گزشتہ روز کراچی سے راولپنڈی جانے والی ٹرین کی مسافر خاتون نے 2 سکیورٹی گارڈز پر زیادتی کا الزام لگایا جس کے بعد ریلوے پولیس نے دونوں سکیورٹی گارڈز کو حراست میں لے لیا۔


تاہم زیر حراست سکیورٹی گارڈز نے پولیس کو بتایا کہ خاتون ٹرین میں بغیر ٹکٹ سفرکررہی تھی بغیر ٹکٹ سفر کرنے پر خاتون کو پکڑاجس پر خاتون نے زیادتی کا الزام لگا دیا۔ بتایا گیا کہ ریلوے پولیس کی جانب سے میڈیکل کے لیے متاثرہ خاتون کو ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں میڈیکل چیک مکمل ہونے کے بعد ابتدائی میڈیکل رپورٹ جاری کی گئی۔

ابتدائی رپورٹ میں خاتون پر تشدد یا زیادتی کے شواہد نہیں ملے۔ دوسری جانب کچھ ہفتے قبل ہی پاکستان ریلوے کی زکریا ایکسپریس میں ایک خاتون کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا اور چند روز قبل ہی اس کیس میں اہم پیشرفت ہوئی جب 3 مرکزی ملزمان کے ڈی این اے کے نمونے متاثرہ خاتون سے میچ کر گئے۔
 
Advertisement

akinternational

Minister (2k+ posts)
isss aurat ko tahaffuz fraham kiya jai, phir bhi haqeeaqt bayan na kare ton ise phansi din jai... jab tak bdmashia aur mafia maujood hai insaf nahin mil sakta
 

insaf-seeker

Minister (2k+ posts)
Iss aurat ki medical report negative ayee hai, aur guards nay khud apnay aap ko police investigation ka part banaya hai, yeh confirmed jhoota ilzaam tha
 

Nebula

Senator (1k+ posts)
Women's also take advantage of law. Minimum in this case police did good investigation so that innocent guards nit stuck for days and years.
 
Sponsored Link