وزیراعظم کے بیانات ملک کی تذلیل ورسوائی کا باعث بن رہے ہیں، لطیف کھوسہ

15latf.jpg

پیپلزپارٹی کے سینئر رہنما لطیف کھوسہ نے کہا ہے کہ عالمی میڈیا کو انٹرویو کے دوران وزیراعظم کی باتیں ریاست کیلئے رسوائی کا باعث بن رہی ہیں۔

نجی ٹی وی چینل سماء نیوز کے پروگرام"سوال" میں میزبان نے وزیراعظم عمران خان کے ایک بین الاقوامی ادارے کو دیئے گئے انٹرویو کا کلپ چلایا گیا جس میں وزیراعظم عمران خان ملک میں قانون کی بالادستی اور اشرافیہ سے متعلق گفتگو کررہے تھے۔

پروگرام کے میزبان نے لطیف کھوسہ سے سوال کیا کہ کیوں ملک میں پیپلزپارٹی اور ن لیگ نے اتنے لمبے عرصے اقتدار پر رہنے کے بعد بھی قانون کی بالادستی قائم نہیں ہونے دی۔

لطیف کھوسہ نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ مجھے شرم آتی ہے کہ میرا وزیراعظم بین الاقوامی میڈیا کے سامنے پاکستان کے گند کے بارے میں بتارہا ہے، کیا وزیراعظم کی یہ گفتگو ریاست کی تذلیل و رسوائی کا سبب نہیں بن رہی۔


انہوں نے مزید کہا کہ اگر انہیں ملک کی اصلاح مقصود تھی تو کاش وہ یہ تقریر ایک بین الاقوامی میڈیا کے سامنے کرنے کے بجائے پارلیمنٹ میں کھڑے ہوکر کرتے، خود کو پارسا ثابت کرکے ملک کی تذلیل کرنا میرے لیےشرم کی بات ہے۔

لطیف کھوسہ نے کہا کہ موجودہ حکومت کو تین سال ہوچکے ہیں جتنی قانون کی بالادستی کی نفی اور آئین کی تضحیک تحریک انصاف کی حکومت کے تین سالوں میں ہوئی ہے پہلے کبھی نہیں ہوئی، اس حکومت نے ریاست کو منہدم ہی نہیں کیا بلکہ اسے حکومت کے تابع کردیا ہے
 
Advertisement

Saboo

Prime Minister (20k+ posts)
ہاہاہا…. نہیں لطیف کھوسہ پورا ڈنگر ہے…..اگر وزیر اعظم کے پاکستان کے گند بارے
بین الاقوامی میڈیا کو بتاتے ہوے تمہیں شرم محسوس ہو رہی ہے تو کیا تم سمجھتے ہو بین الاقوامی
میڈیا کو پاکستانی گند بارے پہلے سے علم نہیں ہے؟ کیا وہ ریاست کی رسوائی کا باعث نہیں بن رہی
اور اگر یہی کچھ عمران خان پارلیمنٹ میں کہتے ہیں تو کیا وہ میڈیا میں رپورٹ نہیں ہوگا؟
 

Okara

Prime Minister (20k+ posts)
Can someone ask Lateef Khosa on the status of Mosque built by Ms Ayyan Ali in Dubai? BTW Sir Lateef was lawyer of Ms Ayyan and this statement was given in court. I know lot of people will say its a joke but it isn't. The joke is the judge accepted this claim as its.
 

Husaink

Chief Minister (5k+ posts)
15latf.jpg

پیپلزپارٹی کے سینئر رہنما لطیف کھوسہ نے کہا ہے کہ عالمی میڈیا کو انٹرویو کے دوران وزیراعظم کی باتیں ریاست کیلئے رسوائی کا باعث بن رہی ہیں۔

نجی ٹی وی چینل سماء نیوز کے پروگرام"سوال" میں میزبان نے وزیراعظم عمران خان کے ایک بین الاقوامی ادارے کو دیئے گئے انٹرویو کا کلپ چلایا گیا جس میں وزیراعظم عمران خان ملک میں قانون کی بالادستی اور اشرافیہ سے متعلق گفتگو کررہے تھے۔

پروگرام کے میزبان نے لطیف کھوسہ سے سوال کیا کہ کیوں ملک میں پیپلزپارٹی اور ن لیگ نے اتنے لمبے عرصے اقتدار پر رہنے کے بعد بھی قانون کی بالادستی قائم نہیں ہونے دی۔

لطیف کھوسہ نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ مجھے شرم آتی ہے کہ میرا وزیراعظم بین الاقوامی میڈیا کے سامنے پاکستان کے گند کے بارے میں بتارہا ہے، کیا وزیراعظم کی یہ گفتگو ریاست کی تذلیل و رسوائی کا سبب نہیں بن رہی۔


انہوں نے مزید کہا کہ اگر انہیں ملک کی اصلاح مقصود تھی تو کاش وہ یہ تقریر ایک بین الاقوامی میڈیا کے سامنے کرنے کے بجائے پارلیمنٹ میں کھڑے ہوکر کرتے، خود کو پارسا ثابت کرکے ملک کی تذلیل کرنا میرے لیےشرم کی بات ہے۔

لطیف کھوسہ نے کہا کہ موجودہ حکومت کو تین سال ہوچکے ہیں جتنی قانون کی بالادستی کی نفی اور آئین کی تضحیک تحریک انصاف کی حکومت کے تین سالوں میں ہوئی ہے پہلے کبھی نہیں ہوئی، اس حکومت نے ریاست کو منہدم ہی نہیں کیا بلکہ اسے حکومت کے تابع کردیا ہے
اس بھڑوے نے بلاول ہاؤس کا نام ملک رکھا ہوا ہے
 

The Sane

Chief Minister (5k+ posts)
15latf.jpg

پیپلزپارٹی کے سینئر رہنما لطیف کھوسہ نے کہا ہے کہ عالمی میڈیا کو انٹرویو کے دوران وزیراعظم کی باتیں ریاست کیلئے رسوائی کا باعث بن رہی ہیں۔

نجی ٹی وی چینل سماء نیوز کے پروگرام"سوال" میں میزبان نے وزیراعظم عمران خان کے ایک بین الاقوامی ادارے کو دیئے گئے انٹرویو کا کلپ چلایا گیا جس میں وزیراعظم عمران خان ملک میں قانون کی بالادستی اور اشرافیہ سے متعلق گفتگو کررہے تھے۔

پروگرام کے میزبان نے لطیف کھوسہ سے سوال کیا کہ کیوں ملک میں پیپلزپارٹی اور ن لیگ نے اتنے لمبے عرصے اقتدار پر رہنے کے بعد بھی قانون کی بالادستی قائم نہیں ہونے دی۔

لطیف کھوسہ نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ مجھے شرم آتی ہے کہ میرا وزیراعظم بین الاقوامی میڈیا کے سامنے پاکستان کے گند کے بارے میں بتارہا ہے، کیا وزیراعظم کی یہ گفتگو ریاست کی تذلیل و رسوائی کا سبب نہیں بن رہی۔


انہوں نے مزید کہا کہ اگر انہیں ملک کی اصلاح مقصود تھی تو کاش وہ یہ تقریر ایک بین الاقوامی میڈیا کے سامنے کرنے کے بجائے پارلیمنٹ میں کھڑے ہوکر کرتے، خود کو پارسا ثابت کرکے ملک کی تذلیل کرنا میرے لیےشرم کی بات ہے۔

لطیف کھوسہ نے کہا کہ موجودہ حکومت کو تین سال ہوچکے ہیں جتنی قانون کی بالادستی کی نفی اور آئین کی تضحیک تحریک انصاف کی حکومت کے تین سالوں میں ہوئی ہے پہلے کبھی نہیں ہوئی، اس حکومت نے ریاست کو منہدم ہی نہیں کیا بلکہ اسے حکومت کے تابع کردیا ہے
👇🏼تو یہ کیا ہے، حرام خور گنجے؟
 

Faraqlit

MPA (400+ posts)
In saray haram gulamo ko tub sharam nahi ati jab yeh

- ak transgender larkay ko party ak head banatay hain
- aak family kyi badshat kya gulam hain or in kya bacho kya gulam hain
- Ayan Ali jasi model prostitue ka case lartay hain
- money loundring kartay hain
- Sindh, thar, karachi ka kya hal kia hai corruption or AIDs say
- sara business or properties west main hain or admit bhi nahi kartay hain snd tax almost nothing
 

Faraqlit

MPA (400+ posts)
Saray haram khor hain and IMRAN is a punishment for them and all stupid followers of mafia famlies, specially duffer bitch patwaris
 

nasir77

Chief Minister (5k+ posts)
Fiker na Ker Ghanjay, Teray Jesay Bay-sharm zaleel ruswa nahin hotay!!! Bulkay TV per a ker bhashun datay hain....
 

Talisman

MPA (400+ posts)
15latf.jpg

پیپلزپارٹی کے سینئر رہنما لطیف کھوسہ نے کہا ہے کہ عالمی میڈیا کو انٹرویو کے دوران وزیراعظم کی باتیں ریاست کیلئے رسوائی کا باعث بن رہی ہیں۔

نجی ٹی وی چینل سماء نیوز کے پروگرام"سوال" میں میزبان نے وزیراعظم عمران خان کے ایک بین الاقوامی ادارے کو دیئے گئے انٹرویو کا کلپ چلایا گیا جس میں وزیراعظم عمران خان ملک میں قانون کی بالادستی اور اشرافیہ سے متعلق گفتگو کررہے تھے۔

پروگرام کے میزبان نے لطیف کھوسہ سے سوال کیا کہ کیوں ملک میں پیپلزپارٹی اور ن لیگ نے اتنے لمبے عرصے اقتدار پر رہنے کے بعد بھی قانون کی بالادستی قائم نہیں ہونے دی۔

لطیف کھوسہ نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ مجھے شرم آتی ہے کہ میرا وزیراعظم بین الاقوامی میڈیا کے سامنے پاکستان کے گند کے بارے میں بتارہا ہے، کیا وزیراعظم کی یہ گفتگو ریاست کی تذلیل و رسوائی کا سبب نہیں بن رہی۔


انہوں نے مزید کہا کہ اگر انہیں ملک کی اصلاح مقصود تھی تو کاش وہ یہ تقریر ایک بین الاقوامی میڈیا کے سامنے کرنے کے بجائے پارلیمنٹ میں کھڑے ہوکر کرتے، خود کو پارسا ثابت کرکے ملک کی تذلیل کرنا میرے لیےشرم کی بات ہے۔

لطیف کھوسہ نے کہا کہ موجودہ حکومت کو تین سال ہوچکے ہیں جتنی قانون کی بالادستی کی نفی اور آئین کی تضحیک تحریک انصاف کی حکومت کے تین سالوں میں ہوئی ہے پہلے کبھی نہیں ہوئی، اس حکومت نے ریاست کو منہدم ہی نہیں کیا بلکہ اسے حکومت کے تابع کردیا ہے
Listen bald pimp of Ayyan Ali, and faggot Bilawal and the Donkey face embarrassment of Pakistan Zardari harami, WE THE AWAM ARE HONORED TO HAVE IK AS OUR PM. YOU SON OF A PROSTITUTE. KUNJUR.
 
Sponsored Link