ملالہ یوسفزئی۔۔ فخرِ پاکستان

Iconoclast

Chief Minister (5k+ posts)
By "you" I don't me you in particular but the hater lot and where have you seen me kissing her ass? I just find all this hate quite unnecessary, annoying and intolerant to be honest and just chime in when people here start spewing all sorts of crock pot conspiracy theories, she's here to destroy Islam, shes a mossad agent and all sorts of nonsense.

Now once again everybody is jumping up and down and getting their knickers all in knots over just one statement. Instantly the arm chair moulvi brigade gets mobilized and start throwing fatwas left and right.

Well I guess it all makes sense, she almost lost her life because of intolerance, she is where she is now because of intolerance and now once again she's getting massive hate because of intolerance. These same people would kill her at the drop of a hat if she was in Pakistan. Full circle.
Defending her and calling the "hate" she get's as just that without figuring out the reasons is kissing ass.... You don't want her to get all the hate she gets, stop calling her "Fakhr e Pakistan" and shit as if she did something great.... while we are on the subject, pray tell me what happened to the other girls who got injured along with her?.....
Islam is too strong to be threatened by this bug as for "agents"....... they're not born, they're manipulated, molded and made and it could be true for her so why pass on sweeping statemens one way or the other? And going by her father's character, a major influence, it could very well be true....
Her talking about peace is like the Republicans telling the Blacks to trust Police and stop resisting them.......
She makes it sound as if we're the only one looking for shit....... absolving the west of their crimes...... it takes two to tango so she can take that peace talk and shove it up her enlightened twat....
She is a nobody, and when you present her as the "essence" of everybody, pride of Pakistan and bullshit like that, it ought to flare up tempers......
 

Black_Falcon

MPA (400+ posts)
مجھے یاد نہیں پڑتا کہ پاکستان کی کسی شخصیت کو عالمی سطح پر اتنی عزت، اتنی مقبولیت اور اتنی پذیرائی ملی ہو جتنی ملالہ یوسفزئی کو مل رہی ہے۔ پاکستان وہ ملک ہے جس کوبیشتر ممالک کے لوگ یا تو جانتے ہی نہیں تھے یا پھر جانتے تھے تو دہشتگردی، دو نمبری، بے ایمانی، فراڈ اور کرپشن کی وجہ سے۔ پاکستان کا نام دنیا میں آتا تھا تو طالبان کے ساتھ، اسامہ بن لادن کے ساتھ۔ ملالہ یوسفزئی کی وجہ سے پہلی بار پاکستان بدنامی کی بجائے نیک نامی سے مستفید ہورہا ہے۔ اس کا کریڈٹ صرف ملالہ کو ہی نہیں جاتا، اس کے والد ضیاء الدین یوسفزئی کو بھی جاتا ہے۔ کیونکہ وہی شخص ہے جس نے پاکستان جیسے قدامت پرست، عورت دشمن، گھٹن زدہ سماج میں اپنی بیٹی کو ایسی تعلیم اور تربیت دی کہ آج وہ دنیا کے افق پر ایک روشن ستارے کی طرح جگمگا رہی ہے۔

ملالہ یوسفزئی آج جس مقام پر پہنچ چکی ہے کوئی بھی عام پاکستانی اس مقام تک پہنچنے کا تصور بھی نہیں کرسکتا ۔ پاکستان کی عوام کی اکثریت ملالہ یوسفزئی کی تحسین کرنے کی بجائے اس پر دشنام طرازی کرنے میں مصروف ہے۔ اس کی کئی وجوہات ہیں۔ پہلی وجہ تو یہ ہے کہ ملالہ یوسفزئی کس بم بارود والے کام میں ملوث نہیں ہے۔ اگر وہ بھی عافیہ صدیقی کی طرح دہشتگردی کرتے ہوئے پکڑی جاتی اور دنیا بھر میں پاکستان کا نام بدنام کرنے کا باعث بنتی تو پاکستانی قوم اسے اپنا ہیرو قرار دیتی۔ مگر وہ چونکہ امن پسند ہے، ہمیشہ امن کی بات کرتی ہے، تعلیم اور تہذیب کی بات کرتی ہے، اس لئےپاکستانی عوام اس کے خلاف ہے۔ کیونکہ ہماری عوام کو شروع سے ہی تعلیم اور تہذیب سے دشمنی سکھائی گئی ہے۔ ہمارے نصاب میں ہیروز کےطور پر محمد بن قاسم، سلطان محمد غزنوی، احمد شاہ ابدالی، غازی علم الدین وغیرہ جیسے لوگوں کو پڑھایا جاتا ہے جن کا امن سے دور دور تک کوئی لینا دینا نہ تھا اور مار دھاڑ، خون خرابہ ان کی پہچان تھی۔ تو پاکستانی عوام کیسے ملالہ جیسی امن پسندکو اپنا ہیرو مان سکتی ہے۔ ہم نے عوام کو امن پسندی سکھائی اور پڑھائی ہی نہیں۔

دوسری وجہ یہ ہے کہ ملالہ ایک لڑکی ہے عورت ہے۔ پاکستان میں عورت کو چار دیواری میں بند، برقعے اور تنبو میں لپیٹ کر رکھنے کا رواج ہے۔ عورت کو مرد کے تابع فرمان رکھنے کی روایت ہے۔ ایک آزاد اور خودمختار عورت کو تو پاکستانی معاشرہ سو طرح کی گالی دیتا ہے۔ اسی وجہ سے پاکستانی عوام ملالہ کو بھی گالیاں دیتی ہے کہ یہ عورت ہوکر اتنی آگے کیسے نکل گئی۔ تیسری وجہ یہ ہے کہ پاکستانی عوام کی اکثریت اپنی بدحالی کی وجہ سے انتہائی قسم کے حسد کا شکار ہے۔ یہ بدحالی بھی انہوں نے اپنی جہالت کی وجہ سےخود پر مسلط کی ہوئی ہے، اپنی جہالت کی وجہ سے یہ ہر اس اقدام کی مخالفت کرتے ہیں جو پاکستان کو خوشحالی کی طرف لے جاسکے۔اس بدحال قوم کے ریوڑ سے اگر کوئی نکل کر خوشحالی کی طرف چلا جائے تو یہ حسد سے جل بھن جاتے ہیں۔ ملالہ سے بھی یہ اسی لئے حسد کرتے ہیں کہ وہ کیوں جہلاء کے ریوڑ سے نکل کر ایک مہذب سماج میں چلی گئی۔۔

ملالہ یوسفزئی کو اس کے والد نے شروع سے ہی اچھی تعلیم دی ، منافرت سے دور رکھا، ذہین تو وہ فطرتاً ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ سطحی سوچ نہیں رکھتی۔ ملالہ نے حالیہ انٹرویو میں شادی کے متعلق جو بیان دیا وہ اس کی اعلیٰ سوچ کی عکاسی کرتا ہے۔ میں ملالہ کی بات سے بالکل اتفاق کرتا ہوں کہ اگر دولوگ ایک دوسرے کے ساتھ خوش ہیں تو وہ بغیر کسی کاغذی کاروائی کے بھی ایک دوسرے کے ساتھ رہ سکتے ہیں۔ ایسا رشتہ میری نظر میں بہت بہتر ہے اس رشتے سے جس کو نکاح ناموں، گواہوں اور سماج کے بندھنوں کے ذریعے اچھی طرح ٹھوک بجا کر پکا کیا گیا ہو، مگر اس رشتے میں بندھے دونوں افراد ایک دوسرے سے خوش نہ ہوں۔ ملالہ کی اس بات پر پاکستان میں موجود دولے شاہ کے چوہے تتے توے پر بیٹھے ہوئے ہیں، بیچاروں کا قصور بھی نہیں،ان کو بچپن سے ہی کچھ لگے بندھے رواج سکھا رٹا کر بڑا کیا گیا ہے، اپنی سوچ پنپنے نہیں دی گئی تو وہ بیچارے کیا کریں، ان کیلئے تو وہی صحیح ہے جو ان کوبچپن سے سکھایا گیا ہے۔۔

بہرحال مجھے اس بات کی خوشی ہے کہ پاکستان جیسے جاہلوں کے جنگل سے کم از کم ایک تو روشن ذہن نکلا۔ میں ملالہ اور اس کے والد کو سلام کرتا ہوں اور حکومتِ پاکستان سے مطالبہ کرتا ہوں کہ ملالہ کو فخرِ پاکستان کے خطاب سے نوازا جائے۔۔
itne mahnat ke just for nothing
 

Citizen X

Prime Minister (20k+ posts)
Defending her and calling the "hate" she get's as just that without figuring out the reasons is kissing ass.... You don't want her to get all the hate she gets, stop calling her "Fakhr e Pakistan" and shit as if she did something great.... while we are on the subject, pray tell me what happened to the other girls who got injured along with her?.....
Islam is too strong to be threatened by this bug as for "agents"....... they're not born, they're manipulated, molded and made and it could be true for her so why pass on sweeping statemens one way or the other? And going by her father's character, a major influence, it could very well be true....
Her talking about peace is like the Republicans telling the Blacks to trust Police and stop resisting them.......
She makes it sound as if we're the only one looking for shit....... absolving the west of their crimes...... it takes two to tango so she can take that peace talk and shove it up her enlightened twat....
She is a nobody, and when you present her as the "essence" of everybody, pride of Pakistan and bullshit like that, it ought to flare up tempers......
Well then you need anger management classes my friend if something so simple can set you off! lol
 

HimSar

Minister (2k+ posts)
She's a Pakistani girl who went through huge changes in life and is busy making a life for herself in Britain, albeit by explaining Pakistan to the world and via the version that suits her since a bright image helps her case, not. She is vocal about Pashtun culture and what she actually thinks of it. She's written/been interviewed a lot apparently but the book that she launched and what it said about my country so taliban became synonymous with a regular Pakistani and Pak army with BSF, did wonders, internationally. She likes to/is expected to comment on sensitive topics esp regarding girls, women, education, etc. They are the keywords her international profile carries. She has a very capable marketing team (iPhone launch co-inciding with her embroidered shirt?). She is like other expat Pakistanis in many ways, except they earn money by their own zor-e-bazu, and send that money home. Without resorting to selling anything that's in demand internationally. The kind of living haqqani, altaf, najayez, bla's gulalai, Hec defaultor goraya, gaomata-phile tarek fateh, etc make. They invented a whole new category of work/residence visas abroad. Malala is pressed to make rather general statements when something happens, from the looks of it. Let her be. She's her parents' fakhr. Perhaps britain's/oxford's/Nobel institute's, etc. Not her area's, not my country's. Not yet. To me, she's irrelevant. She minds her own business, good for her. She does social work in Nigeria, great. She expands her social work to Pakistan, pagris off to her. She comes back to reap fruit others have sown and become the next pm of my country, per her expressed wishes, that's where she crosses the line. For some things in life, people have to get off their pretty assess and Earn them.
 

HimSar

Minister (2k+ posts)
Well I'm going to call myself as fakhr e Pakistan from now on, just to piss you off!
Here's real competition for you.

Contestant no. 1: Pride of Pakistan (rainbow is Haram so b&w for local print. International edition of the flag will be appropriate)
89304-fazlujpg-1571217429.jpg


Contestant no. 2: Bride of Pakistan (don't steal this title even if that's how the word is pronounced around you)
bilawal-bakhtawar-bhutto-host-sindh-festival-4652.jpg


Contestant no. 3: Hyde of Pakistan (hide your videos)
6fe188610d398f7560ea2bca7fc6798d.jpg

If you're still in the game, good luck to you.
 

Haha

Minister (2k+ posts)
Here's real competition for you.

Contestant no. 1: Pride of Pakistan (rainbow is Haram so b&w for local print. International edition of the flag will be appropriate)
89304-fazlujpg-1571217429.jpg


Contestant no. 2: Bride of Pakistan (don't steal this title even if that's how the word is pronounced around you)
bilawal-bakhtawar-bhutto-host-sindh-festival-4652.jpg


Contestant no. 3: Hyde of Pakistan (hide your videos)
6fe188610d398f7560ea2bca7fc6798d.jpg

If you're still in the game, good luck to you.
سر جی ویسے اگر آپ ریبو بنا بھی دیتے تو گوالمنڈیلا کے پیروکا ر اور فضلو اینڈ کمپنی کے پلے ککھ بھی نہیں پڑنا کہ رینبو کیا ہےُ😂ہاں بلو کو ضرور معکوم ہے
 

Citizen X

Prime Minister (20k+ posts)
Here's real competition for you.

Contestant no. 1: Pride of Pakistan (rainbow is Haram so b&w for local print. International edition of the flag will be appropriate)
89304-fazlujpg-1571217429.jpg


Contestant no. 2: Bride of Pakistan (don't steal this title even if that's how the word is pronounced around you)
bilawal-bakhtawar-bhutto-host-sindh-festival-4652.jpg


Contestant no. 3: Hyde of Pakistan (hide your videos)
6fe188610d398f7560ea2bca7fc6798d.jpg

If you're still in the game, good luck to you.
You forgot Lanat e Pakistan

tvnofip8_nawaz-sharif-reuters_625x300_07_July_19.jpg


And Dramabaz e Pakistan

Shahbaz-Sharif-Visit-in-Lahore.jpg


Haram Khoor e Pakistan

asif-ali-zardari.jpg
 

Sohail Shuja

Chief Minister (5k+ posts)
مجھے یاد نہیں پڑتا کہ پاکستان کی کسی شخصیت کو عالمی سطح پر اتنی عزت، اتنی مقبولیت اور اتنی پذیرائی ملی ہو جتنی ملالہ یوسفزئی کو مل رہی ہے۔ پاکستان وہ ملک ہے جس کوبیشتر ممالک کے لوگ یا تو جانتے ہی نہیں تھے یا پھر جانتے تھے تو دہشتگردی، دو نمبری، بے ایمانی، فراڈ اور کرپشن کی وجہ سے۔ پاکستان کا نام دنیا میں آتا تھا تو طالبان کے ساتھ، اسامہ بن لادن کے ساتھ۔ ملالہ یوسفزئی کی وجہ سے پہلی بار پاکستان بدنامی کی بجائے نیک نامی سے مستفید ہورہا ہے۔ اس کا کریڈٹ صرف ملالہ کو ہی نہیں جاتا، اس کے والد ضیاء الدین یوسفزئی کو بھی جاتا ہے۔ کیونکہ وہی شخص ہے جس نے پاکستان جیسے قدامت پرست، عورت دشمن، گھٹن زدہ سماج میں اپنی بیٹی کو ایسی تعلیم اور تربیت دی کہ آج وہ دنیا کے افق پر ایک روشن ستارے کی طرح جگمگا رہی ہے۔

ملالہ یوسفزئی آج جس مقام پر پہنچ چکی ہے کوئی بھی عام پاکستانی اس مقام تک پہنچنے کا تصور بھی نہیں کرسکتا ۔ پاکستان کی عوام کی اکثریت ملالہ یوسفزئی کی تحسین کرنے کی بجائے اس پر دشنام طرازی کرنے میں مصروف ہے۔ اس کی کئی وجوہات ہیں۔ پہلی وجہ تو یہ ہے کہ ملالہ یوسفزئی کس بم بارود والے کام میں ملوث نہیں ہے۔ اگر وہ بھی عافیہ صدیقی کی طرح دہشتگردی کرتے ہوئے پکڑی جاتی اور دنیا بھر میں پاکستان کا نام بدنام کرنے کا باعث بنتی تو پاکستانی قوم اسے اپنا ہیرو قرار دیتی۔ مگر وہ چونکہ امن پسند ہے، ہمیشہ امن کی بات کرتی ہے، تعلیم اور تہذیب کی بات کرتی ہے، اس لئےپاکستانی عوام اس کے خلاف ہے۔ کیونکہ ہماری عوام کو شروع سے ہی تعلیم اور تہذیب سے دشمنی سکھائی گئی ہے۔ ہمارے نصاب میں ہیروز کےطور پر محمد بن قاسم، سلطان محمد غزنوی، احمد شاہ ابدالی، غازی علم الدین وغیرہ جیسے لوگوں کو پڑھایا جاتا ہے جن کا امن سے دور دور تک کوئی لینا دینا نہ تھا اور مار دھاڑ، خون خرابہ ان کی پہچان تھی۔ تو پاکستانی عوام کیسے ملالہ جیسی امن پسندکو اپنا ہیرو مان سکتی ہے۔ ہم نے عوام کو امن پسندی سکھائی اور پڑھائی ہی نہیں۔

دوسری وجہ یہ ہے کہ ملالہ ایک لڑکی ہے عورت ہے۔ پاکستان میں عورت کو چار دیواری میں بند، برقعے اور تنبو میں لپیٹ کر رکھنے کا رواج ہے۔ عورت کو مرد کے تابع فرمان رکھنے کی روایت ہے۔ ایک آزاد اور خودمختار عورت کو تو پاکستانی معاشرہ سو طرح کی گالی دیتا ہے۔ اسی وجہ سے پاکستانی عوام ملالہ کو بھی گالیاں دیتی ہے کہ یہ عورت ہوکر اتنی آگے کیسے نکل گئی۔ تیسری وجہ یہ ہے کہ پاکستانی عوام کی اکثریت اپنی بدحالی کی وجہ سے انتہائی قسم کے حسد کا شکار ہے۔ یہ بدحالی بھی انہوں نے اپنی جہالت کی وجہ سےخود پر مسلط کی ہوئی ہے، اپنی جہالت کی وجہ سے یہ ہر اس اقدام کی مخالفت کرتے ہیں جو پاکستان کو خوشحالی کی طرف لے جاسکے۔اس بدحال قوم کے ریوڑ سے اگر کوئی نکل کر خوشحالی کی طرف چلا جائے تو یہ حسد سے جل بھن جاتے ہیں۔ ملالہ سے بھی یہ اسی لئے حسد کرتے ہیں کہ وہ کیوں جہلاء کے ریوڑ سے نکل کر ایک مہذب سماج میں چلی گئی۔۔

ملالہ یوسفزئی کو اس کے والد نے شروع سے ہی اچھی تعلیم دی ، منافرت سے دور رکھا، ذہین تو وہ فطرتاً ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ سطحی سوچ نہیں رکھتی۔ ملالہ نے حالیہ انٹرویو میں شادی کے متعلق جو بیان دیا وہ اس کی اعلیٰ سوچ کی عکاسی کرتا ہے۔ میں ملالہ کی بات سے بالکل اتفاق کرتا ہوں کہ اگر دولوگ ایک دوسرے کے ساتھ خوش ہیں تو وہ بغیر کسی کاغذی کاروائی کے بھی ایک دوسرے کے ساتھ رہ سکتے ہیں۔ ایسا رشتہ میری نظر میں بہت بہتر ہے اس رشتے سے جس کو نکاح ناموں، گواہوں اور سماج کے بندھنوں کے ذریعے اچھی طرح ٹھوک بجا کر پکا کیا گیا ہو، مگر اس رشتے میں بندھے دونوں افراد ایک دوسرے سے خوش نہ ہوں۔ ملالہ کی اس بات پر پاکستان میں موجود دولے شاہ کے چوہے تتے توے پر بیٹھے ہوئے ہیں، بیچاروں کا قصور بھی نہیں،ان کو بچپن سے ہی کچھ لگے بندھے رواج سکھا رٹا کر بڑا کیا گیا ہے، اپنی سوچ پنپنے نہیں دی گئی تو وہ بیچارے کیا کریں، ان کیلئے تو وہی صحیح ہے جو ان کوبچپن سے سکھایا گیا ہے۔۔

بہرحال مجھے اس بات کی خوشی ہے کہ پاکستان جیسے جاہلوں کے جنگل سے کم از کم ایک تو روشن ذہن نکلا۔ میں ملالہ اور اس کے والد کو سلام کرتا ہوں اور حکومتِ پاکستان سے مطالبہ کرتا ہوں کہ ملالہ کو فخرِ پاکستان کے خطاب سے نوازا جائے۔۔
ملالہ نے اسی بیان میں یہ بھی کہا ہے کہ اسکو اپنے کپڑے خود پسند ہیں اور جو خواتین ایسے کپڑے پہنتی ہیں انھیں کمزور اور دبا ہوا سمجھا جاتا ہے، جبکہ ایسا نہیں۔

اس بیان کے بارے میں کیا خیال ہے؟

شادی کے بارے میں بیان کو اتنا سیریس لینے کی ضرورت نہیں۔ ہوسکتا ہے اسے ابھی ان چیزوں کا علم ہی صحیح طور سے نہ ہو۔ ابھی عمر ہی کیا ہے اسکی؟

پھر فخرِ پاکستان کے ساتھ فخرِ انگلستان کی ایک تصویر بھی ہوجائے؟

20422773.jpg


15903477.jpg
 

Wake up Pak

Chief Minister (5k+ posts)
مجھے یاد نہیں پڑتا کہ پاکستان کی کسی شخصیت کو عالمی سطح پر اتنی عزت، اتنی مقبولیت اور اتنی پذیرائی ملی ہو جتنی ملالہ یوسفزئی کو مل رہی ہے۔ پاکستان وہ ملک ہے جس کوبیشتر ممالک کے لوگ یا تو جانتے ہی نہیں تھے یا پھر جانتے تھے تو دہشتگردی، دو نمبری، بے ایمانی، فراڈ اور کرپشن کی وجہ سے۔ پاکستان کا نام دنیا میں آتا تھا تو طالبان کے ساتھ، اسامہ بن لادن کے ساتھ۔ ملالہ یوسفزئی کی وجہ سے پہلی بار پاکستان بدنامی کی بجائے نیک نامی سے مستفید ہورہا ہے۔ اس کا کریڈٹ صرف ملالہ کو ہی نہیں جاتا، اس کے والد ضیاء الدین یوسفزئی کو بھی جاتا ہے۔ کیونکہ وہی شخص ہے جس نے پاکستان جیسے قدامت پرست، عورت دشمن، گھٹن زدہ سماج میں اپنی بیٹی کو ایسی تعلیم اور تربیت دی کہ آج وہ دنیا کے افق پر ایک روشن ستارے کی طرح جگمگا رہی ہے۔

ملالہ یوسفزئی آج جس مقام پر پہنچ چکی ہے کوئی بھی عام پاکستانی اس مقام تک پہنچنے کا تصور بھی نہیں کرسکتا ۔ پاکستان کی عوام کی اکثریت ملالہ یوسفزئی کی تحسین کرنے کی بجائے اس پر دشنام طرازی کرنے میں مصروف ہے۔ اس کی کئی وجوہات ہیں۔ پہلی وجہ تو یہ ہے کہ ملالہ یوسفزئی کس بم بارود والے کام میں ملوث نہیں ہے۔ اگر وہ بھی عافیہ صدیقی کی طرح دہشتگردی کرتے ہوئے پکڑی جاتی اور دنیا بھر میں پاکستان کا نام بدنام کرنے کا باعث بنتی تو پاکستانی قوم اسے اپنا ہیرو قرار دیتی۔ مگر وہ چونکہ امن پسند ہے، ہمیشہ امن کی بات کرتی ہے، تعلیم اور تہذیب کی بات کرتی ہے، اس لئےپاکستانی عوام اس کے خلاف ہے۔ کیونکہ ہماری عوام کو شروع سے ہی تعلیم اور تہذیب سے دشمنی سکھائی گئی ہے۔ ہمارے نصاب میں ہیروز کےطور پر محمد بن قاسم، سلطان محمد غزنوی، احمد شاہ ابدالی، غازی علم الدین وغیرہ جیسے لوگوں کو پڑھایا جاتا ہے جن کا امن سے دور دور تک کوئی لینا دینا نہ تھا اور مار دھاڑ، خون خرابہ ان کی پہچان تھی۔ تو پاکستانی عوام کیسے ملالہ جیسی امن پسندکو اپنا ہیرو مان سکتی ہے۔ ہم نے عوام کو امن پسندی سکھائی اور پڑھائی ہی نہیں۔

دوسری وجہ یہ ہے کہ ملالہ ایک لڑکی ہے عورت ہے۔ پاکستان میں عورت کو چار دیواری میں بند، برقعے اور تنبو میں لپیٹ کر رکھنے کا رواج ہے۔ عورت کو مرد کے تابع فرمان رکھنے کی روایت ہے۔ ایک آزاد اور خودمختار عورت کو تو پاکستانی معاشرہ سو طرح کی گالی دیتا ہے۔ اسی وجہ سے پاکستانی عوام ملالہ کو بھی گالیاں دیتی ہے کہ یہ عورت ہوکر اتنی آگے کیسے نکل گئی۔ تیسری وجہ یہ ہے کہ پاکستانی عوام کی اکثریت اپنی بدحالی کی وجہ سے انتہائی قسم کے حسد کا شکار ہے۔ یہ بدحالی بھی انہوں نے اپنی جہالت کی وجہ سےخود پر مسلط کی ہوئی ہے، اپنی جہالت کی وجہ سے یہ ہر اس اقدام کی مخالفت کرتے ہیں جو پاکستان کو خوشحالی کی طرف لے جاسکے۔اس بدحال قوم کے ریوڑ سے اگر کوئی نکل کر خوشحالی کی طرف چلا جائے تو یہ حسد سے جل بھن جاتے ہیں۔ ملالہ سے بھی یہ اسی لئے حسد کرتے ہیں کہ وہ کیوں جہلاء کے ریوڑ سے نکل کر ایک مہذب سماج میں چلی گئی۔۔

ملالہ یوسفزئی کو اس کے والد نے شروع سے ہی اچھی تعلیم دی ، منافرت سے دور رکھا، ذہین تو وہ فطرتاً ہے، یہی وجہ ہے کہ وہ سطحی سوچ نہیں رکھتی۔ ملالہ نے حالیہ انٹرویو میں شادی کے متعلق جو بیان دیا وہ اس کی اعلیٰ سوچ کی عکاسی کرتا ہے۔ میں ملالہ کی بات سے بالکل اتفاق کرتا ہوں کہ اگر دولوگ ایک دوسرے کے ساتھ خوش ہیں تو وہ بغیر کسی کاغذی کاروائی کے بھی ایک دوسرے کے ساتھ رہ سکتے ہیں۔ ایسا رشتہ میری نظر میں بہت بہتر ہے اس رشتے سے جس کو نکاح ناموں، گواہوں اور سماج کے بندھنوں کے ذریعے اچھی طرح ٹھوک بجا کر پکا کیا گیا ہو، مگر اس رشتے میں بندھے دونوں افراد ایک دوسرے سے خوش نہ ہوں۔ ملالہ کی اس بات پر پاکستان میں موجود دولے شاہ کے چوہے تتے توے پر بیٹھے ہوئے ہیں، بیچاروں کا قصور بھی نہیں،ان کو بچپن سے ہی کچھ لگے بندھے رواج سکھا رٹا کر بڑا کیا گیا ہے، اپنی سوچ پنپنے نہیں دی گئی تو وہ بیچارے کیا کریں، ان کیلئے تو وہی صحیح ہے جو ان کوبچپن سے سکھایا گیا ہے۔۔

بہرحال مجھے اس بات کی خوشی ہے کہ پاکستان جیسے جاہلوں کے جنگل سے کم از کم ایک تو روشن ذہن نکلا۔ میں ملالہ اور اس کے والد کو سلام کرتا ہوں اور حکومتِ پاکستان سے مطالبہ کرتا ہوں کہ ملالہ کو فخرِ پاکستان کے خطاب سے نوازا جائے۔۔
I don't know if she is a Fakhr e Pakistan but,
for sure she is a "FAKER e PAKISTAN"
(Faker means Dagha Baz بہروپیہ Bheropia)
 

Wake up Pak

Chief Minister (5k+ posts)
“Our Lord, grant us from among our spouses and offspring comfort to our eyes and make us an example for the righteous.” Quran (25:74)

“And We created you in pairs.” Quran (78:8)

“And of His signs is that He created for you from yourselves mates that you may find tranquility in them, And He placed between you affection and mercy. Indeed in that are signs for a people who give thought.” Quran (30:21)

“Wicked women (are) for wicked men, and wicked men (are) for wicked women; and good women (are) for good men, and good men (are) for good women. Those are (declared) quit of whatever they (i.e., of what the wicked ones say) say; they will have forgiveness and an honorable provision.” Quran (24:26)

“It has been made permissible for you the night preceding fasting to go to your wives. They are clothing for you and you are clothing for them. Allah knows that you used to deceive yourselves, so He accepted your repentance and forgave you. So now, have relations with them and seek that which Allah has decreed for you. And eat and drink until the white thread of dawn becomes distinct to you from the black thread [of night]. Then complete the fast until the sunset. And do not have relations with them as long as you are staying for worship in the mosques. These are the limits [set by] Allah, so do not approach them. Thus does Allah make clear His ordinances to the people that they may become righteous.” Quran (2:187)
 

Baadshaah

MPA (400+ posts)
“Our Lord, grant us from among our spouses and offspring comfort to our eyes and make us an example for the righteous.” Quran (25:74)

“And We created you in pairs.” Quran (78:8)

“And of His signs is that He created for you from yourselves mates that you may find tranquility in them, And He placed between you affection and mercy. Indeed in that are signs for a people who give thought.” Quran (30:21)

“Wicked women (are) for wicked men, and wicked men (are) for wicked women; and good women (are) for good men, and good men (are) for good women. Those are (declared) quit of whatever they (i.e., of what the wicked ones say) say; they will have forgiveness and an honorable provision.” Quran (24:26)

“It has been made permissible for you the night preceding fasting to go to your wives. They are clothing for you and you are clothing for them. Allah knows that you used to deceive yourselves, so He accepted your repentance and forgave you. So now, have relations with them and seek that which Allah has decreed for you. And eat and drink until the white thread of dawn becomes distinct to you from the black thread [of night]. Then complete the fast until the sunset. And do not have relations with them as long as you are staying for worship in the mosques. These are the limits [set by] Allah, so do not approach them. Thus does Allah make clear His ordinances to the people that they may become righteous.” Quran (2:187)

مولوی صاحب۔۔ جہالت کی ترویج کی بجائے اگر اپنی کھوپڑی میں کچھ ہے تو پیش کیجئے۔۔۔
 
Sponsored Link