قرآن الله کی کتاب ہے - غیر مسلموں کے سوال کے جوابات

Pakistani1947

Minister (2k+ posts)
کیا قرآن الله کی طرف سے نازل کی گئی کتاب ہے؟ یہ سوال رسول الله ﷺ کی زندگی میں کافروں کی جانب سے کیا گیا جس کا جواب الله تعالیٰ نے قرآن میں خود دے دیا - موجودہ زمانے میں بھی غیر مسلم اکثر یہ سوال اٹھاتے رہتے ہیں خاص طور پر پاکستانی حضرات جو غیر مسلم ممالک میں مقیم ہیں انھیں ایسے سوالات کا سامنا رہتا ہے - اپنے مسلمان بھائیوں اور بہنوں کی اس موضوع پر آگاہی کے لیے میں نے مناسب سمجھا کا یہ تھریڈ سٹارٹ کیا جاجائے - بدقسمتی سے اب یہ سوال شیعہ حضرات کی طرف سے بھی آنا شروع ہو گیا ہے- بہرحال جس جانب سے یہ سوال اٹھایا جاتا ہے بظاھر اس کا مقصد مسلمانوں کے دل میں قرآن کے بارے میں وسوسہ پیدا کرنا معلوم ہوتا ہے - نیچے بیان کی گئی اس موضوع پر بحث سے قرآن کی حقانیت روز روشن کی طرح واضح ہو جائے گی - انشاءالله-

آپ یہ فرمائیں کہ آپ کو کیسے پتہ چلا کہ قرآن الله کی کتاب ہے ؟ کوئی دلیل ہے یا بس ارد گرد کے لوگوں کی دیکھا دیکھی ؟
قرآن اور اس بات کا ثبوت کہ یہ الله کا کلام ہے ، یہ خاص دلائل ہیں جن کو پہلے کافروں نے ضد اور تکبر میں جھٹلایا تھا۔ الله تعالی نے ان کی باتوں کو متعدد طریقوں سے غلط ثابت کیا ، اور اشارہ کیا کہ کافروں کے دلایل کیا غلطیاں ہیں ۔ مثال کے طور پر

یہ قران الله تعالی کی طرف سے انسانوں اور جنوں کے لئے چیلنج ہے کہ وہ اس طرح کی کوئی چیز تیار کریں ، لیکن وہ اس سے قاصر تھے۔ پھر الله نے ان کو چیلنج دیا کہ اس طرح صرف دس سورہ تیار کریں ، اور کفار اس سے قاصر رہے۔ پھر الله نے کافرون کو چیلنج دیا کہ وہ قران میں سب سے چھوٹی سورہ کی طرح کوئی چیز لکھ کر لائیں ، اور وہ ایسا نہیں کرسکے ، حالانکہ جن کو چیلنج دیا جارہا تھا وہ بنی نوع انسان کے نہایت ہی فصاحت رکھنے والے اور باشعور انسان تھے ، اور قرآن ان کی زبان میں نازل ہوا تھا۔ پھر بھی اس کے باوجود انہوں نے کہا کہ وہ ایسا کرنے میں مکمل طور پر نااہل ہیں۔ یہ چیلنج پوری تاریخ میں بدستور برقرار ہے ، لیکن ایک بھی شخص اس طرح کی کوئی چیز تیار نہیں کرسکا ہے۔ اگر یہ انسان کا کلام ہوتا تو کچھ لوگ اس کی طرح پیدا کر سکتے یا اس کے قریب ہوتے۔ قرآن میں اس چیلنج کے لئے بہت سارے ثبوت موجود ہیں ، مثال کے طور پر

(Qur'an 17:88) قُل لَّئِنِ اجْتَمَعَتِ الْإِنسُ وَالْجِنُّ عَلَىٰ أَن يَأْتُوا بِمِثْلِ هَـٰذَا الْقُرْآنِ لَا يَأْتُونَ بِمِثْلِهِ وَلَوْ كَانَ بَعْضُهُمْ لِبَعْضٍ ظَهِيرًا
کہہ دو اگر سب آدمی اور سب جن مل کر بھی ایسا قرآن لانا چاہیں تو ایسا نہیں لا سکتے اگرچہ ان میں سے ہر ایک دوسرے کا مددگار کیوں نہ ہو

الله سبحانہ وتعالی کا فرمان ہے کہ ، انہیں صرف دس سورہ تیار کرنے کا چیلنج ہے

(Qur'an 11:13) أَمْ يَقُولُونَ افْتَرَاهُ ۖ قُلْ فَأْتُوا بِعَشْرِ سُوَرٍ مِّثْلِهِ مُفْتَرَيَاتٍ وَادْعُوا مَنِ اسْتَطَعْتُم مِّن دُونِ اللَّهِ إِن كُنتُمْ صَادِقِينَ
کیا کہتے ہیں کہ تو نے قرآن خود بنا لیا ہے کہہ دو تم بھی ایسی دس سورتیں بنا لاؤ اور الله کے سوا جس کو بلا سکو بلا لو اگر تم سچے ہو

الله سبحانہ وتعالی کا فرمان ہے ، انھیں چیلینج کیا کہ صرف ایک سورہ ہی قرآن جیسی بنا کر لائیں

(Qur'an 2:23) وَإِن كُنتُمْ فِي رَيْبٍ مِّمَّا نَزَّلْنَا عَلَىٰ عَبْدِنَا فَأْتُوا بِسُورَةٍ مِّن مِّثْلِهِ وَادْعُوا شُهَدَاءَكُم مِّن دُونِ اللَّهِ إِن كُنتُمْ صَادِقِينَ
اور اگر تمہیں اس چیز میں شک ہے جو ہم نے اپنے بندے پر نازل کی ہے تو ایک سورت اس جیسی لے آؤ اور الله کے سوا جس قدر تمہارے حمایتی ہوں بلا لو اگر تم سچے ہو

اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے کہ بنی نوع انسان کتنا بھی علم اور ادراک حاصل کرلے ، پھر بھی وہ لامحالہ غلطیاں کریں گے ، چیزوں کو بھول جائیں گے یا کم کر دیں گے۔ اگر قرآن کریم الله تعالی کا کلام نہ ہوتا تو اس میں کچھ تضادات اور کوتاہیاں ہوتیں ، جیسا کہ الله تعالی کا فرمان ہے۔

(Qur'an 4:82) أَفَلَا يَتَدَبَّرُونَ الْقُرْآنَ ۚ وَلَوْ كَانَ مِنْ عِندِ غَيْرِ اللَّهِ لَوَجَدُوا فِيهِ اخْتِلَافًا كَثِيرًا
کیا یہ لوگ قرآن میں غور نہیں کرتے اور اگر یہ قرآن سوائے الله کے کسی اور کی طرف سے ہوتا تو وہ اس میں بہت اختلاف پاتے

لیکن یہ کسی بھی نقص ، غلطی یا تضاد سے پاک ہے۔ بے شک ، یہ سب حکمت ، رحمت اور انصاف ہے۔ جو شخص یہ سمجھتا ہے کہ اس میں کوئی تضاد ہے ، وہ اس کی بیمار سوچ اور غلط فہمی کی وجہ سے ہے۔ اگر وہ علماء سے معلوم کریں، تو علماء اس کی وضاحت کریں گے کہ کیا صحیح ہے اور ان کی الجھن کو ختم کردیں گے ، جیسا کہ الله تعالی کا ارشاد ہے:

(Qur'an 41:41-42) إِنَّ الَّذِينَ كَفَرُوا بِالذِّكْرِ لَمَّا جَاءَهُمْ ۖ وَإِنَّهُ لَكِتَابٌ عَزِيزٌ - لَّا يَأْتِيهِ الْبَاطِلُ مِن بَيْنِ يَدَيْهِ وَلَا مِنْ خَلْفِهِ ۖ تَنزِيلٌ مِّنْ حَكِيمٍ حَمِيدٍ
بے شک وہ لوگ جنہوں نے نصیحت سے انکار کیا جب کہ وہ ان کے پاس آئی اور تحقیق وہ البتہ عزت والی کتاب ہے - جس میں نہ آگے اور نہ پیچھے سے غلطی کا دخل ہے حکمت والے تعریف کیے ہوئے کی طرف سے نازل کی گئی ہے

تیسرا نقطہ یہ ہے کہ الله تعالی نے اس قران کو محفوظ رکھنے کی ضمانت دی ہے ، اور فرمایا:

(Qur'an 15:9) إِنَّا نَحْنُ نَزَّلْنَا الذِّكْرَ وَإِنَّا لَهُ لَحَافِظُونَ
ہم نے یہ نصیحت اتار دی ہے اور بے شک ہم اس کے نگہبان ہیں

پوری اسلامی تاریخ میںقرآن کے ہر حرف کو ہزاروں نے ہزاروں لوگوںکو منتقل کیا ، اور اس کا ایک حرف بھی نہیں بدلا جا سکا ۔ اگر کسی شخص نے اس میں کچھ بھی تبدیل کرنے کی کوشش کی ، یا کچھ شامل کرنے یا کچھاضافہ کرنے کی کوشش کی تو اسے فورا ہی بے نقاب کردیا گیا ، کیوں کہ الله تعالی نے ہی قرآن کریم کو محفوظ رکھنے کی ضمانت دی ہے ، اس کے برعکس الله کی دوسری آسمانی کتابیں صرف خاص نبی کے لوگوں پر نازل ہوئیں ، نہ کہ سارے انسانوں پر ، لہذا الله نے ان کو محفوظ رکھنے کی گارنٹی نہیں دی ، بلکہ ان کا تحفظ انبیاء کے پیروکاروں کے سپرد کیا۔ لیکن انہوں نے ان کو محفوظ نہیں کیا ، بلکہ انھوں نے ایسی تبدیلیاں اور تبدیلیاں متعارف کروائیں جن سے بیشتر معنی مسخ ہوگئے۔ دوسری طرف ، قرآن الله تعالی نے قیامت تک آنے والےتمام انسانوں کے لئے نازل کیا ، کیونکہ محمد صلی الله علیہ وآلہ وسلم کا پیغام ہی آخری پیغام ہے ، لہذا قران مسلمانوں کے دلوں میں محفوظ ہے اور تحریری شکل میں بھی ، جیسا کہ تاریخ کے واقعات سے ثابت ہوتا ہے۔ کتنے لوگوں نے قران کی آیات کو تبدیل کرنے اور مسلمانوں کو دھوکہ دینے کی کوشش کی ، لیکن انھیں جلد ہی بے نقاب کردیا گیا اور ان کے جھوٹ کا پتہ چل گیا

اس کی ایک اور واضح علامت، کہ یہ قران رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم نے نہیں پیش کیا تھا ، بلکہ یہ الله تعالی نے ان کے ذریعہ نازل کیا ہے، نیچے بیان کی گئی ہے ۔

چوتھا نقطہ یہ ہے کہ قرآن قانون ، احکام ، کتاریخی قصوں اور عقائد پر مشتمل عظیم الشان معجزہ ہے ، جو کوئی بھی مخلوق پیدا نہیں کر سکتی ، چاہے اس کی ذہانت اور افہام و تفہیم کی سطح کتنی ہی بڑی ہو۔ اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے کہ لوگ اپنی زندگی کو منظم کرنے کے لئے قوانین کو نافذ کرنے کی کتنی ہی کوشش کریں ، وہ اس وقت تک کبھی بھی کامیاب نہیں ہو سکتے جب تک کہ اپنے قوائد قرآن کی تعلیمات کے قریب تر نہ بنائیں ۔ جتنا دور ہونگے ، ان کی ناکامی کی شرح اتنی ہی زیادہ ہو گی ۔ یہ وہ چیز ہے جسے خود کفار تسلیم کرتے ہیں۔

پانچواں نقطہ یہ ہے کہ ماضی اور مستقبل دونوں ہیکے بارے میں غیب کے معاملات کی اطلاعات ، جن کے بارے میں کوئی بھی انسان حتمی طور پر بات نہیں کرسکتا ، اس سے قطع نظر بھی ان کے پاس کتنا ہی علم کیوں نہ ہو ، خاص طور پر اس زمانے میں جو ٹکنالوجی اور جدید آلات کے معاملے میں قدیم سمجھا جاتا ہے۔ بہت سی ایسی چیزیں ہیں جو اس وقت تک دریافت نہیں ہوئیں تھیں ، اور جنہیں جدید ترین آلات کی مدد سے لمبی لمبی اور دشوار گزار تفتیش کے بعد ہی دریافت کیا گیا ہے ، لیکن الله تعالی نے ہمیں قرآن کریم میں ان کے بارے میں بتایا ، اور رسول الله صلی الله علیہ وآلہ وسلم نے ان باتوں کا تذکرہ پندرہ صدیوں پہلے کیا ، جیسا کہ ماں کے پیٹ میں بچے کی نشوونما کے مراحل ، سمندروں کی نوعیت ، وغیرہ۔ ان چیزوں نے کچھ کافروں کو بھی یہ کہنے پر مجبور کر دیا کہ یہ قرآن الله کی طرف سے ہی آسکتا تھا ، جیسا کہ ایمبریو کی نشو نما کے حقائق۔

شیخ الزندانی نے کہتے ہیں ، ہم نے ایک امریکی پروفیسر سے ملاقات کی ، ایک عظیم ترین امریکی سائنس دان ، جس کا نام پروفیسر مارشل جانسن تھا ، اور ہم نے اسے بتایا کہ قرآن کریم میں یہ بتایا گیا ہے کہ انسان کو مراحل میں پیدا کیا گیا ہے ۔ یہ سن کر وہ نیچے بیٹھا ہوا تھا ، لیکن وہ کھڑا ہوگیا اور کہنے لگا ، "مراحل میں"؟ ہم نے کہا ، یہ بات ساتویں صدی عیسوی میں قرآن میں بیان کی گئی ہے کہ انسان مراحل میں پیدا ہوا۔ اس نے کہا ، یہ ناممکن ہے ، ناممکن ہے، ہم نے اسے قرآن کا یہ حوالہ دیا

(Qur'an 39:6) يَخْلُقُكُمْ فِي بُطُونِ أُمَّهَاتِكُمْ خَلْقًا مِّن بَعْدِ خَلْقٍ فِي ظُلُمَاتٍ ثَلَاثٍ ۚ
وہ تمہیں تمہاری ماؤں کے پیٹوں میں ایک کیفیت کے بعد دوسری کیفیت پر تین اندھیروں میں بناتا ہے

(Qur'an 71:13-14) مَّا لَكُمْ لَا تَرْجُونَ لِلَّهِ وَقَارًا - وَقَدْ خَلَقَكُمْ أَطْوَارًا
تمہیں کیا ہو گیا تم الله کی عظمت کا خیال نہیں رکھتے - حالانکہ اس نے تمہیں کئی طرح سے بنا یا ہے

پھر وہ اپنی کرسی پر بیٹھ گیا اور کچھ لمحوں کے بعد اس نے کہا ، یہاں صرف تین امکانات ہیں۔ پہلا یہ کہ محمد ﷺ کے پاس ایک بہت طاقت ور خوردبین تھی جس کے ذریعہ وہ ان چیزوں کا مطالعہ کرنے میں کامیاب ہوگئے اور وہ ایسی چیزوں کو جانتے تھے جو لوگ نہیں جانتے تھے ۔ دوسرا صورت یہ کہ یہ اتفاق سے ہوا ۔ تیسرا یہ کہ وہ اللہ کی طرف سے رسول تھے۔ ہم نے کہا ، پہلے خیال کے حوالے سے ، کہ ان کے پاس مائکروسکوپ اور دیگر سامان موجود تھا ، آپ جانتے ہو کہ مائکروسکوپ کو عدسے ، تکنیکی مہارت اور دیگر سامان کی ضرورت ہوتی ہے۔ اس میں سے کچھ معلومات کو صرف ایک الیکٹران مائکروسکوپ کے ذریعے دریافت کیا جاسکتا ہے جس کو بجلی کی ضرورت ہوتی ہے ، اور بجلی پیدا کرنے کا علم اس زمانے میں بلکل نہ تھا ۔ یہ ممکن نہیں ہے کہ یہ علم ایک ہی نسل میں ایک ساتھ حاصل کیا جاسکے۔ پچھلی نسل کو سائنس کی نشوونما کرنے اور اسے اگلی نسل میں منتقل کرنے کے لئے سخت جدوجہد کرنی پڑتی ، وغیرہ۔ لیکن یہ ایک شخصکے لئے نہ ممکن ہے جبکہ نہ ہی ان سے پہلے اور نہ ہیان کے بعد ، نہ ہی ان کی اپنی سرزمین میں یا رومیوں ، فارسیوں اور عربوں کے پڑوسی ممالک بھی جاہل تھے اور ان کے پاس ایسا سامان نہیں تھا - یہ آلات اور اوزار ان کی بعد کسی کو نہیں ملے یہ ممکن نہیں ہے۔ اس نے کہا ، آپ ٹھیک کہتے ہیں یہ بہت ہی مشکل ہے ۔ ہم نے کہا ، اورجہاں تک یہ سوچنا کہ یہ حادثہ یا اتفاق تھا ، قرآن نے اس حقیقت کا ذکر صرف ایک آیت میں نہیں بلکہ متعدد آیات میں کیا ہے ، اور یہ کہ قرآن نے عام اصطلاحات میں اس کا حوالہ نہیں دیا ہے بلکہ قرآن نے ہر مرحلے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ پہلے مرحلے میں ایسے ، دوسرے مرحلے میں اور تیسرے مرحلے میں اسی طرح ہوتا ہے۔ کیا یہ اتفاق ہوسکتا ہے؟ جب ہم نے ان کو ان مراحل کی ساری تفصیلات بتائیں تو اس نے کہا ، یہ کہنا غلط ہے کہ یہ حادثہ ہے! یہ اچھی طرح سے قائم کیا ہوا علم ہے۔ ہم نے کہا ، پھر آپ اس کی وضاحت کیسے کریں گے؟ اس نے کہا ، اس کے سوا کوئی وضاحت نہیں ہے کہ یہ اوپر سے وحی ہے

قرآن مجید میں سمندر کے بارے میں بہت سارے بیانات کے سلسلے میں ، ان حقائق میں سے کچھ ابھی کچھ عرصہ پہلے تک دریافت نہیں ہوئے تھے ، اور ان میں سے بہت سے تاحال نامعلوم ہیں۔ مثال کے طور پر ، یہ حقائق سیکڑوں میرین اسٹیشن قائم کرنے کے بعد ، اور مصنوعی سیارہ کے ذریعہ تصاویر لینے کے بعد دریافت ہوئے تھے۔ جس نے یہ کہا وہ پروفیسر شروئڈر (Schroeder) تھے ، جو مغربی جرمنی کے ایک بہت بڑے سمندری ماہر ہیں۔ وہ کہتے تھے کہ اگر سائنس ترقی کرنا ہے تو مذہب کو پیچھے ہٹنا ہوگا۔ لیکن جب اس نے قرآنی آیات کا ترجمہ سنا تو وہ دنگ رہ گیا اور کہنے لگا یہ انسان کے الفاظ نہیں ہوسکتے ہیں۔ اور بحر سائنس (oceanography) کے پروفیسر، پروفیسر ڈورجارو (Dorjaro) نے سائنس کی تازہ ترین پیشرفت کے بارے میں بتایا ، جب انہوں نے آیات سنیں

(Qur'an 24:40) أَوْ كَظُلُمَاتٍ فِي بَحْرٍ لُّجِّيٍّ يَغْشَاهُ مَوْجٌ مِّن فَوْقِهِ مَوْجٌ مِّن فَوْقِهِ سَحَابٌ ۚ ظُلُمَاتٌ بَعْضُهَا فَوْقَ بَعْضٍ إِذَا أَخْرَجَ يَدَهُ لَمْ يَكَدْ يَرَاهَا ۗ وَمَن لَّمْ يَجْعَلِ اللَّهُ لَهُ نُورًا فَمَا لَهُ مِن نُّورٍ
یا جیسے گہرے دریا میں اندھیرے ہوں اس پر ایک لہر چڑھ آتی ہے اس پرایک او رلہر ہے اس کے اوپر بادل ہے اوپر تلے بہت سے اندھیرے ہیں جب اپنا ہاتھ نکالے تو اسے کچھ بھی دیکھ نہ سکے اور جسے الله ہی نے نور نہ دیا ہو اس کے لیے کہیں نور نہیں ہے

اس سائنس داں نے کہا ، ماضی میں ، انسان بیس میٹر سے زیادہ کی گہرائی میں غوطہ نہیں لگا سکتا تھا کیونکہ اس کے پاس کوئی خاص سامان نہیں تھا۔ لیکن اب ہم جدید سازو سامان کا استعمال کرتے ہوئے سمندر کی تہہ تک غوطہ زن کرسکتے ہیں ، اور ہمیں دو سو میٹر کی گہرائی میں شدید اندھیرے ملتے ہیں۔آیت کے مطابق ایک وسیع گہرا سمندر۔ سمندر کی گہرائیوں میں موجودہ دریافتیں ہمیں اندھیرے پر اندھیرا کی آیت ، (تہوں) کا مطلب سمجھنے میں مدد دیتی ہیں ۔ یہ معلوم ہے کہ سپیکٹرم میں سات رنگ ہیں ، جن میں سرخ ، پیلے ، نیلے ، سبز ، اورینج وغیرہ شامل ہیں جب ہم سمندر کی گہرائی میں جاتے ہیں تو ، یہ رنگ ایک کے بعد ایک غائب ہوجاتے ہیں ۔ زیادہ اندھیرے میں سب سے پہلے سرخ ، پھر اورینج ،پھر پیلا پھر آخری رنگ دو سو میٹر کی گہرائی میں نیلا ہوتا ہے جو غائب ہوتا ہے۔ ہر رنگ جو غائب ہو جاتا ہے وہ تاریکی میں مزید اضافہ ہوجاتا ہے یہاں تک کہ یہ مکمل اندھیرا ہو جائے۔ لہروں کے سلسلے میں ، یہ سائنسی طور پر ثابت ہوا ہے کہ سمندر کے اوپری اور نچلے حصوں کے درمیان جدائی ہے اور یہ جدائی لہروں سے بھری ہوئی ہے ، گویا اندھیرے کے کنارے پر لہریں ہیں۔ ، سمندر کا نچلا حصہ ، جو ہم نہیں دیکھتے ہیں ، اور سمندر کے ساحل پر لہریں ہیں ، جو ہم دیکھتے ہیں۔ تو گویا لہروں کے اوپر لہریں ہیں۔ یہ ایک تصدیق شدہ سائنسی حقیقت ہے ، لہذا پروفیسر ڈورجارو (Dorjaro) نے ان قرآنی آیات کے بارے میں کہا ، کہ یہ انسانی علم نہیں ہوسکتا ہے۔

اور ایسی بہت ساری مثالیں موجود ہیں


قرآن میں کچھ آیات ہیں جو رسول الله صلی الله علیہ وسلم کو سرزنش کرتی ہیں اور کچھ ایسی باتوں کا تذکرہ کرتی ہیں جن پر الله تعالی نے ان کی توجہ مبذول کروائی۔ ان میں سے کچھ تو رسول اللہ صلی الله علیہ وآلہ وسلم کے لئے باعث شرمندگی ہونگی ۔ لیکن اگر یہ قرآن رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف سے آتا تو ایسی آیات شامل نہ ہوتی ۔ اگر وہ قران کے کسی حصے کو چھپاتے تو ان میں سے کچھ آیات کو چھپا دیتے جس میں سرزنش ہوئی تھی یا کچھ معاملات کی طرف ان کی توجہ مبذول کرائی گئی تھی جسے انہیں نہیں کرنا چاہئے تھا ، جیسے نیچے آیت جس میں الله تعالی نے اپنے نبی صلی الله علیہ وسلم کو ارشاد فرمایا ہے۔

(Qur'an 33:37) وَإِذْ تَقُولُ لِلَّذِي أَنْعَمَ اللَّهُ عَلَيْهِ وَأَنْعَمْتَ عَلَيْهِ أَمْسِكْ عَلَيْكَ زَوْجَكَ وَاتَّقِ اللَّهَ وَتُخْفِي فِي نَفْسِكَ مَا اللَّهُ مُبْدِيهِ وَتَخْشَى النَّاسَ وَاللَّهُ أَحَقُّ أَن تَخْشَاهُ ۖ فَلَمَّا قَضَىٰ زَيْدٌ مِّنْهَا وَطَرًا زَوَّجْنَاكَهَا لِكَيْ لَا يَكُونَ عَلَى الْمُؤْمِنِينَ حَرَجٌ فِي أَزْوَاجِ أَدْعِيَائِهِمْ إِذَا قَضَوْا مِنْهُنَّ وَطَرًا ۚ وَكَانَ أَمْرُ اللَّهِ مَفْعُولًا
اور جب تو نے اس شخص سے کہا جس پر الله نے احسان کیا اور تو نے احسان کیا اپنی بیوی کو اپنے پاس رکھ الله سے ڈر اور تو اپنے دل میں ایک چیز چھپاتا تھا جسے الله ظاہر کرنے والا تھا اور تو لوگوں سے ڈرتا تھا حالانکہ الله زیادہ حق رکھتا ہے کہ تو اس سے ڈرے پھر جب زید اس سے حاجت پوری کر چکا تو ہم نے تجھ سے اس کا نکاح کر دیا تاکہ مسلمانوں پر ان کے منہ بولے بیٹوں کی بیویوں کے بارے میں کوئی گناہ نہ ہو جب کہ وہ ان سے حاجت پوری کر لیں اور الله کا حکم ہوکر رہنے والا ہے

اس کے بعد ، کیا کسی بھی ذہین شخص کے ذہن میں یہ شک باقی رہ سکتا ہے کہ یہ قرآن الله تعالی کا کلام ہے ، اور رسول الله صلی الله علیہ وسلم نے وہ بات پوری طرح پہنچا دی جو ان پر نازل کی گئی تھی؟

مزید یہ کہ ہم اس شخص کو کہتے ہیں ، اسے خود ہی آزمائیں ، قران کا ایک عمدہ ترجمہ پڑھیں اور ان قواعد و ضوابط پر غور کرنے کے لیۓ اپنے دماغ کا استعمال کریں۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ کوئی بھی ذہین شخص جو فہم و فراست کا حامل ہے ، ان الفاظ (الله تعالی کے ) اور زمین پر کسی بھی شخص کے الفاظ کے درمیان بڑا فرق دیکھ سکے گا۔


ماخوز
 
Advertisement
Last edited:

There is only 1

Chief Minister (5k+ posts)
پہلی بات تو یہ کہ یہ سوال کرنے کا مقصد وسوسے ڈالنا نہیں بلکے لوگوں کے ایمان کو آزمائش کی بھٹی میں ڈال کر مضبوط کرنا تھا . سوال پوچھنے اور جواب دینے سے انسان سیکھتا ہے اور جو سوالات پر ناپسندیدگی کا اظہار کرے تو ضرور اس کے دل میں چور ہے
نوٹ : میں قرآن کی خصوصیت کا منکر ہرگز نہیں ہوں صرف لوگوں سے سوال کر کے جاننا چاہتا ہوں کہ ان کا ایمان کتنا پختہ ہے

 
Last edited:

swing

Chief Minister (5k+ posts)
پہلی بات تو یہ کہ یہ سوال کرنے کا مقصد وسوسے ڈالنا نہیں بلکے لوگوں کے ایمان کو آزمائش کی بھٹی میں ڈال کر مضبوط کرنا تھا . سوال پوچھنے اور جواب دینے سے انسان سیکھتا ہے اور جو سوالات پر ناپسندیدگی کا اظہار کرے تو ضرور اس کے دل میں چور ہے
ایک اور بات قابل غور ہے ، آپ کسی کو یہ بات کسی ایک فقرے سے منوا نہیں سکتے کہ قرآن الله کی کتاب ہے ، اس کے لیے ایک پورا علمی جائزہ چاہیے اور حق ملے گا اسی کو جو اسکا طلبگار ہوگا ، باقیوں کا معاملہ پھر وہ جانیں اور الله جانے ، صرف قرآن کی چند آیات سے شائد ایک کافر کو منوانا مشکل ہو کے یہ واقعی الله کی کتاب ہے ، کیوں کے جس کتاب کی آیات کاحوالہ اسے دیا جائے گا وہ آیات اس کے نزدیک جھوٹی یا حق نہیں نہیں ، اسی لیے صحابہ کے عملوں سے بہت سے لوگ متاثر ہو کر مسلمان ہو جاتے تھے ،جب انہیں آیات عمل کی شکل میں نظر آتی تھی
 

There is only 1

Chief Minister (5k+ posts)
حالانکہ جن کو چیلنج دیا جارہا تھا وہ بنی نوع انسان کے نہایت ہی فصاحت رکھنے والے اور باشعور انسان تھے
ٹھیک ہے وہ لوگ فصاحت اور بلاغت میں بہت آگے ہوں گے لیکن میں نے ان کی نہیں بلکے آج کے لوگوں کی بات کر رہا ہوں . آج کا انسان شاید فصاحت و بلاغت کی الف بے بھی نہیں جانتا ہو گا . کسی مسلمان کو ایک سورت کی آیات آگے پیچھے کر کے سنا دیں وہ ہرگز نہیں پہچان سکے گا کہ واردات کی گئی ہے . یا قرآن میں الرحمن کی بجائے الرحیم لکھ دیں کسی کو ہرگز پتہ نہیں چلے گا
لہٰذا فصاحت و بلاغت کا نقطہ آج کے انسان کے لئے ہرگز لاگو نہیں ہوتا
نوٹ : اس سے یہ مطلب نہ لیجئے گا کہ میں قرآن کے فصاحت و بلاغت کا شہکار ہونے کا انکاری ہوں . میں آج کے انسان کی سمجھ بوجھ کے ناقص ہونے کا ذکر کر رہا ہوں
 
Last edited:

There is only 1

Chief Minister (5k+ posts)
اس میں کوئی تضاد ہے ، وہ اس کی بیمار سوچ اور غلط فہمی کی وجہ سے ہے۔ اگر وہ علماء سے معلوم کریں، تو علماء اس کی وضاحت کریں گے کہ کیا صحیح ہے اور ان کی الجھن کو ختم کردیں گے
اس بارے میں تو میں آپ سے پہلے بھی سوال پوچھ چکا ہوں جن کا جواب آپ سے نہیں بن پایا تھا . آپ اگر بولیں گے تو مزید سوال بھی تیار ہیں
میرے خیال میں آپ بس لوگوں کی دیکھا دیکھی یہ دعوا کر رہے ہیں اور آپ میں یہ ہمت نہیں کہ آپ قرآن کی آیات کی وضاحت کر سکیں جس میں کوئی اختلاف نہ ہو
 

There is only 1

Chief Minister (5k+ posts)
تیسرا نقطہ یہ ہے کہ اللہ تعالی نے اس قران کو محفوظ رکھنے کی ضمانت دی ہے ، اور فرمایا
کسی کافر کے سامنے یہ نقطہ رکھیں کہ قرآن میں الله نے خود کہا ہے کہ اس نے قرآن کو محفوظ رکھنا ہے تو وہ ہنس ہنس کر دوہرا ہو جائے گا کہ یہ کیا بات ہوئی کہ کسی کتاب کے تحریف سے محفوظ ہونے کی یہ دلیل کہ اسی کتاب میں یہ دعویٰ کیا گیا ہے
جس نے تحریف کی ہو گی اسی نے یہ بھی لکھ دیا ہو گا کہ اس میں تحریف ناممکن ہے
نوٹ کریں کہ کافروں کو دی جانے والی دلیل الگ قسم کی ہوتی ہے جس کا وہ انکار نہ کر سکیں
اور آپ کی پیش کر دہ آیت کا مطلب ہرگز وہ نہیں جو آپ لے رہے ہیں
 
Last edited:

There is only 1

Chief Minister (5k+ posts)
وہ اس وقت تک کبھی بھی کامیاب نہیں ہو سکتے جب تک کہ اپنے قوائد قرآن کی تعلیمات کے قریب تر نہ بنائیں ۔ جتنا دور ہونگے ، ان کی ناکامی کی شرح اتنی ہی زیادہ ہو گی ۔ یہ وہ چیز ہے جسے خود کفار تسلیم کرتے ہیں۔
اس بات کو سمجھنا بہت مشکل ہے کہ کامیابی کیا ہے اور کافروں کو سمجھانا تو بہت ہی مشکل ہے
آج کے زمانے میں دیکھیں تو کافر اقوام مسلمانوں سے کہیں کامیاب ہیں اور قرآن میں بھی کہا گیا ہے کہ خبردار کافروں کی مال اور اولاد کی کثرت تمھیں شک میں نہ ڈال دے . لہٰذا ہر بندہ اپنی سوچ میں کامیاب ہے کسی کو آپ کیا سمجھائیں کہ اخروی کامیابی کیا ہے یا دنیا میں تھوڑے میں گزارا کرنا کیسے کامیابی ہے
 
Last edited:

There is only 1

Chief Minister (5k+ posts)
سائنسی علوم کا بیان
یہ دعوا تو وہ کر سکتا ہے جو کچھ سائنسی علوم جانتا ہو اور اس کے علم میں قرآن نے اضافہ بھی کیا ہو
آج کل کے مولوی تو ایسے ہرگز نہیں ہیں
آپ اگر بتانا چاہیں تو بتا دیں کہ آپ کون سا سائنسی علم جانتے ہیں اور قرآن نے آپ کے علم میں کیا اضافہ کیا ہے
 
Last edited:

There is only 1

Chief Minister (5k+ posts)
ایک اور بات قابل غور ہے ، آپ کسی کو یہ بات کسی ایک فقرے سے منوا نہیں سکتے کہ قرآن الله کی کتاب ہے ، اس کے لیے ایک پورا علمی جائزہ چاہیے اور حق ملے گا اسی کو جو اسکا طلبگار ہوگا ، باقیوں کا معاملہ پھر وہ جانیں اور الله جانے ، صرف قرآن کی چند آیات سے شائد ایک کافر کو منوانا مشکل ہو کے یہ واقعی الله کی کتاب ہے ، کیوں کے جس کتاب کی آیات کاحوالہ اسے دیا جائے گا وہ آیات اس کے نزدیک جھوٹی یا حق نہیں نہیں ، اسی لیے صحابہ کے عملوں سے بہت سے لوگ متاثر ہو کر مسلمان ہو جاتے تھے ،جب انہیں آیات عمل کی شکل میں نظر آتی تھی
جی آپ نے درست فرمایا
انسان پہلے جب اسلام قبول کرتا ہے تو اس کا دل ایمان سے خالی ہوتا ہے پھر وہ ساری زندگی قرآن پر غور اور تدبر کرتا رہتا ہے یہاں تک کہ اس کا قرآن پر ایمان پختہ ہو جائے
ہم نے قرآن کے ساتھ ساتھ توحید ، رسالت ، قیامت پر غور کرنا چھوڑ دیا ہے اور اگر کسی کو کہیں بھی تو وہ کہتا ہے کہ تو وسوسہ پیدا کرنا چاہتا ہے
 

Saboo

Prime Minister (20k+ posts)
پہلی بات تو یہ کہ یہ سوال کرنے کا مقصد وسوسے ڈالنا نہیں بلکے لوگوں کے ایمان کو آزمائش کی بھٹی میں ڈال کر مضبوط کرنا تھا . سوال پوچھنے اور جواب دینے سے انسان سیکھتا ہے اور جو سوالات پر ناپسندیدگی کا اظہار کرے تو ضرور اس کے دل میں چور ہے
نوٹ : میں قرآن کی خصوصیت کا منکر ہرگز نہیں ہوں صرف لوگوں سے سوال کر کے جاننا چاہتا ہوں کہ ان کا ایمان کتنا پختہ ہے

لیکن آپ کسی کے ایمان کے بارے میں کیوں جاننا چاہتے ہو کہ
پختہ ہے یا نہیں؟ یہ معاملہ تو انسان اور الله کے مابین ہے؟
آپ اپنے ایمان کی فکر کریں حضرت؟
آپ کب سے مانیٹر لگ گئے؟
 

There is only 1

Chief Minister (5k+ posts)
لیکن آپ کسی کے ایمان کے بارے میں کیوں جاننا چاہتے ہو کہ
پختہ ہے یا نہیں؟ یہ معاملہ تو انسان اور الله کے مابین ہے؟
آپ اپنے ایمان کی فکر کریں حضرت؟
آپ کب سے مانیٹر لگ گئے؟
مجھے تجسس ہے کہ ان لوگوں کے دلوں میں کیا ہے جو یہ اپنے عقیدے پر قائم ہیں
. . . . .
فورم پر اس لئے لکھا کہ اگر کوئی بندہ سیکھنے سکھانے والا مل جائے تو سونے پر سہاگہ ہو جائے


 

Ghulam-e-Qanbar

Councller (250+ posts)
Citizen X

میرا ایک بار پھر آپ سے سوال ہے کہ حضرت محمد ﷺ کے بعد کسی اور نبی کی ضرورت کیوں پیش آئی؟
 

Saboo

Prime Minister (20k+ posts)

مجھے تجسس ہے کہ ان لوگوں کے دلوں میں کیا ہے جو یہ اپنے عقیدے پر قائم ہیں
. . . . .
فورم پر اس لئے لکھا کہ اگر کوئی بندہ سیکھنے سکھانے والا مل جائے تو سونے پر سہاگہ ہو جائے


آپ جتنا تجسس فرما لیں دلوں کا حال تو الله میاں ہی جانتے ہیں
اور کوئی نہیں؟ ویسے بھی دل دریا سمندروں ڈونگھے ؟...کون دلاں
دیاں جانے؟....اب اس میں کیا
 

Citizen X

Prime Minister (20k+ posts)

مجھے تجسس ہے کہ ان لوگوں کے دلوں میں کیا ہے جو یہ اپنے عقیدے پر قائم ہیں
. . . . .
فورم پر اس لئے لکھا کہ اگر کوئی بندہ سیکھنے سکھانے والا مل جائے تو سونے پر سہاگہ ہو جائے


سٹیزن بھائی امید ہے آپ خیریت سے ہوں گے اور دوسرے تھریڈ سے بھاگ نکلنے کی وجہ سے آپکی پھولی ہوئی سانس بھی بحال ہو گئی ہوگی۔ آپ عجیب و غریب قسم کے ٹوٹے چلا کر سمجھتے ہیں کہ آپ نے میرے سوالوں کا جواب دے دیا لیکن میرے سوالات آج بھی آپکی پیٹھ تک رہے ہیں۔

دوسرے تھریڈ پر بھی میں نے آپکے پیغمبر مرزا غلام احمد قادیانی اور ختم نبوت پر آپ مرزائیوں کے عقائد کے بارے میں کچھ سوالات پوچھے تھے آپ جن کا جواب دینے میں یکسر ناکام رہے اور مکار مرزائیوں کی طرح صرف یکطرفہ سوال پوچھنے میں ہی ہشیاری دکھاتے رہے۔

آپکی یاد دہانی اور قارئین کی معلومات کی خاطر اس تھریڈ کا لنک بھی یہاں پیسٹ کر رہا ہوں جس میں پوسٹ نمبر 31 سے لیکر پوسٹ نمبر 69 تک واضح طور پر دیکھا جا سکتا ہے کہ آپ قادیانیت اور اپنے نبی مرزا غلام احمد کا خاطر خواہ دفاع کرنے میں مکمل ناکام ہوئے۔

Citizen X

میرا ایک بار پھر آپ سے سوال ہے کہ حضرت محمد ﷺ کے بعد کسی اور نبی کی ضرورت کیوں پیش آئی؟
I already told you do not get to ask more questions until you start answering some. I told you 3 times I am not a Qaidiani/Mirzai and that is enough for anybody, you and your lot can keep dancing around it in a cheap attempt at character assassination of any one who exposes your bidati and shirkiya cult in a vain attempt to divert attention from your kuffriya aqeedah.

You lot are the one with 12 extra false prophets yet you try to paint anyone exposing you as qaidianis who have only 1 extra false prophet.

1.So do you or do you not believe your imams receive revelations and are infaliable?
2. Do you or do you not believe the Quran we all have today and all Muslims around the world use today is the same Quran which was revealed to Prophet Mohammad s.a.w and does not have distortions in it?
3. Do you or do you not love the Ahl e bayt?

If you can answer these simple questions then conversation can move further. If you are going to carry on with your usual qaidiani/mirzai bullshit then don't bother replying.
 

Haideriam

Senator (1k+ posts)
I already told you do not get to ask more questions until you start answering some. I told you 3 times I am not a Qaidiani/Mirzai and that is enough for anybody, you and your lot can keep dancing around it in a cheap attempt at character assassination of any one who exposes your bidati and shirkiya cult in a vain attempt to divert attention from your kuffriya aqeedah.

You lot are the one with 12 extra false prophets yet you try to paint anyone exposing you as qaidianis who have only 1 extra false prophet.

1.So do you or do you not believe your imams receive revelations and are infaliable?
2. Do you or do you not believe the Quran we all have today and all Muslims around the world use today is the same Quran which was revealed to Prophet Mohammad s.a.w and does not have distortions in it?
3. Do you or do you not love the Ahl e bayt?

If you can answer these simple questions then conversation can move further. If you are going to carry on with your usual qaidiani/mirzai bullshit then don't bother replying.
میرا بھی سوال ہے چونکہ تم لوگ مرزائی تو ثابت ہو چکے ہو الحمدللہ اب یہ بتاؤ کے سنا ہے تم۔ لوگ نماز میں سورتوں کی جگہ روحانی خزائن میں موجود مرزے کی تحریر پڑھتے ہو ایک سابقہ قادیانی بتا رہا تھا کے تم لوگ مرزے کی بیوی کو املمومنین کا خطاب دیتے ہو لگتے ہاتھ اس کا بھی جواب دیتے جاؤ
 

Citizen X

Prime Minister (20k+ posts)
میرا بھی سوال ہے چونکہ تم لوگ مرزائی تو ثابت ہو چکے
Khudi hi jhooti bhotan lagai aur khud hi ek tarfa behas ker ke, apnay aap ko jeeta ke jhoot sabit bhi ker diya! 😂😂😂
Wah wah wah, people should learn how to debate from you

لوگ نماز میں سورتوں کی جگہ روحانی خزائن میں موجود مرزے کی تحریر پڑھتے ہو
Kissi Mirzai se poocho us ko pata ho ga. Main to mirzai houn nahi is liye mujhe nahi pata hai yeh zuroor pata hai ke Kaffir apni namaz ke waqt Ya Ali, Ya Hussain per sajda ker ke un ki pooja kerte hai





Aur Tashadud mein bhi apni tafah se izafa kiya huwa hai




Din mein 5 waqt ki bijaye 3 waqt namaz parthe hain. Aur bhi kafi deegar khurafat hai. Yani ke Musalmano ki namaz se koi lena dena hai.
 

Citizen X

Prime Minister (20k+ posts)
پھر وھی چول لگتا ہے تیرے اندر مردنیت ہے ہی نہیں جب تم سے سوال کریں تو جواب کیبجاے کٹ پیس لگا دیتے ہو
مٹی پر سجدہ رسول خدا خود کرتے تھے آور تین وقت نماز پنجگانہ ادا کرتے تھے صحیح بخاری دیکھ جا کر لگتا ہے تو پیٹ بھر کر جاہل ہے
Us waqt pakay farsh kahi the hi nahi to mitti per hi namaz pardni thi na, aur kya mitti pe Ya Ali Ya Hussain likha huwa hota tha jaha sajda kerte the, apni shirkia Majoosiat Nabi s.a.w Pak se musbit nahi karo. Aur yeh nhi chul sune to mili hai 5 waqt ki 3 waqt mein. Namaz jord sakthe hai lekin yeh nahi ke permanent hi 3 waqt mein 5 namazain.


مرزائی جتنا مرضی جھوٹ بول لو حق چھپ نہیں سکتا لائیو نماز نجف کربلا سے آتی ہے یا کسی بھی مسجد میں جا کر اوہ تم۔ رو نجس ہو تم کو۔ اجازت نہیں مسجد جانے کی تم کسی بھی ویڈیو جو کے نجف کربلا میں ہوتی ہو میں تشہد میں یہ الفاظ دکھا دو پھر بات کرتا ہوں تب تک یہ اپنا کلمہ پڑھو آور سب کو سناؤ اشرفی علی کا کلمہ استغفراللہ
Maine to thumharay imam se raiwayat ka hawala diya hai, yah to woh hadith batil hai yah phir tum jhoot bol rahe ho. Tum hi jhoot bol rahe ho gay kyun ke aab tak tumhara asa koi post nahi hai jis mein tum ne jhoot nahi bola. Jhoot bolna bhi tum logo ka aqeedah hai,

Aur mujhe kya deobandi aur brelivyon ke video dikha rahe ho main to khud in per lanat bheej tha hoo. Deobandi ya Brelvi ya phir aur koi firqay ka shirk dikha ne se tum logon ki majoosiyat chup nahi jaye gi.

Woh din bhi door nahi jub musalmano ko tum logon ki aasli aqeeday pata chal jaye gay aur miraziyon ki tarah tamam ummat-e-muslima tum logon ko bhi kafir declare ker dey gi. Kyun ke aam muslamano abhi tak ahle bidah per ghor se nazar nahi daali, is liye bachay huway ho.
 

Haideriam

Senator (1k+ posts)
Us waqt pakay farsh kahi the hi nahi to mitti per hi namaz pardni thi na, aur kya mitti pe Ya Ali Ya Hussain likha huwa hota tha jaha sajda kerte the, apni shirkia Majoosiat Nabi s.a.w Pak se musbit nahi karo. Aur yeh nhi chul sune to mili hai 5 waqt ki 3 waqt mein. Namaz jord sakthe hai lekin yeh nahi ke permanent hi 3 waqt mein 5 namazain.



Maine to thumharay imam se raiwayat ka hawala diya hai, yah to woh hadith batil hai yah phir tum jhoot bol rahe ho. Tum hi jhoot bol rahe ho gay kyun ke aab tak tumhara asa koi post nahi hai jis mein tum ne jhoot nahi bola. Jhoot bolna bhi tum logo ka aqeedah hai,

Aur mujhe kya deobandi aur brelivyon ke video dikha rahe ho main to khud in per lanat bheej tha hoo. Deobandi ya Brelvi ya phir aur koi firqay ka shirk dikha ne se tum logon ki majoosiyat chup nahi jaye gi.

Woh din bhi door nahi jub musalmano ko tum logon ki aasli aqeeday pata chal jaye gay aur miraziyon ki tarah tamam ummat-e-muslima tum logon ko bhi kafir declare ker dey gi. Kyun ke aam muslamano abhi tak ahle bidah per ghor se nazar nahi daali, is liye bachay huway ho.
😂😁😀😄😃
تو دیو بندی بھی نہیں وہابی بھی نہیں بریلوی بھی نہیں آور ان پر لعنت بھی بھیج رہا ہے اس کا نتلب تو پکا مرزائی ہے اللہ‎ کا شکر ہے تم نے خود مان لیا
اب تجھ سے مذہبی بحث اصولا تو دیو بندی وہابی بریلویوں کو کرنی چاہیے ہے
 

Pakistani1947

Minister (2k+ posts)
پہلی بات تو یہ کہ یہ سوال کرنے کا مقصد وسوسے ڈالنا نہیں بلکے لوگوں کے ایمان کو آزمائش کی بھٹی میں ڈال کر مضبوط کرنا تھا . سوال پوچھنے اور جواب دینے سے انسان سیکھتا ہے اور جو سوالات پر ناپسندیدگی کا اظہار کرے تو ضرور اس کے دل میں چور ہے
نوٹ : میں قرآن کی خصوصیت کا منکر ہرگز نہیں ہوں صرف لوگوں سے سوال کر کے جاننا چاہتا ہوں کہ ان کا ایمان کتنا پختہ ہے

نیچے دئیے گئے شیعہ کتب کے حوالاجات سے ثابت ہوتا ہے کہ شیعہ حضرات قرآن میں تحریف کے قائل ہیں اور اوپری طور پر تقیّہ کرتے ہوے اسے ایک الزام کہتے ہیں - اصل بات یہ شیعہ کا امامت کا باطل عقیدہ کسی طور پر قرآن سے ثابت نہیں ہوتا - کبھی وہ (سورة البقرة, Verse #124) میں لفظ "إِمَامًا" یا کبھی (سورة يس, Verse #12) میں لفظ "إِمَامٍ" دکھا کر اپنے باطل عقیدہ امامت ثابت کرنے کی ناکام کوشش کرتے ہیں- باوجود اس کہ قرآن میں امامت کی کوئی دلیل نہیں شیعہ اپنے دل کو مطمعین کرنے کے لئے دل ہی دل میں تحریف قرآن کے عقیدہ کو صحیح سمجھتے ہیں جو کہ شیعہ کتابوں ایک واضح عقیدہ کے طور پر سامنے آتا ہے​

1. Very high ranking shia Rabbi Kamal al-Hyari exposes the believes of Shi'tism and regards as "Belief in Tahrif al-Quran is from Pillars of Shia Faith"


2. Mulla Mohammad Tagi Kashani in "Hidayatool talibeen" p 368, Tehran 1282 h:
عثمان نے اپنے دوست اور دشمن علی ، زید ابن ثابت کو حکم دیا کہ وہ قرآن اکٹھا کریں ، اور اس سے اہلیت کی خوبیاں اور ان کے دشمنوں کی برائی حذف کریں (نکال دیں )۔ اب ، وہی قرآن ، جو لوگوں کے ہاتھوں میں عثمان کے حکم سے جمع ہوا ، اور عثمانی قرآن کے طور پر جانا جاتا ہے۔

3. Ali Asgar Burjardee in "Akaidu shia" p 27, printed in Iran, said:
"یہ ماننا واجب ہے کہ "اصلی" قرآن میں کوئی تبدیلی اور تحریف نہیں ہے۔ اس قرآن مجید میں تحریف اور تضاد ہے جسے منافقین نے مرتب کیا تھا۔ اور حقیقت ، صحیح قرآن مجید صدی کے امام کے پاس ہے ..."
نوٹ:آپ کسی شیعہ سے بات کر لیں وہ اس باطل عقیدہ کا پہلا حصہ کہ "یہ ماننا واجب ہے کہ "اصلی" قرآن میں کوئی تبدیلی اور تحریف نہیں ہے" - شیعہ جب بھی قرآن کی بات کرتا ہے وہ دراصل اپنے عقیدہ کے مطابق قرآن کے ساتھ تقیّہ کے طور پر لفظ "اصلی" کا اضافہ کرتے ہیں تاکہ ان کا باطل عقیدہ امّت پر واضح نہ ہو جاۓ

4. Mugaddas Ardabili in "Hadigat ash shia" p 118-119, in Farsi, printed in Iran, said:
عثمان نے عبد اللہ ابن مسعود کو اپنا مصحف ترک کرنے کا حکم دیا ، اور اس مصحف کو پڑھنے کا حکم دیا جو زید ابن ثابت نے ان کے حکم سے لکھا تھا اور مرتب کیا تھا۔ (اس کے بعد) انہوں نے اسے مار ڈالا۔ کچھ لوگوں نے کہنا ہے ، کہ عثمان نے اپنے دو مصنفین مروان بن حکام اور زیاد ابن سمارا کو حکم دیا کہ ان کو عبد اللہ (ابن مسعود) کے مصحف سے جو مناسب لگے نقل کریں اور جو مناسب نہیں ہے اسے مٹا دیں اور اس کے بعد جو کچھ باقی بچے اسے تلف کردیں
5. Haji Kareem Khan Kirmanee in "Irshad ul uloom" vol 3, p 121, in Farsi, printed in Teheran, said:
"امام مہدی ظہور کے بعد وہ قرآن کو پڑھیں گے ، اور کہیں گے:" اے مسلمانوں ، میں اللہ کی قسم کھاتا ہوں ، یہ ایک حقیقی قرآن ہے ، جو محمد پر نازل ہوا تھا ، (جوکہ بعد میں ) تحریف کر کے بدل دیا گیا تھا "۔
6. Sharafuldeen Husayni in "Taweel ul ayaat" vol 1, p 319 reported:
سند عبد اللہ ابن سنن کی ، ابو عبد اللہ کی طرف سے ، جس نے کہا: "اور یقینا ہم نے آدم ، محمد ، علی ، فاطمہ ، اور حسن اور حسین اور اماموں کے بارے میں ان کے اولاد میں سے ایک حکم دیا تھا ، اور وہ بھول گئے اور اس میں کوئی پختگی نہیں پای "۔ میں اللہ کی قسم کھاتا ہوں ، یہ محمد ﷺ پر اسی طرح نازل ہوا تھا

نوٹ : جس آیات کا اوپر ذکر ہے وہ قرآن کی سورة طه کی آیت (115) ہے

(Qur'an 20:115) وَلَقَدْ عَهِدْنَا إِلَىٰ آدَمَ مِن قَبْلُ فَنَسِيَ وَلَمْ نَجِدْ لَهُ عَزْمًا
اور ہم نے اس سے پہلے آدم سے بھی عہد لیا تھا پھر وہ بھول گیا اور ہم نے اس میں پختگی نہ پائی

7. Kulayni in "Kafi", kitab al Hujja, vol 1, p 424:
عن الحسين بن مياح عمن أخبره قال قرأ رجل عند أبي عبد الله عليه السلام: "وقل اعملوا فسيرى الله عملكم ورسوله والمؤمنون"، فقال: ليس هكذا إنما هي والمأمونون. "فنحن المأمونون.

Translation:
"ایک شخص نے ابو عبد اللہ کی موجودگی میں آیت پڑھی: وَقُلِ اعْمَلُوا فَسَيَرَى اللَّهُ عَمَلَكُمْ وَرَسُولُهُ وَالْمُؤْمِنُونَ ۖ وَسَتُرَدُّونَ إِلَىٰ عَالِمِ الْغَيْبِ وَالشَّهَادَةِ فَيُنَبِّئُكُم بِمَا كُنتُمْ تَعْمَلُونَ"اور کہہ دےکہ کام کیے جاؤ پھر عنقریب الله اور اس کا رسول اور مسلمان تمہارے کام کو دیکھ لیں گے اور عنقریب تم غائب اور حاضر کے جاننے والے کی طرف لوٹائے جاؤ گےپھر وہ تمہیں بتا دے گا جو کچھ تم کرتے تھے" (امام نے) کہا یہ ایسا نہیں ہے ، لیکن "المأمونون" ہے۔ "ہم "المأمونون" ہیں ۔
(Qur'an 9:105)

Also see: Majlesi "Bihar al anwar" 23/352 and Fayz Kashani "Safi" 2/273
PS. Believers in arabic will sound like this "al-mumineen". Entrusted- "al-muminoon".

8. Fayz Kashani reported other version of this verse, with reference to Kulayni and Ayashi:
"It was reported from Bagr (a.s) in Kafi and by Ayashi: "اے لوگو! تمہارے پاس تمہارے رب کی طرف سے ولایت علی کے بارے میں ٹھیک بات لے کر رسول آ چکا سو مان لو تاکہ تمہارا بھلا ہو اور اگر ولایت علی سے انکار کرو گے......". See "Safi" vol 1, p 523

Note: Allah said: [Qur'an 4:170]
اے لوگو! تمہارے پاس تمہارے رب کی طرف سے ٹھیک بات لے کر رسول آ چکا سو مان لو تاکہ تمہارا بھلا ہو اور اگر انکار کرو گے تو الله ہی کا ہے جو کچھ آسمانوں اور زمین میں ہے اور الله سب کچھ جاننے والا حکمت والا ہے

9. Fayz Kashani reported in "Safi" 1/468:
"And from Bagir (a.s): , it was revealed like this" "اگر یہ لوگ کریں جو ان کو "علی کے بارے میں " نصیحت کی جاتی ہے تو یہ ان کے لیے زیادہ بہتر ہوتا.​

Note: Allah said: [Qur'an 4:66]

اور اگر ہم ان پر حکم کرتے کہ اپنی جانوں کو ہلاک کر دو یا اپنے گھروں سے نکل جاؤ تو ان میں سے بہت ہی کم آدمی اس پر عمل کرتے اور اگر یہ لوگ کریں جو ان کو نصیحت کی جاتی ہے تو یہ ان کے لیے زیادہ بہتر ہوتا اور دین میں زیادہ ثابت رکھنے والا ہوتا​

10. In Tafseer Foorat al-Koofi we read:
"From Mohammad ibn Qassem [ibn Ubayd. Said: "It was narrated to me by Hasan ibn Jafar, from Abu Moosa Mashrooganee, from Abdullah ibn Ubayd, from Ali ibn Saed] from Abu Hamtha ath-Thoomalee [from Jafar as-Sadeeg (a.s)] which said:
"اور جب ان سے کہا جائے کہ تمہارے رب نے کیا نازل کیا ہے،علی کے بارے میں، کہتے ہیں پہلے لوگوں کے قصے ہیں

Note: Allah said in the Qur'an: [16:24]
اور جب ان سے کہا جائے کہ تمہارے رب نے کیا نازل کیا ہے کہتے ہیں پہلے لوگوں کے قصے ہیں
ایک اور بات قابل غور ہے ، آپ کسی کو یہ بات کسی ایک فقرے سے منوا نہیں سکتے کہ قرآن الله کی کتاب ہے ، اس کے لیے ایک پورا علمی جائزہ چاہیے اور حق ملے گا اسی کو جو اسکا طلبگار ہوگا ، باقیوں کا معاملہ پھر وہ جانیں اور الله جانے ، صرف قرآن کی چند آیات سے شائد ایک کافر کو منوانا مشکل ہو کے یہ واقعی الله کی کتاب ہے ، کیوں کے جس کتاب کی آیات کاحوالہ اسے دیا جائے گا وہ آیات اس کے نزدیک جھوٹی یا حق نہیں نہیں ، اسی لیے صحابہ کے عملوں سے بہت سے لوگ متاثر ہو کر مسلمان ہو جاتے تھے ،جب انہیں آیات عمل کی شکل میں نظر آتی تھی
لیکن آپ کسی کے ایمان کے بارے میں کیوں جاننا چاہتے ہو کہ
پختہ ہے یا نہیں؟ یہ معاملہ تو انسان اور الله کے مابین ہے؟
آپ اپنے ایمان کی فکر کریں حضرت؟
آپ کب سے مانیٹر لگ گئے؟
 
Last edited:

Haideriam

Senator (1k+ posts)
Us waqt pakay farsh kahi the hi nahi to mitti per hi namaz pardni thi na, aur kya mitti pe Ya Ali Ya Hussain likha huwa hota tha jaha sajda kerte the, apni shirkia Majoosiat Nabi s.a.w Pak se musbit nahi karo. Aur yeh nhi chul sune to mili hai 5 waqt ki 3 waqt mein. Namaz jord sakthe hai lekin yeh nahi ke permanent hi 3 waqt mein 5 namazain.



Maine to thumharay imam se raiwayat ka hawala diya hai, yah to woh hadith batil hai yah phir tum jhoot bol rahe ho. Tum hi jhoot bol rahe ho gay kyun ke aab tak tumhara asa koi post nahi hai jis mein tum ne jhoot nahi bola. Jhoot bolna bhi tum logo ka aqeedah hai,

Aur mujhe kya deobandi aur brelivyon ke video dikha rahe ho main to khud in per lanat bheej tha hoo. Deobandi ya Brelvi ya phir aur koi firqay ka shirk dikha ne se tum logon ki majoosiyat chup nahi jaye gi.

Woh din bhi door nahi jub musalmano ko tum logon ki aasli aqeeday pata chal jaye gay aur miraziyon ki tarah tamam ummat-e-muslima tum logon ko bhi kafir declare ker dey gi. Kyun ke aam muslamano abhi tak ahle bidah per ghor se nazar nahi daali, is liye bachay huway ho.
او مرزائی اسلام آور ہے آور مرزائت آور ہے رسول خدا آور صحابہ اکرام کپڑے پر سجدہ نہیں۔ کرتے تھے یعنی کو قالین بھی اس میں شامل ہے کیوں کے جب کپڑے پر جائز نہیں تو قالین پر کیسے جائز ہوتا ہے خود ابو بکر بھی مٹی پر سجدہ کرتے تھے تیرے مرزا کی طرح نہیں۔ تھے صحابہ آور اہلبیت
تم۔ لوگ تو صحابہ مرزا کے ساتھیوں کو مانتے ہو آور اہلبیت مرزے کی اولاد کو لکھ لعنت ہوے مرزائیو
 
Sponsored Link

Featured Discussion Latest Blogs اردوخبریں