بھارت نے عالمی پابندیوں کی پرواہ نہ کی، روس سے کھاد کی ریکارڈ درآمد

modi11h1h111.jpg


بھارت نے تمام عالمی پابندیاں ہوا میں اڑا کر روس سے تجارت جاری رکھی اور اب بھارت روس سے کھاد درآمد کرنے والا سب سے بڑا ملک بن گیا ہے۔

روسی میڈیا کے مطابق روس یوکرین تنازع کے باعث عائد کی جانے والی مغربی پابندیوں کے سبب ملنے والی رعایت کا بھارت نے بھرپور فائدہ اٹھایا اور اب بھارت روس سے فاسفیٹ کھاد درآمد کرنے والا سب سے بڑا ملک بن گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ تین ماہ کے دوران بھارت نے روس سے 35 لاکھ ٹن ڈائمونیم فاسفیٹ، یا ڈی اے پی کھاد درآمد کی ہے، یہ وہ کھاد ہے جو زرعی فصلوں کو ان کی نشوونما کے پورے عرصے کے لیے فاسفورس کی غذائیت فراہم کرتی ہے۔

روسی کھاد بنانے والی کمپنی "فاس ایگرو" نے ہندوستانی کمپنیوں کو اپنی مصنوعات پر بھاری رعایت کی پیشکش کے ساتھ ادائیگیوں کی منتقلی کے لیے بینک کمیشن کو بھی مدنظر رکھا ہے جس کے نتیجے بھارت ن نے بھاری مقدار میں روس سے کھاد درآمد شروع کردی ہے۔

اس ڈیل میں بھارت کے لیے روسی کھاد کی قیمت 920 سے 925 امریکی ڈالر فی ٹن مقرر کی گئی تھی، جو کہ چین، سعودی عرب، مراکش اور اردن سمیت دیگر بین الاقوامی سپلائرز کی پیش کردہ قیمتوں سے کم ہے۔ روس یوکرین تنازع شروع ہونے کے بعد مغربی اور یورپی ممالک کی جانب سے روس پر لگائی جانے والی اقتصادی پابندیوں کو بھارت نے نظرانداز کرتے اور امریکا کی تنبیہہ کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے اس موقع سے بھرپور فائدہ اٹھایا۔

بھارت نے روس سے پٹرول، خوردنی تیل، کوئلہ درآمد کیا ہے جس سے اس کی عوام کو قیمتوں کے معاملے میں بڑا ریلیف ملا ہے۔ روس پر امریکا کی جانب سے سخت عالمی پابندیوں کے باوجود بھارت روس کے ساتھ تجارتی روابط جاری رکھنے پر امریکا بھارت کو واضح دھمکی بھی دے چکا ہے۔
 
Advertisement

Yetti

MPA (400+ posts)
This is called independent foreign policy. Pakistan bhi ab Azaad honay k qareeb hai.
 

atensari

President (40k+ posts)
پاکستان نے امریکا کی تابعداری میں ہمیشہ نقصان اٹھایا. کام نکلنے کے بعد امریکا پاکستان کو فراموش کرکے بھارت کی طرف متوجہ ہو جاتا ہے
 
Sponsored Link