خبریں

بیلاروس نے روس میں ضم ہوکر یونین اسٹیٹ بنانے کا فیصلہ کرلیا ہے،اس حوالے ترجمان کریملن نے بیان جاری کردیا، ترجمان دمتری پیسکوف نے بیلا روس کے روس میں انضمام سے متعلق میڈیا کو بھی بریفنگ دی اور بتایا کہ دونوں ممالک کا انضمام مشترکہ مفادات کی بنیاد پر ہوگا۔ اس سے قبل روسی صدر ولادیمیر پیوٹن اور بیلاروس کے صدر الیگزینڈر لوکاشینکو نے واضح کیا تھا کہ دونوں ممالک کے انضمام کے لئے ایک انتہائی عملی اور حقیقت پسندانہ نقطہ نظر کی ضرورت ہے،یونین کے اہداف مقرر کردیئے گئے ہیں جو عملی طور پر دستخط کےلیے تیار ہیں اور اس سلسلے میں تمام 28 یونین پروگرامز کو مربوط کیا جائے گا،دونوں سربراہان نے کہا کہ مشترکہ میکرو اکنامک پالیسی،ادائیگی کے نظام کا انضمام ، معلومات کی حفاظت کے حوالے سے تعاون ، کسٹم ، ٹیکس ، توانائی اور دیگر شعبوں میں تعاون پر اتفاق کیا گیا ہے۔ روس نے انضمام کی جانب بڑھنے کے ساتھ ہی بیلاروس کے ساتھ بڑی فوجی مشقیں شروع کردیں،دونوں ممالک کے علاقے اور بحیرہ بالٹک میں جاری مشقیں نیٹو ممالک کیلئے خطرہ بڑھارہی ہیں،مشقوں میں200،000 فوجی اور معاون عملہ شامل ہے،مشقوں کا مقصد روس کے مغربی حصے پر فوجی آپریشن کرنے کی صلاحیت ، روسی اور بیلاروسی مسلح افواج کے باہمی تعاون کو بھی جانچنا ہے۔ یہ مشقیں پولینڈ اور بالٹک کے ساتھ بیلاروس کی سرحدوں پر پہلے سے کشیدہ صورت حال میں ہورہی ہیں،پولینڈ کی حکومت نے گذشتہ ہفتے بیلاروس کے ساتھ اپنی سرحد کے ساتھ واقع علاقے میں 30 دن کی ایمرجنسی نافذ کی تھی ،انہوں نے واضح طور پر زاپاد مشق کو اس کے اقدام کی ایک وجہ قرار دیا تھا۔ پولینڈ کے وزیراعظم ماتیوز موراوکی نے 6 ستمبر کو ایک پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ اتنی بڑی تعداد میں فوجیوں کی مشق اشتعال انگیزیوں کا باعث بن سکتی ہے،پولش انسٹی ٹیوٹ آف انٹرنیشنل افیئرز کے روسی فیڈریشن اور بیلاروس کے ماہر سکیورٹی ماہر اینا ماریا ڈائنر نے وضاحت کی کہ زپاد 2021 کی مشق واقعی اہم ہے۔
ورلڈ گولڈ کونسل نے مختلف ممالک کے پاس موجود سونے کے ذخائر کے حوالے سے رپورٹ جاری کردی،رپورٹ کے مطابق پاکستان میں سونے کے ذخائر 2020 کی چوتھی سہ ماہی میں 64.64 ٹن تھے، جو رواں سال کی پہلی سہ ماہی میں بڑھ کر 64.65 ٹن ہوگئے ہیں، دوسری جانب اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی رپورٹ کے مطابق پاکستان کے پاس تقریباً 3.8 ارب ڈالر مالیت کے برابر سونا ذخائر میں موجود ہے اور یہ تقریباً ملک کے مجموعی ذخائر کا 16.6 فیصد بنتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق دنیا کے دیگر ممالک ایسے بھی ہیں جن کے پاس سونے کے ذخائر پاکستان کی نسبت زیادہ موجود ہیں، امریکا ان ممالک میں سرفہرست ہے،امریکا کے پاس سب سے زیادہ سونے کئ ذخائر ہیں جس کی تعداد 8 ہزار ٹن سے زیادہ ہے،یہ تعداد یورپ کے تین بڑے ممالک کے ذخائر کو ملا کر بھی سب سے زیادہ ہے۔ دوسری پوزیشن پر جرمنی ہے،جرمنی کے پاس سونے کے ذخائر کی تعداد 3 ہزار 361 ہے،ایشیا میں سب سے زیادہ سونے کے ذخائر چین کے پاس ہیں، ذخائر کی تعداد 1948 ٹن ہے،بھارت کے پاس سونے کے ذخائر کی تعداد 695 ٹن ہے،پاکستان کے پاس بھارت سے کم ذخائر ہیں،دنیا کے مختلف ملکوں کے سینٹرل بینک کے ریزروز کئی اقسام کے ہوتے ہیں جن میں سونے کے علاوہ دیگر غیر ملکی کرنسیاں وغیرہ بھی شامل ہوتی ہیں۔
افغانستان میں طالبان کے کنٹرول کو مزاحمتی شمالی اتحاد مکمل طور پر مسترد کرچکی ہے، اور اب سابق افغان نائب صدر امراللہ صالح کے بھائی کی ہلاکت کی خبریں گردش کررہی ہیں۔ خبر رساں ادارے روئٹرز نے دعویٰ کیا ہے کہ طالبان نے سابق افغان نائب صدر امراللہ صالح کے بڑے بھائی روح اللہ عزیزی کو مار دیا ہے،امراللہ پنجشیر میں طالبان مخالف مزاحمتی اتحاد کے رہنماؤں میں سے ایک ہیں۔ روح اللہ عزیزی کے بھانجے نے نے ہلاکت کی تصدیق کردی ہے،انہوں نے بتایا کہ گذشتہ روز طالبان نے انہیں قتل کیا،جبکہ طالبان کی جانب سے تدفین کی اجازت بھی نہیں دی جارہی ہے۔ بھانجے نے الزام عائد کیا کہ طالبان کہہ رہے ہیں روح اللہ عزیزی کی لاش دفنانے کے بجائے گلنے سڑنے دیا جائے۔ طالبان کے الامارہ نامی ٹوئٹر اکاؤنٹ پر بتایا گیا کہ امراللہ صالح کا بڑا بھائی روح اللہ پنجشیر میں لڑائی کے دوران مارا گیا،طالبان کے خلاف وادی پینجشیر میں مزاحمت کرنے والے امراللہ صالح اس وقت کہاں ہیں کوئی اطلاعات نہیں ہیں اور امراللہ صالح تنقید کی زد میں ہیں کہ اس نے اپنے بھائی کو مرنے کیلئے چھوڑدیا۔ ایک ویڈیو پیغام میں انہوں نے پنج شیر سے بھاگنے کی تردید کردی تھی،طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے دعویٰ کیا تھا کہ امراللہ صالح تاجکستان جاچکے ہیں۔ دوسری جانب پنجشیرکےقومی مزاحمتی محاذ کےرہنما علی میصم نظاری نے دعویٰ کیا ہے کہ طالبان پنجشیرکےعوام پرظلم کر رہے اورانھیں بھاگنے پرمجبورکر رہے ہیں۔ انہوں نے سوشل میڈیا پرٹویٹ میں علاقہ مکینوں کی نقل مکانی کی ویڈیو شئیر کی اورلکھا کہ پنجشیرسے ہزاروں افراد کوان کے گھروں سےنکال دیا گیا ہے، گاڑیوں کے ان قافلوں میں وہ لوگ ہیں جو طالبان کے کہنے پرزبردستی صوبہ چھوڑ رہے ہیں،طالبان نسلی قتلِ عام کر رہے ہیں اور دنیا بے حسی سے دیکھ رہی ہے،انہوں نے عالمی برادری سے ان جنگی جرائم کو روکنے کا مطالبہ بھی کردیا۔ اقوام متحدہ نے افغانستان میں پرامن احتجاج کرنےوالوں پرطالبان کی جانب سے سخت کارروائی کرنےکی مذمت کردی،اقوام متحدہ نےاپنی رپورٹ میں کہا کہ طالبان نے اپنے بنیادی حقوق کےلیےاحتجاج کرنے والے مظاہرین کو گرفتارکیا اور انھیں مارا پیٹا گیا،ایسے واقعات کسی کے مفاد میں نہیں، نہ ہی استحکام کا باعث ہیں، ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ مظاہرین اوراحتجاجی مظاہروں کی کوریج کرنے والے صحافیوں کے خلاف طاقت کا استعمال اور دیگر نامناسب اقدامات روکے جائیں۔
امریکہ میں کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد اور ویکسین لگوانے کیلئے مزید سختیاں عائد کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے جس کے بعد ماسک نہ پہننے والوں پر بھاری جرمانہ عائد کیا جائے گا۔ خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق امریکی صدر جو بائیڈن نے کورونا وائرس کی تازہ ترین لہر اور ڈیلٹا وائرس کے ممکنہ پھیلاؤ سے نمٹنے کیلئے اہم فیصلوں کا اعلان کردیا ہےجن کے مطابق سرکاری و نجی اداروں کے ملازمین اور کاروباری حضرات کو کورونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین لگوانا لازمی قرار دیا گیا ہے۔ امریکی صدر کے فیصلوں کے مطابق ہیلتھ ورکرز، فیڈرل کنٹریکٹرز کیلئے بھی ویکسین لازمی قرار دی ہے جبکہ ملک بھر میں ماسک نہ پہننے والے افراد پر 3 ہزار ڈالر جرمانہ عائد کرنے کی ہدایات بھی جاری کردی گئی ہیں۔ امریکی صدر کی جانب سے جاری کردہ احکامات میں ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ ماسک نہ پہننے والوں کو پہلی بار 500 سے 1 ہزار ڈالر جبکہ دوسری بار 1ہزار سے 3 ہزار ڈالر تک جرمانہ عائد کیا جائے۔ جو بائیڈن کا اس حوالے سے اپنے بیان میں کہنا تھا کہ ہمارا صبر اب جواب دے گیا ہے، آپ کے ویکسین سے انکار کی قیمت ہم سب نے مل کر چکائی ہے، ویکسین نہ لگوانے والے افراد کی چھوٹی سی تعداد بھی ہمیں ناقابل برداشت نقصان پہنچا سکتی ہے اور پہنچا رہی ہے، ان لوگوں کی وجہ سے باقی لوگوں کی زندگیاں خطرے میں ہیں۔ جو بائیڈن نے وارننگ دیتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت کے ساتھ کام کرنے والے یا کاروبار کرنے والے حضرات کیلئے لازم ہے کہ وہ ویکسین لگوائیں۔
جمشید چیمہ کے بچوں کو زہر دینے کا معاملہ نیا رخ اختیار کرگیا،سابق مکان مالک کی بیٹی کے ملوث ہونے کا انکشاف وزیراعظم کے مشیر جمشید چیمہ کے بچوں کو مبینہ طورپر زہر دینے کے معاملے نے ایک اور اہم موڑ لے لیا، بچوں کی والدہ نے سابق مکان مالک کے ملوث ہونے کا انکشاف کیا ہے۔ اس حوالے سے مسرت جمشید چیمہ نے ٹوئٹ میں تفصیل بتائی ہے، انہوں نے سابق مالک مکان ذمہ دار ٹھہرایاہے۔ مسرت جمشید چیمہ نے بتایا کہ سابق مالک کی بیٹی ہم سے مکان واپس لینا چاہتی تھی، جس کے لئے اس نے ہمارے ملازمین کو بھی اپنے منصوبہ کا حصہ بنایا،وہ ہمارے ملازمین سے رابطے میں رہی اور انہیں اپنا کام کروانے کیلئے رشوت بھی دیتی رہی۔ مسرت جمشید چیمہ نے بتایا کہ سابق مالک مکان کی بیٹی نے ملازمین کو منصوبے میں شامل کیا اور ملازمین سے مل کر بچوں کو زہر دینے کی کوشش کی،خانساماں کے پاس سے بھی پولیس نے کیمیکلز برآمد کئے ہیں،خانساماں نے ان کیمکلز کو کھانے میں ملانے کا اعتراف بھی کرلیا ہے،فرانزک رپورٹ کا انتظار ہے۔ پولیس کے مطابق معالے کی تفتیش جاری ہے، کچھ بھی کہنا قبل ازوقت ہوگا، اکتیس اگست کو وزیراعظم کے مشیر جمشید چیمہ کی اہلیہ کی مدعیت میں بچوں کو زہر دینے کے معاملے کا تھانہ مصطفیٰ ٹاون میں مقدمہ درج کیا گیا تھا، جس میں مؤقف اختیار کیا گیا تھا کہ 9 سالہ آحل اور 8 سالہ آرش کو زہر دیا گیا ہے ۔ پولیس نے ان کے باورچی ،ڈرائیورز اور سیکیورٹی گارڈز سمیت چھ ملازمین کو گرفتار کرکے تفتیش شروع کردی تھی۔
ملک بھر فضائی آلودگی میں جہاں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے، وہیں اس سے اموات کی شرح بھی بڑھ رہی ہے، اس حوالے سے ایئر کوالٹی لائف انڈیکس نے رواں سال کی رپورٹ جاری کردی، رپورٹ میں بتایا گیا کہ فضائی آلودگی نے ایک اوسط پاکستانیوں کی متوقع عمر 3.9 سال کم کر دی ہے ، فضائی آلودگی سے ملک کے سب سے آلودہ شہروں میں متوقع عمرتقریباً سات سال کم ہوگئی ہے۔ ایئر کوالٹی لائف انڈیکس کی سالانہ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ ڈبلیو ایچ او کی ہدایات کے مطابق اگر فضائی آلودگی پر کنٹرول کیا گیا توایک اوسط پاکستانی رہائشی 4.2 سال زائد جی سکتے ہیں، ملک کے دو بڑے شہر کراچی اور لاہور میں بالترتیب زندگیاں 5.2 اور 5 سال طویل ہوسکتی ہیں۔ رپورٹ میں پاکستان میں فضائی آلودگی میں اضافے کی وجوہات بھی بتائی گئی ہیں، رپورٹ میں بتایا گیا کہ دوہزار کی دہائی کے آغاز میں پاکستان کی سڑکوں پر گاڑیوں کی تعداد میں چار گنا اضافہ ہوا، جبکہ حیاتیاتی ایندھن سے بجلی کی پیداوار 1998 سے 2017 تک تین گنا بڑھ گئی ہے، پاکستان میں سالوں سے فصلوں کو جلانے ، اینٹوں کے بھٹوں اور دیگر صنعتی سرگرمیوں نے بھی ایئرکوالٹی کو گرایا۔ رپورٹ میں واضح کیا گیا کہ موجودہ حکومت نے عالمی ادارہ صحت کی ہدایات پر فضائی آلودگی کم کرنے کیلئے کئی اقدامات کئے گئے ہیں، پی ٹی آئی حکومت نے موسم سرما میں آلودگی کو مانیٹر کیا، انتہائی آلودہ اضلاع میں فیکٹریاں بند کیں اور دیگر اقدامات اٹھائے۔ رپورٹ میں ایک بار پھر جنوبی ایشیا کو سب سے آلودہ خطہ قرار دیا،بھارت ، پاکستان ، بنگلہ دیش ، نیپال مسلسل دنیا کے 5 سب سے آلودہ ممالک میں شامل ہیں،یہ چار ممالک عالمی آبادی کا تقریبا ایک چوتھائی ہیں۔ ان ممالک کی 89 فیصد آبادی ایسے علاقوں میں رہ رہی ہے جہاں فضائی آلودگی کی سطح ڈبلیو ایچ او کی مقرر کردہ لائن سے کئی زیادہ ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ فضائی آلودگی کی وجہ سے بھارت ، پاکستان ، بنگلہ دیش اور نیپال کے شہریوں کی عمریں چھ سال کم ہوگئی ہیں، جنوبی ایشیا بھی ایئرکوالٹی کی خرابی کی وجہ سے عالمی سطح پر ضائع ہونے والی کل زندگی کا تقریبا 60 60 فیصد ہے، رپورٹ میں بتایا گیا کہ اگر فضائی آلودگی کو کنٹرول کیا جائے تو بنگلہ دیش ، بھارت، نیپال اور پاکستان میں ایک اوسط شخص 5.6 سال سے زیادہ زندگی جی سکتا ہے۔
اسلام آباد میں نورمقدم کے قتل کیس میں اہم موڑ آگیا،ملزم ظاہر جعفر نے نور مقدم کے قتل کا اعتراف کرلیا ہے، ظاہر جعفر نے بتایا کہ نور نے شادی سے انکار کیا تو اسے کمرے میں بند کردیا، تشدد کیا اور قتل کردیا، جان سے مارنے کے بعد سر بھی دھڑ سے الگ کر دیا۔ اسلام آباد پولیس نے نامکمل عبوری چالان عدالت میں پیش کردیا،جس میں انکشاف ہوا کہ ملزم ظاہر جعفر نورمقدم سے شادی کرناچاہتا تھا،شادی سے انکار پر نورمقدم کو زبردستی کمرے میں بند کیا، چوکیدار کو بھی ہدایت دی کہ گھرکے اندر کوئی آنے نہ پائے،نور مقدم بھی گھر سے باہر جانے نہ پائے۔ور بھاگ کرگیٹ پہنچی تو گارڈ،مالی نےپھر ظاہرجعفر کےحوالے کیا ظاہر جعفر نے اس دوران نور مقدم کو قتل کیا اور سر بھی دھڑ سے الگ کردیا،والد نے بھی جرم پر پردہ ڈالا ،والد کو جب بیٹے کی گھناؤنی واردات کی اطلاع ملی تو اس نے بیٹے کو کہا گھبرانا نہیں، ہمارے لوگ آرہےہیں، لاش کو ٹھکانے لگاکر اسے نکال لیں گے۔ عبوری چالان میں بتایاکہ والد نےاس وقوعہ میں اپنے بیٹے کی مدد کی جبکہ اگر ذاکر جعفر بر وقت پولیس کو اطلاع دیتا تو نور مقدم قتل کی جان بچائی جاسکتی تھی۔ دوسری جانب کیس میں تھراپی ورکس کے ملازمین نے بھی واقعہ چھپانے اور شواہد ضائع کرنے کی مکمل کوشش کی،تھراپی ورکس کے زخمی ملازم امجد نے بھی واقعے کا مقدمہ درج نہیں کرایا بلکہ میڈیکل سلپ میں روڈ ایکسیڈنٹ درج کرایا گیا،ملزم کے بیان کے مطابق تھراپی ورکس کےایک ملازم امجد محمود کے ساتھ غلط فہمی پر لڑائی بھی ہوئی۔ عبوری چالان کے مطابق ڈی وی آر میں محفوظ شدہ تصاویر اور فنگر پرنٹس بھی ظاہر جعفرے کے ہیں جبکہ بارہ اگست کی ڈی این اے رپورٹ میں بھی نور مقدم سے زیادتی ثابت ہوچکی ہے، جب ظاہر جعفر نے نور مقدم کو قید کیا تو اس دوران اس نے بار بار بھاگنے کی کوشش کی، نور مقدم واش روم سے چھلانگ لگا کر گیٹ پر آئی تو چوکیدار نے مدد نہیں کی نہ ہی مالی جان محمد نے گیٹ کھولنے دیا۔ ملزم ظاہر جعفر نے 19 جولائی کو امریکا کی فلائٹ بک کرا رکھی تھی لیکن سفر نہیں کیا،چالان میں بتایا گیا کہ ملزم نے قتل کے بعد نور مقدم کا موبائل فون چھپادیا تھا، ملزم کی نشاندہی پر مقتولہ نور مقدم کا موبائل فون بھی اس کے گھر سے برآمد کرلیا گیا ہے،ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ کی لیپ ٹاپ اور موبائل فون سے متعلق رپورٹ آنے پر ضمنی چالان داخل کرایا جائے گا۔
عوام ویسے ہی مہنگائی سے پریشان، ایسے میں وفاقی حکومت نے کردیا انوکھا اقدام، سستی چینی چھوڑ کر مہنگی چینی خرید لی،آخر ماجرا کیا ہے، جی ہاں وفاقی حکومت نے سستی مقامی چینی چھوڑ کر 38 روپے مہنگی چینی خریدنے کا منفرد کام کرڈالا ہے،ذرائع نے حکومت کے اس انوکھے اقدام کی تصدیق کردی ہے، ذرائع کے مطابق حکومت نے مہنگی ترین درآمدی چینی خریدنے کا ریکارڈ بنایا ہے، اور چینی کیلئے637.10 ڈالر فی ٹن کی کم سے کم بولی کو منظور کرلیا ہے۔ نجی ٹی وی نے ذرائع سے بتایا کہ درآمدی چینی پورٹ پر108روپے 85 پیسے فی کلو کے حساب سے ہوگی، جبکہ اخراجات ملا کر یوٹیلٹی اسٹورز کو چینی تقریباً 123 روپےکلو میں پڑے گی،ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان نے2 لاکھ میٹرک ٹن چینی کا سودا کیا جسے الخلیج گروپ سے خریدا گیا ہے، اس طرح حکومت نے سستی مقامی چینی چھوڑ کر تقریباً38 روپے فی کلو مہنگی چینی کا انتخاب کیا ہے،مقامی چینی 84.50 روپے فی کلو اور درآمدی چینی 123 روپے فی کلو ہوگی،درآمدی چینی کی پہلی کھیپ 20 سے 24 ستمبر تک پاکستان پہنچے گی۔ ملک میں چینی کی قیمتوں کو کنٹرول کرنے کے دعوے بے سود ثابت ہوئے ہیں، فی کلو چینی کی ریٹیل قیمت 89 روپے 50 پیسے ہے اور شہری 115 روپے فی کلو خریدنے پر مجبور ہیں،جبکہ حکومت اب بھی کہتی سنائی دے رہی ہے کہ چینی سستی ہوگی،کراچی کے شہری 50 روپے 50 پیسے، اسلام آباد، راولپنڈی، لاہور، سیالکوٹ، بہاولپور، حیدر آباد اور کوئٹہ کے شہری 20 روپے 50 پیسے مہنگی چینی خرید کر گزارا کررہے ہیں۔
عزت کے رکھوالے ہی عزت کے دشمن بن گئے، کراچی میں اغوا برائے تاوان میں گرفتار پولیس اہلکار کی خاتون ٹک ٹاکر سے زیادتی کا انکشاف ہوا ہے، گلشن اقبال پولیس کے ہاتھوں گرفتار ہونے والے پولیس اہلکار نے ٹک ٹاکرامبرین کو زیادتی کا نشانہ بنایا ہے، زمان ٹاؤن پولیس نے ٹک ٹاکر کی مدعیت میں مقدمہ درج کرلیا، مقدمہ الزام نمبر 959/21بجرم دفعات 376 اور 506 ٹیلی گراف ایکٹ کے تحت درج کیا تھا،امبرین ڈول نے موقف اختیار کیا ہے کہ پولیس اہلکارعثمان اکبر نے متعدد مقامات پر زیادتی کی ہے۔ واقعے کے حوالے سے امبرین کا ویڈیو بیان بھی سامنےآگیا ہے، جس امبرین کا کہنا ہے کہ عثمان اکبر نے پہلے انہیں پولیس میں نوکری کا جھانسہ دیا نمبر لیا اور پھر نوکری دینے کے بہانے کسی سے ملاقات کا کہہ کر شارع فیصل لے گیا، وہاں گیسٹ ہاؤس میں زیادتی کا نشانہ بنایا اور تصاویراوروڈیو بھی بناکر بلیک کرنے لگا۔۔ متاثرہ ٹک ٹاکر نے بتایا کہ عثمان اکبر زمان ٹاؤن تھانے لیکرگیااورتھانے کے اندرمتعدد دفعہ زیادتی کی تھی، تھانے کے چند اہلکاروں کو بھی اس حوالےسے علم تھا لیکن کسی نے کچھ نہیں کیا، عثمان سرعام مارتا ہے اورزبردستی ساتھ لیجاکرزیادتی کرتا رہا۔ ٹک ٹاکر نے مزید انکشاف کیا کہ ڈر خوف اور زیادتی کے باعث گھر میں قید ہوگئی، دھمکیاں دینے لگا، عثمان نے گھر کے باہر فائرنگ بھی کی، جبکہ اکثر مجھے پولیس موبائل میں لے جاتا تھا موبائل میں بھی وڈیو بنائی گئی،امبرین نے حکام بالا سے انصاف کی اپیل کردی اور سخت سزا کا مطالبہ کردیا۔
لیجنڈ کامیڈین و سینئر اداکار عمر شریف کی طبیعت کے حوالے سے ان کی اہلیہ زرین عمر کا اہم بیان سامنے آگیا ہے۔ خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق زرین عمر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ڈاکٹرز کے مطابق عمر شریف کیلئے آئندہ 24 گھنٹے بہت اہم ہیں۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر عمر شریف کے ویریفائیڈ اکاؤنٹ جاری کردہ بیان میں زرین عمر نے مداحوں سے عمر شریف کی صحت یابی کیلئے دعاؤں کی اپیل کی ہے۔ یادرہے کہ لیجنڈ کامیڈین و ادکار عمر طویل عرصے سے عارضہ قلب کے علاوہ دیگر بیماریوں کا شکار تھے جس کی وجہ سے ان کی یادداشت اور جسمانی صحت شدید متاثر ہوچکی تھی، گزشتہ دنوں طبیعت بگڑنے پر انہیں ہسپتال منتقل کردیا گیا تھا جہاں ڈاکٹر ان کی حالت کو تشویش ناک بتاتے ہیں۔
خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق کراچی کے ضلع ایسٹ پولیس نے جعلی پولیس یونیفارم پہن کر خود کو پولیس اہلکار بتا کر شہریوں کو اغوا کرکے ان سے تاوان اینٹھنے والے گروہ کے 6ملزمان کو گرفتارکرلیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق ملزمان مختلف محکموں کی یونیفارم پہن کر خود کو پولیس، کسٹم اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار ظاہر کرتے ہوئے شہریوں کو اغوا کرلیتے تھے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ جعلی یونیفارم پہن کر وارداتیں کرنے والا گینگ 6 ملزمان پر مشمل ہے جن میں سے 5 کو گرفتار کرلیا گیا ہے تاہم ایک ملزم فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا ہے، ملزمان دکانوں سے سامان اور نقدی وغیرہ لوٹنے کی کارروائیوں میں بھی ملوث تھے۔ پولیس نے ملزمان کی معاونت کرنے والے کراچی کے زمان ٹاؤن تھانے کے ایک پولیس اہلکار کو بھی گرفتار کیا ہے ۔پولیس کا کہنا ہے ملزمان اغوا برائے تاوان، لوٹ مار کی وارداتیں کرتے تھے، گرفتار ہونےو الے ملزمان سے جعلی وردیاں ، اسلحہ، موبائل فونز اور گاڑی برآمد کرلی ہے اور ان سے مزید تفتیش جاری ہے۔پولیس کے مطابق گینگ کے پانچوں ارکان سے فرار ہونےو الے ملزم کی معلومات حاصل کرکے گرفتاری کیلئے تلاش بھی شروع کردی جائے گی۔
بے نظیر شاہ کے الیکٹرانک ووٹنگ مشین سے متعلق دعوے۔۔ اینکر عمران خان نے تمام دعوؤں کو رد کردیا گزشتہ روز نجی چینل کے پروگرام میں بے نظیر شاہ نے دعویٰ کیا کہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین کام ایسے کرتی ہے کہ ووٹر جاتا ہے، ووٹ ڈالتا ہے، جب وہ ووٹ ڈالتا ہے تو مشین آپکو ایک سلپ نکال کردیتی ہے جس پر لکھا ہوتا ہے کہ اس ووٹر نے اس امیدوار کو ووٹ ڈالا۔ بے نظیر شاہ کا مزید کہنا تھا کہ یہ آئین کےآرٹیکل 226 کی خلاف ورزی ہے ، یہ آرٹیکل ووٹ کی رزداری کا تحفظ کرتا ہے۔۔ ووٹر باہر جاکر دکھاسکتا ہے کہ میں نے اس امیدوار کو ووٹ ڈالا۔ بے نظیر شاہ نے یہ دعویٰ بھی کیا کہ حکومت کو 9 کروڑ الیکٹرانک ووٹنگ مشینیں بنان پڑیں گی اور اگر حکومت الیکٹرانک ووٹنگ مشینیں بنائے تو اس کو بنانے میں24 ماہ لگ سکتے ہیں جبکہ ان مشینوں پر 150 ارب روپے کی لاگت آئے گی۔ بے نظیر شاہ اور الیکشن کمیشن کے اس دعوے کو اینکر عمران خان نے رد کردیا اور کہا کہ میں خود وزارت سائنس وٹیکنالوجی گیا، میں نے خود اس مشین کا تجربہ کیا، یہ مشین ووٹر کی رازداری رکھتی ہے، جب اس ووٹنگ مشین سے ووٹ نکلتا ہے تو اس پر ایک بار کوڈ ہوتا ہے، ووٹ پر ووٹر کا نام ہوتا ہے، نہ خاندان ہوتا ہے، نہ شناختی کارڈ نمبر ہوتا ہے۔ ایسی کوئی شناخت نہیں ہے۔ اینکر کا مزید کہنا تھا کہ ووٹر کی شناخت کو کوئی مائی کا لال نہیں پکڑسکتا کہ یہ ووٹ کس نے ڈالا ہے لیکن اس پر یہ پتہ چلتا ہے کہ ووٹ کتنے بجے، کس تاریخ کو ڈلا ہے اور یہ پتہ تو چلنا چاہئے۔ سوشل میڈیا صارفین نے بے نظیر شاہ کے دعوے اور اینکر عمران خان کے جواب پر ایک کلپ شئیر کیا ہے جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ بے نظیر شاہ کچھ کہہ رہی ہیں جبکہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین کا تجربہ کرنیوالے اینکر عمران خان کچھ اور کہہ رہے ہیں۔ ایک طرف تو بے نطیر شاہ یہ کہتی ہیں کہ ووٹنگ مشینیں بنانے میں 24 ماہ لگ سکتے ہیں جبکہ شبلی فراز کا موقف ہے کہ 8 لاکھ ووٹنگ مشینیں بنانے میں زیادہ سے زیادہ 6 ماہ درکار ہوں گے جبکہ حکومت نے 150 ارب روپے کی لاگت کو بھی مسترد کردیا ہے۔
امریکی کمپنی نے 2024 سے سعودی عرب میں نئی طرز کی الیکٹرک کاریں تیار کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق دنیا کی مشہور الیکٹرک کارساز کمپنی 'ٹیسلا موٹرز' کی مدمقابل برقی گاڑیاں بنانے والی کمپنی 'لوسڈ موٹرز' نے اعلان کیا ہے کہ 2024 سے سعودی عرب میں الیکٹرک کاریں تیار کرنا شروع کردیا جائے گا۔ کمپنی نے اس حوالے سے سعودی عرب میں اجازت نامہ حاصل کرنے کیلئے درخواست بھی جمع کروادی ہے، درخواست لوسڈ موٹرز کے سعودی عرب میں نائب سربراہ سعود العسکر کی جانب سے جمع کروائی گئی ہے۔ واضح رہے کہ لوسڈ موٹرز میں سعودی انوسٹمنٹ فنڈ نے سرمایہ کاری کرکے کمپنی کے 62 فیصد شیئر ز خرید رکھے ہیں، یہ کمپنی گزشتہ ماہ امریکی اسٹاک ایکسچینج میں شامل ہونے والی کمپنیوں میں شامل ہے، سعودی فنڈکو کمپنی کے امریکی اسٹاک ایکسچینج میں لسٹنگ سے 22 ارب ڈالر کا منافع ہوا ہے۔ لوسڈ موٹرز رواں برس اپنی پہلی گاڑی'لوسڈ ایئر' متعارف کروانے جارہی ہے جس کی امریکا میں قیمت 77 ہزار400 ڈالرز رکھی گئی ، کمپنی نے دعویٰ کیا ہے کہ یہ گاڑی ایک کلوواٹ آور میں ساڑھے 4 میل کا سفر طے کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے اور اس کا مقابلہ ٹیسلا موٹرز کے ایس ماڈل کے ساتھ کیا جاسکتا ہے۔ واضح رہے کہ کمپنی کے دعویٰ کے مطابق گاڑی کی مکمل رینج 517 میل ہےجو ٹیسلا ایکس سے 26 فیصد سے بھی زیادہ ہے۔
راولپنڈی کے علاقے فتح جنگ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے ایڈیشنل آئی جی موٹروے سجاد افضل آفریدی زخمی جبکہ ان کے بھائی نعمان فضل جاں بحق ہوگئے ہیں، واقعہ میں ملوث گاڑی پکڑی گئی ہے جبکہ اس میں سوار 4 مسلح ملزمان بھی گرفتار کرلیے گئے ہیں۔ خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ترجمان موٹروے کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق واقعہ فتح جنگ انٹرچینج پر پیش آیا جہاں ایڈیشنل آئی جی موٹروے سجاد افضل آفریدی کی گاڑی پر فائرنگ کی گئی۔ ترجمان موٹروے کے مطابق واقعے میں ایڈیشنل آئی جی زخمی اور ان کے بھائی نعمان فضل جاں بحق ہوگئے ہیں، گاڑی پر فائرنگ کرنے والے ملزمان کی تعداد 6 تھی، واقعہ بظاہر پرانی دشمنی کا نظر آتا ہے۔ ترجمان موٹروے پولیس کے مطابق ایڈیشنل آئی جی موٹروے پر ایک مشکوک گاڑی کا پیچھا کررہے ہیں کہ نامعلوم افراد نے ان کی گاڑی پر اندھا دھنگ فائرنگ کردی اور فرار ہوگئے، ایڈیشنل آئی جی کو 2 گولیاں لگیں جس سے وہ شدید زخمی ہوگئے۔ موٹروے پولیس کے مطابق ایڈیشنل آئی جی کو فوری طور پر پمز ہسپتال منتقل کردیا گیا تھا، جبکہ ایڈیشنل آئی جی کے بھائی موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے تھے۔ واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج سامنے آگئی ہے جس ایڈیشنل آئی جی کی سرکاری گاڑی ایک سفید گاڑی کا پیچھا کرتی دکھائی دے رہی ہے ، گاڑی فتح جنگ انٹرچینج پر رکی تو نامعلوم افراد نے فائرنگ کردی اور فرار ہوگئے، موٹروے پولیس نے دوسری گاڑی میں ملزمان کا پیچھا کرنے کی کوشش کی مگر ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے تھے۔ جس کے بعد اطلاعات سامنے آئیں ہیں کہ پولیس نے مذکورہ گاڑی پکڑ کرا س میں سوار 4مسلح افراد کو گرفتار کرلیا ہے۔
سپریم کورٹ پاکستان میں سی ای او لائیو اسٹاک ڈاکٹر شاہد امین کی تقرری سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی جس میں جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ وفاقی ادارے کے معاملات پر بلوچستان ہائیکورٹ کا دائرہ اختیار کیسے ہوا؟ چیف جسٹس پاکستان جسٹس گلزاراحمد نے کہا کہ ہائیکورٹ کے دائرہ اختیار سے متعلق سپریم کورٹ کا فیصلہ موجود ہے۔ جس پر سینئر وکیل کامران مرتضیٰ نے کہا کہ ضرور اس نکتہ پر سپریم کورٹ کی ججمنٹ موجود ہو گی۔ چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کو عدالت کے ڈیکورم کا نہیں پتہ؟ ایسا نہیں کہتے کہ ججمنٹ ہو گی۔ وکیل کامران مرتضیٰ نے جواب دیا کہ مجھے عدالت کے ڈیکورم کا پتہ ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ادب سے پیش ہوتا ہوں، چیف صاحب آپ اتنا غصہ نہ کریں۔ آپ کسی اور کا غصہ مجھ پر نہ نکالیں۔ اس کا مطلب یہ ہوا کہ عدالت مجھے سننا ہی نہیں چاہتی۔ جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ آپ کا نوٹس بھی نہیں ہوا جب نوٹس ہو گا تو سن لیں گے۔ یاد رہے کہ اس کیس میں بلوچستان ہائیکورٹ نے ڈاکٹر شاہد امین کو سی ای او لائیو اسٹاک تعینات کرنے کا حکم دیا تھا اور بلوچستان ہائیکورٹ کے فیصلے کو مرکزی حکومت نے عدالت عظمیٰ میں چیلنج کر رکھا تھا۔
حکومت کی جانب سے عوام پر ایک اور مہنگائی کا بم گرانے کی تیاری کرلی گئی ہے، نیپرا نے بجلی کی فی یونٹ قیمت میں اضافے کی منظوری دیدی ہے۔ خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی(نیپرا) کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق بجلی کی فی یونٹ قیمت میں ایک روپیہ38 پیسے اضافہ کیا گیا ہے۔ نیپرا کے مطابق بجلی کی قیمتوں میں حالیہ اضافہ فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں کیا گیا ہے، سینٹرل پاور پرجیزنگ ایجنسی نے بجلی کی قیمتوں میں ایک روپیہ 47 پیسے اضافے کرنے کی سفارش کی تھی۔ نوٹیفکیشن کے مطابق سی پی پی کی تجویز پر نیپرا نے یکم ستمبر کو عوامی سماعت کی جس کے بعد فیصلہ کیا گیا ہے کہ فی یونٹ قیمت میں ایک روپیہ 38 پیسہ اضافہ کیا جائے۔ نیپرا کے مطابق اس فیصلے کا اطلاق صرف ماہ ستمبر کے بجلی بلوں پر ہوگا، تمام ڈسکوز کے صارفین اس فیصلے سے متاثر ہوں گے تاہم لائف لائن صارفین اور کے الیکٹرک کے صارفین کیلئے استثنیٰ ہوگا۔
افغانستان کے صوبے قندھار کے انسپکٹر جنرل پولیس کا کہنا ہے کہ طالبان کی حکومت آنے کے بعد جرائم میں 95 فیصد تک کمی واقع ہوئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق آئی جی پولیس قندھار نے پاکستان کے نجی ٹی وی چینل کے اینکر پرسن اور سینئر صحافی ارشد شرف سے خصوصی گفتگو کی۔ دوران گفتگو آئی جی قندھار کا کہنا تھا کہ ہم نے میڈیا کے ذریعے ہیلپ لائن نمبرز کی تشہیر کی ہے جس پر فون کرکے شہری اپنی شکایات درج کرواسکتے ہیں، ہمارے انٹیلی جنس ادارے بھی مکمل طور پر فعال ہیں، صوبے میں تمام بڑے جرائم کا خاتمہ کرچکے ہیں، چند مقامات پر معمولی جرائم کی شکایات ہیں جنہیں جلد حل کرلیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمارے پاس 3 ہزار سے زائد پولیس فورس کے اہلکار ہیں، ان لوگوں کو بینکوں کے ذریعے تنخواہیں ادا کرتے ہیں، ہم نے پولیس کے محکمے کے تمام عہدوں پر کام کرنے والے لوگوں کو واپس فورس جوائن کرنے کیلئے کہا ہے۔ آئی جی قندھار کا کہنا تھا کہ پولیس اسلامی شرعی اور طالبان کے شوریٰ نظام کے تحت کام کررہی ہے۔ یادرہے کہ اس سے قبل اسپین کے اپنے ہم منصب سے ملاقات کے بعد وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ عالمی برادری کو افغانستان کی معاشی بہتری کیلئے اپنا کردار ادا کرنا چاہیے، افغانستان میں معاشی بحران کسی کے حق میں بھی نہیں ہے۔
گھوٹکی میں ہونے والے خوفناک ٹرین حادثے میں زخمی ہونے والی 14 سالہ کائنات تین ماہ بعد صحت یاب ہوکر گھر واپس آگئی ہے۔ خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق گھوٹکی میں 7 جون کو ہونے والے دو ٹرینوں کے خوفناک تصادم کے نتیجے میں زخمی ہونے والے کائنات کو کراچی کے آغا خان ہسپتال سے صحت یابی کے بعد گھر منتقل کردیا گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق اس حوالے سے ترجمان ریلوے نے ایک بیان جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ بچی کے علاج کے دوران ڈویژنل سپرٹنڈنٹ کراچی محمد حنیف گل ہسپتال اور بچی کے اہلخانہ سے مسلسل رابطے میں رہے۔ ترجمان ریلوے کے مطابق بچی کے صحت یاب ہوکر گھر جانے کے بعد محمد حنیف گل اور ڈائریکٹر پبلک ریلشنزریلوے نازیہ جبین بچی کے گھر گئے اور اسے تحائف، پھول اور مٹھائی پیش کی۔ اس موقع پر ڈویژنل سپرٹنڈنٹ کراچی ریلوے محمد حنیف گل کا کہنا تھا کہ میں کائنات کی مکمل صحت یابی اور زندگی کی طرف واپس لوٹنے سے متعلق معاملات کو خود مانیٹر کرتا رہا ہوں، کائنات میرے لیے میری اپنی بچیوں کی طرح ہے۔ یادرہے کہ 7 جون کو گھوٹکی کے مقام پر سرسید ایکسپریس اور ملت ایکسپریس کے درمیان زوردار تصادم ہوا تھا جس کے نتیجے میں 63 افراد جاں بحق جبکہ 100 سے زائد زخمی ہوگئے تھے، تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق واقعہ ریلوے ٹریک کی مناسب مینٹنس نہ ہونے کے باعث جوائنٹ کھلنے کی وجہ سے پیش آیا تھا۔
فیس بک اور رے بین کا شاہکار۔۔ موبائل،سوشل میڈیا، کیمرہ سب کچھ گلاسز میں فیس بک اور اٹلی کی معروف گلاسز کمپنی رے بین کا اشتراک لایا ٹیکنالوجی کی دنیا میں نیا انقلاب، اب آپ کو فیس بک، واٹس ایپ، انسٹاگرام اور دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارم پر جانے کی ضرورت نہیں، بس اسمارٹ گلاسز لیں اور سب پالیں۔ جی ہاں فیس کے بانی مارک ذکر برگ نے رے بین کمپنی کے ساتھ مل کر ایک ایسا جدید ترین گلاسز لانچ کیا ہے، جو صرف انگلی کی جنبش سے تصویر کھینچے گا،وڈیو بنائے گا، موسیقی بھی سنی جاسکتی ہے، اور ٹیلیفونک رابطہ بھی آسان ہوگا۔ رپورٹس کے مطابق فیس بک کے اگیومینٹڈ رئیلٹی ٹیکنالوجی سے لیس اسمارٹ گلاسز کو پہننے پر صارفین کی آنکھوں کے سامنے ایک گرافک ڈسپلے آجائے گا اور صارف باآسانی کالز کرسکے گا۔ اتنا ہی نہیں فیس بک، وائٹس ایپ انسٹاگرام پر پوسٹ بھی شیئر ہوسکتی ہے،گلاسز کی قیمت دوسوننانوے ڈالر رکھی گئی ہے،گلاسز آن لائن اور امریکی اسٹورز کے ساتھ ساتھ آسٹریلیا ، کینیڈا ، آئرلینڈ ، اٹلی اور برطانیہ میں بھی دستیاب ہونگے۔ فیس بک بانی مارک ذکر برگ نے اس حوالے سے جاری ویڈیو میں صارفین کو خوشخبری سنائی اور اسمارٹ گلاسز کے فیچرز کے حوالے سے بتایا،گلاسز میں ڈوئل کمیرہ ہیں جو فائیو میگا پکسل ہیں،جسے سائیڈ میں لگے بٹن سے آن کیا جاسکتا ہے اور اس سے تصاویر اور تیس سینکڈ کی ویڈیو بنائی جاسکتی ہے،گلاسز میں پانچ سو تصاویر اور تیس ویڈیو کو محفوظ رکھا جاسکتا ہے، جبکہ آن آف کا آپشن بھی موجود ہے۔
اسٹیٹ بینک آف پاکستان کا کہنا ہے کہ بیرونِ ملک مقیم پاکستانیوں نے مسلسل 15 ویں مہینے اگست 2021 میں بھی 2 ارب ڈالرز سے زائد کی ترسیلات زر پاکستان بھیجی ہیں۔ البتہ مرکزی بینک نے اپنے اعلامیے میں یہ بھی بتایا ہے کہ گزشتہ مہینے میں ملک میں آنے والی رقوم جولائی 2021 کے مقابلے 4.92 لاکھ ڈالرز کم تھیں۔ مرکزی بینک نے اپنے اعلامیے میں بتایا کہ اگست میں برطانیہ میں مقیم پاکستانیوں نے 35 کروڑ ڈالرزکی ترسیلات بھیجیں، جب کہ خلیجی ممالک سے 28 کروڑ ڈالرز کی ترسیلات ملک میں آئیں۔ اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے مطابق گزشتہ ماہ امریکا سے 27 کروڑ ڈالر، یورپی ممالک سے 29 کروڑ ڈالرز کی رقوم پاکستان بھیجی گئیں۔ یاد رہے کہ گزشتہ سال کورونا کی وبا آنے کے بعد خدشہ ظاہر کیا گیا تھا کہ عالمی سطح پر معیشت پر مرتب ہونے والے منفی اثرات کے پیش نظر پاکستان آنے والی ترسیلات زر کی شرح متاثر ہو سکتی ہے۔ ورلڈ بینک نے بھی پاکستان سمیت خطے کے دیگر ممالک میں ترسیلات زر میں کمی کی پیش گوئی کی تھی کیوں کہ عالمی وبا کورونا وائرس نے دنیا بھر میں ممالک کو اپنی معیشت لاک ڈاؤن کرنے اور تارکین وطن ورکرز کو ان کے گھر واپس بھیجنے پر مجبور کردیا تھا۔ تاہم مایوس کن تخمینوں کے برعکس اب تک پاکستان میں ترسیلاتِ زر میں اضافہ ہی دیکھنے میں آیا ہے۔

Sponsored Link