Siasat.pk Forums
  1. #1

    کیا معاشرے کی ہیجانی کیفیت عدل کی بنیاد ہوگی





    کیا معاشرے کی ہیجانی کیفیت عدل کی بنیاد ہوگی۔
    آج میں یہ سوال کرنے پر مجبور ہوں، کیونکہ ہجوم انصاف کے نام پر تشدد کرہا ہے، کسی بھی شخص سے اگر آپ کا جھگڑا ہوجائے، تو اسے لڑکی چھیڑنے کا الزام لگا کر مارنا شروع کردو، ہجوم آپ کا کا ساتھ دے گا۔ میڈیا کا کیمرہ میں کسی بھی بھیڑ میں سے ایک شخص کو نشانہ بنا کر اس کی پٹائی کراکے، سبسے پہلے بریکنگ نیوز کا تمغہ سجائے گا، سب جانتے ہیں کہ جب میڈیا نے خبر بنانی ہوتی ہے تو وہ لوگوں کو پیسہ دے کر نیوز بناتا ہے کہ گدھا کا گوشت بناتے ہوئے پکڑا گیا۔
    معاشرے کو اسلامی عدل کی طرف لاؤ، ایسے میڈیا چینلوں کا بائیکاٹ کرو جہاں پر ساحر لودھی قبیل کے بےحمیت لوگ معاشرے کو بھیڑیا بنانے میں لگے ہوئے تھے، مگر پیمرا ان کے خلاف کچھ کرنے کو تیار نہیں تھے، کوئی بھی ایسا چینل جو اسلامی قوانین کے خلاف فحاشی اور عریانیت کو فراغ دے، اسے بند کردیا جائے۔
    جس علاقے میں واردات ہو، اور وہاں سے لاش ملے، اس علاقے پر جن لوگوں کا تسلط ہو، ان سے تفتیش کی جائے، اورقسمیں لی جائیں، کہ نہ انھوں نے یہ قتل کیا ہے اور نہ ہی انھیں اس قتل کے متعلق کچھ معلوم ہے۔ قسمیں اٹھاچکنے کے بعد ان کی ذمہ داری ختم نہیں ہوجائے گی، بلکہ ان پر لازم ہوگا کہ وہ اس مقتول کی دیت ادا کریں۔ شیر شاہ سوری اسی بنیاد پر علاقہ میں امن قائم کیا تھا۔
    ہجوم کی ایک کمزوری یہ ہے کہ وہ اکثر وقتی یا حادثاتی نوعیت کے جذبات سے متاثر ہوکر "عمومی و حادثاتی" پہلوؤں کو خلط ملط کر دیتا ہے۔ مثلا حالیہ واقعے کی سنگینی کے تناظر میں فی الوقت بہت سے لوگ "سخت سے سخت سزا" (مثلا رجم یا سر عام پھانسی وغیرہ) کی حمایت کرر ہے ہیں، مگر یقین مانیے کہ چند ماہ بعد تفتیش کے بعد (جب جذبات ذرا ٹھہراؤ کی سطح پر آچکے ہوں گے) اگر عدالت واقعی مجرم کو سرعام رجم کرنے کی سزا سنا دے اور حکومت اس پر عمل کا فیصلہ کرلے تو انھی لوگوں کی ایک اکثریت اس کے خلاف لب کشائی کر رہی ہوگی، ہیومن رائٹس کی یہی تنظیمیں پھر اس "ظلم" پر عالمی میڈیا کو متوجہ کریں گی بلکہ خود ہمارے میڈیا والے ہی شور مچا دیں گے، کیونکہ انھین اسلام پھیلنے کے خدشات کا سامنا ہوگا، مغرب ذدہ میڈیا رجم کی سزا کے خلاف اٹھ کھڑا ہوگا، موم بتی مافیا کو رجم کی سزا مین بربریت نظرآئے گی۔
    اسلامی قوانین ہی معاشرے کو جرائم سے پاک کرنے کی سکت رکھتے ہیں، جنسی جرائم کے خاتمے کے لئے ضروری ہے کے معاشرے سے فحشائی اور عریانیت کا خاتمہ کیا جائے، میڈیا شو میں زن و مرد کے باہم گلے ملنے پر پابندی لگائی جائے، اور رقص و سرور کی محافل کا انعقاد ممنوع کیا جائے اور اسکولوں میں بھی بیہودہ مخلوط شو بند کئے جائیں۔
    حکومت اگر اپنی ذمہ داری پوری نہ کرے گی، تو ہجوم تشدد کا راستہ اختیار کرکے حالات کو مزید گھمبیر بنا سکتا ہے۔


    Quick reply to this message Reply  

  2. #2

    Re: کیا معاشرے کی ہیجانی کیفیت عدل کی بنیاد ہوگی


    خواتین کو چھیڑنے پر سب سے پہلے تمہاری پٹائی ہونی چاہیئے



    Start Date Lift Date Banned By Reason Ban Discussion Thread
    26-Jan-2016 05:14 PM 29-Jan-2016 05:00 PM Ijaz Personal attack on female member کیا بات ہے زنا میں اتنا انٹریسٹ کیوں؟ Ban on Zia Hydari: Personal attack on female member کیا بات ہے زنا میں اتنا انٹریسٹ کی&#
    10-Feb-2016 06:13 PM 24-Feb-2016 06:00 PM Waseem Harrassng Female member Ban on Zia Hydari: Harrassng Female member (10-Feb-2016 06:13 PM)
    25-Feb-2016 02:33 AM Permanent Ban Waseem For Abusing Female member : لبرل بھڑوے تو اپنی لبرل۔۔۔۔ کا ریٹ چیª Ban on Zia Hydari: For Abusing Female member : لبرل بھڑوے تو اپنی لبرل۔۔۔۔ کا ریٹ
    21-Apr-2016 12:37 AM 24-Apr-2016 12:00 AM A Abbasi Getting personal with members. talking about their mothers Ban on Zia Hydari: Getting personal with members. talking about their mothers (20-Apr-2016 03:37 PM)
    14-Jun-2016 01:26 PM 16-Jun-2016 01:00 PM Ijaz Abusive Language Ban on Zia Hydari: Abusive Language (14-Jun-2016 01:26 PM)
    28-Jul-2016 05:20 PM 30-Jul-2016 05:00 PM Faiza Personal attack Ban on Zia Hydari: Personal attack (28-Jul-2016 06:20 AM)
    02-Aug-2016 03:50 AM 05-Aug-2016 03:00 AM Faiza --Not Generated--
    16-Aug-2016 01:56 PM 18-Aug-2016 01:00 PM Waseem
    Quick reply to this message Reply  

Quick Reply


Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •