Siasat.pk Forums
  1. #1
    Join Date
    Feb 2012
    Location
    tabuk
    Posts
    406
    Post Thanks / Like

    برما میں مسلمانوں کا قتل عام - میڈیا کا جھوٹ




    یہ برما کے علاقے اراکان میں روہنگیا مسلمانوں کی لاشیں ہیں۔ انہیں عشروں سے قتل عام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ برما میں بدھ مت کی چینی حمایت یافتہ حکومت ہے جو کسی مسلمان کو ملک میں برداشت کرنے کو تیار نہیں۔ اس لئے ہر چند برس بعد وہاں منظم طور پر مسلمانوں کا قتل عام کیا جاتا ہے جس میں فوج اور دیگر سرکاری ادارے مسلمانوں کو کھلے عام قتل عام کرتے ہیں۔ تازہ& قتل عام چند ہفتے قبل شروع ہوا اور سڑکوں پر پڑی مسلمانوں کی لاشوں کی تصاویر انصاف کی دہائی دے رہی ہیں مگر اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کے دیگر چیمپین اس پر خاموش ہیں۔


    Last edited by TruPakistani; 10-Jul-2012 at 04:02 PM. Reason: Unsuitable Graphic content
    Quick reply to this message Reply  

  2. #2
    Join Date
    Dec 2011
    Location
    London
    Posts
    2,702
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    .......
    Quick reply to this message Reply  

  3. #3
    Join Date
    Oct 2010
    Posts
    4,292
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    is it after new regima of aung san suki or are these old pics??
    Quick reply to this message Reply  

  4. #4
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Peshawar
    Posts
    4,159
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    yaar ye UN, kia so rahi hai?
    Quick reply to this message Reply  

  5. Likes Bangash Liked
  6. #5
    Join Date
    Nov 2011
    Location
    NA-125
    Posts
    4,809
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    Kahan haaain Duniya bhaar ki Human Rights ki NGO's kahan hain woh log jo bohat liberal bani phirtay hain ??
    Quick reply to this message Reply  

  7. Likes Bangash Liked
  8. #6
    Join Date
    Feb 2012
    Location
    Oslo
    Posts
    15,497
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    we have burnet alive christians in Gojra in 2010 ,,responsible moulvis and their followers are still active their and they have no fear of law enforcing agencies. First of all we have to look upon ourselves as a Muslim and than criticize others.same things happening in Burma now against us coz we think that like Pakistan we are powerful all over the world for any kind of cruality but reality is different.
    Quick reply to this message Reply  

  9. #7
    Join Date
    Feb 2012
    Location
    Oslo
    Posts
    15,497
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    Quick reply to this message Reply  

  10. #8
    Join Date
    Jun 2010
    Location
    Toronto
    Posts
    731
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    Astaghfurullah. May Allah help our brothers and sisters in Burma. Time again and again keeps on exposing all the NGO's and human rights organizations. They are only for zionists.
    Quick reply to this message Reply  

  11. Likes Bangash Liked
  12. #9
    Join Date
    Jun 2011
    Location
    آفاقی
    Posts
    17,759
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    انسانی حقوق کی دعوےدار این جی اوز اور اقوام متحده کا ضمیر زنده هے کیا؟
    عالم اسلام کے بے حس حکمران امت مسلمه کے مظلوم مسلمانوں کے قتل عام پر


    کیو ں خاموش ہیں؟
    Quick reply to this message Reply  

  13. #10
    Join Date
    Jun 2011
    Location
    آفاقی
    Posts
    17,759
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    Originally Posted by Believer12 View Post
    we have burnet alive christians in Gojra in 2010 ,,responsible moulvis and their followers are still active their and they have no fear of law enforcing agencies. First of all we have to look upon ourselves as a Muslim and than criticize others.same things happening in Burma now against us coz we think that like Pakistan we are powerful all over the world for any kind of cruality but reality is different.
    If this happened in pakistan it does not mean that we should not protest againt crueleties,we can expect a non muslim refering like this,we should protest as a muslim aganist any cruelity,muslims are also innocent like christians......UNO and so-called ngos are all under pressure of christians..........why they dont protest?
    Islam is not responsable for all this........

    Quick reply to this message Reply  

  14. #11
    Join Date
    Feb 2012
    Location
    Oslo
    Posts
    15,497
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    Originally Posted by Za Chaudhry View Post
    If this happened in pakistan it does not mean that we should not protest againt crueleties,we can expect a non muslim refering like this,we should protest as a muslim aganist any cruelity,muslims are also innocent like christians......UNO and so-called ngos are all under pressure of christians..........why they dont protest?
    Islam is not responsable for all this........

    those who can not protest with in their own society and claimed themselves Muslims ,,,they have no right to protest when something happened in other countries.
    Quick reply to this message Reply  

  15. #12
    Join Date
    Jun 2011
    Location
    آفاقی
    Posts
    17,759
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    Originally Posted by Believer12 View Post
    those who can not protest with in their own society and claimed themselves Muslims ,,,they have no right to protest when something happened in other countries.
    Can you give me even one example, please clear me your faith before giving your valuable comments.....you always blaming muslims.............its a reason to ask you about your faith.
    Last edited by Afaq Chaudhry; 25-May-2015 at 02:35 AM.
    Quick reply to this message Reply  

  16. #13
    Join Date
    Feb 2012
    Location
    Oslo
    Posts
    15,497
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    Originally Posted by Za Chaudhry View Post
    can you give me even one example, please clear me your faith before giving your valuable comments.....you always blaming muslims.............ita reason to ask from you about your faith.
    I am Muslim aur faith kisi k baap ka nahi jo jawab diya jae.
    yesterday you were conflicting over long march issue,,,,but today you did not feel shame because your rented mullahs are sleeping at their homes and you are still dreamin change via these pigs.
    Quick reply to this message Reply  

  17. Likes EniGma90 Liked
  18. #14
    Join Date
    Apr 2012
    Location
    UAE
    Posts
    74
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    Qadyanis are non-muslims, worst than jews and chrsitians...We should do something similar to them..

    Originally Posted by Believer12 View Post
    we have burnet alive christians in Gojra in 2010 ,,responsible moulvis and their followers are still active their and they have no fear of law enforcing agencies. First of all we have to look upon ourselves as a Muslim and than criticize others.same things happening in Burma now against us coz we think that like Pakistan we are powerful all over the world for any kind of cruality but reality is different.
    Quick reply to this message Reply  

  19. #15
    Join Date
    Feb 2012
    Location
    Oslo
    Posts
    15,497
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    Originally Posted by saleema View Post
    Qadyanis are non-muslims, worst than jews and chrsitians...We should do something similar to them..
    welcome in the show.
    Quick reply to this message Reply  

  20. #16
    Join Date
    Aug 2011
    Location
    Canada
    Posts
    19,543
    Post Thanks / Like

    Re: برما.مسلمانوں کے قتل عام کے ہولناک مناظر

    Originally Posted by staray khaatir View Post
    yaar ye UN, kia so rahi hai?
    Burma does not have oil or any other natural resources nor is its location very important stategically...why would UN waste its money on Burma..
    Quick reply to this message Reply  

  21. #17
    Join Date
    Jun 2011
    Location
    آفاقی
    Posts
    17,759
    Post Thanks / Like

    اراکانی مسلمانوں کا قتل عام






    Last edited by Afaq Chaudhry; 25-May-2015 at 02:37 AM.
    Quick reply to this message Reply  

  22. #18
    Join Date
    Dec 2009
    Location
    Great Pakistan
    Posts
    51,963
    Post Thanks / Like

    Re: اراکانی مسلمانوں کا قتل عام

    Did Khadim e Harmeen talk about that ??
    Quick reply to this message Reply  

  23. #19
    Join Date
    Dec 2009
    Posts
    5,400
    Post Thanks / Like

    Re: اراکانی مسلمانوں کا قتل عام



    Ager Bangladesh kay 'secular' logon nay inhein insaan na samjhtay huay qabool nahi kiya tu Saudi Arab kay ameer kabeer momin hukoomat nay apna behri bera bhej ker in logon ko kyun nahi apnay mulk mein panah day dee?

    Kia Saudi Arab ya koi Islami mulk kisi ko 'political asylum' ke facility provide kerta hay like the 'secualr' West provides to many including Muslims from all over the world?

    Sad as it is what is going on in Burma but the people most in position to instigate world opinion into action are the Saudis with their hold on the world oil production. They should be the ones going to the UN and raising alarms over this matter because the oil hungry West will listen to their oil supply store.

    Quick reply to this message Reply  

  24. #20
    Join Date
    Jun 2011
    Location
    آفاقی
    Posts
    17,759
    Post Thanks / Like

    Re: اراکانی مسلمانوں کا قتل عام


    روہنگیا مسلمانوں کی آہیں

    میانمار یا برما میں اپریل کے شروع میں الیکشن ہوا، الیکشن کا گھمسان اڑتالیس سیٹوں پر برسر اقتدار پارٹی اور حزب مخالف سومتی کے امیدواروں کے درمیان ہوا، حزب مخالف کے امیدوار جمہوری نیشنل فرنٹ کی طرف سے رانجوں کے قریب ’’کومو‘‘ حلقے کے لیے اتارے گئے۔ مغرب پرامید ہے کہ یہ الیکشن نومبر2010ء کی قرعہ اندازی کے بعد فوجی برسر اقتدار نظام کے لیے ایک طرح کا امتحان ہے کہ وہ اپنے کو عوامی حکومت کے پیرہن میں پیش کرے، اور یہ کہ وہ کس حد تک سیاسی اصلاحات کے نفاذ میں سنجیدہ ہے

    دوسری جانب عالم اسلام میانمار کے مظلوم مسلمانوں کی آہوں اور آنسؤوں سے بالکل بے خبر ہے، میانمار کے مسلمان ملک کی مجموعی آبادی 5کروڑ، 45لاکھ، 84 ہزار کا چار فی صد ہیں جب کہ89 فیصد بودھ مذہب کے ماننے والے ہیں۔ بلاشبہ میانمار میں قانونی حکومت کے قیام کی کوشش یوروپی یونین کے زیر نگرانی ملک پر عائد پابندیوں کوکم کر نے کے لیے ہے، لیکن یہ کوشش ہر گز ان بیس لاکھ مسلمانوں کو نظر انداز کر کے بار آور نہیں ہوسکتی جن کو روہنگیا کا نام دیا گیا ہے جو چند سال سے ملک کو چھوڑنے پر مجبور ہیں اور صفایا و خاتمہ کی مہم سے دو چار ہیں، فوج ان مسلمانوں کو الیکشن میں حصہ لینے ہی سے نہیں روک رہی بلکہ انہیں شہری حقوق سے بھی محروم کر رہی ہے ان مسلمانوں کو وہاں کا نیشنل نہیں سمجھا جاتا ہے اور ان کے پاس پاسپورٹ بھی نہیں ہے اور انہیں اتری راحینی صوبہ سے میانمار کے دوسرے صوبے میں اجازت کے بغیر سفر کرنے کی اجازت بھی نہیں ہوتی

    اس کے علاوہ پرسنل لا سے متعلق کارروائی جیسے شادی بیاہ، بچوں کے نام درج کرانے کے سلسلے میں ایسی کڑی شرطیں ہیں جس کی وجہ سے وہ لوگ پڑوسی ملکوں میں ہجرت کرنے پر مجبور ہو رہے ہیں خاص طور سے بنگلہ دیش جو اکثریتی مسلم ملک ہے، اور ہزاروں لوگ بھارت میں بھی مہاجر کی زندگی گزار رہے ہیں۔ اس ملک کے مسلمانوں کی آہ و بکا اور پریشانیوں کے ساتھ ساتھ ہزارہا ہزار روہنگیا جو بنگلہ دیش میں ہجرت کر کے زندگی بسر کر رہے ہیں یا مہاجرین کے کیمپوں میں زندگی گزارنے پر مجبور ہیں وہ لوگ میانمار میں دوبارہ واپس آنے کے مقابلے میں موت کو ترجیح دیتے ہیں کیوں کہ وہ سمجھتے ہیں کہ وہاں موت ان کے انتظار میں کھڑی ہے۔

    پناہ گزینوں میں حاجی عبد المطلب ہیں جو میانمار اور بنگلہ دیش کے علاقے میدا میں غیر سرکاری کیمپ میں رہ رہے ہیں ان کا کہنا ہے: میانمار میں فوج مسلم اقلیت مٹانے کے لیے کوشاں ہے، وہ انہیں بلا معاوضہ مشکل کام انجام دینے کے لیے مجبور کرتی ہے، اس کے ساتھ غصب و اغوا و قتل و غارت گری کا بازار پورے ملک میں گرم ہے جیسا کہ رائٹر کی 31 جنوری 2009ء کی رپورٹ سے معلوم ہوتا ہے۔ ایک دوسرے صاحب محمد نور بھی پناہ گزینی کی زندگی گزار رہے تھے وہ کسی طرح تکلیف دہ سفر کرکے انڈونیشیا پہنچے ان کو بلا قصور جیل میں ڈال دیا گیا تھا ان سے میانمار کی فوج کے مفاد میں کام لیا جاتا تھا، وہ مقام سخرہ میں کام کے دوران بے حد تکلیفوں سے گزرے چنانچہ وہ بنگلہ دیش بھاگنے پر مجبور ہوئے پھر وہاں سے انڈونیشیا پہنچے جہاں انڈونیشیا کی سمندری فوج نے پناہ گزینوں کی کشتی ڈوب جانے کے بعد انہیں نکالا۔

    محمد نور کی آزمائش یہیں پر ختم نہیں ہوئی۔ محمد نور کہتے ہیں، اگر مجھے میانمار بھیجا گیا تو میں یہاں مر جانے کو ترجیح دونگا کیوں کہ مجھے یقین ہے کہ اگر میں وہاں پہنچا تو وہاں کی فوج مجھے دردناک حالت میں قتل کر دے گی انہوں نے مجھے قید کر رکھا تھا وہ مجھے مارتے تھے اور ادھ مرا کرکے چھوڑتے تھے۔ مسلم اقلیت جن پریشانیوں سے دو چار ہے ہیومن رائٹس نے اپنی سالانہ رپورٹ میں اس کی مذمت کی ہے اور ایک سے زائد بار مطالبہ کیا ہے کہ میانمار کی فوج روہنگیا کے نام پر ظلم و ستم کے پہاڑ توڑ رہی ہے اس کی بین الاقوامی تحقیق و تفتیش ہونی چاہیے چنانچہ 13جولائی 2011ء کے بیان میں کہا گیا ہے کہ میانمار حکومت کو عدالت میں پیش ہونا چاہیے کیوں کہ اس نے انسانوں کے ساتھ جانوروں والا معاملہ کیا ہے، برمی فوج قیدیوں پر ظلم کرتی ہے اور ان سے جانوروں والا کام لیتی ہے جن کی اکثریت مسلمان ہے، پھر بغیر کسی فیصلے کے انہیں پھانسی دے دی جاتی ہے اور ٹارچر کیا جاتا ہے اور ڈھال کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔

    برمی فوج کی شہریوں کے حقوق کی پامالی جس کا تذکرہ ہیومن رائٹس نے اپنی جنوری 2012ء میں شائع ہونے والی رپورٹ میں کیا ہے کہ یہ انسانی بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی ہے، وہاں بڑے پیمانے پر لوگوں کے لیے بارودوی سرنگوں کا استعمال، عورتوںکے ساتھ جنسی زیادتی، قتل و غارت گری، مارپیٹ، غذائی سامان کو نشانہ بنانا، زمین و جائداد کو ہڑپ کرنا اور بچوں سے زبردستی کام لینا، جس کی وجہ سے روہنگیا کے پناہ گزینوں کی تعداد بنگلہ دیش کے سرکاری کیمپوں میں (28) اٹھائیس ہزار ہو گئی ہے جب کہ چودہ ہزار لوگ تھائی لینڈ کے غیر سرکاری کیمپوں میں زندگی گزار رہے ہیں اور دو لاکھ لوگ میانمار کے سرحدی علاقوں میں زندگی بسر کر رہے ہیں جو وہاں سے ہندوستان یا سنگاپور میں داخل ہونا چاہتے ہیں۔ امریکہ کے انسانی معاملات کو منظم کر نے والے ایک ادارے کے آفس نے23جنوری 2012ء کو یہ رپورٹ شائع کی ہے کہ روہینجیا کے چالیس ہزار بچوں کا نام درج نہیں کیا جا سکا ہے ان کڑی شرطوں کی وجہ سے جو وہاں کی اقلیت پر عائد ہیں اس میں سے ایک پابندی یہ ہے کہ دو سے زائد بچے نہ ہوں اور بیبیوں کے نام بھی نوٹ نہیں کیے جاتے

    ان شرطوں کی خلاف ورزی ایسا جرم ہے کہ جس کی سزا دس سال قید با مشقت ہے، 1982ء میں جاری شدہ میانمار حکومت کے قانون کے مطابق روہنگیا مسلمانوں کے تمام بچے خواہ نام نوٹ کیا گیا ہو یا نہ کیا گیا ہو برمی نہیں سمجھے جائیں گے انہیں غذا خورو نوش، صحت کی سہولتیں اور تعلیم کے مواقع فراہم نہ ہوں گے، اور انہیں فوج کے مفاد والے مشکل کاموں میں استعمال کیا جائے گا۔ بظاہر معلوم ہوتا ہے کہ انسانی حقوق کی محافظ تنظیموں کی رپورٹوں اور امریکن پناہ گزیں لوگوں کے حالات کو منظم کرنے والی تنظیموں کی مذمتوں کا دنیا کے بڑے ملکوں خاص طور سے ایشیا کے بڑے ملکوں پر کچھ بھی اثر نہیں ہو رہا ہے، جس کی واضح مثال یہ ہے کہ ایشیائی کانفرنس جو انڈونیشیا میں اپریل 2009ء میں میانمار کی اقلیت کے مسئلے کو حل کرنے کے لیے منعقد کی گئی تھی وہ ناکام ہوئی تھی اس طرح ایشیائی ملکوں کے کھاتے میں ایک اور ناکام کانفرنس کا اضافہ ہوگیا جو میانمار کی اقلیت کی پریشانیوں میں تخفیف و کمی اور صوبائی حل پیش کرنے کے لیے منعقد کی گئی تھی

    ناکامی کی حد تک معاملہ نہیں رہا بلکہ اب معاملہ بہت آگے بڑھ گیا ہے کہ چین میانمار کی اتھارٹی کو سیاسی و دینی تعاون پیش کر رہا ہے جس کی وجہ سے انسانی حقوق کی خلاف ورزی روز بروز بڑھ رہی ہے، چین نے 22 فروری 2012ء کو ایک دستاویز پر دستخط کیے ہیں جو میانمار میں موجود بودھ مذہب والوں کی تقویت اور ان کے اثر ورسوخ کو بڑھانے کے لیے لینع قوانع بکین اور میانمار کے معبدوں کے درمیان دوستانہ تعلقات قائم کرنے کے لیے تیار کی گئی ہے، اور چین نے اسکول قائم کرنے اور طبی امداد دینے کے لیے فنڈ فراہم کیا ہے، جب کہ مسلم ممالک اس مظلوم اقلیت کے ساتھ کسی طرح کا تعاون کرنے سے قاصر ہیں، اسلامی تنظیم کے رکن ممالک اس اقدام کو نافذ کرنے کے لیے ذرائع و وسائل ڈھونڈ رہے ہیں جو مئی 2011ء میں سامنے آیا تھا جس اقدام کا مقصد یہ تھا کہ دوسرے ملکوں میں رہائش پذیر روہنگیا لوگوں کو متحد کیا جائے، اور اس اقلیت کے جائز مطالبات کا ایک منظم ڈھانچہ مرتب کیا جائے اور بین الاقوامی تنظیموں جیسے اسلامی کنوینشن تنظیم، امریکن تنظیم اور یورپی انجمن کو مسلمانوں کو جائز حقوق دلانے کے لیے آمادہ کیا جائے لیکن میانمار حکومت کی ملک میں اصلاحات کی کوششیں نا کام ہوگئیں جب کہ اس نے بہت سے سیاسی قیدیوں کو رہا کیا اور وہاں کی بعض جماعتوں جیسے کاربن شان، تشین اور کوکانج سے امن و سلامتی کے معاہدے پر دستخط بھی کیے، اور دوسری طرف مسلسل اپنے ان شہریوں کا صفایا اور خاتمہ کیا جن کا صرف اور صرف یہ قصور ہے کہ وہ مسلمان ہیں۔ کونسا قانون ان کو یہ سزا دینے کا جواز فراہم کر تاہے۔ کیا ان حالات میں سیاسی اصلاحات ممکن ہیں؟

    http://www.jasarat.com/epaper/index.php?page=03&date=2012-07-14

    Last edited by Afaq Chaudhry; 25-May-2015 at 02:34 AM.
    Quick reply to this message Reply  

Page 1 of 5 123 ... LastLast

Quick Reply


Similar Threads

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •