Siasat.pk Forums
Results 1 to 11 of 11
  1. #1
    Professional behzadji's Avatar
    Join Date
    Oct 2010
    Posts
    2,665
    Post Thanks / Like

    "Imran farooq had direct links with the militants" - Ansar Abbasi article


    اسلام آباد (انصار عباسی ) انتہائی خطرناک ٹارگٹ کلرز میں سے ایک نے مبینہ طور پر کراچی میں کئی پولیس اہلکاروں کو قتل کرنے کا اعتراف کیا ہے اور اپنا تعلق متحدہ قومی موومنٹ کے عسکری ونگ سے بتا رہا ہے۔ اسی شخص نے ڈاکٹر عمران فاروق کو اپنا رابطہ کار بتایا ہے جبکہ اجمل پہاڑی کی شناخت بطور ایم کیو ایم کے کارکنوں میں سے ایک کی حیثیت سے کی ہے۔ 2010ء میں عمران فاروق کے قتل سے قبل گرفتار کیے گئے ٹارگٹ کلر محمد اشتیاق عرف سلمان عرف پولیس والا نے آئی ایس آئی، آئی بی، رینجرز، سی آئی ڈی، سندھ پولیس اور اسپیشل برانچ کے افسران پر مشتمل مشترکہ تفتیشی ٹیم کے سامنے اعتراف کیا ہے کہ تقریباً 100/ لوگوں کے قتل میں ملوث کراچی سے حال ہی میں گرفتار ہونیوالا شخص اجمل پہاڑی ایم کیو ایم کا رکن ہے۔ ایک طرف اشتیاق یہ بیان دیتا ہے تو دوسری طرف اس کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر عمران فاروق اور اجمل پہاڑی پارٹی پالیسی کے بغیر ہی یہ قتل کیا کرتے تھے۔ اس بات کو دیکھ کر اشتیاق کے انکشافات متنازع ہوجاتے ہیں۔ تفتیشی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اشتیاق نے مزید انکشاف کیا ہے کہ کئی جنگجو (Militants) ڈاکٹر عمران فاروق کے ساتھ براہ راست رابطے میں تھے۔ مثلاً اجمل پہاڑی اور سعید بھرم نے عمران فاروق کے کہنے پر، پارٹی پالیسی سے ہٹ کر، کئی لوگوں کو قتل کیا۔ اکثر و بیشتر قتل کی یہ وارداتیں ذاتی مفاد کے حصول اور ذاتی دشمنیاں نمٹانے کیلئے کی جاتی تھیں۔ سندھ کے محکمہ داخلہ کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 2010ء کے ٹارگٹ کلنگ کے واقعات کے سلسلے میں جن 26/ ملزمان کو گرفتار کرکے تفتیش کی گئی ہے ان کا تعلق ایم کیو ایم، ایم کیو ایم (حقیقی)، اے این پی، سپاہ صحابہ، سپاہِ محمد اور لشکر جھنگوی سے ہے۔ رپورٹ میں اشتیاق نے جو انکشافات کیے ہیں وہ یہ ہیں:
    ایم کیو ایم (اے) کے عسکری ونگ کے ساتھ وابستگی
    اس نے ایم کیو ایم (اے) میں 1996-97ء میں لیاقت آباد سیکٹر سے شمولیت اختیار کی۔ گولڈن پان شاپ کے سامنے اسلحہ کی نمائش کے الزام میں عزیزآباد پولیس نے اسے 1997ء میں گرفتار کیا۔ شعیب بخاری کی طرف سے اجازت ملنے پر ایس ایچ او نے سیکشن 13-d کے تحت اشتیاق کے خلاف مقدمہ درج کیا۔ جیل میں اس کی ملاقات ایم کیو ایم (اے) کے ان کارکنوں / دہشت گردوں سے ہوئی جنہیں آپریشن کے عرصے کے دوران گرفتار کیا گیا تھا۔ جیل سے رہائی کے بعد اس نے فہیم عرف کن کٹا سے ملاقات کی جس نے اسے 1997ء میں ایم کیو ایم کے عسکری ونگ میں شمولیت کیلئے رضامند کیا۔ چونکہ وہ اپنی ملازمت سے معطل ہوچکا تھا اسلئے اکتوبر 1997ء میں جنوبی افریقا چلا گیا اور وہاں 9/ ماہ قیام کیا۔ وہ اگست 1998ء میں واپس آیا اور اسے اس آپریشن میں گرفتار کرلیا گیا جو اکتوبر 1998ء میں حکیم سعید کے قتل کے بعد شروع کیا گیا تھا۔ اسے ایس ایچ او عزیز آباد انسپکٹر غضنفر کاظمی نے گرفتار کیا۔ اسے قتل کے پانچ، 13-d کے ایک، 13-e کے ایک اور 147/148 کے ایک کیس میں چالان کیا گیا۔ وہ دو سال بعد جیل سے رہا ہوا اور 2003ء میں شعیب بخاری کی سفارش پر اسے ملازمت پر بحال کردیا گیا۔ آئندہ 4-5 سال تک وہ پارٹی میں غیر سرگرم رہا۔ ڈھائی سال قبل، عدیل بھائی لندن سے آیا اور اس نے اشتیاق سے رابطہ کیا۔ عدیل بھائی اسے جانتا تھا کیونکہ وہ جنوبی افریقا میں عدیل کے ساتھ کام کرتا تھا۔ عدیل بھائی نے پارٹی کیلئے نیا نظام بنانے کیلئے جنگجو بھرتی کرنے کا کام دیا۔ نیا نظام قاتلوں کی نئی ٹیم تشکیل دینے کیلئے ایک خفیہ نام تھا۔ اس سلسلے میں اس کی ملاقات عبید K-2 سے ہوئی لیکن عبید کے ٹو نے اسے بتایا کہ وہ پہلے ہی دوسرے سیٹ اپ میں یعنی اجمل پہاڑی کے ساتھ کام کررہا ہے، اس نے اشتیاق کو رافع سے رابطہ کرنے کو کہا۔ رافع عبید کا دوست تھا۔ اشتیاق نے رافع کی ملاقات عدیل سے کروائی۔ یہ ملاقات 5/A2 نیو کراچی میں ہوئی۔ عدیل نے اسے ٹیم بنانے کی اجازت دی اور رافع کی ٹیم میں دانش، فیصل، عرفان عرف عرفی اور نومی شامل تھے۔ ملاقات کے 10/ دن بعد رافع اپنی پوری ٹیم لے کر عدیل کے ساتھ ملاقات کیلئے پہنچا۔ عدیل نے انہیں اسے کہا کہ وہ اپنی طور پر ٹیم کے معاملات سنبھالے کیونکہ وہ ٹیم کے دیگر ارکان کے ساتھ براہِ راست رابطہ نہیں رکھناچاہتا۔ اس بات کے ایک سال بعد، عدیل نے اسے دو مزید ٹیمیں بنانے کی اجازت دی جس میں لانڈھی کا محمد بھائی عرف حسن اور اورنگی کا سلطان بھائی شامل تھے۔ کورنگی میں ٹیم چلانے والا جہانگیر بابو بھی رافع کو رپورٹ دیتا تھا۔
    انکشافات / معلومات
    30/ بور کا غیر قانونی اسلحہ رکھنے کے الزام میں اسے 1997ء میں عزیز آباد میں گرفتار کیا گیا۔ مقدمہ 13-d کے تحت درج کیا گیا اور اسے تین ماہ جیل بھیج دیا گیا۔ اس کے بعد وہ آصف دادن اور نسیم عرف نسیم بہاری (لیاقت آباد والا) کے ساتھ جنوبی افریقا چلاگیا اور وہاں پناہ لے لی۔ وہ جنوبی افریقا میں ایم کیو ایم (اے) گروپ میں شامل ہوا۔ نیو کراچی سیکٹر کا رضا بھائی جنوبی افریقا ایم کیو ایم (اے) گروپ کا انچارج تھا، اور قمر غالب اور قمر ٹیڈی بھی جنوبی افریقا کے سیٹ اپ میں انتہائی حد تک سرگرم تھے۔ تقریباً 9-10/ ماہ بعد وہ آصف بھائی کے ہمراہ پاکستان آیا۔ کریانہ کا سامان اور گھر کا کرایہ پارٹی ادا کرتی تھی لیکن گوشت اور کپڑوں کا انتظام خود کرنا ہوتا تھا۔ اپنی واپسی پر وہ ایک مرتبہ پھر لیاقت آباد میں سرگرم ہوگیا اور ایک سال بعد یعنی 1999ء میں ایس ایچ او غضنفر کاظمی کے ہاتھوں عزیز آباد میں گرفتار ہوا۔ اسے ایم کیو ایم حقیقی کے کارکنوں اسمٰعیل برمی، نسیم اور اسلم، پولیس کانسٹیبل اور ایک پارٹی ورکر شیرا بھائی کے قتل سمیت 7/ مقدمات میں چالان کیا گیا۔ اسے 2/ سال قید کی سزا ہوئی۔ 2001ء میں وہ اے ڈی جے سینٹرل سے ضمانت پر رہا ہوا۔ ایک مرتبہ پھر وہ لیاقت آباد سیکٹر میں سرگرم ہوگیا اور پارٹی کیلئے کام کرنے لگا۔ 2003ء میں شعیب بخاری نے اسے پولیس سروس میں اسپیشل برانچ میں بحال کرایا۔
    ایس ایس پی محمد اسلم خان پر حملہ
    (کیس ایف آئی آر نمبر 07/2010، گزری پولیس اسٹیشن کلفٹن ٹاؤن، کراچی)
    عدیل بھائی عرف آغا نے اسے بتایا کہ شکیل عمر، جو اس وقت شہر بھر میں ایم کیو ایم کے تمام جنگجوؤں کو کنٹرول کر رہا تھا، نے اجمل پہاڑی کی ٹیم کو ایس ایس پی محمد اسلم خان کے قتل کی ذمہ داری دی ہے۔ اس ٹیم نے پنجاب چورنگی پر محمد اسلم خان پر حملہ کیا جس میں ایس ایس پی کے دو محافظ جاں بحق ہوئے۔
    ڈی ایس پی (ریٹائرڈ) رحیم بنگش کیس
    (کیس ایف آئی آر نمبر 517/2010 سیکشن 302/34 تعزیرات پاکستان پولیس اسٹیشن میٹھا در، صدر ٹاؤن، کراچی)
    تقریباً 18/ ماہ قبل سیکٹر 5-A1/2 کے سیکٹر آفس میں اس کی ملاقات عدیل بھائی اور رافع سے ہوئی۔ عدیل بھائی نے اس سے ڈی ایس پی رحیم بنگش کے متعلق پوچھا۔ اس نے انہیں بتایا کہ رحیم بنگش ریٹائر ہوچکا ہے اور اس کا آپریشن سے کوئی تعلق نہیں۔ اس نے انہیں کوئی معلومات نہیں دی۔ عدیل بھائی نے اپنے طور پر معلومات حاصل کیں اور تقریباً 5/ سے 7/ روز بعد اسے دوبارہ بلایا اور اسے ٹیم کی مدد کرنے کو کہا کیونکہ یہ آرڈر اوپر سے آیا تھا۔
    رافع نے اسے بلایا اور کہا کہ وہ طے شدہ پتہ یعنی یونی پلازہ کے ساتویں فلور پر ہے (جہاں رحیم بنگش کا کمرہ تھا)۔ رافع نے اسے بتایا کہ وہ رحیم بنگش کو نہیں پہچانتا اور اسے اشتیاق کی مدد کی ضرورت ہے۔ اشتیاق نے اسے بتایا کہ وہ اس دن نہیں آسکتا، اگلے دن آئے گا۔ عبید کے ٹو نے بھی اسے بلایا اور ٹارگٹ کی شناخت کیلئے کہا۔ اگلے روزوہ ٹیم کے ساتھ گیا جس میں رافع، عبید کے ٹو، جو صرف ٹیم کی مدد کیلئے آیا تھا، اور عرفی شامل تھے۔
    وہ یونی پلازہ کے باہر کھڑا رہا جبکہ ٹیم اوپر گئی اور بنگش کا پیچھا کیا۔ جس کے بعد اس سے تصدیق کی گئی کہ آیا یہی رحیم بنگش تھا؛ اس نے اثبات میں جواب دیا۔ اگلے دن عدیل بھائی نے اس سے پوچھا کیا کہ اس نے بنگش کی شناخت کردی تھی تو اس نے اثبات میں جواب دیا۔ اس بات کے دو دن بعد عبید عرف کے ٹو نے فون کرکے مخفی الفاظ میں پیغام دیا (فائل ہوگئی / فائل کی پیمنٹ ہوگئی)۔ عدیل بھائی نے شام میں مجھے اپنے آفس بلایا اور جب میں وہاں پہنچا تو وہاں عبید، رافع اور عفی بھی موجود تھے۔ عدیل بھائی نے ان کے کام کی تعریف کی۔
    سب انسپکٹر ساجد قتل کیس
    جہانگیر بابو عدیل سے ملنے آیا اور اس سے کورنگی میں رہنے والے سب انسپکٹر ساجد کو قتل کرنے کی اجازت طلب کی۔ عدیل نے اسے بتایا کہ جہانگیر نے اس سے ذاتی دشمنی کی بناء پر ساجد کو مارنے کی اجازت مانگی ہے؛ ساجد نے ایم کیو ایم کے خلاف آپریشن میں حصہ نہیں لیا تھا۔ اس بات کے 15/ دن بعد ساجد کا قتل ہوگیا اور جہانگیر نے اس سلسلے میں اشتیاق کو رپورٹ دی۔
    انسپکٹر ناصر الحسن (ایس ایچ او بریگیڈ پولیس) کا قتل کیس
    ایف آئی آر نمبر 30/2010 سیکشن 353/324/302/392/34 تعزیرات پاکستان پولیس اسٹیشن بریگیڈ، جمشید ٹاؤن، کراچی
    عدیل بھائی نے گول مارکیٹ میں رافع کے گھر پر اس سے ملاقات کی۔ گول مارکیٹ میں رافع کے گھر کا خفیہ نام دکان تھا۔ وہاں انسپکٹر ناصر الحسن کو مارنے کی پلاننگ کی گئی۔ عدل بھائی نے ٹیموں سے ٹارگٹ کے متعلق سوال کیا جس میں رافع کی ٹیم نے ناصر الحسن کو مارنے کی تجویز دی جو اس وقت کیماڑی ٹاؤن میں تعینات تھا۔ عدیل اس بات پر راضی ہوگیا کیونکہ یہ بات طے تھی کہ ناصر الحسن ایم کیو ایم کے خلاف آپریشن میں سرگرم تھا اور اس نے لیاقت آباد سے تعلق رکھنے والے ایم کیو ایم کے رکن ریحان بندھانی کو ہلاک کیا تھا۔ 6/ ماہ بعد عدیل بھائی نے کارکردگی رپورٹ طلب کی کیونکہ رافع کی ٹیم کو کامیابی نہیں ملی تھی۔ اشتیاق نے رافع سے 2-3 بار اس کام کے متعلق پوچھا جو اس کی ٹیم کو دیا گیا تھا اور اس نے یقین دلایا کہ کام ہوجائیگا۔ چونکہ ناصر الحسن کے حلیے کے حوالے سے چند شکوک و شبہات تھے اسلئے عدیل نے کسی سے وگ والے آدمی کی تصویر لانے کیلئے کہا (ناصر الحسن وگ پہنتا تھا)۔ لیکن تصویریں ملنے سے پہلے ہی، ٹیم کو موقع مل گیا۔ اس وقت نومی رافع کی ٹیم کا حصہ نہیں تھا، نومی عبید کے ٹو کے ساتھ کام کرتا تھا۔ ناصر الحسن کے قتل کے وقت، عبید کے ٹو نے اسے فون کیا اور اسے بتایا کہ کام پورا ہوگیا ہے لیکن ایک لڑکا (نومی) زخمی ہوگیا ہے اور اس نے اشتیاق سے کہا کہ وہ ڈاکٹر کا بندوبست کرے۔ اس نے عدیل کو فون کیا اور اس سے کہا کہ وہ لیاقت آباد نمبر 4/ میں ایک اسکول میں ڈاکٹر کو لیکر آئے کیونکہ یہی جگہ ٹیم کی ملاقات کی جگہ تھی۔ اس نے اسرار راحیل نامی ڈاکٹر کا انتظام کیا۔ اسرار راحیل لیاقت آباد نمبر 3/ میں زبیدہ اسپتال میں کام کرتا تھا۔ ڈاکٹر نے زخمی کا معائنہ کیا اور بتایا کہ یہ گولی سے زخمی ہونے کا کیس ہے لہٰذا مریض کو اسپتال منتقل کیا جائے۔ ڈاکٹر کے جانے کے بعد، اس نے ایک اور ڈاکٹر کا انتظام کیا جس کا نام ندیم عباس جعفری (میمن اسپتال حسین آباد) تھا۔ ڈاکٹر نے مریض کا معائنہ کیا اور بتایا کہ گولی زخمی کی گردن کو چھو کر نکل گئی ہے اور یہ کوئی سنجیدہ نوعیت کا زخم نہیں ہے لیکن اسپتال جانا پڑے گا۔ ڈاکٹر نے زخمی نومی کو میمن اسپتال حسین آباد میں بھرتی کردیا۔
    ڈی ایس پی نواز رانجھا قتل کیس
    (ایف آئی آر نمبر 929/2010 سیکشن 302/324/353/427/34 تعزیرات پاکستان، 7 ATA پولیس اسٹیشن پریڈی، صدر ٹاؤن، کراچی
    دو سال قبل ایک واقعے میں عفی کا بھائی جمشید کوارٹرز پولیس اسٹیشن کی حدود میں مارا گیا۔عفی کو شک تھا کہ اس کے بھائی کو قتل کیا گیا ہے اور اس واقعے کو مقامی پولیس نے چھپایا ،خصوصاً ڈی ایس پی نواز رانجھاجو کہ اس وقت ایس پی او تھے۔ اس واقعے کو چھپانے کا مقصد یہ تھا کہ وہ لڑکی جس کے چکر میں عفی کا بھائی تھا اس کے اہلخانہ نے نواز رانجھا سے رابطہ کیا۔جب اشتیاق نے اس کے جنازے میں شرکت کی ا س وقت اس کے علم میں یہ بات تھی کہ عفی کے بھائی کا کسی لڑکی سے چکر تھااور وہ اس کے گھر بھی آتا جاتا تھا۔ایک صبح ایک پولیس والا عفی کے گھر آیااور بتایا کہ پولیس کو ایک لاش ملی ہے جس کے ساتھ ایڈریس بھی موجود تھاجس پر گھر والے پولیس اسٹیشن پہنچ گئے۔پولیس نے پہلے ہی خود کشی کا مقدمہ درج کرلیا تھا۔عفی کے اہلخانہ نے 2سے4دن کی معلومات جمع کی اور یہ نتیجہ اخذکیا کہ اسے لڑکی کے گھر والوں نے قتل کیا ہے اور رانجھا نے یہ معاملہ دبایا۔
    جب عفی نے اس بنیاد پر عدیل بھائی سے نواز رانجھا کو قتل کرنے کی اجازت مانگی تو عدیل بھائی نے دریافت کیا کہ ڈی ایس پی نوا زرانجھاپولیس اسٹیشن گلبہار کا ایس ایچ او تھا ؟ عدیل بھائی نے ڈی ایس پی نواز رانجھا کے حوالے سے معلومات اکھٹی کرنے کا حکم دیااور کہا اگر یہ وہی رانجھا ہے جو کہ گلبہار میں تعینات تھاتو اس کا مطلب ہے کہ یہ پارٹی کا حامی ہے،کیونکہ وہ پارٹی کو کھجی گراؤنڈ کے محاصرے اور گھیرے سے قبل پارٹی کو بتا دیا کرتا تھا۔ لیکن رافع اور عفی کا اصرار تھا کہ یہ وہ رانجھا نہیں جس پر عدیل نے ان کو اسے قتل کرنے کی اجازت دے دی۔جس رات ڈی ایس پی نواز رانجھا کا قتل ہوااس کے آدے گھنٹے بعد رافع نے مجھے فون کیااور پوچھا کہ کیا میں ٹی وی دیکھ رہا ہوں کیونکہ اس روز ایک زبردست میچ آرہا تھا۔ (وہ رانجھا کے قتل کی بریکنگ نیوز کے حوالے سے کوڈ ورڈز میں پوچھ رہا تھا)۔ اشتیاق نے جواب دیا جی ہاں اور کہا جو ہوا اچھا ہوااور پھر فون بند کردیا۔اگلے روز عدیل بھائی نے مجھے فون کیا اورکوڈ ورڈز میں پوچھا یہ کام کس نے کیا(یہ گاڑی کس نے خریدی؟)اشتیاق نے بتایا کہ وہ اس کی تفصیلات آفس میں آکر بتائے گا۔ پھر میں رافع سے ایف سی ایریا کی گول مارکیٹ میں ملا اور واقعے کی تفصیلات جاننا چاہیں۔رافع نے فخریہ انداز میں جواب دیا ،وہ عفی ،فیصل ، نومی اور کاشف نے ملکر یہ کام کیا۔مزید اس نے بتایا کہ میں یہ عدیل بھائی کو بتا چکا ہوں۔
    چند روز کے بعدعدیل بھائی نے مجھے ناظم آباد میرج ہال میں بلایااور کہا کہ وہ اس غلطی کا خیال کرینگے۔ صدیقی بھائی بھی وہیں موجود تھے اور انہوں نے عدیل بھائی کو ڈانٹااور دھمکی دی کہ اگر وہ اپنی ٹیموں کو قابو نہیں کرسکتا تو اسے واپس لندن بھیج دیا جائے گا۔عدیل بھائی نے صدیقی بھائی کو بتایا کہ میں نے رافع سے کہا تھا کہ رانجھا کے بارے میں تمام حقائق جاننے کے بعد یہ کام کرنااوروہ سلمان بھائی(اشتیاق کا پارٹی نام) سے پوچھ لینے کے بعد میں نے منع کردیا کہ رافع نے کبھی بھی مجھ سے اجازت نہیں لی۔
    جب عفی گرفتار ہوا اور اس نے میرا نام لیاتو میں نے عدیل بھائی سے کہا کہ مجھے اپنے گھر لے چلیں کیونکہ میرا نام ٹی وی پر آ چکا ہے ۔ لیکن انہوں نے مجھے تحفظ نہیں دیا اور پھر مجھے انڈر گراؤنڈ ہونا پڑا۔پھر انہوں نے میرے دوست محمد سلطان سے رابطہ کیااور ان سے کہا کہ مجھے سے کوئی رابطہ نہ کریں اور نہ ہی میرا فون سنیں۔ جب میں نے عید پر عدیل بھائی سے رابطہ کیا تو انہوں نے بندوں جہانگیربابو ، شہزاد، اسد، انصاری بھائی اور مون کی بحالی کا بتایا۔
    رکن صوبائی اسمبلی رضا حیدر کے قتل سے قبل ٹارگٹ کلنگ میں تیزیاس نے انکشاف کیا کہ ایم کیو ایم کے صوبائی رکن اسمبلی رضا حیدر کے قتل سے تقریباً ڈیڑھ ماہ قبل عدیل بھائی نے اسے تمام ٹیموں کو اے این پی کے عہدیداروں کو نشانہ بنانے کی ہدایات دینے کا کہا۔عدیل بھائی نے کہا تھا کہ یہ احکامات اوپر سے آئے ہیں۔اشتیاق نے اپنی ٹیم سے یہی کچھ کہالیکن اس دوران اے این پی کا کوئی بھی عہدیدار ان کے نشانے پر نہیں آیا۔ بہرحال درجنوں عام پٹھان مارے گئے اور حقیقت میں سلطان نے اسے بتایا کہ انہوں نے اپنے اہداف صرف اے این پی تک ہی کیوں محدود کر دیئے ہیں کیونکہ اس وقت تو ہر کوئی اپنی مرضی کے بندے مار رہاہے۔سلطان نے بتایا کہ اس کو بھی ایسا کرنے کی اجازت مل گئی ہوتی تو وہ بھی درجنوں کو اہداف بنادیا ہوتا۔
    بعد ازاں عدیل بھائی نے ان کو بتایا کہ ان کے بندے تقریباً 21سے 22قتل کے ذمہ دار ہیں۔اشتیا ق نے مزید انکشاف کیا کہ ایم پی اے رضا حیدرکے قتل کے بعد ہونے والی ٹارگٹ کلنگ میں اس کی ٹیموں نے ٹارگٹ کلنگ کی کسی کارروائی میں حصہ نہیں لیااور بتایا کہ یہ قتل کی وارداتیں یونٹ اور سیکٹر لیول کی ویجی لنس کمیٹیوں نے انجام دی تھیں۔
    ایم کیو ایم کی کلنگ ٹیموں کا ڈھانچہ
    اشتیاق نے انکشاف کیا کہ ٹارگٹ کلنگز کیلئے کراچی میں کئی سیٹ اپکام کر رہے تھے ۔ ابتداء میں کراچی میں تمام کلنگ ٹیمیں مرکزی طور پر شکیل عمر کی سربراہی میں کام کررہی تھیں۔پھر جب شکیل عمر بڑے پیمانے پرسرجانی ٹاؤن میں زمینوں پر قبضے اور کرپشن کی سرگرمیوں میں ملوث ہو گیا تو اسے ایک طرف کر دیا گیااور اجمل پہاڑی (پارٹی نام عدنان) اور سعید بھرم (پارٹی نام احمد)کو یہ ذمہ داری سونپی گئی۔لیکن پھر یہ دنوں بھی کرپشن کی سرگرمیوں میں ملوث ہو گئے تو پھر یونٹ اور سیکٹر لیول پرویجی لنس کمیٹیاں تشکیل دی گئیں،جو کہ مسلح ونگ کے طور پر خدمات انجام دینے لگیں۔لیکن وہ دونوں قابو سے باہر بھی ہو گئے تھے۔
    لہٰذا حتمی طور پر عدیل بھائی اور صدیقی بھائی کی نگرانی میں نیا سیٹ اپ تشکیل دیا گیا۔ان دونوں جنگجوؤں کو جنوبی افریقا سے کنٹرول کیا جاتا تھا۔اس وقت نئی کراچی والے رضا بھائی اور قمر ٹیڈی جنوبی افریقا میں انچارج ہیں اور عدیل بھائی اور صدیقی بھائی ان دونوں افراد سے رابطوں میں تھے،جہاں انیس قائم خانی کلنگ ٹیمز کا انچارج تھا۔
    اشتیاق نے مزید انکشاف کیا کہ کئی جنگجو ڈاکٹر عمران فاروق سے براہ راست رابطے میں تھے۔مثال کے طور پر اجمل پہاڑی اور سعید بھرم کے بارے میں اطلاعات ہیں کہ وہ پارٹی پالیسی سے ہٹ کر براہ راست ان کے حکم پر قتل کرتے تھے۔اور اکثرذاتی مفادات اور دشمنیوں کی وجہ سے بڑے پیمانے پر قتل کی وارداتیں ہوتی تھیں۔
    قتل کی دیگر وارداتیں
    یکم اپریل 1997ء کو ملزم اشتیاق نے اپنے ساتھیوں کے ہمراہ ہدف بنا کر محمد اسمعیل کو پولیس اسٹیشن نارتھ ناظم آبادکی حدود میں قتل کیااس سلسلے میں ایف آئی آر نمبر 162/97 سیکشن 302 تعزیرات پاکستان نارتھ ناظم آباد پولیس اسٹیشن میں درج کی گئی ۔
    15جون 1998ء کو ملزم اشتیاق نے اپنے ساتھیوں کے ہمراہ ہدف بنا کرخان کو پولیس اسٹیشن نارتھ ناظم آبادکی حدود میں قتل کیااس سلسلے میں ایف آئی آر نمبر 247/98 u /s 302 PPCنارتھ ناظم آباد پولیس اسٹیشن میں درج کی گئی ۔
    24جون 1998ء کو ملزم اشتیاق نے اپنے ساتھیوں کے ہمراہ ہدف بنا کرایسٹ زون کراچی میں تعینات اے ایس آئی مقصود کو پولیس اسٹیشن نارتھ ناظم آبادکی حدود میں قتل کیااس سلسلے میں ایف آئی آر نمبر 162/97 u /s 302 PPCنارتھ ناظم آباد پولیس اسٹیشن میں درج کی گئی ۔
    3جون 1997ء کو ملزم اشتیاق نے اپنے ساتھیوں کے ہمراہ ہدف بنا کرنسیم اختر ولد محمد علی کو پولیس اسٹیشن شریف آبادکی حدود میں قتل کیااس سلسلے میں ایف آئی آر نمبر 272/97 u /s 302 PPCنارتھ ناظم آباد پولیس اسٹیشن میں درج کی گئی ۔
    23جون 1995ء کو ملزم اشتیاق نے اپنے ساتھیوں کے ہمراہ ہدف بنا کرشیر محمدکو پولیس اسٹیشن شریف آبادکی حدود میں قتل کیااس سلسلے میں ایف آئی آر نمبر 166/95 u /s 302 PPCنارتھ ناظم آباد پولیس اسٹیشن میں درج کی گئی ۔
    24جون 1998ء کو ملزم اشتیاق نے اپنے ساتھیوں کے ہمراہ ہدف بنا کرجہانگیر مرزائیں کو پولیس اسٹیشن نارتھ ناظم آبادکی حدود میں قتل کیااس سلسلے میں ایف آئی آر نمبر 141/98 u /s 302 PPCنارتھ ناظم آباد پولیس اسٹیشن میں درج کی گئی ۔
    معلومات
    عدیل عرف آغاایم کیو ایم(A) گروپ کی متعدد ٹارگٹ کلنگ ٹیموں کا انچارج ہے۔ اس کی سربراہی وہ(اشتیاق پولیس والا)عرف سلمان ٹیموں کو چلا رہا ہے
    ۱۔رافع کی لیاقت آباد سیکٹر کی ٹیم۲۔ محمد کی لانڈھی سیکٹر کی ٹیم
    ۳۔ سلطان کی اورنگی ٹاؤن سیکٹر کی ٹیم۴۔ کبھی کبھار کورنگی کا جہانگیر بابو
    ٹیموں کو ا ن کے ٹارگٹ اشتیاق پولیس والادیتا تھااور ٹیموں سے کام کی تکمیل کی رپورٹ جمع کرکے عدیل عرف آغا مرتضیٰ کو پہنچاتا تھا۔اطلاعات ہیں کہ حال ہی میں ایم کیو ایم کی لندن میں موجود ہائی کمان نے اے این پی ، ایم کیو ایم (حقیقی ) عہدیداروں اور کراچی میں پی پی آئی کے ورکرز کو نشانہ بنانے کی ہدایات دی گئی ہیں۔اشتیاق پولیس والا نے مزید انکشاف کیا کہ متعلقہ علاقوں میں دہشت گردی کی کارروائیوں کیلئے ایم کیو ایم (A)کے ہر سیکٹرکی اپنی ویجی لنس ٹیم ہے۔


    Last edited by Adeel; 24-Oct-2011 at 12:16 AM.

  2. Thanks thepearl, TruPakistani thanked for this post

  3. #2
    Intermediate Ajnabi27's Avatar
    Join Date
    Feb 2010
    Posts
    249
    Post Thanks / Like

    Re: Imran farooq had direct links with the militants

    You forgot to give "Ummat" Reference : Anyways thanks for doing such a hardwork....

  4. Likes EniGma90 liked this post
    Dislikes thepearl, sdmuashr disliked this post

  5. #3
    Professional Khalid's Avatar
    Join Date
    Sep 2011
    Location
    Karachi
    Posts
    4,103
    Age
    32
    Post Thanks / Like

    Re: Imran farooq had direct links with the militants

    http://www.jang.com.pk/jang/apr2011-...pst/main10.gif

    Quote Originally Posted by Ajnabi27 View Post
    You forgot to give "Ummat" Reference : Anyways thanks for doing such a hardwork....

  6. Thanks thepearl, sdmuashr thanked for this post

  7. #4
    Professional
    Join Date
    Aug 2010
    Location
    Dubai, United Arab Emirates, United Arab Emirates
    Posts
    3,760
    Post Thanks / Like

    Re: Imran farooq had direct links with the militants

    Good Work nice

  8. Thanks thepearl thanked for this post
    Likes sdmuashr liked this post

  9. #5
    Advanced thepearl's Avatar
    Join Date
    Apr 2010
    Posts
    2,362
    Post Thanks / Like

    Re: Imran farooq had direct links with the militants

    expose these bloody terrorists..........................mqm is black spot on URDU SPEAKING people.

  10. Likes sdmuashr liked this post

  11. #6
    Advanced thepearl's Avatar
    Join Date
    Apr 2010
    Posts
    2,362
    Post Thanks / Like

    Re: Imran farooq had direct links with the militants

    Quote Originally Posted by Ajnabi27 View Post
    You forgot to give "Ummat" Reference : Anyways thanks for doing such a hardwork....
    bhai aaap ne Ajnabi27 ko kia zooor ki laaat mari hay!!!!!!!!!!!!!

    Last edited by thepearl; 23-Oct-2011 at 10:24 PM.

  12. Likes behzadji, sdmuashr liked this post

  13. #7
    Professional Khalid's Avatar
    Join Date
    Sep 2011
    Location
    Karachi
    Posts
    4,103
    Age
    32
    Post Thanks / Like

    Re: Imran farooq had direct links with the militants

    bhai, Ajnabi ny ref manga meine ref de deya .... un ko shayad isliye laga k ummat hi aisa likhta hai ...

    dost achey burey loog party mein hotey hain ... mein PTI ko support kurta hoon tou mein yeh nahin kahonga k PTI mein sab farishtey hain ... waisey hi MQM mein kuch loog achey bhe hain ... aur mujhey lagta hai k Ajnabi27 bhe un mein sy hi aik hai ... party dushmani mein humein yeh nahin bholna chahiye k hum sab pehle Pakistani hain ...

    Quote Originally Posted by thepearl View Post
    bhai aaap ne Ajnabi27 ko kia zooor ki laaat mari hay!!!!!!!!!!!!!


  14. Likes behzadji, thepearl liked this post

  15. #8
    Expert Saboo's Avatar
    Join Date
    Dec 2010
    Location
    Canada
    Posts
    10,584
    Post Thanks / Like

    Re: Imran farooq had direct links with the militants

    What ever the reference, yeh Munkareen nahin maanein gay!

  16. Likes thepearl liked this post

  17. #9
    Expert
    Join Date
    Jun 2009
    Posts
    7,146
    Post Thanks / Like

    Re: Imran farooq had direct links with the militants

    Quote Originally Posted by Legend View Post
    bhai, Ajnabi ny ref manga meine ref de deya .... un ko shayad isliye laga k ummat hi aisa likhta hai ...

    dost achey burey loog party mein hotey hain ... mein PTI ko support kurta hoon tou mein yeh nahin kahonga k PTI mein sab farishtey hain ... waisey hi MQM mein kuch loog achey bhe hain ... aur mujhey lagta hai k Ajnabi27 bhe un mein sy hi aik hai ... party dushmani mein humein yeh nahin bholna chahiye k hum sab pehle Pakistani hain ...

    absolutely wrong.no one is "good" in mqm.its party of satanists.
    may allah punish them soon now...inshalah i hope azaab is near on them,some signs are there already.
    if you ppls family members had also been killed by mqm than you had known what kind of party is this....but you ppl have selfish hearts so dont care about other pakistanis being killed by mqm sectarian terrorists..but one day those ppl who dont care will pay too...time is changing fast

  18. Likes sdmuashr liked this post

  19. #10
    Professional Khalid's Avatar
    Join Date
    Sep 2011
    Location
    Karachi
    Posts
    4,103
    Age
    32
    Post Thanks / Like

    Re: Imran farooq had direct links with the militants

    i appreciate your concerns but i am afraid i will not agree with you

    i have witnessed MQM's brutuality while i lived in MQMs strong hold in 90s, during that time i had seen MQMers openly firing on the innocent peoples, i had witnessed torture cells, body in 5 pieces etc ... also someone closed to my family had been killed by MQM-H's shooter, now owned by MQM-A ...

    i do condemn them ... and no i am not selfish ... may be in next riots i get kill or someone close to me ... i do say and i will that MQM is terrorist organization but i will not condemn people like Ajnabi only for their affilation with MQM ...

    remember we cant bring change with more hate ...

    MAY ALLAH SWT give them hidayat .. before its too late ... Ameen

    Quote Originally Posted by drkjke View Post
    absolutely wrong.no one is "good" in mqm.its party of satanists.
    may allah punish them soon now...inshalah i hope azaab is near on them,some signs are there already.
    if you ppls family members had also been killed by mqm than you had known what kind of party is this....but you ppl have selfish hearts so dont care about other pakistanis being killed by mqm sectarian terrorists..but one day those ppl who dont care will pay too...time is changing fast


  20. #11
    Expert
    Join Date
    Dec 2009
    Posts
    10,516
    Post Thanks / Like
    Blog Entries
    11

    Re: Imran farooq had direct links with the militants

    Quote Originally Posted by Ajnabi27 View Post
    You forgot to give "Ummat" Reference : Anyways thanks for doing such a hardwork....
    Maain na manoo!

  21. Likes thepearl, Saboo liked this post

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •